وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکریٹری جنرل علامہ راجہ ناصرعباس جعفری نے پشین اسٹاپ کوئٹہ میں ایف سی اہلکاروں پر خودکش حملے میں فوجیوں اور شہریوں کی قیمتی جانوں کے نقصان پر شدید افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ وطن عزیز کہ جشن آزادی سے ۲ روز قبل بم دھماکے میں قیمتی انسانی جانوں کا ضیاع ناقابل تلافی نقصان ہے،انسانی جانوں سے کھیلنے والے درندے ہیں جو کسی رعایت کے مستحق نہیں،دہشت گرد طاقتیں بلوچستان کو عدم استحکام کا نشانہ بنا کر سی پیک منصوبے کو سبوتاژ کرنا چاہتے ہیں، قوم و ملک کے دشمن کسی رعایت کے مستحق نہیں۔

انہوں نے کہاکہ کوئٹہ میں کالعدم مذہبی جماعتیں دہشت گردی کے واقعات میں ملوث ہیں، جوکبھی ہزارہ شیعہ شہریوں اور کبھی سکیورٹی فورسز کو اپنی بربریت کا نشانہ بناتی ہیں،بھارت اور ملک دشمن قوتوں پاکستان کے امن کو تباہ کرنے کے لیے کالعدم جماعتوں کو استعمال کر رہے ہیں،سیکورٹی فورسز پر حملے کی یہ بزدلانہ کاروائی ہمارے عزم و حوصلے کو پست نہیں کر سکتی،داعش اور کالعدم تنظیموں کہ خلاف اقدامات ناگزیر ہوچکے ہیں،کوئٹہ میں سانحہ کےوقت وزیراعلی بلوچستان کی لاہور میں نااہل وزیراعظم کے استقبالیہ میں موجودگی افسوسناک ہے،حکمران جماعتی وفاداریاں نبھانے کے بجائے قومی سلامتی واستحکام پر توجہ دیں ۔

علامہ راجہ ناصرعباس نے سانحہ میں شہید ہونے والوں کے غم زدہ خاندانوں سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے کہاکہ مجلس وحدت مسلمین دکھ کی اس گھڑی میں آپ کے غم میں برابر کی شریک ہے، اپنے پیاروں کے بچھڑنے کا غم ملت تشیع سے زیادہ بہتر کوئی نہیں سمجھ سکتا جس نے بیک وقت سو سو عزیزوں کے جنازے اٹھائے لیکن کبھی وطن عزیز کی سلامتی اور استحکام کا سودا نہیں کیا، انہوں نے شہداء کی بلندی درجات اور زخمیوں کی جلد صحت یابی کی دعا بھی کی ہے ۔

وحدت نیوز(گلگت) ملک دشمن عناصر کی جانب سے نہتے شہریوں پر پے درپے حملے حکومت کی دانستہ غفلت اور نااہلی کا ثبوت ہے۔پارا چنار میں دہشت گردی کا یہ کوئی پہلا واقعہ نہیں اس سے قبل بھی کئی مرتبہ یہاں کے پرامن شہریوں کو نشانہ بنایا گیا لیکن حکومت کی جانب سے دہشت گردی پر قابو پانے کیلئے موثر اقدامات نہ اٹھانا سوالیہ نشان ہے۔

مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان کے ترجمان محمد الیاس صدیقی نے کہا کہ پاراچنار میں بے گناہ شہریوں پر حملے کے پیچھے تکفیری سوچ کارفرما ہے جس کی بارہا نشاندہی کررہے ہیں لیکن حکومت دہشت گردوں کا لگام دینے کی بجائے دہشت گردی کے خلاف احتجاج کرنے والوں کے خلاف طاقت استعمال کررہی ہے ۔پولیٹیکل انتظامیہ کا رویہ ہمیشہ سے جانبدارانہ رہا ہے اور اس سے صا ف ظاہر ہوتا ہے کہ پولیٹیکل انتظامیہ اور دہشت گرد ایک پیج پر ہیں۔

انہوں نے پاراچنار میں امامبارگاہ کے قریب ہونے والے دھماکے کی سخت مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت طالبان بچائو تحریک پر گامزن ہے اور نیشنل ایکشن پلان کو محض سیاسی مقاصد کیلئے استعمال کررہی ہے ۔ملت تشیع پورے پاکستان میں دہشت گردوں کے نشانے پر ہے جلوسوں، امامبارگاہوں اور مساجد کو نشانہ بنایا جارہا ہے ،تین دہائیوں سے دہشت گردی کے واقعات رونما ہورہے ہیں لیکن حکومتیں اپنے اقتدار کی خاطر دہشت گردوں کے اصل سرغنوں پر ہاتھ ڈالنے سے قاصر نظر آرہی ہے ۔دہشت گردوں کواخلاقی و مالی سپورٹ فراہم کرنے والے آج بھی حکومت کے ساتھ ہیں،وزیر داخلہ کالعدم جماعتوں کے خلاف اقدامات کرنے کی بجائے ان سے تعلقات بڑھائے جارہے ہیں جبکہ یہی کالعدم جماعتیں دہشت گردوں کو سپورٹ فراہم کرتی ہیں۔انہوں نے پاراچنار  میں شہید ہونے والوں کے لواحقین سے ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے غم و اندوہ کی اس گھڑی میں صبر اور حوصلے کا دامن تھامنے کی اپیل کی ہے۔

وحدت نیوز(مظفرگڑھ) مجلس وحدت مسلمین ضلع مظفرگڑھ کے سیکرٹری جنرل علی رضا طوری نے پاراچنار میں حالیہ دہشتگردی پر سخت مذمت کرتے ہوئے کہا کہ پاراچنار میں ہونے والے دھماکے اور سیکیورٹی کے اداروں کی جانب سے نہتے مظاہرین پر فائرینگ کی شدید مذمت کرتے ہیں ۔ہم ایک طرف سے دہشتگردوں کے حملوں کے شکار ہیں تو دوسری طرف اپنے اوپر ہونے والے مظالم پر آواز اٹھانے پرسیکیورٹی اداروں کے نشانے پر ہیں۔ پچھلے ایک مہینے سے سیکیورٹی اداروں کو آگاہ کیا گیا تھا۔ لیکن وہ صرف عوام کو مختلف بہانوں سے کرنے پر تل ہوئی ہے۔ ہم دوسرے ملکوں کو دفاع کے لئے تیار رہتے ہیں لیکن اپنی عوام کو دہشت گردوں کے رحم وکرم پر چھوڑا ہے۔
    
ان کا مزید کہنا تھا کہ رنگپور میں قرآن پاک کی بیحرمتی کی گئی جس کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں اور حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کے  جو اس واقعہ میں ملوث ہیں ان کو گرفتار کر کے قرار واقع سزا دی جائے اور حکومت کوبیحرمتی کے دانستہ و نادانستہ بیحرمتی کو روکنے کے لئے اقدامات کرنے چاہئے۔کیوں کہ ہر اخبار، رسالے پر قرآن کی آیات اور احادیث لکھی ہوتی ہیں جو کے مناسب بندوبست نہ ہونے کی وجہ سے کہیں زمیں پر اور کہیں گند کے دھیروں مین اخبار پڑے ہوتے ہیں، لہٰذا اسکو روکا جائے۔

ان کا مزید کہنا تھا کے یہ جنگی اتحاد جس کی سربراہی جنرل راحیل شریف کر رہے ہیں اس سے مسلکی و فرقہ وارانہ تعصب کی بُو آتی ہے جنرل راحیل شریف جس سعودی اتحاد کی قیادت کرنے چلے ہیں و? اک مسلکی و فرقہ وارانہ تعصب کی بنیاد پے بنایا گیا ہے ۔ پاکستان جو کے خود دہستگردی کا شکار ہے اور پاک فوج کے جوان جو اپنی جانوں کے نذرانے دے کر اس ملک کو ہر قسمی دہستگردی سے پاک کرنے میں مصروف ہیں اس صورت حال میں پاکستان میں فرقہ واریت اور دشستگردی کی یہ نئی لہر ملک کے امن کو خراب کرنے میں کارگر ثابت ہو گا، کیوں کے یہ اس جنگی اتحاد کی کاروایاں اک اسلامی ملک یمن کے مسلمانوں کے خلاف ہیں ۔ہم اپنی قیادت پر مکمل اعتماد کرتے ہوے راحیل شریف سے امید کرتے ہیں کہ پاکستان کے مفاد کو اول رکھیں گے ۔

وحدت نیوز(ملتان) پاراچنار میں مرکزی امام بارگاہ کے قریب ہونے والے دہشتگردانہ حملے کے خلاف مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عبا س جعفری کی اپیل پر نماز جمعہ کے بعد ملک بھر میں احتجاجی مظاہرے کیے گئے۔ ملتان میں بھی نماز جمعہ کے بعد جامع مسجد الحسین نیو ملتان کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا گیا، مظاہرین نے پلے کارڈز اُٹھا رکھے تھے جن پر دہشتگردی کے خلاف نعرے درج تھے، احتجاجی مظاہرے کی قیادت صوبائی سیکرٹری جنرل علامہ اقتدار حسین نقوی، سیکرٹری سیاسیات مہر سخاوت علی، ضلعی سیکرٹری جنرل ملتان سید ندیم عباس کاظمی، مولانا عمران ظفر اور دیگر نے کی۔ مظاہرین کی حکومت کے خلاف شدید نعرے بازی، دہشتگردوں کے خلاف کاروائی کا مطالبہ کیا، مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے علامہ اقتدار حسین نقوی نے کہا کہ پاراچنار دھماکہ انتظامیہ اور سکیورٹی اداروں کی ناکامی کا ثبوت ہے، دہشتگردوں کا درجنوں چیک پوسٹوں سے گزر کر علاقے میں داخل ہونا سکیورٹی اداروں کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے۔

علامہ اقتدار نقوی نے کہا کہ ہمیں اپنے اندر چھپے دہشتگردوں کے ہمدرد کالی بھیڑوں کو بے نقاب کرنا ہوگا۔ پاراچنار میں ایک طرف دہشتگرد ہمیں نشانہ بنارہے ہیں تو دوسری طرف احتجاج کرنے پر سیکیورٹی فورسز ہمیں نشانہ بنارہی ہیں، ملک میں ہمیں مارا بھی جارہا ہے اور احتجاج بھی نہیں کرنے دیا جارہا، ہمیں پولیٹیکل انتظامیہ اور مرکزی حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ آئندہ جمعہ سے قبل متاثرین کے مطالبات کو مانا جائے علاوہ ازیں ملک بھر میں احتجاج کریں گے ۔ہم ملک میں امن کے داعی ہیں مگر حکومت ہمارے صبر کا امتحان لے رہی ہے ، پارہ چنار میں اس سے قبل بھی سیکیورٹی فورسز کی جانب سے شہریوں پر تشددکیا گیا ، ہمیں حکومت اور پولیٹیکل انتظامیہ کو متنبہ کرتے ہیں کہ اگر ہمارے اُوپر ہونے والے مظالم بند نہ کیے گے تو حالات کی ذمہ داری پولیٹیکل انتظامیہ اور حکومت پر عائد ہوگی۔ مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے مولانا عمران ظفر کا کہنا تھا کہ پاراچنار کے دیگر سانحات کے مجرموں کیخلاف فیصلہ کن کاروائی ہوتے تو آج کا واقعہ رو نما نہ ہوتا، ملت جعفریہ کو اس وقت ملک میں دہشتگردوں کیساتھ ساتھ حکومتی انتقامی کاروائیوں کا بھی سامنا ہے، دوسروں کی جنگ میں کودنے سے پہلے اپنے ملک کو محفوظ بنانے کی ضرورت ہے۔

وحدت نیوز(کراچی) سربراہ مجلس وحدت مسلمین علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے پاراچنار میں دہشتگردوں کی سفاکانہ و بزدلانہ کاروائی کی شدید مذمت کی اور دھماکہ کے بعد شہریوں کی احتجاجی مظاہرے پر ایف سی اہلکاروں کی فائرنگ اور اس کے نتیجے میں درجنوں پرامن شہریوں کے زخمی ہونے پر شدید احتجاج کرتے ہوئے آرمی چیف سے مطالبہ کیا کہ وہ ایسے متعصب اور دہشتگردوں کے ہمدردوں کیخلاف فوری تحقیقات کرے اور ذمہ داراں کو قرارواقعی سزا دیں۔

علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے اپنے بیان میں کہا کہ پاراچنار کے عوام کو ایک طرف دہشتگردوں کی بربریت کا سامنا ہے تو دوسری طرف ایف سی اور پولیٹیکل ایجنٹ انتقامی کاروائیوں میں مصروف ہیں،آخر یہ مظلوم عوام انصاف کے لئے کہاں جائیں؟جس دن سے عوامی رضا کاروں کو ناکوں سے ہٹایا گیا اس دن سے لے کر اب تک درجنوں شہید اور سینکڑوں زخمی ہو چکے ہیں،پاراچنار کے عوام کو تحفظ دینے میں پولیٹیکل ایجنٹ اور انتظامیہ مکمل ناکام ہو چکے ہیں،ایک مکمل منصوبہ بندی کے تحت وقفے وقفے سے اس مظلوم آبادی کو نشانہ بنایا جا رہا ہے،پاراچنار کے پہلے سانحات پر ایکشن لیا جاتا اور دہشتگردوں اور ان کے سہولت کاروں کو کیفرکردار تک پہنچایا جاتا تو آج یہ المناک سانحہ پیش نہ آتا،آپریشن ضرب عضب اور ردالفساد کے بعد بھی حکومت اور سکیورٹی ادارے شیعہ قتل عام روکنے میں ناکام ہیں ،مسلسل غفلت کے مرتکب سیکورٹی اہلکاروں کیخلاف کاروائی ہونی چاہیئے،حکومت اور ادارے دوسرے ممالک کی تحفظ کے لئے بے چین ہونے سے پہلے اپنی عوام کی جان ومال کی تحفظ کو یقینی بنائیں۔

وحدت نیوز (اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے تفتان بارڈ پر زائرین کو درپیش مسائل پر تشویش کااظہار کرتے ہوئے اس مسئلہ کے مستقل اور فوری حل کا مطالبہ کیا ہے۔انہوں نے کہ وفاقی وزارات داخلہ اور بلوچستان کی صوبائی حکومت کوئٹہ سے ایران بذریعہ سڑک سفر کرنے والے زائرین کی مشکلات سے بخوبی آگاہ ہے۔اس معاملے سے حکومت کی دانستہ لاتعلقی اور غفلت زائرین کے اضطراب میں اضافے کا باعث ہے۔تفتان میں رہائش اور کھانے کے نام پر لوٹ مار کرنے والوں کی اجاری داری قائم رکھنے کے لیے زائرین کو خود ساختہ مشکلات میں الجھایا جا رہا ہے جس پر پاکستان کے پانچ کروڑ اہل تشیع سراپا احتجاج ہیں۔۔سیکورٹی کے نام پر زائرین کے قافلوں کو کئی کئی دن تفتان بارڈر پر روک لیا جاتا ہے۔جس کے باعث بچوں ،بزرگوں اور خواتین کو شدید اذیت جھیلنا پڑتی ہے۔بارڈر پر دکاندار اشیا ئے خورد ونوش کئی گنا مہنگے نرخوں پر فروخت کرتے ہیں۔مناسب رہائشی سہولیات نہ ہونے کے باعث خواتین و بچوں کو اکثر اوقات کھلے آسمان تلے کئی کئی دن اور راتیں گزارنی پڑتی ہیں۔انہوں نے حکومت سے ایسی پالیسی تشکیل دینے کا مطالبہ کیا ہے جس کے تحت تفتان بارڈر پر زائرین کے قیام کو چندگھنٹوں تک محدود کیا جائے۔تاکہ انہیں تفتان بارڈر پر کم سے کم مشکلات کا سامنا کرنا پڑے۔زیارت امام رضا علیہ السلام سے واپس آنے والے زائرین کے تفتان سے کوئٹہ تک محفوظ سفری سہولیات کی فراہمی ریاست کی ذمہ داری ہے ۔

Page 1 of 3

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree