وحدت نیوز (سکردو) مجلس وحدت مسلمین پاکستان تحصیل گمبہ اسکردو کے زیر اہتمام خالصہ سرکار کے نام پر گلگت بلتستان کی زمینوں پر انتظامیہ کے قبضے کےخلاف ایک عظیم الشان احتجاجی جلسہ مالک اشتر چوک گمبہ میں ہوا جس میں پاکستان پیپلز پارٹی، پاکستان تحریک انصاف، پاکستان مسلم لیگ نون کےرہنماوں نے بھی شرکت کی۔ آل پارٹیز احتجاجی جلسے سے پی پی پی کے سٹی صدر نثار سرباز، پی ایم ایل این کے سٹی صدر ریاض غازی، پاکستان تحریک انصاف کے رہنماء ذاکر حسین ایڈووکیٹ اور مجلس وحدت مسلمین کے رہنماء مولانامحمد علی واعظی اور شیخ علی محمد کریمی نے خطاب کیا۔

مقررین نے اپنے خطاب میں خالصہ سرکار قانون کی آڑ میں زمینوں پر قبضے کو غیر قانونی اور غیر انسانی عمل قرار دیتے ہوئے مطالبہ کیا کہ بلتستان کی زمینوں کی بندر بانٹ ختم کی جائے۔ اس موقع پراحتجاجی جلسے سے خطاب میں ایم ڈبلیو ایم تحصیل گمبہ کے سیکرٹری جنرل علامہ شیخ علی محمد کریمی نے کہا کہ حکومت اور انتظامیہ ہوش کے ناخن لے اور عوامی زمینوں پر قبضے کی کوشش ختم کرے۔ انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان کی زمینیں کسی سے خیرات میں نہیں لی اور نہ ہی خالصہ سکھ کی جائیداد ہے بلکہ اس زمین کو جانوں کا نذرانہ دیکر حاصل کیا ہے اوریہ یہاں کے عوام کی ملکیت ہے۔عوامی ملکیتی اراضی پر بلامعاوضہ قبضہ ظلم ہے جسے کسی صورت برداشت نہیں کی جائے گی۔ انہوں نے مسلم لیگ نون کے رہنماء کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ یہاں کی زمینوں کو ہتھیانے کے جرم میں انتظامیہ اور صوبائی حکومت برابر کے شریک ہے۔ اس کی روک تھام کے لیےعملی اقدامات اٹھانا ہوگا۔ شیخ علی محمد کریمی نے کہا کہ انتظامیہ نے بلتستان میں بلامعاوضہ قبضے کی کوشش کی تو پورے خطے میں عوامی تحریک چلائی جائے گی اور عوام کو سڑکوں پر لے کے آئیں گے۔ انہوں نے کہا کہ عوام اپنے اندر اتحاد پیدا کریں اور کسی کے بھی عزائم کو کامیاب ہونے نہ دیں۔

وحدت نیوز (ڈی آئی خان) مجلس وحدت مسلمین اور امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن ڈیرہ اسماعیل خان کے زیراہتمام شرافت حسین اور پولیس وین پر ہونے والے حملے کے خلاف، نماز جمعہ کے بعد کوٹلی امام حسینؑ میں احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے ایم ڈبلیو ایم ڈی آئی خان کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل تہور عباس شاہ نے کہا کہ ہم شہر میں ہونے والی دہشتگردی کی بھرپور الفاظ میں مذمت کرتے ہیں، دہشت گردوں کی بزدلانہ کارروائیوں سے ہمارے حوصلے پست ہونے والے نہیں، ہم پویس اور فوج کے ساتھ ہیں، اس جنگ میں مکمل تعاون کا یقین دلاتے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ دہشتگردی کا کوئی مذہب نہیں، ان کاروائیوں میں کبھی شیعہ کبھی سنی، کبھی پولیس اور فوج دہشتگردی کی بھینٹ چڑھتے ہیں، ہمیں مل کر جدوجہد کرنی ہوگی تاکہ اپنے شہر اور اپنے ملک کو امن کا گہوارہ بنا سکیں۔ کوٹلی امام حسینؑ کی اراضی کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ یہ زمین وقف امام حسینؑ ہے اور شیعہ قوم کی پراپرٹی ہے، اس کے ایک انچ پر بھی قبضہ نہیں کرنے دیں گے، اگر ہمیں جانوں کا نذرانہ بھی دینا پڑا تو ہم دریغ نہیں کریں گے۔ ایم ڈبلیو ایم اس حوالے سے ملک گیر احتجاج کرے گی۔ اجتماع سے آئی ایس او کے ڈویژنل صدر نے بھی خطاب کیا۔ انہوں نے کہا کہ ہم حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ دہشتگردوں کو جلد سے جلد گرفتار کیا جائے اور ان کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے۔

وحدت نیوز (کراچی) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کراچی ڈویژن کے رہنما علامہ مبشر حسن نے کہا ہے کہ علامہ مرزا یوسف حسین کو جلد رہا نہیں کیا گیا تو سندھ حکومت کے خلاف چہلم امام حسین کے جلوس میں شدید احتجاج کیا جائے گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جامع مسجد نورایمان کے باہر سندھ حکومت کی جانب سے بزرگ عالم دین علامہ مرزا یوسف حسین کی بے گناہ گرفتاری کیخلاف احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر علامہ بشیر انصاری، علامہ اظہار حسین نقوی، ناصر حسینی، شبیر حسین اور ثمر زیدی سمیت دیگر رہنما بھی موجود تھے۔ علامہ مبشر حسن نے مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ علامہ مرزا یوسف کا جرم دہشت گردوں کی مخالفت کرنا اور مظلوم کی حمایت کرنا ہے، ماضی میں ان پر کئی مرتبہ دہشت گردوں نے حملہ کیا تھا اور اس سے واضح ہوتا ہے کہ دہشت گرد انکے جانی دشمن ہیں، لیکن سندھ حکومت نے جس طرح کا سلوک ان سے کیا ہوا ہے، وہ بھی شرمناک عمل ہے، اس ضعیفی اور بیماری کی حالت میں پس زندان کرنا اور ضمانت دینے میں مشکلات کھڑی کرنا قابل مذمت ہے، وزیراعلیٰ سندھ بتائیں کہ سندھ حکومت کو علامہ مرزا یوسف سے کیا دشمنی ہے، نواز حکومت سے کچھ بھی بعید نہیں، لیکن جمہوریت کا نعرہ لگانے والی جماعت کے اس رویے کو کیا سمجھا جائے۔

علامہ مبشر حسن نے سندھ حکومت سے مطالبہ کیا کہ اتحاد بین المسلمین کے داعی بزرگ شیعہ عالم دین علامہ مرزا یوسف حسین کے خلاف درج کی گئی جعلی ایف آئی آر ختم کرکے انہیں فی الفور رہا کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ کالعدم دہشت گرد تنظیمیں کراچی سمیت ملک بھر میں دندنانی پھر رہی ہیں، وفاقی وزیر داخلہ کالعدم تنظیموں کے سربراہوں سے ملاقاتیں کرکے انہیں فعالیت کی اجازت دے رہے ہیں، ارباب اختیار ان سب کا نوٹس لیں۔انہوں نے کہا کہ اگر حکومت ہمارے مطالبات تسلیم نہیں کرتی تو ہم احتجاج کا دائرہ وسیع کر دینگے اور ملک بھر میں چہلم شہدائے کربلا کے جلوسوں میں سراپا احتجاج ہونگے کیونکہ کربلا نے ہمیں ظلم و خبر کے خلاف قیام کرنا سکھایا ہے، ہماری امن پسند قوم کو زبردستی فرقہ واریت کی آگ میں نہ دھکیلا جائے۔

وحدت نیوز (لاہور) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ راجہ ناصرعباس جعفری کی اپیل پر ملک بھر میں پاراچنار اور نائجیریا میں نہتے پرامن مسلمانوں کے قتل عام کیخلاف یوم احتجاج منایا گیا،اسلام آباد ،لاہور کراچی،کوئٹہ،آزاد کشمیر،گلگت بلتستان کے تمام اضلاع میں نماز جمعہ کے بعد احتجاجی مظاہرے اور ریلیاں نکالی گئیں،لاہور پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرے میں مختلف مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والی شخصیات ،سول سوسائٹی کے کارکنان شریک ہوئے،مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین ،امامیہ سٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان لاہور ڈویژن ،مدارس جعفریہ اور دیگر مذہبی جماعتوں کے اراکین بھی مظاہرے میں شریک تھے،مظاہرے کی قیادت مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی و صوبائی رہنماوُں علامہ ابوذر مہدوی،علامہ محمد اقبال کامرانی،علامہ اسد عباس نقوی،علامہ سید حسین نجفی نے کی۔

مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی رہنما علامہ ابوذر مہدوی کا کہنا تھا کہ دہشت گردی کیخلاف جنگ میں حکمران مخلص نہیں ،نیشنل ایکشن پلان کے نام پر عوام کو بیووقف بنایا جا رہا ہے،دہشت گرد کالعدم جماعتوں کو مکمل آزادی کے ساتھ سیاسی عمل میں شریک کر کے حکمرانوں نے بتا دیا ہے کہ ہمیں ملکی مفادات اور عوامی تحفظ سے کوئی سروکار نہیں،پاراچنار،جیکب آباد اور چھلگری میں ہماری نسل کشی کی گئی،لیکن حکمران ٹس سے مس نہیں ہوئے،ہم اس بات سے بخوبی واقف ہے کہ ہماریہ نسل کشی میں بین الاقوامی قوتیں ملوث ہیں،اور حکمران جماعت ان طاقتوں کے غلام ہیں،داعش،طالبان،النصرہ،بوکوحرام اور لشکرجھنگوی کے سرپرستوں اور فنانسرز کے نام نہاد اتحاد میں شامل ہو کر حکمرانوں نے شہیدوں کے خون سے غداری کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ دنیا جانتی ہے کہ ان دہشت گردوں کی سرپرستی کون کرتا رہا ہے،ناعاقبت اندیش حکمران ملک کو عدم استحکام سے دوچار کرنے کے درپے ہیں،ہم ہر ظلم کے خلاف صدائے احتجاج بلند کرتے رہیں گے،خواہ اس راہ میں ہمیں اپنی جان ہی کیوں نہ دینی پڑے، انہوں نے کہا کہ نائجیریا میں اسلامی موومنٹ کے پرامن مسلمانوں پر اسرائیلی نواز نائجیرین  افواج کا حملہ اور ہزاروں افراد کی بے دردی سے قتل عام کی ہم شدید مذمت کرتے ہیں،ہم حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ اس ظالمانہ اقدام پر نائجیرین حکومت پر سفارتی دباوُڈالیں اور بے گناہوں کے قتل عام پر عالمی تحقیقات کا مطالبہ کریں،اسلامی موومنٹ نائجیریا کے رہنما آیت اللہ زکزکی اور ان کے اہلخانہ کو باحفاظت رہائی دلوانے میں تمام مسلم امہ کو اپنا کردار ادا کرنا چاہیئے،انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں افواج پاکستان اور حکومت کو ایک پیچ پر آنا چاہیئے،جو ہمیں بلکل بھی نظر نہیں آتے۔

مظاہرے سے مجلس وحدت مسلمین پنجاب کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل علامہ محمد اقبال کامرانی نے بھی خطاب کیا ،انہوں نے کہا کہ حکومت اپنے آقاوُں کی خوشنودی کے لئے شیعہ نسل کشی پر خاموش ہے،نیشنل ایکشن پلان کی آڑ میں ہمیں دیوارسے لگایا جارہا ہے،ہم ان سازشوں سے بخوبی واقف ہیں،پنجاب ،سندھ،بلوچستان،خیبر پختونخواہ سمیت گلگت بلتستان میں دہشت گرد کالعدم تکفیری گروہ کی حکومتی سطح پر سرپرستی اس بات کی دلیل ہے کہ شیعہ نسل کشی ایک منظم منصوبے کا حصہ ہے،انشااللہ ہم دشمنوں اس اس ناپاک عزائم کو کامیاب نہیں ہونے دینگے،پاکستان کے دشمن پاکستان کے فطری دفاع ملت تشیع کو ایسے اوچھے ہتھکنڈوں سے مرعوب نہیں کرسکتے،مظاہرین سے انجمن شہریان لاہور کے چیئرمین محمد شفیق رضا قادری،آئی ایس اور لاہورڈویژن کے رہنماوں،مدارس جعفریہ،مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین کے رہنماوں نے بھی خطاب کیا،مظاہرے میں بڑی تعدا میں خواتین ،بچے اور بزرگ افراد شریک تھے ،بعد ازآں مظاہرین پرامن طور پر منتشر ہوئے۔

وحدت نیوز (کراچی) مجلس وحدت مسلمین کراچی،ضلع ملیر اور امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن کے تحت پاراچنارمیں تکفیری خوارج کے خودکش بم دھماکے اور نائیجیریامیں اسرائیل نوازآرمی کے ہاتھوں سینکڑوں شیعہ مسلمانوں کے قتل عام سمیت قائد ملت اسلامیہ نائیجیریاآیت اللہ شیخ ابراہیم زکزکی حفظ اللہ کی بلاجواز گرفتاری کے خلاف احتجاجی مظاہرہ منعقد کیا گیا۔حسینی جامع مسجد برف خانہ ملیرکے باہر احتجاجی مظاہرے سے مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی رہنما علامہ سید احمد اقبال رضوی اورضلعی سیکریٹری جنرل سید احسن عباس رضوی نے خطاب کیا، اس موقع پر مظاہرین کی بڑی تعداد موجود تھی ،جنہوں نے ہاتھوں میں پرچم ، بینراور پلے کارڈاٹھارکھے تھے، جن پر مظلوموں کی حمایت اور ظالموں کے خلاف نعرے درج تھے۔ مقررین نے پاراچنارکے محب وطن پاکستانیوں پر تکفیری دہشت گردوں کے مظالم اور نائیجرین آرمی کے ہاتھوں سینکڑوں بے گناہ شیعہ مسلمانوں کے قتل عام کی پر زور الفاظ میں مذمت کی۔

وحدت نیوز (کراچی) نائیجیریا میں اسرائیل نواز افواج کے ہاتھوں مسلمانوں کا قتل عام ریاستی دہشت گردی کی بدترین مثال ہے، نائیجیریا حکومت اسلامی تحریک کے سربراہ شیخ ابراہیم زکزکی اور ان کے اہل خانہ کو فی الفور رہا کرے اور تحفظ فراہم کرے۔ ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی رہنماؤں مولانا اعجاز بہشتی، مولانا احمد اقبال رضوی، مولانا باقر زیدی اور امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کراچی کے صدر یاور عباس سمیت ایم ڈبلیو ایم کے رہنماؤں مولانا علی انور جعفری، علامہ مبشر حسن، سید میثم رضا، حسن ہاشمی نے کراچی پریس کلب کے باہر نائیجیریا کے مسلمانوں سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے نائیجیریا کی اسرائیل نواز فوج کے خلاف احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر مظاہرین کی بڑی تعداد موجود تھی جن کے ہاتھوں میں بینرز اور پلے کارڈز موجود تھے، جن پر اسلامی تحریک نائیجیریا کے سربراہ شیخ ابراہیم زکزکی کی رہائی کے مطالبے سمیت اسرائیل نواز نائیجیرین فوج کے خلاف نعرے آویزاں تھے۔ یاد رہے کہ 12 دسمبر کو زاریا شہر میں اسرائیل نواز نائیجیرین فوج نے بھاری ٹینکوں اور گولہ بارود کے ساتھ شہریوں کو ریاستی دہشت گردی کا نشانہ بنانا شروع کیا تھا اور تیس گھنٹوں تک جاری سفاکانہ دہشت گردی میں 6 ہزار سے زائد معصوم انسانوں کو موت کی نیند سلا دیا گیا تھا۔

مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے مقررین کا کہنا تھا کہ نائیجیریا کے مظلوم مسلمانوں اور بالخصوص اسلامی تحریک کے سربراہ شیخ ابراہیم زکزکی کا قصور یہ ہے کہ انہوں نے ہمیشہ فلسطینیوں کی حمایت کی ہے اور غاصب اسرائیل اور اس کی سرپرست قوتوں امریکہ اور برطانیہ کے خلاف صدائے احتجاج بلند کی ہے، تاہم مظلوم فلسطینیوں کی حمایت کے اس جرم میں شیخ ابراہیم زکزکی نے اپنے پانچ فرزندوں کی قربانی دی ہے اور آج خود بھی اسرائیل نواز نائیجیرین افواج کے ہاتھوں ریاستی دہشت گردی کا نشانہ بنے ہوئے ہیں۔ رہنماؤں نے نائیجیریا میں جاری ریاستی دہشت گردی پر عالمی برادری کی مجرمانہ خاموشی سمیت ذرائع ابلاغ کی جانب سے خاموشی اور سکوت کی شدید الفاظ میں مذمت کی اور کہا کہ آج اگر یہی واقعہ کسی یورپی یا مغربی ممالک میں رونما ہوتا تو یہ ذراع ابلاغ، انسانی حقوق کے ادارے اور عالمی برادری پوری دنیا کو تگنی کا ناچ نچوا دیتے لیکن کیونکہ یہ ریاستی دہشت گردی نائیجیریا میں مظلوم اور نہتے مسلمانوں پر ہوئی ہے اس لئے پوری دنیا خواب خرگوش میں ہے۔

انہوں نے کہا کہ نائیجیریا حکومت کو چاہئیے کہ اسرائیل نواز آرمی کی مدد سے بنائے جانے والے دہشت گرد گروہ بوکو حرام کے خلاف سخت اقدامات کئے جائیں نہ کہ ملک کے پر امن باسیوں کا بڑے پیمانے پر قتل عام کیا جائے۔ انہوں نے نائیجیریا کی حکومت اور افواج کو پیغام دیتے ہوئے کہا کہ اگر اسلامی تحریک نائیجیریا کے سربراہ شیخ ابراہیم زکزکی کو فی الفور رہا نہ کیا گیا اور مسلمانوں کے قتل عام کا سلسلہ بند نہ ہوا تو پاکستان بھر میں احتجاج کا دائرہ وسیع کر دیں گے اور نائیجیریا کے سفارت خانے کا گھیراؤ بھی کیا جائے گا۔ اس موقع پر مظاہرین نے امریکہ مردہ باد، اسرائیل نامنظور، دہشت گردی مردہ باد اور شیخ ابراہیم زکزکی کو رہا کرو کے نعرے بھی لگائے اور اس موقع پر امریکی اور اسرائیلی پرچم کو بھی نذر آتش کیا گیا۔

Page 8 of 16

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree