وحدت نیوز (اسلام آباد ) بلوچستان کے ضلع بولان میں عیدمنانے جانے والے مزدوروں کا بہیمانہ قتل شرمناک فعل ہے ، اس کی جتنی مزمت کی جائے کم ہے ، ہماری سول اور ملٹری لیڈر شپ شتر مرغ کی مانند منہ زمین میں دے کہ یہ نہ سمجھیں کہ پاکستان کا استحکام ، پاکستان کی اسا س ، پاکستان کا وجود ، یایہ لوگ خود ان سفاک دہشت گردوں سے محفوظ ہیں ۔اتنے خون خرابے کے بعد پاکستان کے تمام بااختیار اداروں کے ذمہ داروں کو ہوش میں آجانا چاہیئے ۔ پروکسی وار پروکسی وار کا راگ الاپنے والے بتائیں بلوچستان کے سہرا میں شہید ہو نے والے یہ بیگناہ مزدورکن ممالک کی پروکسی وار کے نتیجے میں مارے گئے ؟ ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے وحدت ہاؤس جاری اپنے مذمتی بیان میں کیا ۔

ان کا کہنا تھا کہ بلوچستان سمیت پو رے پاکستان میں کہیں بھی فرقہ واریت نہیں ہے ، بلکہ یہ ایک منظم دہشت گردی ہے ، جس کا مقصد پاکستان کو بین الاقوامی سطح پر ایک سکیورٹی اسٹیٹ قرار دلوانا ہے ، کبھی یہ درندہ صفت دہشت گرد مذہب کے نام پر بیگناہوں کا قتل عام کر تے ہیں تو کبھی زبان کو بنیاد بنا کر سر تن سے جدا کیئے جاتے ہیں ، پاکستان میں درندگی کی وہ مثالیں قائم کی گئیں ہیں جن کی نظیر تاریخ بشریت میں کم ہی ملتی ہیں ، جس قدر بربر یت کا مظاہرہ یہ دہشت گرد کر رہے ہیں ہمارے ، فوجی اور سول ادارے انہیں اس قدر ہی چھوٹ فراہم کر ہے ہیں ۔ غریب عوام کے ٹیکس پر پلنے والی فوجی اور سول لیڈر شپ کا کام صرف ملک کی تباہی اوربربادی کا تماشہ دیکھنا ہے ۔

ان کا کہنا تھا کہ ٹی وی ٹاک شوز میں آکر پاکستان میں جاری دہشت گردی کو دو پڑوسی ممالک کی پروکسی وار کا ٹائٹل دینے والے اینکر پرسنزاور نام نہاد سیاسی رہنماء پاکستانی قوم کو بتائیں کہ بلوچستان کے سہرا میں شہید ہو نے والے یہ بیگناہ 15مزدورکن پڑوسی ممالک کی پروکسی وار کے نتیجے میں مارے گئے ؟دہشت گردوں کی شناخت کے باوجود ان کے خلاف کوئی کاروائی نہ کر نا انتہائی افسوسناک پہلو ہے ، ایسا محصوص ہو تا ہے کہ اس ملک کو دہشت گردوں کے ہاتھوں ٹھیکے پہ دے دیا گیا ہے ۔ان کا مزید کہنا تھا کہ ہم نے ہمیشہ دہشت گردی کی مذمت اور دہشت گردوں کو بے نقاب کیا ہے ہم یہ کام دینی وظیفہ سمجھ کر انجام دیتے رہیں گے ، کیوں کے ہم ہر مظلوم کے حامی اور ہر ظالم کے دشمن ہیں ۔

وحدت نیوز (اسلام آباد)  مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ ناصر عباس جعفری (حفظ اللہ ) نے علامہ مظہر حسین کاظمی اور علامہ احمد اقبال رضوی کو اپنی کابینہ میں شامل کرلیا ہے۔ ایم ڈبلیو ایم کی مرکزی کابینہ کا اجلاس رات گئے اسلام آباد میں جاری رہا، جس میں علامہ احمد اقبال رضوی شعبہ تربیت جبکہ علامہ مظہر حسین کاظمی شعبہ تعلیم کے مسئول بنا دیئے گئے۔

 اجلاس میں علامہ ناصر عباس جعفری، علامہ اعجاز حسین بہشتی، علامہ ابوذر مہدوی، ناصر عباس شیرازی، علی مہدی، علامہ مبارک موسوی، علامہ مظہر حسین کاظمی اور علامہ احمد اقبال رضوی ۔ ملک اقرار حسین سمیت دیگر کابینہ کے ممبران شریک تھے۔

مرکزی کابینہ کے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ برسی قائد شہید علامہ عارف حسین الحسینی کا اسلام آباد میں منعقد ہونے والا ملک گیر اجتماع 25 اگست کے بجائے آٹھ ستمبر کو منعقد کیا جائے گا۔ اس حوالے سے کمیٹیاں بھی قائم کر دی گئیں، جو برسی کے امور کو دیکھیں گی۔ اجلاس میں گذشتہ ماہ کی کارکردگی کا جائزہ لیا گیا اور آئندہ کا لائحہ عمل ترتیب دیا گیا۔

وحدت نیوز (کراچی ) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی رہنماء علامہ شیخ اعجاز حسین بہشتی نے بارش سے متاثرہ امروہہ سوسائٹی ، سعدی ٹاؤن ،سچل گوٹھ ، جلبانی گوٹھ، صومار کڈھانی گوٹھ کھوکراپار کے بارش سے متاثرہ علاقوں کا دورہ کیا اور امدادی کیمپس کا معائنہ بھی کیا، ایم ڈبلیوایم کے رضاکاروں نے امدادی سرگرمیاں شروع کردیں، لوگوں کومحفوظ مقام پر منتقل کیاگیاجبکہ ان علاقوں میں بڑی تعداد میں روزہ داروں کیلئے افطار اور کھانے کا انتظام کیا گیا۔اس موقع پر ایم ڈبلیو ایم کراچی ڈویژن کے رہنماء علامہ دیدار جلبانی ، علامہ علی انور، علی حسین نقوی ، انجینئر رضا نقوی بھی ہمراہ تھے۔

مجلس وحدت مسلمین کراچی کے شعبہ فلاح و بہبود خیر العمل فاؤنڈیشن نے شہر میں شدید بارش سے متاثرہ علاقوں میں امدادی سرگرمیاں شروع کردیں، متاثرین کی محفوظ مقامات پر منتقلی کا کام جاری ہے جبکہ بڑی تعدادمیں متاثرین کے لیے افطاراورکھانے کا بھی انتظام کیا گیا۔ کھوکھراپار اور امروہہ سوسائٹی میں ریلیف کیمپس بھی لگا دئیے گئے ہیں جہاں عوام الناس سے متاثرین کی مدد کے لئے کپڑے ، دودھ ، خشک غزائی اشیاء ، صاف پانی اور نقد امداد جمع کرانے کی اپیل کی گئی ہے ۔

وحدت نیوز ( اسلام آباد) قائد ملت جعفریہ پاکستان شہید علامہ سید عارف حسین الحسینی (رہ) کی 25ویں برسی آج ملک بھر میں انتہائی عقیدت و احترام کیساتھ منائی گئی۔ مجلس وحدت مسلمین کے سربراہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری (حفظ اللہ) کی ہدایت پر ملک کے مختلف اضلاع و یونٹس میں تعزیتی اور دعائیہ تقریبات اور مجالس عزا ء منعقد کی گئیں ،شہید کو شاندار الفاظ میں خراج تحسین پیش کیا گیا ، مقررین نے شہید قائد علامہ عارف حسین الحسینی (رہ ) کی قومی و ملی خدمات اور ان کی قربانیوں اور ایثار پر روشنی ڈالی۔اس موقع پر اعلان کیا گیا کہ شہید کی برسی کا ملک گیر اجتماع 25 اگست کو اسلام آباد میں منعقد ہوگا۔

واضح رہے کہ علامہ سید عارف حسین الحسینی کو 5 اگست 1988 بروز جمعہ پشاور میں ان کے مدرسہ جامعہ معارف الاسلامیہ میں نماز فجر کے موقع پر اسلام و پاکستان دشمنوں نے فائرنگ کرکے شہید کر دیا تھا، شہید علامہ عارف حسین الحسینی نے اپنے ساڑھے چار سالہ دور قیادت میں ملک و ملت کیلئے بھرپور خدمات انجام دیں۔ آپ پاکستان میں اتحاد بین المسلمین کے بانی شمار ہوتے ہیں۔

وحدت نیوز (اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین کے سربراہ علامہ ناصر عباس جعفری نے کہا ہے کہ وہ اس بات پر حیران ہیں کہ پاک فوج کے سربراہ جنرل کیانی کو نیند کیسے آجاتی ہے، جس کے ہر روز دس سے پندرہ فوجیوں کو شہید کیا جا رہا ہے، انہوں نے استفسار کیا کہ جنرل کیانی صاحب قوم اور اپنے فوجی جوانوں کو بتائیں کہ آپ کی تین سال کی توسیع سے انہیں کیا ملا ہے۔؟ ڈی آئی خان جیل پر حملہ نے پاک فوج سمیت تمام اداروں کے رسپانس نہ کرنے پر انہیں سوالیہ نشان بنا دیا ہے۔ ریاستی اداروں کے اس عمل سے قوم اور فوجی جوانوں میں دن بدن مایوسی بڑھتی جا رہی ہے۔ غیر ریاستی عناصر حملے جاری رکھنے کا اعلان کر رہے ہیں تو دوسری جانب خاموشی چھائی ہوئی ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے اسلام آباد کے ایک مقامی ہوٹل میں ایم ڈبلیو ایم میڈیا سیل کی جانب سے صحافیوں کے اعزاز میں دیئے گئے افطار ڈنر سے خطاب کر تے ہو ئے کیا۔

ایم ڈبلیو ایم کے سربراہ کا کہنا تھا کہ دشمن یہی چاہتا ہے کہ پاکستان میں مایوسی دن بدن پروان چڑھے، کیونکہ طاقتور پاکستان کسی صورت امریکہ، بھارت، اسرائیل اور عرب ممالک کو سوٹ نہیں کرتا، جبکہ فوج کو بھی طاقتور سیاسی قوت سوٹ نہیں کرتی ہے، جتنا پاکستان کمزور ہوگا اتنا ہی ان طاقتوں کا فائد ہوگا۔ دشمن پاکستان کی ایٹمی صلاحیت سے خوفزدہ ہے، کیونکہ اگر اس ملک میں طاقتور لیڈرشپ وجود میں آگئی تو ایٹمی صلاحیت کا حامل پاکستان دنیا بھر میں اہم کردار ادا کرنا شروع کردیگا، لہٰذا اسی وجہ سے اسے کمزور کرنے کی سازشیں بنی جا رہی ہیں۔

مرکزی سیکرٹری جنرل کا کہنا تھا کہ ڈاکٹر، انجنیئرز، وکلاء، کسان اور صحافی حضرات سمیت مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد دراصل مختلف صلاحتیوں اور ضرورتوں کا نام ہیں، ان تمام صلاحیتوں کو آپس میں اکٹھا کیا جائے تو معاشرہ وجود میں آتا ہے، اگر ان کے درمیان بہترین تعلق قائم ہو اور ہر فیلڈ کا بندہ اپنے دائرہ کار میں رہتے ہوئے کام کرے تو بہترین معاشرہ وجود میں آتا ہے، اگر افراد اور ادارے اپنے دائرہ کار سے تجاوز کریں اور انہیں روکنے والا قانون عمل میں نہ آئے تو معاشرہ کمزور ہوتا ہے اور ملک میں انارکی جنم لیتی ہے۔ معاشرے کے ان طبقات کو اپنی حدود میں رکھنے کیلئے قانون بنایا جاتا ہے، عدلیہ اپنا کام کرتی ہے اور مجریہ اپنا کام، ان کے فنکشنل ہونے سے ہی ریاست کا ماں جیسا روپ سامنے آتا ہے۔
 
لیکن آج افسوس کیساتھ کہنا پڑتا ہے کہ ہماری ریاست ماں جیسا کردار ادا کرنے میں مکمل طور پر ناکام ہوتی جا رہی ہے، صورتحال سب کے سامنے ہے کہ اس ملک میں کوئی بھی محفوظ نہیں رہا۔ قاتل آزاد ہیں، شیعہ ہو، سنی ہو یا صحافی کوئی بھی اب دہشتگردوں سے محفوظ نہیں رہا۔ اگر یہی صورتحال برقرار رہی تو آئند چند ماہ پاکستان کیلئے انتہائی بھاری ثابت ہونگے۔ ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف اور عمران خان کی خاموشی نے قوم کو مایوس کیا ہے۔ ایک وفاق میں بیٹھا ہوا ہے تو دوسرا صوبائی حکومت چلا رہا ہے۔ لیکن ڈی آئی خان واقعہ کے بعد دونوں اطراف سے خاموشی چھائی ہوئی ہے۔ نواز حکومت کے پہلے دو ماہ نے ثابت کر دیا ہے کہ ان کے الیکشن سے پہلے کے تمام دعوے دم توڑ چکے ہیں۔

وحدت نیوز (لاہور) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے زیراہتمام سفیر خط ولایت، مرحوم آغا سید علی الموسوی کی پہلی برسی پر اْن کی ملی خدمات کو خراج تحسین پیش کرنے کیلئے لاہور کے ایمبسیڈر ہوٹل میں سیمینار بعنوان ''آغا علی الموسوی ایک عہد ساز شخصیت'' کا انعقاد کیا گیا، جس میں جوانوں ، بزرگوں سمیت خواتین نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ سیمینار سے مجلس وحدت مسلمین کے سربراہ علامہ ناصر عباس جعفری، امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کے صدر اطہر عمران سمیت دیگر نے خطاب کیا اور آغا علی موسوی کی ملی خدمات کو خراج عقیدت پیش کیا۔

 

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree