وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے بھارتی وزیر اعطم نریندر مودی کے دورہ اسرائیل پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ بھارت اسرائیل گٹھ جوڑ عالمی امن کو تباہ کرنے کی کڑی ہے،انہوں نے کہا کہ مودی کوتلیا چانکیاکا پیروکار ہے،بھارت اسلام اور انسانیت دشمنوں کیساتھ مل کر عالمی امن کو تباہ کرنے کے درپے ہے،بھارت کشمیر میں اور اسرائیل فلسطین میں مسلمانوں کے نسل کشی کے مجرم ہیں، خطے میں طاقت کے توازن کو بگاڑنے کی یہ بھارتی کوشش بھارت کی سالمیت و بقا کو خطرے میں ڈال دے گی۔پاکستان کو غیر مستحکم یا تنہا کرنے کی کسی سازش کو کامیاب نہیں ہونے دیا جائے گا۔پاکستان کو کمزور سمجھنے والے ذہنی عارضے کا شکار ہیں۔پاکستان ایک ایٹمی طاقت ہے اور کسی بھی دشمن کے دانت کٹھے کرنے کی پوری صلاحیت رکھتا ہے۔کشمیر ی عوام پر بھارتی مظالم اور غزہ پر اسرائیلی جارحیت پر عالم اسلام کو سخت تشویش ہے،اسرائیل اور انڈیا کو مظلوم فلسطینیوں اور کشمیریوں کے خون ناحق کا حساب دینا ہو گا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کے خلاف اسرائیل کی طرف سے بھارت کی غیر مشروط مدد اور حمایت کا اعلان اسلام دشمنی کی بنیاد پر ہے۔بھارت،اسرائیل اور امریکہ وہ شیطانی قوتیں ہیں جو عالمی امن کے لیے سب سے بڑا خطرہ ہیں،ان سے کسی نفع کی امید لگانا خام خیالی اور خود فریبی ہے،اسلام کے نام پر بننے والا فوجی اتحاد اسرائیل کی بقا و سلامتی کے لیے کام کر رہا ہے۔مودی کا حالیہ دورہ اور اسرائیل کے ساتھ آل سعود کا ہمدردانہ رویہ ایک ہی ایجنڈے کی کڑیاں ہیں،انہوں نے کہا دنیا کی باطل قوتیں تیزی سے مجتمع ہو رہی ہیں،امت مسلمہ کو اپنے دوست اور دشمنوں کی شناخت کرنا ہو گی،مودی کے قدامات پاکستان اور بھارت سمیت دنیا بھر کے مسلمانوں کے لیے اضطراب کا باعث ہیں،پاکستانی حکومت کو چاہیے کہ بھارت کے منافقانہ طرز عمل پر دوٹوک موقف اختیار کرے اور امت مسلمہ بھارت اور اسرائیل سے ہر قسم کے تعلقات ختم کرنے کا اعلان کر کے غیرت ایمانی کا ثبوت دے۔

وحدت نیوز (مظفرآباد) مجلس وحدت مسلمین آزاد کشمیر کے ڈپٹی سیکریٹری جنرل طالب حسین ھمدانی و دیگر رہنماؤں نے کہا ہے کہ قطر کو فلسطینی مزاحمتی بلاک کی حمایت کرنے اور ایران کے خلاف استعمال نہ ہونے کی سزا دی جا رہی ہے، امریکی ایماء پر لیبیا، شام، عراق کے بعد خائن عرب بادشاہتیں قطر کو تباہ و برباد کرنے کی سازشیں کر رہی ہیں۔ ان خیالات کا اظہار رہنماؤں نے وحدت ہاؤس مظفرآباد میںریاستی کابینہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پرعابد قریشی،محسن رضا،حمید نقوی دیگر رہنما بھی موجود تھے۔ کابینہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے رہنماؤں نے کہا کہ فلسطینی مزاحمتی بلاک کی حمایت کرنے اور ایران کے خلاف استعمال نہ ہونے کی پاداش میں قطر کو تباہ و برباد کرنے کی سازش کو عملی جامع پہنانے کیلئے امریکی ایماء پر نام نہاد عرب فوجی اتحاد سرگرم ہو چکا ہے۔ رہنماؤں نے کہا کہ امریکی ایماء پر ایران کو تنہا کرنے کے بے وقوفانہ اعلان کے بعد اب اہم عرب ملک قطر کے خلاف فوجی اتحاد کے جارحانہ عزائم ایک جانب تو عالم اسلام کو کمزور کرنے کا باعث ہوگا تو دوسری جانب صہیونی جعلی ریاست اسرائیل کے تحفظ کا باعث ہوگا، کیونکہ قطر نے مزاحمتی بلاک کی حمایت ترک کرنے سے صاف انکار کر دیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ امریکی سربراہی میں بننے والا نام نہاد فوجی اتحاد عالم اسلام میں تفرقہ، نفرتیں اور دوریاں پیدا کرنے کی سازشیں کر رہا ہے، جس کیلئے وہ داعش سمیت دیگر دہشت گرد گروہوں کو مدد فراہم کر رہا ہے، دہشت گردی کے خلاف کارروائی کے نام پر بننے والے نام نہاد فوجی اتحاد کی جانب سے امریکی ایماء پر کھلے عام جمہوری اسلامی ایران کو تنہا اور اب عرب اسلامی ملک قطر کے گھیراؤ اور اس کے خلاف کارروائی کا اعلان کرنے کے باعث اس کے چہرے سے نقاب الٹ چکی ہے، لہٰذا پاکستانی حکومت کو چاہیئے کہ نام نہاد اسلامی فوجی اتحاد میں شمولیت کے نام پر ملک و قوم کو اس دلدل میں دھکیلنے سے باز رہے، عالم اسلام کو درپیش تمام مسائل و چیلنجز میں فریق بننے کے بجائے غیر جانبدارانہ اور ثالثی و مصالحتی کردار ادا کرے، تاکہ عالم اسلام کو امریکی اسرائیل سازشوں سے بچایا جا سکے۔

وحدت نیوز(کراچی) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کراچی ڈویژن کے سیکریٹری جنرل میثم عابدی و دیگر رہنماؤں نے کہا ہے کہ قطر کو فلسطینی مزاحمتی بلاک کی حمایت کرنے اور ایران کے خلاف استعمال نہ ہونے کی سزا دی جا رہی ہے، امریکی ایماء پر لیبیا، شام، عراق کے بعد خائن عرب بادشاہتیں قطر کو تباہ و برباد کرنے کی سازشیں کر رہی ہیں۔ ان خیالات کا اظہار رہنماؤں نے وحدت ہاؤس کراچی میں ڈویژنل کابینہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر علامہ مبشر حسن، علامہ صادق جعفری، علامہ علی انور، علامہ اظہر نقوی، علامہ سجاد شبیر رضوی، علامہ احسان دانش، تقی ظفر و دیگر رہنما بھی موجود تھے۔ کابینہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے رہنماؤں نے کہا کہ فلسطینی مزاحمتی بلاک کی حمایت کرنے اور ایران کے خلاف استعمال نہ ہونے کی پاداش میں قطر کو تباہ و برباد کرنے کی سازش کو عملی جامع پہنانے کیلئے امریکی ایماء پر نام نہاد عرب فوجی اتحاد سرگرم ہو چکا ہے۔ رہنماؤں نے کہا کہ امریکی ایماء پر ایران کو تنہا کرنے کے بے وقوفانہ اعلان کے بعد اب اہم عرب ملک قطر کے خلاف فوجی اتحاد کے جارحانہ عزائم ایک جانب تو عالم اسلام کو کمزور کرنے کا باعث ہوگا تو دوسری جانب صہیونی جعلی ریاست اسرائیل کے تحفظ کا باعث ہوگا، کیونکہ قطر نے مزاحمتی بلاک کی حمایت ترک کرنے سے صاف انکار کر دیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ امریکی سربراہی میں بننے والا نام نہاد فوجی اتحاد عالم اسلام میں تفرقہ، نفرتیں اور دوریاں پیدا کرنے کی سازشیں کر رہا ہے، جس کیلئے وہ داعش سمیت دیگر دہشت گرد گروہوں کو مدد فراہم کر رہا ہے، دہشت گردی کے خلاف کارروائی کے نام پر بننے والے نام نہاد فوجی اتحاد کی جانب سے امریکی ایماءپر کھلے عام جمہوری اسلامی ایران کو تنہا اور اب عرب اسلامی ملک قطر کے گھیراؤ اور اس کے خلاف کارروائی کا اعلان کرنے کے باعث اس کے چہرے سے نقاب الٹ چکی ہے، لہٰذا پاکستانی حکومت کو چاہیئے کہ نام نہاد اسلامی فوجی اتحاد میں شمولیت کے نام پر ملک و قوم کو اس دلدل میں دھکیلنے سے باز رہے، عالم اسلام کو درپیش تمام مسائل و چیلنجز میں فریق بننے کے بجائے غیر جانبدارانہ اور ثالثی و مصالحتی کردار ادا کرے، تاکہ عالم اسلام کو امریکی اسرائیل سازشوں سے بچایا جا سکے۔

وحدت نیوز (اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصرعباس جعفری نے سعودی عرب کے نائب ولی عہدشہزادہ محمد بن سلمان کی طرف سے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو مسلمانوں کا سچا دوست قرار دینے کے بیان پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ عالم اسلام کے خلاف شدید رجحانات رکھنے والی متعصب شخصیت کو مسلمانوں کا دوست قرار دینا مسلمانوں کے جذبات مجروح کرنے کے مترادف ہے۔ٹرمپ انتظامیہ کی طرف سے سات مسلم ممالک پر پابندی کے فیصلے کو غیر مسلموں کی طرف سے بھی سخت تنقید کا نشانہ بنایا گیا۔ٹرمپ کی اسلام دشمنی کے خلاف امریکی کی کئی ریاستوں کے اندر دیگر مذاہب کی طرف سے احتجاجی مظاہرے کیے گئے۔امت مسلمہ کے خلاف ٹرمپ کے جارحانہ رویے سے پوری دنیا آگاہ ہے۔سعودی ولی عہد نے ٹرمپ کو مسلمانوں کا سچا دوست کہہ کر عالم اسلام کی تضحیک کی ہے۔امریکی صدر کے بارے میں سعودی عرب کے ولی عہد کا یہ موقف ایک اسلام دشمن شخصیت کی طرف غیر معمولی جھکاؤ کا بین ثبوت ہے۔

انہوں نے کہا کہ شہزادہ محمد بن سلمان کے اس عمل نے ثابت کیا ہے کہ وہ خادمین حرمین شریفین نہیں بلکہ خادمین یہودین ہیں۔یہود و نصاری کے لیے آل سعود کی ہمدردی نے مسلمانوں کو ہمیشہ شدید ترین نقصان پہنچایا ہے۔امریکہ عالم اسلام کا ازلی دشمن ہے۔ افغانستان میں اسامہ کی تلاش کے بہانے اور عراق میں کیمیائی ہتھیاروں کے نام پر اس نے لاکھوں بے گناہ مسلمانوں کا خون کیا ہے۔امریکہ سے دوستی اسلام دشمنی کا دوسرا نام ہے۔سعودی ولی عہد کے اس بیان کے خلاف امت مسلمہ کو اپنا احتجاج ریکارڈ کرانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا امریکہ مسلمانوں کا سچا دوست نہیں بلکہ سعودی عرب کا سچا دوست ہے اور یہی دوستی مسلمانوں کے گلے کاٹنے کا سبب بن رہی ہے۔

وحدت نیوز (ملتان) مجلس وحدت مسلمین جنوبی پنجاب کے سیکرٹری جنرل علامہ اقتدار حسین نقوی نے کہا ہے کہ ایک طرف پورا عالم اسلام امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے اسلام مخالف بیانات پر سراپا احتجاج ہے تو دوسری طرف سعودی عرب امریکی حماقت کی حمایت کر رہا ہے، سعودی عرب کے وزیرتیل خالد الفلیح کی جانب سے امریکی صدر کے سات مسلم ممالک کے مسلمانوں پر دروازے بند کرنے کے اقدام کی حمایت عالم اسلام کے منہ پر زور دار طمانچہ ہے، سعودی وزیر نے امریکی صدر کے احمقانہ فیصلے کی حمایت کر کے اسلام کی خدمت نہیں بلکہ مسلمانوں سے عداوت کا اظہار کیا ہے۔ ان خیالات کا اظہار اُنہوں نے ملتان میں جنوبی پنجاب کے میڈیا سیکرٹریز کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ علامہ اقتدار نقوی نے کہا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے اسلام مخالف اقدامات پر امریکہ سمیت پوری دنیا سراپا احتجاج ہے، لیکن سعودی عرب کی جانب سے امریکی صدر کی حمایت اُسے شہہ دلانے کے مترادف ہے، اُنہوں نے کہا کہ کل تک جو جماعتیں اور رہنما امریکی صدر کے اقدامات کی مذمت کر رہے تھے آج اُنہیں سعودی عرب کی جانب سے بیانات کی مذمت کرنی چاہیے۔ اُنہوں نے کہا کہ امریکہ عالم اسلام کا بٹوارہ کرنا چاہتا ہے اور اپنے مفادات کی خاطر چند ممالک کو استعمال کر رہا ہے، کاش دنیا کے دیگر ممالک بھی ایران اور عراق کی طرح عملی غیرت کا ثبوت دیتے اور امریکی شہریوں کے داخلے پر پابندی عائد کرتے،؟ لیکن مشرق وسطی کے چند ممالک امریکی ڈالروں کی کمائی پر چلتے ہیں اُن سے اسلام اور مسلمان ممالک پر عائد پابندیوں کا کوئی اثر نہیں۔ علامہ اقتدار نقوی نے کہا کہ پاکستانی حکمرانوں کے امریکی اقدامات کی مذمت کرنی چاہیے نہ کہ امریکی دبائو میں شہریوں اور جماعتوں کو کالعدم قرار دینا چاہیے، پاکستان کے حکمران اپنی غیرت کا ثبوت دیں اور دفتر خارجہ امریکہ کو دھمکی کا جواب دھمکی سے دے کہ اگر امریکہ پاکستانی شہریوں کے داخلے پر پابندی عائد کی تو کوئی امریکی بھی پاکستان داخل نہیں ہو سکے گا۔ جب تک ہمارے فیصلہ واشنگٹن، لندن، جدہ اور بیجنگ میں ہوتے رہیں گے ہم خوددار نہیں بن سکیں گے۔

وحدت نیوز (اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا ہے کہ پاکستان میں تفرقہ بازی کی ہر سازش کو ناکام بنانے کے لئے تمام معتدل سیاسی و مذہبی قوتوں کو اپنا کردار ادا کرنا ہوگا۔ مذہب کی آڑ میں انتشار پیدا کرنے والی قوتیں نہ صرف وطن عزیز کی سالمیت و بقا کے لئے خطرہ ہیں بلکہ عالم اسلام کو بھی سنگین مشکلات کی طرف لے کر جا رہی ہیں۔ ایسی قوتیں جو عالم اسلام کو دست و گریبان دیکھنا چاہتی ہیں، ان کی طرف دوستی کا ہاتھ بڑھانا ان کے مذموم مقاصد کو تقویت دینے کے مترادف ہے۔ پاکستان کو عالم اسلام میں ایک قابل قدر حیثیت حاصل ہے، اسے بحال رکھنے کے لئے ضروری ہے کہ امت مسلمہ کو درپیش متنازعہ امور میں فریق بننے کی بجائے ثالثی کا کردار ادا کیا جائے۔ بین الاقوامی ایشوز پر پاکستان کی مثبت مصالحانہ کوششیں ہماری نیک نامی میں اضافے کے ساتھ ساتھ اسلامی میں بھڑکی ہوئی آگ کو ٹھنڈا کرنے میں معاون ثابت ہوسکتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عالمی دہشت گرد تنظیم داعش پاکستان میں بھی اپنے پر پھیلانے کی کوششون میں مصروف ہے۔ حکومت عوام کی آنکھوں پر پردہ ڈالنے کی بجائے دہشت گردوں کے تدارک کے لئے عملی اقدامات کرے۔

علامہ راجہ ناصر عباس نے مزید کہا ہے کہ کالعدم دہشت گرد جماعتوں کے ساتھ کسی بھی قسم کے معاونین کو جب تک عبرتناک سزائیں نہیں دی جاتیں، تب تک دہشت گردی کے خلاف جاری جنگ کو کامیاب قرار نہیں دیا جا سکتا۔ انہوں نے کہا دہشت گردی کے خاتمے کے لئے عالمی استعماری کوششیں صرف اور صرف مسلمانوں کو دہشت گرد ثابت کرنے کے لئے ہیں۔ امت مسلمہ کو مل کر اس عفریت سے چھٹکارے کا حقیقی حل تلاش کرنا ہوگا۔ یہود و نصاریٰ دوست کے روپ میں چھپے ہوئے وہ دشمن ہیں، جو مسلمانوں کے مابین مسلکی اختلافات کو اچھال کر ہمیں ایک دوسرے کا دشمن بنانا چاہتے ہیں۔ تمام مسلمان ممالک کے حکمرانوں کو اس حقیقت کا بخوبی درک ہے، لیکن ملت اسلام کے مفادات کو ذاتی مفاد کی بھینٹ چڑھایا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ امت مسلمہ کے اتحاد و وحدت کے لئے جو بھی حکمران عملی کوششوں کا آغاز کرے گا، تاریخ میں اس کا نام سنہرے حروف سے لکھا جائے گا۔

Page 1 of 3

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree