وحدت نیوز(اسلام آباد) سربراہ مجلس وحدت مسلمین پاکستان علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کی وفد کے ہمراہ گورنر گلگت بلتستان راجہ جلال حسین مقپون سے ملاقات،گلگت بلتستان کے عوامی مسائل و دیگر ملکی امور پر تبادلہ خیال،ملاقات میں اپوزیشن لیڈر گلگت بلتستان اسمبلی کیپٹن ریٹائرڈ محمد شفیع ترجمان ایم ڈبلیو ایم گلگت بلتستان الیاس صدیقی اور مظاہر شگری شریک تھے،علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے گورنر گلگت بلتستان کو عہدہ سنبھالنے پر نیک خواہشات کا اظہار کیا اور کہا کہ گلگت بلتستان کے عوام کی محرومیوں کو حل کرنے اور آئینی حقوق کے حصول کی جدو جہد میں جو بھی سیاسی جماعت کردار ادا کریگی ایم ڈبلیو ایم ان کا بھرپور ساتھ دیگی،ہمیں سیاسی مصلحتوں سے بالا تر ہو کر گلگت بلتستان کے محب وطن عوام کے حقوق کے لئے کردار ادا کرنا ہے،گلگت بلتستان میں ن لیگ کی حکومت انتقامی کارروائیاں کرتے ہوئے علاقے کے عوامی مسائل کے لئے آواز بلند کرنے والوں کو شیڈول فور میں ڈال کر ہراساں کرنے میں مصروف ہے حالانکہ یہ قانون کشمیر میں نافذ نہیں گلگت بلتستان والوں کے ساتھ ناروا سلوک رکھنے والے دراصل ملک قوم سے مخلص نہیں،یہ وہ خطہ ہے جو پاکستان کا فطری دفاع ہے۔

انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت کو چاہیئے اور ہمارا مطالبہ بھی ہے کہ گلگت بلتستان  کے محب وطن عوامی رہنماؤں کے ساتھ دہشتگردوں جیسے سلوک کرنے والوں کا محاسبہ کریں اور گلگت بلتستان میں بھی بے رحمانہ احتساب کرکے قومی وسائل پر شب خون مارنے والوں کو نشان عبرت بنایا جائے۔علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ گلگت بلتستان کے مدنی وسائل پر حق وہاں کے باسیوں کا ہے،وفاقی حکومت گزشتہ ادوار میں جاری لیزز کا آڈٹ کرےاور وہاں کے وسائل پر ڈاکہ ڈالنے والوں کیخلاف کارروائی کرے،گورنر گلگت بلتستان راجہ جلال مقپون نے علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ انشاالله وفاقی حکومت سے مل کر گلگت بلتستان کے عوامی مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کرنے کی کوشش کریں گے،ایم ڈبلیو ایم کی خدمات اور اتحاد بین المسلمین کے لئے ملک بھر خصوصاََ گلگت بلتستان میں کوششوں کو ہم قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں،آئندہ بھی گلگت بلتستان کے سیاسی معاملات میں مل کر آگے بڑھیں گے۔

وحدت نیوز (اسلام آباد) گلگت بلتستان کے عوام کو نظر انداز کرنے والے دراصل پاکستان کی استحکام و سلامتی کے خیر خواہ نہیں،ملک قوم کے لئے اپنے جوانوں کی جانوں کا نذرانہ دینے والوں کو فراموش کرنے والے ناعاقبت اندیش حکمرانوں نے سوائے طفل تسلی کے اس قوم کو کچھ نہیں دیا،یہ دنیا کی واحد قوم ہے جو سترسالوں سے الحاق پاکستان کی جنگ لڑی رہے ہیں،اور اسی جرم کی پاداش میں یہ پابند سلاسل بھی ہوتے ہیں، پاکستان سے محبت کرنے والے لاکھوں لوگوں کو ستر سالوں سے ان کے بنیادی آئینی حقوق سے محروم رکھنا کہاں کا انصاف ہے ۔ گلگت بلتستان کے غیور عوام ریاست سے آئینی حقوق کے مستقل حل چاہتے ہیں ۔ چیف جسٹس آف پاکستان ثاقب نثار کی گلگت بلتستان ایشو پر توجہ قابل ستائش ہے، ان خیالا ت کا اظہار مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سربراہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری گزشتہ روز سپریم کورٹ میں گلگت بلتستا ن ایشو پر دائر درخواست کے ریمارکس پر اظہار خیال کرتے ہوئے کیا ۔

انہوں نے کہا کہ جب تک پاکستان کی مقتدر قوتیں اور تمام سیاسی جماعتیں مل کر گلگت بلتستان آئینی حقوق پر لائحہ عمل نہیں دیں گی تب تک اس مسلئے پر سنجیدہ پیش رفت ممکن نہیں۔عالمی دباو کے پیش نظر ہم نے لاکھو ں لوگوں کے آئینی حقوق سلب کررکھے ہیں،ہم پہلے ہی بہت دیر کر چکے ہیں نصف صدی سے زیادہ عرصہ ایک علاقے کو بنیادی و آئینی حقوق سے محروم رکھ کر بہت زیادتی کی گئی ہے۔اب مذید ان کو محروم رکھنا خطرناک ثابت ہو سکتاہے ۔ گلگت بلتستان کی موجودہ نسل تعلیم یافتہ اور باشعورہیں یہاں کے بسنے والوں کا ایک ہی سوال ہے کہ ہمارا کیا قصور ہے کہ ہمیں اتنے عرصے سے آئینی شناخت سے محروم رکھا گیا ہے گلگت بلتستان میں یہ مطالبہ اب روز بہ روز قوت پکڑتا جارہا ہے کہ جلد از جلد گلگت بلتستان کے باشندوں کو باقی پاکستانیوں کی طرح آئینی شناخت اور اس علاقے کو باقی صوبوں کی طرح مکمل حقو ق و اختیارت دئیے جائیں مجلس وحدت مسلمین پاکستان بطور پاکستانی مذہبی و سیاسی جماعت گلگت بلتستان کے عوام کے آئینی حقوق کی مکمل حمایت کرتی ہے ۔اور ہر پلیٹ فارم پر گلگت بلتستان کے محب وطن عوام کی آواز کو بلند کرتی رہے گی ۔

وحدت نیوز(گلگت)  گلگت بلتستان کے آئینی حقوق کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ وزیر اعلیٰ حفیظ الرحمن ہیں،وہ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان کے ہیں اور نمائندگی کسی اور کی کررہے ہیں۔گلگت بلتستان کے عوام کا استحصال مسلم لیگ نواز کے دور میں عروج تک پہنچ چکا ہے، ظلم و استحصال کا سلسلہ نہ رکا تو خاموش نہیں رہیں گے۔

مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے رہنما علامہ نیئر عباس مصطفوی نے سید علی رضوی کے والدہ محترمہ کے انتقال پر وحدت ہائوس گلگت میں تعزیتی ریفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ صوبائی حکومت کے زبانی جمع خرچ پر عوام کا اعتماد اٹھ چکا ہے اور مسلم لیگ نواز عوامی حمایت کھو چکی ہے۔عوام کی ملکیتی زمینوں کو خالصہ سرکار کی آڑ میں ہتھیانے کے پیچھے بیرونی سازش کارفرما ہے۔حکومت جان بوجھ کر عوام کو مشتعل کررہی ہے سلسلہ نہ رکا تو عوامی تحریک شروع کرینگے۔سرکاری اداروں کو کرپشن کا گڑھ بنادیا گیا اور ریاستی اداروں کے ساتھ ٹکرائو نے ملکی سلامتی کو دائو پر لگادیا ہے، کرپشن عروج پر ہے اور سرکاری ملازمتوں میں اہل افراد کو نظرانداز کرکے من پسند افراد کو نوازا جارہا ہے۔ٹھیکے میرٹ پر دینے کی بجائے من پسند ٹھیکداروں کو دیئے جاتے ہیں،ترقیاتی منصوبوں کے نام پر مال بنانے کا سلسلہ زور و شور سے جاری ہے۔

انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ بلوچستان سے عبرت حاصل کرے بصورت دیگر وزیر اعلیٰ پر عدم اعتماد کی تحریک کو کامیاب بنایا جائیگا۔اس موقع پر سید علی رضوی کے والدہ محترمہ کے ایصال ثواب کیلئے قرآن خوانی اور فاتحہ کی گئی تعزیتی ریفرنس میں سید آغا علی رضوی کے والدہ محترمہ کے انتقال پرملال پر غمزدہ خاندان کو تعزیت و تسلیت پیش کی گئی۔اجلاس میں صوبائی عہدیداروں کے علاوہ ضلعی عہدیدار بھی شریک رہے۔

وحدت نیوز (سکردو) مجلس وحدت مسلمین پاکستان گلگت بلتستان کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل شیخ احمد علی نوری نے اپنے ایک تعزیتی بیان میں کہا ہے کہ مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان کے سیکریٹری جنرل عالم مبارز و مجاہد حجت الاسلام آغا علی رضوی کو انکی والدہ محترمہ اور میر واعظ نیورنگاہ آغا محمد علی شاہ کو انکی اہلیہ محترمہ کی وفات پر تعزیت و تسلیت پیش کرتے ہیں۔ انہوں نے اپنے بیان میں کہا کہ آغا علی رضوی کی والدہ محترمہ کی رحلت پر انکو اور تمام لواحقین کو تعزیت و تسلیت و پیش کرتے ہیں۔ والدہ محترمہ کی وفات سے آغا علی رضوی کی زندگی میں جو خلا پیدا ہوگیا ہے اسے پر کرنا ممکن نہیں۔ انہیں صبر و شکر کی تلقین کے ساتھ والدہ محترمہ کی مغفرت اور درجات کی بلندی کے لیے دعا گو ہیں۔ انہوں نے کہا کہ موت ایک اٹل حقیقت ہے اور ہر کسی نے اس کا مزہ چکھنا ہے۔ خدا اپنے بندوں کو مختلف امتحانات کے ذریعے کے آزماتا ہے اور وہی بندے کامیاب ہوتے ہیں جن کے ہاتھ سے صبر و شکر کا دامن نہیں چھوٹتا۔ ماں جیسی عظیم ہستی کی موت انتہائی سخت امتحان ہے، کیونکہ اس ہستی کی کمی کوئی بھی پورا نہیں کرسکتا۔ اللہ سے دعا ہے کہ اسکے نہ ختم ہونے والے خزانہ غیب سے لواحقین بلخصوص آغا علی رضوی کو اس نعمت کا نعم البدل عطا فرما اور مرحومہ کے درجات میں اضافہ فرما۔

وحدت نیوز (سکردو) عوامی ایکشن کمیٹی بلتستان کے چیئرمین اور مجلس وحدت مسلمین پاکستان گلگت بلتستان کے سربراہ آغا علی رضوی نے ٹیکس کے خلاف جاری احتجاجی دھرنے کے پندرہویں روز آج یادگار شہداء اسکردو سے خطاب کرتے ہوئے اسمبلی اراکین اور جی بی کونسل کے نمائندوں کو للکارتے ہوئے کہا کہ تم لوگ چھپ کر دھمکی دینے کی بجائے سر بازار آجائیں اور میری آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر بات کریں۔ ہم عوامی حقوق پر سمجھوتہ کرنے والے ہیں اور نہ ہی کسی خوف میں مبتلا ہونے والے۔ انہوں نے کہا کہ ہم اتنے کمزور بھی نہیں کہ تمہاری دھمکیوں سے عوامی حقوق کے لیے جاری جدوجہد سے پیچھے ہٹ جائیں۔ فدا ناشاد، اکبر تابان، اشرف صدا، اقبال حسن اور کاچو امتیاز سن لو، ٹیکس ایشو پر تم لوگوں نے غداری کی ہے اور تمہارے خلاف آواز بلند کرتے رہیں گے۔ دوسری طرف یہ خبر جنگل میں آگ کی طرح پھیل چکی تھی کہ حکمرانوں کی طرف سے دھمکی آمیز ایس ایم ایسز موصول ہوئے ہیں۔ اس سلسلے میں آغا علی رضوی کا کہنا تھا کہ چند نمبرز سے دھمکی آمیز میسیجز موصول ہوئے ہیں اور ان نمبرز کو وقت آنے پر ظاہر کردوں گا۔ علاقے کے امن و امان اور میرے دوست، احباب کے جذبات کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے کسی کو بھی مسیج نہیں دیکھایا، تاہم وقت آنے پر ضرور ان غداروں کے اصل چہرے کو بے نقاب کروں گا۔

میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کسی بھی رکن اسمبلی سے میرا ذاتی جھگڑا نہیں ہے اور عوامی مفاد پر کبھی سمجھوتہ نہیں کرسکتا۔ صحافیوں کے اصرار پر انہوں نے کہا کہ ماضی میں حکمران جماعت کی طرف سے مناسب الفاظ میں پیغام بھی بھیجا گیا تھا، لیکن میں کسی سے ڈرنے والا نہیں ہوں۔ میری آرزو اور تمناء ہی یہی ہے کہ میں خطے کے تمام مسالک کو متحد کرنے کی راہ میں جان دے دوں۔ میںری دلی خواہش ہے کہ خطے کے اہلسنت، نوربخشی، اسماعیلی، اہلحدیث اور اہل تشیع سب بھائی بھائی بن جائیں اور اس کوشش میں میں اپنی جان دے دوں۔ میں سمجھتا ہوں کہ غریب، محروم اور محکوم عوام کے حقوق کی راہ میں مرنا اور اتحاد بین المسلمین و وطن عزیز کے استحکام و سلامتی کی راہ میں مرنا سعادت ہے، جس کے لیے میں ہمہ وقت تیار ہوں۔

وحدت نیوز(شگر) آئینی حقوق دیے بغیر کسی قسم کے ٹیکس کی وصولی نہ صرف جی بی کے عوام کے ساتھ زیادتی ہے بلکہ ملک کے آئین کے ساتھ متصادم بھی ہے.ان خیالات کا اظہار ایم ڈبلیو ایم شگر کے رہنما فداعلی شگری نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا،انہوں نے مزید کہا کہ حکومت اس طرح کے آوچھے ہتھکنڈوں کے ذریعے جی بی کے عوام سے منہ کا نوالہ بھی چھیننا چاہتی ہے.وفاقی حکومت کی دوغلی پالیسی سمجھ سے بالاتر ہے، جب کچھ دینے کی بات آتی ہے تو یہ علاقہ غیر آئینی قرارپاتاہے اور جب مختلف قوانین کا نفاذ، کئی قسم کے ٹیکسز کی حصولی اور بنجر زمینوں کو ہتھیانے کا معاملہ ہو تو یہ علاقہ آئینی اور انصاف مانگنے والے ملک دشمن اور غدار ٹھہراتے ہیں. انہوں نے صوبائی اور وفاقی حکومت سے پرزور مطالبہ کرتے ہوہے کہا کہ فورا تمام قسم کے ٹیکسز کے نفاذ کے احکامات واپس لیں اور اسٹیٹ سبجیکٹ رولز کے نفاذ کے ذریعے ملکیتی حقوق کے تحفظ کی یقینی سمیت اشیاء ضروریہ کی خریداری پر ملنے والی تمام سبسڈیز بحال کی جائے اور آئینی حقوق کے حصول کی راہ میں حائل تمام رکاؤٹوں کو دور کریں اور پر ٹیکسز کے نفاذکی بات کرے۔

Page 1 of 5

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree