وحدت نیوز (کوئٹہ) مجلس وحدت مسلمین کوئٹہ کے رہنماء اور صوبائی اسمبلی کے رکن جناب آغا رضا صاحب نے کہا ہے کہ ہم نے ہمیشہ اپنے وعدے کی لاج رکھی ہے۔ عوام کی خدمت ہمارا نصب العین ہے ۔ صوبائی اسمبلی میں عوام کی رہنمائی کا موقع ملا ہے اور یہ میرا فرض ہے کہ انہیں انکا حق دلاؤں۔ معاشرے کی خدمت میں مصروف سماجی اداروں کی حوصلہ افزائی ضروری ہے۔مستقبل کا معاشرہ انہی سماجی اداروں کی خدمت سے بہتر بن سکتا ہے۔ سماجی خدمات میں مصروف افراد ملک و قوم کیلئے کسی سرمائے سے کم نہیں۔ گزشتہ روز مجلس وحدت مسلمین کوئٹہ ڈویژن کے مرکزی سیکریٹریت میں ایم پی اے آغا رضا نے اپنے فنڈز سے مختلف سماجی اداروں میں پینتیس لاکھ روپوں کے چیکس تقسیم کئے، ان فنڈز کیلئے اعلانات پچھلے سال کیا گیا تھا مگر حکومتی کاروائیوں میں سستی اور تاخیر کی وجہ سے مستحقین کو انکا حق ایک برس بعد ملا ۔چیکس وصول کرنے والے اداروں میں امید لائبریری، اجتماعی شادیاں کمیٹی،گلو اکیڈمی اور بزم خسروشامل ہے جنہیں اسی تقریب میں انکے چیکس دے دیئے گئے۔ اس کے علاوہ مولانا عبدلباری آغا کے فرزند محمود الحسن بھائی کیلئے بھی فنڈ کا اعلان ہوا تھا تاہم انکی غیر حاضری کے باعث بعداً انکا چیک ان تک پہنچا دیا گیا۔اس موقع پر مجلس وحدت مسلمین کوئٹہ ڈویژن کے مرکزی دفتر میں ا یم ڈبلیو ایم کوئٹہ کے سیکریٹری جنرل عباس علی، سیکریٹری سیاسیات کامران حسین ہزارہ، سیکریٹری مالیات رشید طوری، سیکریٹری تعلیم حاجی عمران علی، سیکریٹری روابط محمد حسین، آفس سیکریٹری حاجی ناصر علی، کونسلر کربلائی رجب علی، کونسلر عباس علی اور کونسلر سید محمد مہدی سمیت دیگر عہدیداران موجود تھے۔ صوابدیدی فنڈز کے تقسیم کے موقع پر آغا رضا صاحب نے کہا کہ حکومت کی جانب سے ہمارے فنڈز پانچ کروڈ روپے مختص کئے گئے تھے ،جسے اسٹوڈنٹس سکولر شپ،میڈیکل انسٹیٹیوشنز،مختلف تعلیمی اداروں،اسپورٹس اور اس سے وابسطہ افراد،ثقافتی سرگرمیوں اور کمیونٹی ڈیویلپمنٹ کیلئے استعمال کرنے تھے، مگر کمیونٹی ڈویلپمنٹ اور ثقافتی سرگرمیوں کے فنڈز پر عدالت کو بہت ہی زیادہ اعتراض تھا اور عدالت کی جانب سے دو مرتبہ صوابدیدی فنڈزپر پابندی لگا دی گئی تھی، مہذب شہری ہونے کے ناتھے ہم نے عدالت کے حکم کا احترام کیا اور اپنے حقوق کیلئے عدالت میں اس بات کو ثابت کرنے کیلئے کوششیں شروع کر دی کہ یہ فنڈز سماجی اداروں کا حق ہے ۔ پہلی مرتبہ تو پابندی ختم کر دی گئی مگر دوسری مرتبہ ہمیں خود عدالت میں پیش ہو کر اپنا کیس لڑنا پڑا اور ہمیں عوام تک انکا حق ان تک پہنچانا تھا تو ہم نے عدالت میں ساری تفصیلات پیش کی تب جاکے ہمیں چیکس ملے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ثقافتی سرگرمیوں کے چیکس روکے ہوئے تھے جو کافی تاخیر کے بعد ہم تک پہنچے ہیں اور اللہ کے فضل سے ہمیں آج یہ موقع ملا ہے کہ ہم ان چیکس کو انکے اصل حقداروں تک پہنچائے۔چیکس کے تاخیر میں ہمارا کوئی قصور نہیں ہے۔ بیان کے آخر میں انہوں نے کہا کہ میں اس بات کیلئے اپنے لوگوں شکر گزار ہو کہ انہوں نے مجھے عزت بخشی ہے اور بلوچستان اسمبلی میں مجھے اپنی قوم کی نمائندگی کا موقع ملا ہے۔ میں نے ہمیشہ اپنے کئے ہوئے وعدوں کو یاد رکھا ہے اور انہیں پورا کرکے دکھایا ہے ، عوام کی خدمت میرا فرض ہے اور میں قوم کی خدمت کیلئے ہی منتخب ہوا ہوں۔

وحدت نیوز (بولان) بلوچستان اسمبلی سے دو رکنی کمیٹی صوبائی وزیر داخلہ سرفراز بگٹی , مجلس وحدت مسلمین کے ممبر بلوچستان اسمبلی آغا رضا اور سیکریڑی داخلہ اظہار تعزیت کرنے گوٹھ چھلگری پہنچے. جہاں شہداء اور زخمیوں کے لواحقین سے ملاقات کی اور حکومت بلوچستان کی جانب سے شہدائے چھلگری کے لواحقین کے مابین دس دس لاکھ روپے کے امدادی چیک تقسیم کیے. اس موقع پر مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی رہنما علامہ سید ہاشم موسوی اور علامہ مقصود علی ڈومکی بھی تشریف فرما تھے،یاد رہے کہ 8 محرم الحرام کو چھلگری امام بارگاہ فاطمیہ میں نہتے نمازی اور عزاداروں پر خودکش حملہ ہوا تھا جن میں 12 عزادار شہید اور درجن سے زیادہ زخمی ہوئے تھے۔

وحدت نیوز (پشاور) مجلس وحدت مسلمین خیبر پختونخوا کے رہنما ارشاد حسین بنگش نے شہداء سانحہ امامیہ مسجد حیات آباد کے شہداء کیلئے اعلان کردہ 5لاکھ پیکج کو متاثرین کیساتھ حکومتی مذاق قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت جہاں ایک طرف دہشتگردی پر قابو پانے میں ناکام ہے تو دوسری طرف دہشتگردی سے متاثرہ خاندانوں کی دلجوئی اور داد رسی سے بھی غافل ہے، وحدت ہاوس پشاور سے جاری ایک بیان میں ان کا کہنا تھا کہ دہشتگردی کا شکار ہونے والے تمام شہری حکومت کی نظر میں برابر ہونے چاہیئں، شہداء کے لواحقین کے دکھ اور درد کا کوئی ازالہ ممکن نہیں، لیکن حکومت کا یہ فرض بنتا ہے کہ وہ شہداء کے خاندانوں کی جس حد تک ممکن ہو مدد اور تعاون کرے، انہوں نے مزید کہا کہ ہمارا مطالبہ ہے کہ سانحہ امامیہ مسجد کے شہداء کیلئے کم از کم 20 لاکھ روپے کا اعلان کیا جائے، اور خودکش حملہ آور کو واصل جہنم کرنے والے دو نوجوانوں کو شہید عباس علی اور شہید کاشف علی کیلئے تمغہ شجاعت کا اعلان کیا جائے۔ علاوہ ازیں انہوں نے ڈیرہ اسماعیل خان میں کالعدم تحریک طالبان اور لشکر جھنگوی کی جانب سے اہل تشیع کیخلاف دھمکی آمیز خطوط پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ آئی جی خیبر پختونخوا ناصر درانی اور حکومت اس حوالے سے فوری طور پر نوٹس لے۔

وحدت نیوز(کوئٹہ) شہدائے یوم القدس کوئٹہ کے اہل خانہ میں امداری رقوم کے چیک تقسیم کر دیئے گئے ، بلوچستان حکومت کی جانب سے امدادی رقوم کے چیک ایم ڈبلیوایم کے صوبائی سیکریٹریٹ میں خانوادہ شہداء میں تقسیم کیئے گئے ،  کل ۳۱شہداءکے لواحقین میں چیک تقسیم کیئے گئے ، باقی لواحقین میں چیک دستاویزات مکمل ہو نے پر تقسیم کیئے جائیں گے،معزز مہمانان چیف آف ہزارہ قبائل جناب سردار سعادت علی ، جناب حاجی قیوم علی چنگیزی ، جناب مظفر علی چنگیزی، جناب پروفیسر تاج، رکن بلوچستان اسمبلی آغا رضا رضوی، ایم ڈبلیو ایم کے مرکزی رہنما سید ہاشم علی موسوی ، ڈویژنل سیکریڑی جنرل جناب سید عباس علی، کونسلر کربلائی رجب علی نے شہداء کے لواحقین میں چیک تقسیم کیے۔ دیگر مہمانوں میں کونسلر کربلائی عباس علی، کونسلر سید مہدی ، ایم ڈبلیو ایم کابینہ کے کامران علی ، غلام مہدی اور دیگر دوستوں نے شرکت کیں۔

وحدت نیوز(بلتستان) مجلس وحدت مسلمین پاکستان بلتستان ڈویژن شعبہ فلاح و بہبود خیرالعمل فائونڈیشن کے زیراہتمام بلتستان بھر کے 300 سے زائد مستحق یتیموں میں امدادی رقوم تقسیم کی گئی۔ اطلاعات کے مطابق تین سو سے زائد مستحق یتیموں میں 21 لاکھ سے زائد امدادی رقوم تقسیم کی گئی۔ اس سلسلے میں بتایا جارہا ہے کہ سولہ سال تک کے حقدار یتیم بچوں کی مالی امداد کا ایک وسیع پروگرام پورے ملک میں شروع کیا گیا ہے اور یہ اس سلسلے کی ایک کڑی ہے۔ جس کا مقصد یہ ہے کہ ان مستحق یتیم بچوں کی تعلیمی و دیگر ضروریات کو پورا کیا جا سکے۔ مجلس وحدت مسلمین پاکستان بلتستان ڈویژن کے شعبہ فلاح و بہبود خیر العمل فائونڈیشن کے ذرائع کا کہنا ہے کہ مظلوم اور محروم طبقہ کی حمایت اور ان کی مالی و اخلاقی امداد کے لیے وسیع پیمانے پر پروجیکٹس شروع کئے جارہے ہیں۔

biltistan kafوحدت نیوز (بلتستان)  مجلس وحدت مسلمین پاکستان شعبہ فلاح و بہبود خیر العمل فائونڈیشن کے زیر اہتمام بلتستان بھر کے سینکڑوں مستحق یتیموں میں امدادی رقوم تقسیم کی گئی۔

اطلاعات کے مطابق تین سو پچاس سے زائد حقدار یتیموں میں اٹھارہ لاکھ سے زائد امدادی رقوم تقسیم کی گئی۔ اس سلسلے میں بتایا جارہا ہے کہ سولہ سال تک کے حقدار یتیم بچوں کی مالی امداد کا ایک وسیع پروگرام پورے ملک میں شروع کیا گیا ہے اور یہ اس سلسلے کی ایک کڑی ہے۔ جس کا مقصد ان بچوں کی تعلیمی و دیگر ضروریات کو پورا کیا جا سکے۔

مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے شعبہ فلاح و بہبود خیر العمل فائونڈیشن کے ذرائع کا کہنا ہے کہ مظلوم اور محروم طبقہ کی حمایت اور ان کی مالی و اخلاقی امداد کے لیے وسیع پیمانے پر پروجیکٹس شروع کئے جارہے ہیں۔

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree