وحدت نیوز (کوئٹہ) مجلس وحدت مسلمین بلوچستان کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل علامہ سید ظفر عباس شمسی نے کہا ہے کہ آئے دن دہشتگرد کوئٹہ میں دہشتگردی کرتے رہتے ہیں اب تو دہشتگردی معمول بنا چکا ہے، شیعہ نسل کشی سربازار کی جاتی ہے سب بازاری شیعہ نسل کشی دیکھتے رہتے ہیں کسی کو توفیق نہیں ہوتی کہ دہشتگردی کو روکا جائے یا دہشتگردی کے خلاف موثر آواز بلند کی جائے۔ حکومت پاکستان بالخصوص حکومت بلوچستان تو دہشتگردی سے نہ واقف ہیں بلوچستان میں جتنی دہشتگردی ہوئی ہے، بهاگ چهلگری ہو یا فتح پور، کوئٹہ میں شیعہ نسل کشی ہو یا وکیلوں پر خود کش حملہ، حکومت بلوچستان نے آج تک کوئی ایکشن نہیں لیا کسی دہشتگرد کو اور سہولت کار کو نا تو کبھی گرفتار کیا اور نا کسی دہشتگرد کو سزا دی دہشتگرد کوئٹہ میں اور مستونگ میں دندناتے دہشتگردی کهلے عام کر رہے ہیں اور حکومت بلوچستان نے چپ سادھ کر رکھی ہے ایسا لگتا ہے جیسے حکومت بلوچستان کی نگرانی میں یہ سب کچھ ہو رہا ہو۔ جناب قمر جاوید باجوہ صاحب اگر حکومت بلوچستان اور حکومت پاکستان دہشتگردی بلوچستان میں نہیں روک سکتی. نسل کشوں سے شیعہ نسل کشی نہیں بند کر سکتی تو آپ میدان میں آئیں۔

وحدت نیوز(جهل مگسی) صوبائی سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین بلوچستان علامہ برکت علی مطهری اور ڈپٹی سیکرٹری جنرل علامہ سید ظفر عباس شمسی نے  وفد کے ہمراہ گدی نشین سید سرفراز شاہ سے شہدا فتح پور کی تعزیت کی اور  واقعے کی پر زور مذمت کی اس موقع پر  ایم پی اے  نواب زادہ نادر خان مگسی، نواب زادہ اورنگ زیب مگسی ڈسٹرکٹ چیئرمین ضلع جهل مگسی اور پیپلزپارٹی کے سابق وزیر صادق عمرانی اور علاقے کے سیاسی شخصیات موجود تھیں،سانحہ فتح پور میں جس بہادر کانسٹیبل شہید بہار خان لاشاری نے بہادری کا مظاہرہ کیا بهاگتے ہوئے دہشتگرد کو گرفتار کرنے کی خاطر دو مرتبہ اپنی کلاشنکوف کا بٹ مارا جس سے دہشتگرد زمین پر گر پڑا اور گرتے ہی خودکش دھماکہ کر دیا جس کی وجہ سے یہ بہادر کانسٹیبل شہید ہوا،صوبائی سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین بلوچستان علامہ برکت علی مطهری اور صوبائی ڈپٹی سیکرٹری جنرل علامہ سید ظفر عباس شمسی نے ان کے لواحقین سے گھر جاکر تعزیت کااظہار کیا اور فاتحہ خوانی کی اور شہید کی بہادری کوخراج تحسین پیش کیا۔

وحدت نیوز(کوئٹہ) مجلس وحدت مسلمین بلوچستان کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل علامہ سید ظفر عباس شمسی کا کہنا ہے کہ مستونگ میں آج پھر شیعہ ھزارہ کو قتل کیا گیا، اس سانحہ میں چار افراد شھید ھوئے اور ایک زخمی. شھید ھونے والوں میں ایک خاتون بھی ھے۔ یہ سانحہ اس جگہ پیش آیا جہاں سے چند قدم پر ایف سی کی چیک پوسٹ قائم ہے، دھشتکگرد دھشتگردی کر کے اس جگہ سے باآسانی فرار ھونے میں کامیاب ھو گئے، وھاں سے دھشتگردں کا فرار ھونا باعث تشویش ھے اور سیکورٹی اداروں کی مجرمانہ غفلت ھے۔ ان کا بیان میں کہنا تھا کہ حکومت بلوچستان دھشتگردی کو ختم کرنے میں ناکام ھو چکی ھے، اسی وجہ سے دھشتگردی میں اضافہ ھوا ھے۔ کچھ دن پہلے کوئٹہ میں ایک فرض شناس پولیس آفیسر ایس ایس پی اور اسکے ساتھیوں کو شھید کیا گیا اور آج مستونگ میں یہ سانحہ پیش آیا ھے۔ کوئٹہ اور مستونگ دھشتگردوں کا گڑھ ھے، لشکر جھنگوی سے تعلق رکھنے والے دھشتگرد کوئٹہ اور مستونگ میں دندناتے پھر رھے ھیں انکو حکومت گرفتار نہیں کر رھی۔ ان دھشت گردوں کو آزاد چھوڑ دیا گیا. اس طرح پاکستان میں امن قائم نہیں ھوسکے گا۔ بلوچستان مین شیعہ عدم تحفظ کا شکار ھیں، اس لئے میں افواج پاکستان کے سربراہ  قمر جاوید باجوہ سے اپیل کرتا ھوں کہ وہ بلوچستان میں آپریشن شروع کریں خصوصا کوئٹہ اور مستونگ میں فوجی آپریشن شروع کریں اور دھشتگردوں کا صفایا کیا جائے۔

وحدت نیوز (کوئٹہ) سانحہ پشارو کے خلاف احتجاجی ریلی  سے خطاب کرتے ہوئے ایم ڈبلیو ایم بلوچستان کے سیکریٹری جنرل علامہ مقصود علی ڈومکی نے کہا ہے کہ وزیرداخلہ ان دس فیصد مدارس کی نشاندہی کریں جہاں دھشت گردی کی تربیت دی جاتی ہے۔ یا جو دہشت گردی کے لئے نرسری کا کام کرتے ہیں۔ محض کمیٹیوں کی تشکیل سے کام نہیں چلے گا۔ صاف گوئی اور حق گوئی کے بغیر معاملات کو سنبھالا دینا مشکل ہے۔ اب وقت آچکا ہے کہ لیت ولعل سے کام لینے کی بجائے مجرموں کو بے نقاب کیا جائے۔ طالبان اور داعش اسلام اور عوام کے دشمن ہیں۔جن کے خلاف فوج کو ملک بھرمیں آپریشن کرنے کی ضرورت ہے۔

 

انہوں نے کہا کہ جو دھشت گردوں کے حامی ہیں انہیں شامل تفتیش کیا جائے،اور بے گناہ انسانوں کے قتل کا فتویٰ جاری کرنے والوں کو بھی تختہ دار پر لٹکایا جائے۔انہوں نے کہا کہ اب وقت آچکا ہے کہ پاکستان کی عوام اور ان کی نمائندہ سیاسی جماعتیں دھشت گردوں کے خلاف اٹھ کھڑی ہوں۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ دھشت گردوں کو سرعام پھانسی دی جائے۔

 

اس موقع پر احتجاجی ریلی سے مجلس وحدت مسلمین بلوچستان کے رہنما مخدوم سید ظفرعباس شمسی، مولانا عبدالوہاب لغاری، غلام حسین و دیگر نے بھی خطاب کیا۔ اجلاس میں دو تا چار جنوری کو منعقد ہونے والی صوبائی تعلیمی ورکشاپ کے انتظامات کا بھی جائزہ لیا گیا۔ جس میں صوبہ بھر سے تنظیمی کارکن شرکت کریں گے۔

وحدت نیوز(کوئٹہ) ملی یکجہتی کونسل اتحاد بین المسلمین کے حوالہ سے موثر فورم ہے۔ اس پلیٹ فارم پر اکٹھے ہو کر ہمیں فرقہ واریت کے خاتمہ کے لئے اہم کردار ادا کرنا چاہیے۔ ان خیالات کا اظہار ایم ڈبلیو ایم بلوچستان کے صوبائی سیکرٹری جنرل علامہ مقصود علی ڈومکی نے ملی یکجہتی کونسل کی نمائندہ جماعتوں کے اہم اجلاس سے خطاب میں کیا۔ ملی یکجہتی کونسل میں شریک جماعتوں کا اجلاس الفلاح ہاوس کائٹہ میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں نمائندہ جماعتوں کے صوبائی رہنما شریک تھے۔ جمعیت علماء پاکستان کے صوبائی صدر مولانا عبدالقدوس ساسولی، وفاق المدارس شیعہ علماء کے علامہ محمد جمعہ اسدی، جماعت اسلامی کے بشیر احمد ماندائی اور عبدالحمید منصوری، مجلس ختم نبوت کے مولانا انوار الحق حقانی، اسلامی تحریک کے مولانا اکبر حسین زاہدی، جماعت الدعوۃ کے صوبائی امیر مفتی محمد قاسم، ایم ڈبلیو ایم کے صوبائی سیکرٹری جنرل علامہ مقصود ڈومکی و دیگر شریک تھے۔ اس موقع پر صوبہ بلوچستان میں ملی یکجہتی کونسل کی تشکیل پر غور و خوص کیا گیا۔

وحدت نیوز(کوئٹہ)شہدائے راہ اسلام خصوصاً شہید محمد ہادی اور شہید ہمایوں علی کی یاد میں قرآن خوانی اور مجلس ترحیم منعقد ہوئی۔ اس موقع پر مجلس عزاء سے خطاب کرتے ہوئے ایم ڈبلیو ایم بلوچستان کے سیکریٹری جنرل علامہ مقصود علی ڈومکی نے کہا ہے کہ شہادت انبیائے کرام (ع) اور اولیاء اللہ کی آرزو کا نام ہے۔ یزیدیت کے پیرو کار ظلم و دہشت گردی کے ذریعہ اہل حق کو نہیں مٹا سکتے۔ شیعت کی 14 سو سالہ تاریخ مصائب و آلام میں دین خدا کی سربلندی کیلئے جدوجہد سے عبارت ہے۔ انہوں نے بلوچستان کی پرنٹ میڈیا میں دشمنان صحابہ (رض) اور امریکی ایجنٹوں کی جانب سے شیعہ مسلمانوں کے خلاف میڈیا ٹرائل کو افسوسناک قرار دیتے ہوئے اسے صحافتی اصولوں کی پامالی قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ شیعہ صحابہ کرام (رض) کا احترام کرتے ہیں۔ دشمنان صحابہ (رض) وہ ہیں جو اصحاب رسول کے مقدس مزارات پر بم دھماکے کر رہے ہیں۔ انہوں نے گلگت بلتستان کے عوام کی تحریک کی بھرپور حمایت کرتے ہوئے وفاقی حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ اس صوبے کے مظلوم عوام کی مطالبات تسلیم کرلے۔ گندم کی سبسڈی اور آئینی حقوق اس صوبے کی عوام کا حق ہے۔

Page 1 of 3

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree