وحدت نیوز (اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکریٹری امورسیاسیات سید اسد عباس نقوی نے ڈیرہ اسماعیل خان میں دودھ فروش شرافت حسین پر تکفیری دہشت گردوں کے قاتلانہ حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے، مرکزی سیکریٹریٹ سے جاری اپنے مزمتی بیان میں انہوں نے پاکستان تحریک انصاف کی خیبر پختونخوا حکومت سے مطالبہ کیا کہ ڈیرہ اسماعیل خان کی بگڑتی صورت حال پر فوری وجہ دے، وزیر اعلیٰ اور آئی جی شرافت حسین پر قاتلہ حملے کا فوری نوٹس لیں اور حملے میں ملوث دہشت گردوں کو فوری گرفتار کرکے نشان عبرت بنایا جائے، انہوں نے کہا کہ خدا خدا کرکے ڈی آئی خان میں حالات بہتری کی جانب سفر کرنا شروع ہوئے ہی تھے کہ ایک اور دلخراش واقعہ رونما ہو گیا، اب تک شیعہ ٹارگٹ کلنگ میں ملوث کسی بھی دہشت گردکو سزاکا نہ ملنا ملت جعفریہ کے لئے اضطراب کا باعث بنتا جا رہا ہے ، حکمران ملک وقوم کو چین وسکون چھینے والوں سے آہنی ہاتھوں سے نپٹیں ۔

وحدت نیوز (کراچی) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کراچی ڈویژن کے وفد نےانسپکٹر جنرل سندھ پولیس اللہ ڈنو خواجہ سے ملاقات کی اور سندھ بھر میں کالعدم جماعتوں کی سرگرمیوں، اہل تشیع کے قتل عام سمیت سیکورٹی ایشوز پرتبادلہ خیال کیا۔ ایم ڈبلیو ایم کے رہنماؤں میں علامہ مبشر حسن، علامہ علی انور جعفری، علامہ نشان حیدر ساجدی، میر تقی ظفر اور ثمر زیدی شامل تھے۔ رہنماؤں نے آئی جی سندھ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سندھ بھر میں کالعدم جماعتوں کی سرگرمیاں بڑھ رہی ہیں، سکھر ، کراچی اور خیرپور میں سندھ پولیس میں شامل بعض افسران ملت جعفریہ کیخلاف سازشوں میں مصروف عمل ہیں، جس پر پوری ملت میں شدید تشویش پائی جاتی ہے، ظلم کیخلاف آواز بلندکرنے کی اجازت اس ملک کا آئین دیتا ہے تو کس قانون کے تحت مظلومیت کی آواز اٹھانے والوں کے خلاف ایف آئی آر کا ٹی جاتی ہے، کراچی بھر میں محرم الحرام کے دوران جو ٹارگٹ کلنگ ہوئی اس پر اب تک کیا پیش رفت ہوئی، سندھ پولیس ہمیں اس پر اعتماد میں لے۔ اس موقع پر آئی جی سندھ نے سندھ پولیس کے متعلقہ حکام کو ہدایات جاری کیں کہ مجلس وحدت مسلمین کے وفد کی شکایات کا فوری ازالہ کیا جائے اور ڈی آئی جیز کی سطح پر بھی ملاقاتیں رکھی جائیں تاکہ کیس ٹو کیس فالو اپ کیا جاسکے۔ اللہ ڈنو خواجہ نے کہا کہ ظلم کے خلاف آواز بلند کرنا ہر پاکستانی شہری کا حق ہے لہٰذا وزیراعلیٰ سندھ کے احکامات کی روشنی میں ایم ڈبلیو ایم کے رہنماؤں کے خلاف ایف آئی آرزواپس لے رہے ہیں۔

وحدت نیوز(کراچی) مجلس وحدت مسلمین صوبہ سندھ کے سیکرٹری جنرل علامہ مقصود علی ڈومکی نےعزاداری سیل کے ذمہ داران سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کربلا سے ہمیں عدل وانصاف،اخوت،بھائی چارے کا درس ملتا ہے۔ہمیں آپس کے اختلافات کو بھلا کر ایک دسترخواں پر بیٹھنا ہوگا۔شیعہ سنی اسلام کے دو بازوں ہیں اور اسلام میں تعصبات کی ہر گز گنجائش نہیں ہے۔ہمیں ایک دوسرے کے عقائد کا احترام کرتے ہوئے بھائی چارے کے ماحول کو پروان چڑھانا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ محرم کے اس مقدس ماہ میں ہمیں تمام تر تعصبات سے بالا تر ہو کر نفرتوں کو بھلانا ہوگا۔کربلاء ایک عظیم درس گاہ ہے۔امام عالی مقام نے سجدے میں سرکٹا کے اسلام کے پرچم کو ہمیشہ ہمیشہ کیلئے سربلند کیا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہمارا مقصد امام عالی مقام کی اس عظیم قربانی کو زندہ رکھنا ہے۔ کربلا ء مسلمانوں کیلئے درس حریت ہیں کربلا ء انسان کو غلامی کی زنجیروں سے نجات دلاتا ہے اور تمام مسلمانوں کی نجات عاشورہ میں مضمر ہے۔ اگر امت مسلمہ غلامی سے نجات چاہتی ہے تو وہ درس کربلاء پر عمل کریں کیونکہ امام حسین ؑ نے کربلاء میں یہی پیغام دیا تھا کہ غلامی کی زنجیروں کو توڑے بغیر مسلمان کامیاب نہیں ہوسکتے۔انہوں نے کہا کہ شہدائے کربلاء نے 61ہجری میں اس وقت کے طاغوت کے خلاف قیام کرکے مسلمانوں کو بتادیا کہ حق کسی باطل کے سامنے جھک نہیں سکتے۔علامہ مقصود علی ڈومکی نے کہا کہ اس وقت بھی مسلمانوں کو مختلف طاغوتوں کا سامنا ہے اور یہی طاغوت امت مسلمہ کے اندر فرقہ واریت کے ذریعے انتشار پھیلانے میں مصروف عمل ہے مسلمانوں کو چاہئے کہ مظلوم کربلاء کے پیغام پر عمل کرتے ہوئے غلامی کی زنجیروں کو توڑے تاکہ ملک میں امن و امان قائم ہو۔

وحدت نیوز(کراچی) مجلس وحدت مسلمین کے صوبائی سیکرٹری سیا سیات سید علی حسین نقوی نے کہا ہے کہ سنی وشیعہ عزاداران امام حسین ؑ ملک بھر میں تکفیری دہشتگرد وں کی سازشوں کو ہمیشہ ناکام بناتے رہیں گے ،عزاداری نواسہ رسولؐ کے خلاف کسی تکفیری سازش کو کامیاب نہیں ہونے دیا جائے گا ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی وحدت ہاؤس صوبائی سیکرٹریٹ میں جاری عزاداری سیل کے اجلاس سے خطاب میں کیا اجلاس میں یکم محرم الحرام سے یوم عاشورہ تک صوبہ کے تمام ضلعی سیل کا جائزہ لیا گیا ۔اجلاس میں ایم ڈبلیو ایم کراچی کے سیکرٹری جنرل میثم عابدی، علامہ نشان حیدر ساجدی،علامہ مبشر حسن ،علامہ احسان دانش،علامہ علی انور جعفری،ڈاکٹر مدثر حسین،رضا نقوی ،ناصر الحسینی سمیت ضلعی ذمہ اران موجود تھے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کے مجلس وحدت مسلمین عزاداری سیل 8ربیع اول تک قائم رہے گا اور اس حوالے صوبائی سطح پر مجا لس وجلوس عزاء کی مانیٹرنگ کا سلسلہ جاری رہے گا ۔ اجلاس سے خطاب میں علی حسین نقوی نے عشرہ محرم الحرام کے دوران عزاداران سید الشہداء کو بہترین سیکورٹی و دیگر سہولیات مہیا کرنے کیلئے کی جانے والی انتھک محنت اور کاوشوں پر وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ معاون خصوصی برائے مذہبی امور ڈاکٹر قیوم سومرو، ہوم سیکریٹری سندھ، آئی جی سندھ، ڈی جی رینجرز سندھ، کمشنر کراچی، بالخصوص ایڈیشنل آئی جی کراچی ، شہر کے تمام ڈی آئی جی ، ایس ایس پی ،ڈپٹی کمشنر زصاحبان اور قانون نافذ کرنے والے تمام اداروں کے آفسران اور جوانوں کا تہ دل سے شکریہ ادا کرتے ہوئے انہیں خراج تحسین پیش کیا۔

وحدت نیوز(پشاور) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل سید ناصر شیرازی کی سربراہی میں ایک وفد نے خیبرپختونخواہ کے وزیر اعلی پرویز خٹک اور ان کی ٹیم سے ملاقات کی۔حکومتی اعلی سطح وفد میں صوبائی وزرا شوکت یوسف زئی، علی امین گنڈاپور، آئی جی ناصر درانی ، چیف سیکرٹری ،اوقاف سیکرٹری،ڈی سی اور ایس پی سمیت دیگر اعلی سرکاری افسران شامل تھے ملاقات میں حکومتی ٹیم نے مذاکرات کے پہلے دور میں طے ہونے والے معاملات کی پیش رفت سے ایم ڈبلیو ایم کو آگاہ کیا۔مجلس کے رہنماوں نے خیبر پختونخواہ میں ٹارگٹ کلنگ کے واقعات میں نمایاں کمی اور امن امان کی صورتحال پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے دیگر مسائل کے حل کے لیے مزید اقدامات کا مطالبہ کیا۔مذاکرات کے دوسرے دورمیں خیبر پختونخواہ حکومت ایم ڈبلیو ایم کے تمام مطالبات تسلیم کرنے پر اصولی طور پر راضی ہو گئی ہے۔مذاکرات کے دوران باقی ماندہ مطالبات پر عمل درآمد کے لیے ضابطہ کار کا تعین بھی کر دیا گیا ہے۔مجلس وحدت مسلمین کے مطالبات میں ڈیرہ اسماعیل خان میں دہشت گردوں کے ہاتھوں شہید ہونے والوں کے لیے سرکاری پیکج کا اعلان،عزادری میں درپیش مسائل کو فوری حل کیاجانا، ملت تشیع کے حراست میں لیے جانے والے بے گناہ افراد کی رہائی و بے بنیاد مقدمات کا خاتمہ، لاپتہ افراد کی فوری بازیابی کے لیے موثر اقدامات، کوٹلی امام حسین امام بارگاہ کے گرد چاردیواری سمیت دیگر تعمیراتی کام،شیعہ آبادی والے علاقوں میں امن و امان کی یقینی بنانے کے لیے گشتی پولیس کی نفری میں اضافہ اور اہم شخصیات کی مکمل طور پر حفاظت کے لیے ٹھوس اقدامات کیے جانا شامل ہے۔حکومت کی طرف سے تمام مطالبات کی منظوری کو ایک بڑی کامیابی قرار دیا جا رہا ہے۔مذاکرات کا یہ سلسلہ مجلس وحدت مسلمین کے سربراہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کی 87روزہ بھوک ہڑتال کے دوران عمران خان کی بھوک ہڑتالی کیمپ آمد کے بعد شروع ہوا۔ مجلس وحدت مسلمین کے وفد میں ، صوبائی آرگنائزر علامہ اقبال بہشتی ، ریٹائرڈچیف جسٹس و سابق عبوری گورنر سیدابن علی، سابق رکن قومی اسمبلی حسین حسینی ، مولاناعبدالحسین، مولانانذیرحسین مطھری، ڈاکٹرسلامت جعفری، تنویرمھدی ایڈوکیٹ اور تہورعباس ایڈوکیٹ شامل تھے۔

وحدت نیوز (اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ راجہ ناصرعباس جعفری نے باچا خان یونیورسٹی پر علم دشمن دہشت گردوں کے بزدلانہ حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے قومی معماروں کی شہادت پرملک بھر میں کل یوم سوگ منانے کا اعلان کیا ہے انہوں نے کہا ہے کہ دہشت گردی کے خلاف آپریشن سے مطلوبہ نتائج حاصل نہیں کیے جا سکے،باچا خان یونیورسٹی پر حملہ پاکستان کی سالمیت و استحکام کے خلاف گناونی سازش ہے،قیمتی انسانی جانوں کا ضیاع ناقابل تلافی نقصان اور قومی سانحہ ہے ،ان کا کہنا تھا کہ تعلیمی اداروں کے خلاف کاروائی کر کے پاکستانی قوم کی جرات کو شکست نہیں دی جا سکتی ،ان اداروں کا فوری محاسبہ کیا جائے جن کے تعلقات کالعدم جماعتوں سے قائم ہیں،وفاقی دارالحکومت سمیت ملک کے تمام شہروں میں فوجی آپریشن کیا جائے،علامہ راجہ ناسر عباس جعفری کا مزید کہنا تھا کہ پنجاب سمیت ملک بھر سے عالمی دہشت گرد گروہ داعش سے وابسطہ افراد کی گرفتاری پر حکمرانوں کی خاموشی لمحہ فکریہ ہے، جنوبی پنجاب دہشت گردوں کا دوسرا  وزیرستان بنا ہوا ہے،مصلحت پسندی اور سیاسی وابستگی دہشت گردی کیخلاف جنگ میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے،دہشت گردوں کے سیاسی سرپرست اور سہولت کار اب بھی آزاد ہیں،دہشتگرد کالعدم جماعتیں نام بدل کر مکمل آزادی سے اپنے مذموم کاروائیوں میں مصروف ہیں،نیشنل ایکشن پلان کو سیاسی مخالفین کیخلاف استعمال کیا جا رہا ہے،کرم ایجنسی پاراچنار دھماکے کرنے والے دہشت گردوں اور ان کے سہولت کاروں کیخلاف بھر پور کاروائی ہوتی تو آج کا یہ المناک سانحہ نہ ہوتا،دہشتگردی کے شکار شہداء میں تفریق کا عمل دہشت گردی کیخلاف جنگ کو مشکوک بنانے کے مترادف ہے۔

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree