وحدت نیوز(بلتستان) مجلس وحدت مسلمین پاکستان بلتستان ڈویژن کے زیراہتمام ملک بھر میں جاری دہشتگردی، شیعہ نسل کشی، کراچی میں علامہ مرزا یوسف یوسف حسین پر لسانی جماعت کی جانب سے قاتلانہ حملہ، بلدیاتی امیدواروں کے قتل اور گلگت میں سانحہ چلاس کے مجرمین کی رہائی کے خلاف احتجاجی ریلی نکالی گئی۔ احتجاجی ریلی مرکزی جامع مسجد اسکردو سے شروع ہو کر یادگار شہداء اسکردو پر مقررین کی تقاریر کے بعد اختتام پذیر ہوئی۔ ریلی سے علامہ آغا علی رضوی، شیخ احمد علی نوری اور علامہ سید مظاہر حسین موسوی نے خطاب کیا۔ مقررین نے اپنے خطاب میں کہا کہ حکومت ملک بھر میں جاری دہشت گردی کو روکنے میں سنجیدہ نہیں، حکومت ہوش کے ناخون لے اور محب وطن شہریوں کی حفاظت کو یقینی بناتے ہوئے دہشت گردوں کا گھیرا تنگ کرے، کراچی میں ایم ڈبلیو ایم کے بلدیاتی امیدواروں کو دن دھاڑے گولیاں مار کر قتل کر دیا گیا، کسی کے کان پر جوں تک نہ رینگی، کراچی میں ایک مخصوص قبضہ مافیا ایم ڈبلیوایم کی سیاسی فعالیت سے خوف زدہ ہے، اگر اس نام نہاد حق پرست ٹولے ان اپنی صفوں میں موجود تکفیری دہشت گردوں کو نکال باہر نہ کیا تو ایم ڈبلیو ایم عالمی سطح پر اس دہشت گرد لسانی جماعت کے خلاف آواز حق بلند کر نے پر مجبور ہوگی۔

وحدت نیوز( لاہور) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ راجہ ناصرعباس جعفری کی اپیل پر ملک میں جاری شیعہ نسل کشی کیخلاف لاہور،فیصل آباد،راولپنڈی،اٹک،جہلم،گجرات،میانوالی،مظفرگڑھ،،ملتان،خانیوال،جھنگ،سرگودہا،رحیم یارخان،کوٹ ادو،ڈیرہ غازی خان،ساہیوال،پاکپتن،بہاولپورسمیت پنجاب کے دیگر شہروں میں بھی احتجاجی مظاہرے ہوئے۔ لاہور میں احتجاجی مظاہرہ پریس کلب لاہور کے سامنے ہوا جس کی قیادت علامہ امتیاز کاظمی سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین ضلع لاہور نے کی مظاہرے میں مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی رہنما ،علامہ ا حمد اقبال رضوی ،علامہ سید جعفر موسوی سمیت دیگر رہنماوُں نے شرکت کی مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے علامہ سیدجعفر موسوی کا کہنا تھا کہ پاکستان میں منظم منصوبہ بندی کیساتھ ہمارے خلاف محاذ بنایا جارہا ہے کیونکہ دشمن کو یہ معلوم ہیں کی ملت جعفریہ کے ہوتے ہوئے پاکستان میں اُن کے مذموم عزائم کھبی کامیاب نہیں ہوسکتے کراچی میں ہمارے شہدا ء کے لہو سے تکفیریوں کیساتھ لسانی جماعت کے دہشت گردوں کے ہاتھ بھی رنگے ہوئے ہیں ہم متحدہ قاتل مومنٹ کو وارننگ دیتے ہیں کہ وہ ہمارے بلدیاتی امیدواروں کے قاتل قانون کے حوالے کریں بصورت دیگر دنیا بھر میں اُن کو رسوا کیاجائے گا۔


پاکستان میں ملت تشیع کے ہزاروں افراد کو گذشتہ سال میں شہید کیا گیا نئے سال کے پہلے دد دن میں 6شیعہ افراد شہید اور 36سے زائد زخمی کیے لیکن آج تک ہمارے شہدا کے قاتلوں کا سراغ نہیں ملا ۔اُن کا کہنا تھا کہ ہم سمجھتے ہیں کہ ہمارے قاتل اس دور کے حکمران ہیں جن کے دور حکمرانی میں ہماری نسل کشی ہوئی موجود ہ دور کے حکمرانوں نے قاتلوں کو شیعہ نسل کشی کے لئے فری ہینڈ دے دیا ہے ہم اب پاکستان کے حکمران ،عدلیہ اور سلامتی کے دیگر اداروں سے نااُمید ہو گئے ہیں اب ہم عالمی سطح پر پاکستان میں جاری شیعہ نسل کشی پر آواز اُٹھانے پر مجبور ہوگئے ہیں ہمیں پاکستان بنانے کی سزا دی جارہی ہیں۔


مظاہرین سے علامہ امتیاز کاظمی نے بھی خطاب کیا ہزاروں پاکستانیوں اور سیکورٹی فورسز کے قاتل طالبان سے مذاکرات کو ہم مسترد کرتے ہیں۔ پاکستانی بزدل حکمرنوں کو اگر قوم کی سیکورٹی کا خیال نہیں تو عوام کو دفاع کا حق دیا جائے۔ بصورت دیگر وہ وقت دور نہیں جب ان مظلوم محب وطن عوام کے ہاتھ غاصب حکمرانوں کے گریبان تک پہنچیں۔ انہوں نے کہا کہ کوئٹہ میں زائرین امام رضا ؑ کو نشانہ بنانے والے ملکر دشمن تکفیری درندوں کیخلاف صوبائی و وفاقی حکومت کا کوئی قدم نہ اٹھانا اس بات کی دلیل ہے کہ ان تکفیریوں کی سرپرستی کوئی اور نہیں ہمارے ہی ملک دشمن حکمران کررہے ہیں کراچی میں سیکورٹی ذرائع کے مطابق گذشتہ چار برسوں سے کراچی میں شیعہ مسلک سے تعلق رکھنے والے معتبرین، قومی و ملی شخصیات کے قتل عام میں ایم کیو ایم میں شامل تکفیری کارکن ملوث ہیں، جن کی نشاندہی بار ہا خفیہ ادارے کر تے رہے ہیں، لیکن قانون نافذ کرنے والے اداروں نے ان دہشت گردوں کے خلاف کوئی کارروائی کی اور نہ ہی ایم کیو ایم کی قیادت نے اس پر کوئی سنجیدگی دکھائی۔ ان لسانی تکفیری دہشت گرد گروہ کے ہاتھوں اب تک شہید علامہ آغا آفتاب جعفری، شہید استاد پروفیسر سبط جعفر زیدی، شہید علامہ دیدار جلبانی، شہید عالم ہزارہ، شہید صفدر عباس، شہید علی شاہ سمیت بے شمار شخصیات کو نشانہ بنایا گیا جبکہ اب بھی مختلف علاقوں میں شیعہ تنظیمی شخصیات کو مسلسل جان سے مارنے کی دھمکیوں کا سلسلہ جاری ہے مظاہرین ملک میں جاری دہشت گردی کیخلاف پلے کارڈ اٹھائے نعرہ بازی کرتے رہے بعد میں پرامن طور پر منتشر ہوئے

وحدت نیوز(بلتستان) مجلس وحدت مسلمین پاکستان بلتستان ڈویژن کے سیکرٹری جنرل علامہ آغا علی رضوی نے کوئٹہ میں زائرین کی بس پر حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ملک بھر میں جاری دہشت گردانہ واقعات اور حملوں کی تمام تر ذمہ داری وفاقی حکومت پر عائد ہوتی ہے۔ اگر حکومت دہشت گردوں کے ساتھ مذاکرات اور یارانہ مراسم رکھنے کے بجائے آہنی ہاتھوں سے نمٹتی تو نہ دہشت گردوں کے حوصلے بلند ہوتے اور نہ اس طرح کے افسوسناک واقعات پیش آتے۔ لیکن بزدل اور طالبان نواز حکومت نے اپنی کرسی کو بچانے کے لئے ملک دشمنوں، انسانیت دشمنوں اور اسلام دشمنوں کو گلے سے لگانے کی ٹھانی ہے، جس کے نتیجے میں دہشت گردوں کے حوصلے بلند ہوگئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ملک کے سکیورٹی ادارے اور خفیہ ادارے خاموش تماشائی بننے کے بجائے ملک دشمنوں کا گھیرا تنگ کریں۔ کوئٹہ میں زائرین کی بس پر حملہ سکیورٹی اداروں کی غفلت کا نتیجہ ہے۔

وحدت نیوز (کراچی) ہمارے شہداء ہماری عزت ہیں، ہم ان کی یاد کو ہمیشہ زندہ رکھیں گے، شہید عالم ہزارہ، شہید صفدر عباس اور شہید سید علی شاہ کا بے گناہ خون انشاء اللہ ضرور رنگ لائے گا اور لسانی دہشت گرد دنیا بھر میں تنہائی کا شکار ہوکر رسوا ہوں گے۔ ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی رہنما علامہ اعجاز حسین بہشتی نے مغل ہزارہ گوٹھ کراچی میں ایم ڈبلیو ایم کے شہید ہونے والے بلدیاتی امیدواروں کی مجلس سوئم کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ شہداء نے اپنے خون کے ذریعے ہمارے لئے راستہ فراہم کیا ہے ، یہ وہ راستہ ہے کہ جس کا مرکز و محور کربلا ہے، انشاء اللہ پاکستان میں بسنے والے تمام شیعان اہل بیت (ع) اپنے شہداء کے نقش قدم پر چلتے ہوئے کربلا کے راستے کو ہمیشہ زندہ رکھیں گے اور اس راہ میں ہر قسم کی قربانی دیں گے۔

 

علامہ اعجاز بہشتی کا مزید کہنا تھا کہ سانحہ پنڈی کے بعد دشمن نے سازش کی ہمیں اہل سنت کے ساتھ دست و گریباں کیا جائے لیکن ہم علامہ راجہ ناصر عباس جعفری اور دیگر علماء کو سلام پیش کرتے ہیں کہ جنہوں نے دہشت گردوں کے عزائم کے آگے قیام کرکے ملت جعفریہ کو میدان میں حاضر رہنے کا درس دیااور یہ ثابت کیا کہ دشمن کی تمام سازشوں کے خلاف پاکستان کے شیعہ و سنی متحد ہیں، جس طرح اہل سنت برادران نے چہلم امام حسین (ع) میں شرکت کرکے تکفیری دہشت گردوں کو مایوس کیا ہے ، اس ہی طرح پاکستان بھر کے شیعہ میلاد النبی (ص) کے اجتماعات میں اپنی شرکت سے تکفیریوں کو مایوس کریں گے۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) الائنس آف پیٹریاٹ میں شامل مجلس وحدت مسلمین پاکستان،سنی اتحاد کونسل پاکستان،وائس آف شہدائے پاکستان کے رہنماوُں سید نا صرشیرازی سیکرٹری سیاسیات مجلس وحدت مسلمین، صاحبزادہ حامد رضا، چیئرمین سنی اتحاد کونسل،سینٹر فیصل رضا عابدی، ترجمان وائس آف شہدائے پاکستان و رہنما پاکستان پیپلزپارٹی نے اسلام آباد پریس کلب میں مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج اس پریس کانفرنس کا مقصد حکومت پر یہ واضح کرنا ہے، ہم ایسی کسی کوشش کو کامیاب نہیں ہونے دیں گے جس کا مقصد آئین پاکستان سے بلا تر ہوکر کسی دہشتگرد، آئین پاکستان مخالف اورقومی اداروں کے وجود کی منکر قوت کو تسلیم کرنا ہو یا اس کے ایجنڈے کو قبول کرنا ہو، ہم طالبان سے حکومتی مذاکرات کی مخالف کرتے ہیں اور مطالبہ کرتے ہیں کہ فی الفور حکومت شہدائے پاکستان کے لواحقین سے مذاکرات کرے اور انہیں یقین دلائے کہ وطن عزیز کی جغرافیائی سرحدوں کی حفاظت کیلئے جام شہادت نوش کرنے والے وطن کے بیٹوں کے ناحق خون سے بے وفائی نہیں برتی جائے گی۔ ہم حکومت کی طرف سے طالبان کو سیاسی عمل میں اعلانیہ شامل کرنے کی مذمت کرتے ہیں اور اسے شہداء پاکستان کے خون سے غداری تصور کرتے ہیں۔


مشترکہ پریس کانفرنس میں رہنماوں کا کہنا تھا کہ ہم واضح کرتے ہیں کہ اگر ان مذاکرات کے نتیجے میں ملک میں طالبانی نظام رائج کرنے کی کوشش کی گئی تو عاشق مصطفی ملک کے پورے نظام کو جام کرکے رکھ دیں گے۔ ہم ایسی سوچ اور افراد کی مذمت کرتے ہیں جو یہ کہتے ہیں کہ ملک میں دہشتگردی سے نہیں نمٹا جاسکتا۔ حکومت طالبان سے مذاکرات کا ڈرامہ ختم کرے اور دہشتگردوں سے نمٹنے کیلئے اپنی ول اور لڑنے کا اعلان کرے، پوری قوم حکومت کے اس عمل کی حمایت کریگی۔


پریس کانفرنس میں مشترکہ اعلان بھی کیا گیا کہ5 جنوری کو اسلام آباد کے کنونشن سینٹر میں ’’قومی امن کانفرنس‘‘ہوگی جس میں دہشتگردی کا نشانہ بننے والے فوجی جوانوں، سوئلینز، وکلاء، مسیحی برادری ، صحافی حضرات اور دہشتگردوں کا نشانہ بننے والے مختلف مکاتب فکر کے شہداء کے ورثاء شرکت کرینگے اور اس ناسور کیخلاف اعلان جہاد کرینگے۔اس کانفرنس میں دہشتگردی سے نمٹنے کا واضح راہ حل پیش کیا جائے گا اور قومی اتحاد کا فقیدالمثال مظاہرہ کیا جائیگا۔

وحدت نیوز(اسلام آباد)نئے سال کے آغاز پر حکومتی نا اہلی کے نئے دور کا بھی آغاز ہو گیا ہے ، کوئٹہ میں زائرین امام رضا علیہ السلام کی بس پر خودکش حملہ نواز حکومت کے لئے ڈوب مر نے کا مقام ہے، جو حکمران نہتے عوام کی جان و مال کا تحفظ نہیں کر سکتے انہیں مسند اقتدار پر بیٹھنے کا کو ئی حق نہیں ، ہمارے صبر کا مذید امتحان نہ لیاجائے ، ہمارا صبر حکومت کو مہنگا پڑے گا، وزیر اعلیٰ بلوچستان ہوش میں آجائیں ، رئیسانی کو گھر گئے زیادہ عرصہ نہیں ہو ا، درندہ صفت دہشت گردوں نے خواتین اور معصوم بچوں کو بھی نہیں بخشا۔ ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکریٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کوئٹہ کے نذدیک زائرین کی بس پر ہو نے والے خودکش حملے کے خلاف اپنے مذمتی بیان میں کیا ۔


ان کا کہنا تھا کہ سال 2013کا اختتام اور سال 2014کا آغاز ہمیں خاک و خون نہلا کر کیا گیا ، گذشتہ تیس سال میں ہمارے ہزاروں بے گناہ لوگوں کو کافر کا نعرہ لگا کر شہید کیا گیا ، مرد و خواتین کے ساتھ ساتھ معصوم بچے بھی بربریت کی بھینٹ چڑھائے گئے ، کبھی شناختی کارڈ دیکھ کر ہمارے ہم مسلک و ہم عقیدہ لوگوں کو بسوں سے اتار اتار کا مارا گیا ، اتنے مصائب کا سامنا کر نے کے باوجود ہم نے کبھی ریاست ، فوج ، حکومت کے خلاف کو ئی اقدام نہیں کیا، حکومت نے ہمیشہ ہماری حب الوطنی پر شک کیا ، ہمارے اور ہو نے والے مظالم پر زبان کھولتے ہو ئے حکمرانوں کو شرم آتی ہے ، انہوں نے حکومت کو متنبہ کر تے ہو ئے کہا کہ نواز شریف اور ڈاکٹر عبد المالک ہمیں مجبود نہ کریں کے ہم کبھی نہ ختم ہو نے والے احتجاجی تحریک کا آغاز کر دیں ، جو حکمران دہشت گردوں سے خوف کھاتے ہو ں ، انہیں بھتہ دیتے ہوں ، لاشوں کے بدلے انہیں مستقل مذاکرات کی دعوت دیتے ہوں ، عوام کی جان و مال کا تحفظ ان کے بس کی بات نہیں ، اسے تمام حکمران اقتدار کو خیر باد کہہ کر وزیرستان منتقل ہو جائیں ، ان خوف زدہ حکمرانوں کی مظلوم عوام کو نہیں دہشت گردوں کا زیادہ ضرورت ہے۔


انہو ں نے کہاکہ کراچی سے لیکر گلگت تک اور کوئٹہ سے لیکر پاراچنار تک دہشت گرد مراکز موجود ہیں ، جب تک دہشت گردوں کے مراکز کو تباہ نہیں کیا جائے گا ، شہریو ں کے ہنستے بستے گھر تباہ ہو تے رہیں گے، غیر ملکی ایجنسیوں سے فنڈز لے کر پاکستان کو غیر مستحکم کر نے کی کوششیں کی جارہی ہیں ، اٹھارہ کروڑ عوام ان خائن حکمرانوں سے مایوس ہو چکے ہیں، پاک فوج اپنا قومی کردار ادا کرے اور عوام کو دہشت گردوں کے اس بے قابو جن سے نجات دلائے ۔

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree