وحدت نیوز(سکردو) مجلس وحدت مسلمین پاکستان گلگت  بلتستان کے سربراہ آغا علی رضوی نے گزشتہ روز ایک نجی ٹی وی چینل پر ریٹائرڈ لیفٹننٹ جنرل امجد شعیب کی جانب سے گلگت بلتستان کے عوام پر لگائے گئے سنگین الزامات اور توہین کے خلاف غم و غصے کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان آرمی میں جگہ ملنے والے ایسے افرادپاکستان آرمی کے ماتھے پر کلنک کا ٹیکہ ہے۔ ان جیسوں نے ملکی سالمیت کو ناقابل تلافی نقصان پہنچا ہے۔ وطن عزیز پاکستان کے مختلف اداروں میں ایسی کالی بھیڑیںاب بھی موجود ہیں جنکی وجہ سے ملک دہشتگردوں کے چنگل میں ہے اور بیرونی ممالک بلخصوص امریکی ظالمانہ پالیسوں میں جکڑا ہوا ہے۔ آزادی کے بعد سے اب تک پاکستان کی سرزمین اس ملک کے پچاسی ہزار بے گناہ عوام و سکیورٹی اداروں کے شہداء کے خون سے رنگین ہوئی ہے اس میں ایسے احمق یا سازشی افراد کا کارنامہ ہے۔ موجودہ خودساختہ دانشور کی گفتگو سے واضح ہو رہا ہے کہ وہ اس ضیا ء مائنڈ سیٹ کا پیروکار ہے جنکی عاقبت نااندیشی اور غیروں کے آلہ کار بننے کے سبب طالبان جیسی ملک دشمن جماعت بنی اور ملک بحرانوں میں داخل ہوا۔

 آغا علی رضوی نے کہا کہ اس ناعاقبت اندیش ضیاء الحق کے فرزند کے خلاف فوری طور آئی ایس پی آر ایکشن لے اور تمام چینلز پر پابندی عائد کرانے کے ساتھ ساتھ گلگت بلتستان کے عوام سے معافی دلائیں۔ ان کے سبب ملک کے حساس ترین سرحدی علاقے میں جہاں کے سپوت نے ہمیشہ دشمنوں کے سامنے سینہ سپر ہو کر جنگ لڑ ی ہے بحران پیدا ہورہا ہے اور منفی طاقتوں کو جگہ مل رہی ہے۔ جبکہ یہاں کے جوانوں نے ہی پاکستان آرمی کا نام روشن کیا اور کرگل جنگ سے لے کر دہشتگردوں کے خلاف جاری آپریشنز میں جانیں دیں ان سب شہداء کے خون اور غازیوں کے توہین کے مرتکب اس نام نہاد فکر کے خلاف احتجاجی تحریک شروع کی جائے گی۔ ہم سب کچھ برداشت کر سکتے ہیں لیکن دشمن کے آلہ کار ہونے کا الزام ناقابل برداشت ہے۔اس خود ساختہ تجزیہ کار کو شاید معلوم نہیں کہ پورے ملک میں آزادی سیاسی جدوجہد کے بعد حاصل کی تھی جبکہ گلگت بلتستان واحد خطہ ہے جہاں کے عوام نے ڈگرہ فوج کے خلاف مسلح جدوجہد کر کے آزادی حاصل کی تھی اور اس آزادی میں ہمارے اسلاف نے جانیں دیں ہیں۔ معرکہ کرگل میں انڈیا کے قلب دراس کی پہاڑی چوٹیوں پر سبز ہلالی پرچم لہرایا ہے تو بلتی سربازوں نے لہرایا ہے۔ کتنی دکھ کی بات ہے کہ پاکستان آرمی جیسے اہم ادارے میں زندگی گزارنے والا شخص شاید بیرونی اشارے پر نمک حرامی کا مرتکب ہواہے اور اس بلتی قوم پر الزام لگاتا ہے جنہون نے کبھی ریاستی اداروں پر حملہ نہیں کیا۔

انہوں نے مزیدکہاکہ جی ایچ کیو، مہران ائیر بیس، مناوا پولیس ٹریننگ سنٹر ، آرمی پبلک سکول سمیت ریاست کے دیگر حساس مقامات اور اثاثوں پر سینکڑوں حملے میں ملوث افراد بلتی ہے نہ طالبان بنانے والے بلتی ہیں اور نہ ہی راء کے چیف سے مل کر سستی شہرت کی خاطر کتاب لکھنے والا بلتی ہے ۔ اسی طرح گلگت بلتستان سمیت پورے ملک میں اسماعیلی برادری کی خدمات ہیں انکے خلاف باتیں سمجھ سے بالا تر ہیں۔ہم آرمی چیف سے مطالبہ کرتے ہیں کہ اس نام نہاد جنرل کو لگام دیا جائے اور قومی توہین پر عبرتناک سزا دی جائے تاکہ آئندہ کسی کو ملکی سالمیت کے ساتھ کھیلنے کی ہمت نہ ہو۔ ہماری پاکستان کے ساتھ وابستگی نظریاتی بنیادوں پر ہے نہ کہ خوف یا لالچ میں ۔ پورے ملک میں گلگت بلتستان کے عوام سے زیادہ کوئی محب وطن نہیں ستر سالہ محرومی کے باوجود جذبہ حب الوطنی میں اضافہ ہو رہا ہے لیکن کمی نہیں ۔ اس کے باوجود ایسے الزامات وہ بھی پوری قوم پر ناقابل برداشت ہے امید ہے کہ فوری طور آئی ایس پی نہ صرف اس شخص کے حالیہ بیان سے لاتعلقی کا اظہار کریں گے بلکہ یہاں کے عوام کے جس طرح جذبات مجروح ہوئے ہیں اس کا ازالہ بھی کرائیں گے اور اس نام نہاد دانشور پر تمام ٹی چینلز پر پابندی عائد کریں گے اور گلگت بلتستان کے قوم سے معافی دلائیں گے۔

وحدت نیوز (سکردو) مجلس وحدت مسلمین پاکستان گلگت بلتستان کے سیکریٹری جنرل آغا علی رضوی نے یوم آزادی کی مناسبت سے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ یوم آزادی کے پرمسرت موقع پر تمام محب وطن پاکستانیوں کو ہدیہ تبریک پیش کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مفکر اسلام علامہ محمد اقبال کے تصور پاکستان کو برصغیر کی بے لوث مسلم قیادت قائد اعظم محمد علی جناح نے اپنی ولولہ انگیز قیادت سے عملی جامہ پہنایا اوردنیا کے نقشے پر ایک اسلامی نظریاتی ریاست کے طور پر ابھراتا کہ قرآنی اصولوں کے مطابق ایک اسلامی فلاحی ریاست کا قیام ہو، جہاں تمام مکاتب فکر اپنی تعلیمات کے مطابق زندگی کر سکیں۔ وطن عزیز کو وجود میں آنے سے روکنے کے لیے اس وقت کی تمام عالمی طاقتوں نے کوشش کی لیکن اللہ کی مدد سے جناح کی قیادت اور برصغیر کے عوام کے عزم و کوشش کے سبب پاکستان آزاد ہوا۔

انہوں نے مزید کہاکہ آج ہم اگر آزادی کی فضاء میں سانس لے رہے ہیں تو یہ پاکستان کے سبب ہے۔ پاکستان دنیا میں ابھرتا ہوا ایک اسلامی ملک بنا تو دشمنوں نے اس سے روح نکالنے کی کوشش کی۔ اسلام کے نام پر بننے والے ملک کو لیبرلزم کی طرف لے جانے کی کوشش کی جو کہ اب بھی جاری ہے۔ دوسری طرف اس ملک کو شدت پسندی کی طرف دھکیلا گیا تا کہ اسلام کا چہرہ مسخ کیا جائے۔ اقبال و جناح کے پاکستان میں اس وطن کے حقیقی بیٹوں کے زمین تنگ کر دی گئی۔ اس وطن کے وفاداروں کو سزا دی گئی جو کہ اب بھی جاری ہے جبکہ روز اول سے پاکستان کی مخالفت کرنے والوں کو زمام اقتدار دیا گیا تا کہ مقصد حصول پاکستان فوت ہو جائے۔ لیکن اقبا ل و جناح کے پیروکاروں نے سبز ہلالی پرچم کو سربلند رکھنے کے لیے جانوں کے نذرنے پیش کیے۔ آج پاکستان کے ہر شہری کو اقبال و جناح کے پاکستان کی تعمیر و ترقی کے لیے اپنا کردار ادا کرنے کی ضرورت ہے۔ اقبال و جناح کا پاکستان حقیقی اسلام کی ریاست ہے نہ کہ شدت پسند ریاست اور نہ لیبرل ریاست۔ وطن عزیز میں پاکستان مخالفین طاقتیں دم توڑ رہیں ہیں اور حقیقی اسلامی ریاست بنانے کے لیے مزید قربانیاں درکار ہے۔

وحدت نیوز(گلگت) کارگاہ نالے میں پولیس چوکی پر دہشت گردوں کے حملے کی پرزور مذمت کرتے ہیں۔مقابلے میں شہیدہونے والے پولیس اہلکاروں کی جرات اور حوصلے کو سلام پیش کرتے ہیں۔تانگیر اور داریل میں موثر فوجی آپریشن ہوتا تو آج کا یہ واقعہ دیکھنا نہ پڑتا۔

مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان کےسیکریٹری جنرل آغا علی رضوی نے کہا ہے کہ حفیظ حکومت دہشت گردوں کو محفوظ راستہ دینے کیلئے موثر فوجی آپریشن کی مخالفت کررہے ہیں ۔داریل تانگیرکے پورے ریجن کو کوارڈن کرکے موثر فوجی آپریشن ہوتاتو دہشت گردوں کو کارگاہ نالے میں دہشت گردی کا موقع نہ ملتا۔وانا وزیرستان میں فوجی آپریشن کے دوران دہشت گرد فرار ہوکر تانگیر اور داریل روپوش ہوئے ہیں اور آج موقع پاکر دہشت گردانہ کاروائیاں کررہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہم نے بارہا سیکورٹی اداروں کو یاد دہانی کروائی تھی کہ کارگاہ نالہ اور غذر کے نالوں سے دہشت گرد گلگت میں کاروائی کرسکتے ہیں لیکن ہمارے خدشات کو ردی کی ٹوکری میں ڈال دیا گیا۔کارگاہ نالہ،شروٹ نالہ اور دیگر نالوں میں دہشت گردی کے کئی واقعات رونما ہوچکے ہیں جس میں آج تک کسی مجرم کو گرفتارکرکے سزا نہیں دی گئی۔اب تو دہشت گردوں کی آسائش کیلئے کارگاہ نالے کو جیپ روڈ کے ذریعے داریل سے لنک بھی کیا جارہا ہے تاکہ دہشت گردوں کو فرار ہونے میں کوئی رکاوٹ درپیش نہ آئے۔

انہوں نے کہا کہ اب تو دہشت گرد گلگت شہر کے انٹری پوائنٹ تک پہنچ چکے ہیں حکومت کو کس چیز کا انتظار ہے۔انہوں نے کہا کہ دیامر میں ڈی سی آفس پر حملے سے ثابت ہوا کہ دیامر ڈسٹرکٹ میں حکومت کی رٹ ختم ہوچکی ہے۔انہوں نے  پاک آرمی سے مطالبہ کیا ہے ایمرجنسی نافذ کرکے پورے علاقے کو کوارڈن کرکے موثر فوجی آپریشن کا آغاز کیا جائے اور آخری دہشت گرد کے خاتمے تک آپریشن جاری رکھا جائے۔

وحدت نیوز(سکردو)  امام جمعہ باغیچہ کھرمنگ حجتہ السلام شیخ اکبر رجائی نے جمعہ کے خطے میں کہا کہ ہے کہ عوامی حقوق کے لیے جدوجہد کرنے اور آواز بلند کرنے اور حکمران جماعت کی سیاہ کاریوں سے پردہ اٹھانے کے جرم میں عالم مبارزآغا علی ضوی اورگلگت بلتستان کی دیگر اہم شخصیات کو شیڈول فور کے نام پر انتقام کا نشانہ بنانا موجودہ حکومت کی بدترین عمل اور عوامی حقوق کے لیے اٹھنے والی آواز کو دبانے کی ناکام کوشش ہے اس طرح کے فیصلوں سے نہ عوامی حقوق کے لیے اٹھنے والی آوازوں میں کمی آئے گی اور نہ ہم مرعوب ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ ایسے غلط اقدام کی صورت میں خطے میں جو صورتحال پیش آئے گی اس کی تمام تر ذمہ داری حکومت پر عائد ہوگی ۔ چیف جسٹس آف پاکستان گلگت بلتستان میں شیڈول فور نامی سیاسی پھندے کو ختم کرنے میں اپنا کردار ادا کرے۔ کھرمنگ کے عوام عوامی حقوق کے لیے جدوجہد کرنے والی شخصیت آغا علی رضوی ، شیخ کریمی اورایکشن کمیٹی کے دیگر ممبران کو شیڈول فور سے نکالنے کا مطالبہ کرتے ہیں کہ اس واقعے کی حساسیت کو مدنظر رکھتے ہوئے ذمہ دار ادارے فوری طور پر سنجیدہ اقدام اٹھائیں بصورت دیگر سخت ترین ردعمل دینے پر عوام مجبور ہونگے۔

 امام جمعہ گمبہ سکردو شیخ محمد حسن عابدی نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان میں شیڈول فور کا بدترین سیاسی استعمال ہو رہا ہے۔ پرامن عوامی جدوجہد کرنے والے علماء اور سماجی کارکنان کو شیڈول فور میں ڈالنے کی حکومتی کوشش کی پرزور مذمت کرتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ مقتدر حلقے شیڈول فور کے سیاسی استعمال کو روکنے میں اپنا کردار ادا کرے بصورت دیگر سخت احتجاج پر مجبور ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ آغا علی رضوی اور شیخ کریمی سمیت ایکشن کمیٹی کے دیگر ممبران کو شیڈول فور میں ڈالنا سیاسی انتقام کا شاخسانہ ہے۔ ہم مقتدر حلقوں سے مطالبہ کرتے ہیں کہ آغا علی رضوی، شیخ کریمی اور دیگر شخصیات کو فی الفور شیڈول فور سے نکالے بصورت دیگر احتجاج کرنے پر مجبور ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ یہاں کے عوام شیڈو ل فور کے نام سے گبھرانے والے نہیں بلکہ حقوق کے لیے آواز بلند کرتے رہیں گے۔

امام جمعہ حسین آباد سکردو آغا مظاہر حسین موسوی نے جمعہ کے خطبے میں کہا ہے کہ اتحاد بین المسلمین کے داعی آغا علی رضوی کو شیڈول فورتھ میں ڈالنا پورے خطے کی توہین ہے اور عوامی حقوق کے لیے اٹھنے والی توانا آواز کو دبانے کی کوشش ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومتی اقدامات سے آغا علی رضوی کی جان کو خطرات لاحق ہیں۔ حکومت ہوش کے ناخن لیں اور غلط فیصلوں سے باز رہے۔ انہوں نے کہا کہ اتحاد بین المسلمین کے حقیقی داعی کے حق میں آج تمام تر مکاتب فکر کے پیروکار آواز بلند کر رہے ہیں ۔ غذر سے ہنزہ نگر اور استور سے گانچھے تک کے عوام آغا علی رضوی ، شیخ کریمی اور دیگر عوامی حقوق کے لیے آواز بلند کرنے والوںکو شیڈول فور میں ڈالنے کے خلاف سراپا احتجاج ہے۔ حکومت فوری طور پر اپنا غلط فیصلہ واپس لے بصورت دیگر ہم خاموش نہیں رہیں گے۔

وحدت نیوز (گلگت)  آغا علی رضوی کی آواز پورے گلگت بلتستان کے عوام کی آواز ہے ،گلگت بلتستان کے حقوق کی بات کرنے والوں کو فورتھ شیڈول میں شامل کرنا سیاسی انتقام اور زبان بندی کی بدترین مثال ہے ایسے ہتھکنڈے سوائے عوام کو اشتعال دلوانے کے علاوہ کچھ نہیں۔

مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان کے سیکریٹری سیاسیات غلام عباس نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان میں 200 سے زائد سیاسی مخالفین کو فورتھ شیڈول میں شامل کرکے دیگر پاکستان کے چار صوبوں سے سبقت لے گئے ہیں جبکہ یہ ناعاقبت اندیش فیصلوں سے گلگت بلتستان کا امیج متاثر کیا جارہا ہے جس سے سیاحت سمیت دیگر کاروباری سلسلوں کو شدید نقصان پہنچنے کا اندیشہ ہے اور ساتھ ہی فورتھ شیڈول کا مقصد بھی ختم ہوتا جارہا ہے۔انہوں نے کہا کہ طلباء پر فورتھ شیڈول کے اطلاق سے قوم کے معماروں کا مستقبل خطرے سے دوچار ہورہا ہے اور ستم ظریفی یہ ہے کہ ایسے طلباء کو فورتھ شیڈول میں ڈالا گیا ہے جو اپنے ڈیپارٹمنٹ میں پوزیشن ہولڈر ہیں۔

انہوں نے فورس کمانڈر سے اپیل کی کہ وہ فورتھ شیڈول کے غیر ضروری استعمال کا نوٹس لے اور حکومت کو ایسے اوچھے ہتھکنڈوں سے روکے جس سے علاقے میں نقص امن کا خدشہ پیدا ہورہا ہو۔انہوں نے عوامی ایکشن کمیٹی کی جانب سے شیڈول فورتھ کے خلاف تحریک چلانے کے اعلان کی مکمل حمایت کا اعلان کیا اور عوام سے بھی اپیل کی کہ وہ ان مظالم کے خلاف میدان میں نکلنے کیلئے تیار ہوجائے۔انہوں نے حکومت کو خبردار کیا کہ وہ سیاسی انتقام کی یہ روایت ختم کریں ورنہ آنے والے وقتوں میں انہیں بھی فورتھ شیڈول کا سامنا کرنا پڑیگا۔

وحدت نیوز (سکردو)  مجلس وحدت مسلمین پاکستان گلگت بلتستان کے سیکریٹری جنرل آغا علی رضوی نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ چیف سیکرٹری گلگت بلتستان نے سائل کے ساتھ جو سلوک کیا وہ انتہائی شرمناک عمل اور فرائض منصبی کے برخلاف ہے۔ غریب عوام کے مسائل سن کر حل کرنے کی بجائے انہوں نے گلگت بلتستان کے غیور عوام کی توہین کی جس کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے انہیں عوام سے معافی مانگنی چاہیے۔ ان کے انداز سے معلوم ہوتا ہے کہ یا تو وہ خطے کے عوام کی پاکستان کے لیے دی گئی قربانیوں سے نابلد ہے یا وہ جان بوجھ کر خطے کا ماحو ل خراب کرنا چاہتا ہے۔ اگر وزیراعلی ٰ انہیں فوری طور علاقہ بدر نہیں کرتا ہے تو سمجھا جائے گا کہ وہ گلگت بلتستان کے عوام کو پاکستان کے خلاف اکسانا چاہتا ہے ۔

آغا علی رضوی نے کہا کہ پورا ملک گلگت بلتستان کا مقروض ہے یہا ں کے عوام نے ڈوگروں سے مار بھگاکر جی بی کو پاکستان کی جھولی میں ڈال دیا، آدھا پاکستان یہاں کے آبی وسائل سے سیراب ہوتا ہے اور ہر مشکل وقت میں یہاں کے جری جوانوں نے سینہ سپر ہو کر پاکستان کی حفاظت کی معرکہ کرگل ہو یا دہشتگردوں کے خلاف آپریشن جی بی کے جوانوں کے خون پاکستان کے تحفظ میں صرف ہوا ہے۔ یہاں کے عوام جنرل سیلز ٹیکس کی مد میں اربوں روپے دیتے ہیں، یہاں کی سیاحت سے ملک کو اربوں روپے کی آمدنی حاصل ہوتی ہے، سست ڈرائی پورٹ سے اربوں روپے حاصل ہوتے ہیں، اس خطے کا سینہ چیر کر سی پیک جیسے منصوبہ یہاں سے گزرتا ہے اور پاکستان میں مستقبل میں بننے والے ڈیموں کے پانی بھی اسی خطے کی دین ہے لیکن یہاں کے عوام نے کبھی ان وسائل کی رائیلٹی نہیں مانگی ۔ ایسے میں چیف سیکرٹری کا رویہ نہ صرف عوام کی توہین ہے بلکہ پاکستان کے استحکام پر حملہ ہے ریاستی ادارے نوٹس لیں۔

 انہوں نے مزید کہا کہ گائنی ڈاکٹر کے مطالبے کو ریاست کے خلاف ہرزہ سرائی قرارد دینے والا ریاست کا دشمن ہے۔ گلگت  بلتستان میں ایک عرصے سے عوام کو بہکانے اور پاکستان سے دور کرنے کی کوششیں ہو رہی ہیں چیف سیکرٹری کا یہ عمل بھی اسی سلسلے کی کڑی معلوم ہوتی ہے۔ سابقہ چیف سیکرٹری کو وزیراعلی کے ایماء پر علاقہ بدر کر کے حالیہ چیف سیکرٹری کو لانا اور آتے ہی عوام کے ساتھ بدسلوکی کرنا اور عوام کو ورغلانا ممبئی حملے سے متعلق دئیے گئے شرمناک بیان سے میل کھاتا ہے۔ وزیراعلی گلگت بلتستان اپنا موقوف واضح کرے کہ چیف سیکرٹری کے بیان کو کس نگاہ دیکھتے اگر خاموش رہے تو اس بیان کا ذمہ دار وزیراعلی ہوگا۔ہم ریاستی ادروں بلخصوص ایف سی این سے جنرل سے مطالبہ کرتے ہیں کہ پاکستان کے حساس ترین علاقے کے محب وطن شہریوں کی توہین کا نوٹس لیتے ہوئے فوری طور پر چیف سیکرٹری اور ان جیسے دیگر عوام دشمن،خطہ دشمن افسران کو علاقہ بدر کیا جائے۔

Page 1 of 3

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree