وحدت نیوز (گلگت) بابر حیات جان لیں ہم تسلیم کریں توچیف سیکرٹری ورنہ تمہاری حیثیت ایک آوارہ پردیسی کے سوا کچھ نہیں۔صوبائی حکومت ہتک آمیز رویے پر چیف سیکرٹری کو فوراً علاقہ بدر کرے۔گلگت بلتستان کے عوام کے ساتھ توہین آمیز سلوک قطعاً برداشت نہیں کرینگے۔ مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان کے ترجمان محمد الیاس صدیقی نے چیف سیکرٹری کے رویے کی سخت مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ گلگت بلتستان متنازعہ خطہ ہے او رچیف سیکرٹری کو ٹیکس کے معاملے میں عوام سے بدتمیزی کرنے کا حق کس نے دیا ہے۔ ستر سالوں سے ملک سے محبت اور وفاداری کا یہ صلہ دیا جارہا ہے کہ ایک گائناکالوجسٹ کی تعیناتی کا مطالبہ کرنے پر طوفان بدتمیزی برپا کیا جائے۔گلگت بلتستان کے جیسے وفادار عوام مملکت خداداد پاکستان کو کہیں اور نہیں ملیں گے۔حکمران ہوش کے ناخن لیں اور بیورکریٹس کو لگام دیں قبل اس کے کہ ان کے رویوں سے گلگت بلتستان کے عوام بددل ہوجائیں۔

انہوں نے کہا کہ100 ارب کا طعنہ دینے والے گریڈ 20 کے آفیسر اگرہم گلگت بلتستان کو آزاد کرواکے پاکستان کے حوالے نہیں کرتے تو کہاں چیف سیکرٹری لگتے ،انہوں نے کہا کہ چیف سیکرٹری کے رویے سے عیاں ہوچکا ہے کہ موصوف ذہنی مریض ہے اور وفاق کو فوری نوٹس لیتے ہوئے ان کو معطل کرکے کاروائی کرے۔گلگت بلتستان کے تمام مذہبی اور سیاسی جماعتوں سے بھی اپیل ہے کہ وہ قومی غیرت کا مظاہرہ کرتے ہوئے اس کے خلاف بائیکاٹ کا اعلان کرے۔انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان کو ملنے والے بجٹ کا نصف حصہ ان آفیسروں کے پروٹوکول اور دیگر مراعات پر ہی خرچ ہوتا ہے جبکہ یہی آفیسران وفاق میں ہوتے ہیں تو 1500 سی سی کار میں پھرتے جبکہ گلگت بلتستان میں درجنوں گاڑیاں ان کے استعمال میں ہوتے ہیں۔

وحدت نیوز(گلگت)  مشیر اطلاعات اور وزیر تعمیرات اپنے گریبان میں جھانکیں تو انہیں معلوم ہوگا کہ وہ کس کھیت کے مولی ہیں۔مولانا سلطان رئیس اور آغا علی رضوی کے خلاف غم و غصہ سے نواز لیگ کی بوکھلاہٹ ظاہر ہورہی ہے۔سلطان رئیس اور علی رضوی گلگت بلتستان کے عوام کے حقیقی ترجمان ہیںجنہوں نے اپنی قائدانہ صلاحیتوںسے خطے کے عوام کے دل جیت لئے ہیں۔

مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان کے ترجمان محمد الیاس صدیقی نے کہا ہے کہ ہم گلگت بلتستان کے عوامی کے حقوق کی جنگ لڑ رہے ہیں اورآرڈر 2018 گلگت بلتستان کے عوامی امنگوں کے خلاف ہے جسے ہرگز قبول نہیں کرینگے۔نااہل وزیر اعظم کے نااہل کارندے اپنی رسوائی کو چھپانے کیلئے معزز علمائے کرام کے خلاف ہرزہ سرائی پر اتر آئے ہیں۔نواز لیگ جی بی کے عوام کو آئینی حقوق دلوانے میں ناکام ہوکر آرڈر 2018 کو نافذ کرنا چاہتی ہے جو ان کے بادشانہ مزاج کا مظہر ہے۔

انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ اور اس کی ٹیم عوام کے احتجاج کا سامنا کرنے کی سکت نہیں رکھتی اور علاقے کے عوام کو تقسیم کرنے کیلئے دھونس دھمکیوں اور مذہبی تعصب کا سہارا لے رہی ہے ۔گلگت بلتستان کا امن یہاں کے علماء اور عوامی ایکشن کمیٹی کی کاوشوں سے بحال ہوا ہے، حفیظ الرحمن کے اقتدار سے امن کو مشروط کرنے والے احمقوں کی جنت میں رہتے ہیں۔گلگت والوں کا دماغ پھراکر کر بلتستان کو ہلادینے کی بات کرنے والے صاف صاف بتادیں کہ وہ کیا چاہتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ مجلس وحدت مسلمین نواز لیگ کی ہرسازش کا ڈٹ کرمقابلہ کرے گی اور گلگت بلتستان کے عوام کو جغرافیہ اور فرقے کی بنیاد پر تقسیم کرنے کی ہر سازش کو ناکام بنادے گی۔

وحدت نیوز(گلگت)  مسلم لیگ نواز جاتے جاتے پاکستان بھر میں انارکی پھیلانے کی پالیسی پر گامزن ہے۔نواز شریف کے حالیہ بیان سے ملک بھر کے عوام تشویش کا اظہار کررہے ہیں جبکہ گلگت بلتستان کی صوبائی حکومت عوامی زمینوں پر قبضے کرکے عوام کو دھرنوں پر مجبور کررہی ہے۔ مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان کے ترجمان محمد الیاس صدیقی نے نواز شریف نے ریاستی اداروں کے خلاف ہرزہ سرائی کرکے ملکی سا  لمیت کو خطرے سے دوچار کردیا ہے۔اقتدار چھن جانے کے بعد نواز شریف اینڈ فیملی اپنے ہواس کھوچکے ہیں ان کے خلاف غداری کا مقدمہ درج کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ ابھی تک خالصہ سرکار کی رٹ لگائے بیٹھا ہے اور گمبہ سکردو میں اپنے گماشتوں کے ذریعے عوامی زمینیں ہتھیانے کی ناکام کوشش کررہا ہے۔ہم گمبہ سکردو کے عوام کے ساتھ کھڑے ہیں اور عوامی زمینوں پر قبضے کی بھرپور مزاحمت کرینگے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت کے عوام کش پالیسیوں کی وجہ سے گلگت بلتستان میں مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے لوگ سڑکوں پر آنے پر مجبور ہیں جو کہ حکومت کی ناقص اور جانبدار انہ حکمت عملی کا نتیجہ ہے جبکہ خود حکومتی بنچوں پر بیٹھے ہوئے لوگ آف دی ریکارڈ حکومت سے بیزاری کا ا ظہار کررہے ہیں۔انہوں  نے کہا کہ موجودہ حکومت کے دور میں جتنی اقربا پروری کی گئی ہے شائد اس کی مثال ماضی میں نہیںملتی۔ گلگت بلتستا ن کے حقوق پر بھی اصلاحات کے نام ڈاکہ ڈالنے کی سازش ہورہی ہے ۔ گلگت بلتستان کے عوام نے خالصہ سرکار کا قانون مسترد کیاہوا ہے اور اگر حکومت نے زبردستی کی کوشش کی تو عوامی طاقت سے ظالموں کا سر کچلا جائیگا۔

وحدت نیوز(گلگت ) آئینی اصلاحاتی پیکج کے نام پر گلگت بلتستان کے عوام کا مذاق اڑایا گیا ہے۔سپریم اپیلیٹ کورٹ کے چیف جج کیلئے گلگت بلتستان سے تعلق رکھنے والوں کیلئے ہمیشہ ہمیشہ کیلئے راستہ بند کردیا گیا ہے جبکہ جی بی کونسل کے اختیارات وزیر اعظم کو منتقل کرکے وزیر اعظم کو مطلق العنان بادشاہ بنادیا گیا ہے۔گلگت بلتستان کی عدالتوں میں وزیر اعظم کے کسی فیصلے کے خلاف رٹ دائر کرنے پر پابندی عدالتوں پر عدم اعتماد کے مترادف ہے۔مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان کے ترجمان محمد الیاس صدیقی نے نواز لیگ کی جانب سے پیش کردہ اصلاحاتی پیکج کومطلق العنانیت پر مبنی پیکیج قراردیتے ہوئے اسے یکسر مسترد کیا ہے۔وفاقی حکومت کی جانب سے پیش کردہ پیکیج کو کسی  بھی طور پر بھی اصلاحاتی پیکیج قرار نہیں دیا جاسکتا ہے اور گلگت بلتستان کے عوام ایسے کسی بھی پیکیج کو قبول نہیں کرینگے جس میں عوام کی رائے کا احترام نہ کیا گیا ہو۔

انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان میں بھی پاکستان کے دیگر صوبوں کی طرح انسان بستے ہیں اور وفاقی حکومتیں گلگت بلتستان کے عوام کیساتھ بھونڈا مذاق کرتی رہی ہیں۔گلگت بلتستان کے حوالے سے کوئی بھی فیصلہ کرتے وقت عوام کو اعتماد میں نہیں لیا گیا اور ہربار ایک ظالمانہ فیصلہ کرکے وفاقی حکومتیں گلگت بلتستان کے محسن بننے کی کوشش کرتی رہی ہے۔گلگت بلتستان کے عوام سمجھدار ہیں اور کوئی بھی اس خوش فہمی میں نہ رہے کہ یہاں کے عوام کو دھوکہ دینگے۔انہوں نے کہا کہ حکومت جی بی کو آئینی صوبہ قرار نہیں دے سکتی تو کم از کم کشمیر طرز کا سیٹ اپ دیکر عوامی محرومیوں کا ازالہ کیا جائے اس سے کم کوئی پیکیج  علاقے کے عوام کے ساتھ مذاق کے علاوہ کچھ بھی نہیں۔

انہوں نے کہا کہ نواز لیگ پیکیج میں گلگت بلتستان سے اختیارات لے کر بااختیار بنانے کا دعویٰ کررہی ہے جبکہ کونسل کو ختم کرکے پانچ اہم سبجیکٹس کو وفاق کے حوالے کیا گیا ہے جن پر اپنی مرضی کے فیصلے مسلط کرینگے اور ظلم پر مبنی اس پیکیج کو عدالتوں میںچیلیج کرنے کے خوف سے  عدالتوں کو پابند کیا گیا ہے کہ وہ کسی بھی وفاقی فیصلے کے خلاف سماعت نہیں کرسکتے۔کسی غیر مقامی بادشاہ کی بادشاہت گلگت بلتستان کے عوام کو ہرگز قبول نہیں، گلگت بلتستان کی صوبائی حکومت کیلئے یہ نام نہاد پیکیج ایک بہت بڑا امتحان ہے چاہے تو وہ اپنے وقتی مراعات کیلئے اسے قبول کریںیا گلگت بلتستان کے مستقبل کو مدنظر رکھتے ہوئے اسے مسترد کرکے عوامی نمائندگی کا حق ادا کریں۔

وحدت نیوز (گلگت)  کوئٹہ میں بیگناہ پاکستانیوں خاص کر ہزارہ برادری کی نسل کشی پر اداروں کی خاموشی لمحہ فکریہ ہے۔کالعدم تنظیمیں بھیس بدل کر کھلے عام تشہیراتی مہم چلارہے ہیں ،حکومت نیٹ ورک تک پہنچنے کی نہ صرف کوشش نہیں کرتی بلکہ درپردہ ان کی پشت پناہی کررہی ہے۔مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان کے ترجمان محمد الیاس صدیقی نے کوئٹہ میں ہزارہ برادری کے قتل عام پر سخت مذمت کرتے ہوئے اسے حکومت کی غلط پالیسیوں کا نتیجہ قرار دیا ہے۔ہزارہ قوم کا شمار بلوچستان کی پڑھی لکھی قوم میں ہوتا ہے جس کا دہشت گردی سے کوئی تعلق نہیں اور اس نہتے قوم کے خلاف ایک عرصے سے دہشت گردکاروائیاں ہورہی ہیں اور اب تک ہزاروں افراد جن میں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں لقمہ اجل بن چکے ہیں۔

انہوں نے کہاکہ ا س ظلم وبربریت کے سامنے حکومت بے بس دکھائی دے رہی ہے جو ایک ریاست کیلئے کھلم کھلا چیلنج ہے اور حکومت اس  تمام عرصے میں مگرمچھ کے آنسو بہانے کے سوا عملاً دہشت گردی کی روک تھام کیلئے کچھ کرنے کیلئے تیارہیں۔انہوں نے کہاکہ بلوچستان میں دہشت گردی کے خلاف وزیرستان طرز کا اپریشن ہونا چاہئے اور آخری دہشت گردکی کی موجودگی تک آپریشن جاری رہنا چاہئے۔انہوں نے چیف جسٹس سپریم کورٹ اور آرمی چیف سے اپیل کی کہ وہ اس سلسلے میں نوٹس لیں اور بلوچستان کی سرزمین کو پرامن خطہ بنانے میں اپنا کردار ادا کریں۔

وحدت نیوز (گلگت) لینڈ ریفارمزکے حوالے سے دیامر کے عمائدین کے موقف کی مکمل حمایت کرتے ہیں، حکومت  ہوش کے ناخن لے اور فوری طور پر عوام کو مالکانہ حقوق دیکر آباد کاری کے مواقع فراہم کرے۔ چھلمس داس اہالیان نومل کی وجہ سے حکومتی بندربانٹ سے بچا ہوا ہے،چھلمس داس پر اہالیان نومل استقامت نہ دکھاتے تو اس کا حشر بھی کونوداس جیسا ہوتا۔

مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان کے ترجمان محمد الیاس صدیقی نے کہا ہے کہ صرف حکمران جماعت کے علاوہ باقی تمام سیاسی و مذہبی جماعتیں زمینوں کے حوالے سے ایک پیج پر ہیں۔عوامی زمینوں کی حفاظت کیلئے اٹھنے والے ہر اقدام کی مجلس وحدت مسلمین حمایت کرے گی۔انہوں نے کہا کہ حکومت جان لے کہ وہ وقت گزرگیا جب طاقت کے زور پر عوامی زمینوں کی بندربانٹ کی گئی،عوامی طاقت سے حکومتی جبر کے آگے سیسہ پلائی دیوار کھڑی کرینگے۔گلگت بلتستان میں جتنی بھی بنجر زمینیں ہیں ان کو فوری آباد کرنے کیلئے مواقع فراہم کئے جائیںاور سرکاری تعمیرات کیلئے ضرورت کی زمینیں عوام کی رضامندی سے معاوضہ دیکر حاصل کیا جائے۔

انہوں نے کہا کہ چھلمس داس کو اہالیان نومل نے قربانیاں دیکر لینڈ مافیا اور حکومتی خرد برد سے  محفوظ رکھا ہے اگر نومل کے عوام مزاحمت نہ کرتے تو اس زمین پر کب کا سرکاری قبضہ ہوچکا ہوتاجو کہ ایک حقیقت ہے اور اس حقیقت کا اہالیان گلگت کو بھی اعتراف کرنا چاہئے۔چھلمس داس اگر بچا ہوا ہے تو وہ نومل کے عوام کے مزاحمت کے مرہون منت ہے اہالیان گلگت کو حکومت کے کندھے پر بیٹھ کر نومل کے عوام کی مخالفت کرنے کی بجائے ان کا ساتھ دینا چاہئے تاکہ عوامی زمینوں کی حفاظت کو یقینی بنایا جاسکے۔

Page 1 of 22

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree