وحدت نیوز(نوشہروفیروز) مجلس وحدت مسلمین پاکستان ضلع نوشہروفیروز کے سیکریٹری جنرل اعجاز ممنائی اور ڈپٹی سیکریٹری جنرل وقار حیدر عابدی نے مختلف یونٹس کے دورے کے دوران خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وقت آگیا ہے طالبان سے مذاکرات ختم کرنےکا دو ٹوک  اعلان کیا جائے۔ حکومت عوام کے تحفظ کرنے میں ناکام ہوچکی ہے دفاع وطن کے لیے جانیں قربان کرنے والے کے خلاف وفاقی وزرا کی بد زبانی قابل مذمت ہےکراچی میں ہونے والے ٹارگٹ کلنگ میں وزیراعلی اور گورنر ملوث ہیں اور کراچی میں ہمارے رہنمائوں کو ایک سازش تحت قتل کیا جارہاہے انہوں نے مزيد کہا کہ یکم مئی مزدوروں کا عالمی دن ہے ھم توقع رکہتے ہیں کہ اپنے عوام کے بنیادی حقوق کے پاسبان بنیں عوام اپنے حقوق کیلئے بیدار ہوچکے ہیں اور نواز حکومت کی خیانتوں کے سامنے آہنی دیوار ثابت ہوں گے۔

وحدت نیوز(لاہور) شہدائے پاکستان کے پاک لہو ملکی بقا کا ضامن ہے،شہداء کے پاک لہو آج اس ملک کے نااہل حکمرانوں سے سوال کرتے ہیں کیا ان کے قاتلوں کو اسٹیک ہولڈر قرار دے کر اُن سے مذاکرات غداری اور ملک دشمنی نہیں؟وہ قومیں صفحہ ہستی سے مٹ جاتی ہیں جو اپنے شہداء کے لازوال قربانیوں کو فراموش اُن کے قاتلوں اور ملک کے دشمنوں کے سامنے جھکتے ہیں آج پاکستان میں ستم ظریفی یہ ہے کہ افواج پاکستان کے قاتلوں سے ہمدردی اور اُن کو شہید قرار دے کر نہ صرف پاکستان کے ان پاک شہیدوں کی توہین کی گئی بلکہ اسلامی اصولوں کا بھی مذاق اُڑایا گیا ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے یوم شہدا ء کے حوالے سے مرکزی سیکریٹریٹ سے جاری اپنے پیغام میں کیا ۔

 

اُن کا کہنا تھا کہ شہدائے پاکستان کے لہو کے ساتھ ہم توہین نہیں ہونے دینگے دشمن پاکستان کے قومی اداروں کو کمزور کرنے اور اس کے ذریعے اپنے ناپاک عزائم کی تکمیل چاہتے ہیں ایسے محب وطن قوتوں کی خاموشی وطن عزیز کے سنگین خطرے سے کم نہیں ملک کو غیروں کے ہاتھوں چند ڈالروں کے عوض گروی رکھا گیا ہے ملکی سلامتی کے دشمنوں کو وطن دوست اور محب وطن لوگوں کو ہراساں کیا جا رہا ہے علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کا مزید کہنا تھا کہ ہم اپنے شہداء اور افواج کی قربانیوں کو رائیگاں نہیں جانے دینگے ہمیں اپنے ملک کے ان بہادور سپوتوں پر فخر ہے۔

وحدت نیوز(کراچی) کراچی میں جاری شیعہ ٹارگٹ کلنگ پر حکومتی و ریاستی اداروں کی خاموشی بہت سے سوالات کو جنم دے رہی ہے، سعودی اور موجودہ حکمرانوں کے بڑھتے تعلقات اور ملت جعفریہ کا قتل عام دراصل ایک گریٹ گیم کا حصہ ہیں۔ ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سیکرٹری اطلاعات سید مہدی عابدی نے مشاورتی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اُن کا کہنا تھا کہ کراچی اس وقت ملت جعفریہ کا قتل گاہ بنا ہوا ہے، صوبائی گورنمنٹ دہشت گردوں کے پشت پناہی میں مصروف ہے، سندھ بھر میں منظم منصوبہ بندی کے تحت اہل تشیع افراد کو نشانہ بنایا جا رہا ہے، ہزاروں شیعہ مقتولین کے قاتل اب بھی آزاد دندناتے پھر رہے ہیں۔

 

اُن کا کہنا تھا کہ حکومتی سطح پر شیعہ قتل عام میں خاموشی طالبان مذاکرات کا حصہ ہے، لاہور میں گرفتار دہشت گردوں کے سرپرست کو ثبوت ملنے کے باوجود نظر بندی کے نام پر حکومتی تحفظ میں رکھا جا رہا ہے، ان تمام حالات کو مدنظر رکھتے ہوئے ملک گیر سطح پر دہشت گردوں اور ان کے حامی طاقتوں کو بے نقاب کرنے کے لئے ہر قورم پر آواز اُٹھائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ سعودی پالیسی کا پہلا ایجنڈا مسلمانوں میں تفرقہ بازی کو فروغ دینا اور تکفیریوں کے ذریعے بے گناہوں کا خون بہانا ہے۔

وحدت نیوز(مظفرآباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل علامہ سید شفقت شیرازی سے مختلف سیاسی رہنماؤں کے وفود نے ملاقاتیں کیں۔ وزیراعظم آزادکشمیر کے سٹاف آفیسر قلب عباس جعفری،پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنماء سید شجاعت کاظمی، سید فخر عباس کا ظمی،مسلم کانفرنس کے رہنماء سید یاسر نقوی، آئی او کے ناظم سید اشتیاق سبزوری اور دیگر نے کہا کہ مجلس وحدت مسلمین کا آزادکشمیر و پاکستان میں اتحاد امت کیکئے کردارا لائق تحسین و ستائش ہے۔آزادکشمیر کی تمام سیاسی جماعتیں اتحادبین المسلمین اورامن عامہ کے ایجنڈے پر مجلس وحدت مسلمین کے ساتھ ہیں۔آزادکشمیر پر امن خطہ ہے اور سیاسی و مذہبی جماعتوں کے درمیان بہترین رابطہ سازی موجود ہے۔ مجلس وحدت مسلمین آزادکشمیر کی قیادت کے صدر ریاست سرداریعقوب خان، وزیر اعظم و صدر پی پی پی آزادکشمیر چوہدری عبدالمجید، اپوزیشن لیڈرصدر مسلم لیگ ن راجہ فاروق حیدر خان سمیت مختلف سیاسی جماعتوں سے ملاقاتیں رہتی ہیں اور باہمی ربط و تعاون کی اچھی فضا قائم ہے۔

 

مختلف سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں سے گفتگو کرتے ہوئےعلامہ سید شفقت شیرازی نے کہا کہ پاک فوج ملک کی سرحدوں کی محافظ ہے۔ ہر مشکل گھڑی میں جب قوم کو ضرورت پڑی پاک فوج نے ہماری مدد کی،ہم اپنے گھروں میں آرام سے سوتے ہیں اور ہمارے فوجی جوان سرحدوں پر موسمی حالات برداشت کرتے ہوئے جاگ کر ہمارے تحفظ کی ضمانت دیتے ہیں۔پاک فوج کے شہداء نے ہمارے کل کیلئےاپنا آج قربان کیا۔ چند دشمن قوتیں پاک فوج کو بدنام کرنے کی سازش کررہی ہیں۔ مجلس وحدت مسلمین کے قیام کا مقصد پاکستان سے محبت کرنے والی جماعتوں اور افراد کو متحد کرناہے۔ مجلس چاہتی ہے کہ نوجوان مفادات کی سیاست نہ کریں، محب وطن قوت کے بازوں کو مضبوط کریں۔انہوں نے کہا کہ کہ مجلس وحدتِ مسلمین مظلوم کشمیری عوام کے حق آزادی اور حق خودارادیت کی حمایت کا اعلان کرتی ہے۔اگراقوام متحدہ کے مبصرین کی نگرانی میں کشمیری عوام کی اکثریت حق خودارادیت کیلئے رائے شماری کے بعد یہ فیصلہ کرلے کہ انہیں کشمیرکی آزادی چاہئے تو پھربھارت کو انہیںآزادی دے دینی چاہئے ۔یہ انفارمیشن ٹیکنالوجی کی صدی ہے ، اب مظلوم کشمیری عوام کی قربانیوں اوران پر ڈھائے جانے والے مظالم کودنیاسے چھپایانہیں جاسکتا۔ مجلس وحدتِ مسلمین کشمیر کے مسئلے اور تنازع کو ایک سیاسی ، جغرافیائی ، انتظامی اور سفارتی مسئلے سے بڑھ کر اسے ایک انسانی مسئلہ تصور کرتی ہے اور اگر پوری دنیا میں سب سے بڑا انسانی مسئلہ ہے تو وہ مسئلہ کشمیر ہے ۔حکومت آزادکشمیرمیں جلدازجلد بلدیاتی انتخابات کروا ئے اورکشمیری عوام کا برسوں کادیرینہ مطالبہ پوراکیاجائے۔

وحدت نیوز(مظفرآباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل علامہ سید شفقت شیرازی کی ممبر اسلامی نظریاتی کونسل مفتی کفایت حسین نقوی سے خصوصی ملاقات،مجلس وحدت مسلمین کے آزادکشمیر میں کردار، علاقائی سیاسی صورتحال، اتحاد بین المسلمین سمیت باہمی دلچسپی کے امور پر گفتگو۔مفتی کفایت حسین نقوی نے کہا کہ میں مجلس وحدت مسلمین کے ساتھ ہوں ۔آزادکشمیر میں،مجلس دن دگنی رات چگنی ترقی کررہی ہے۔ آزادکشمیر کے سیاسی منظر نامے میں مجلس وحدت مسلمین نے انتہائی قلیل وقت میں نمایاں مقام حاصل کرلیا ہے۔ علامہ سید شفقت شیرازی نے کہاکہ گزشتہ 65 برسوں سے پاکستان میں مظلوم کشمیریوں، ان کے حقوق اور حق خودارادیت کیلئے تقاریب کا انعقاد ہوتارہا ہے لیکن ہم سب کو یہ فیصلہ کرنا ہوگاکہ کیاہم ہرسال اسی طرح صرف یوم یکجہتی ، یوم حقِ خودارادیت ،یوم شہداء کشمیرمناتے رہیں گے؟ ہرسال کی طرح اس مرتبہ بھی کشمیری عوام کی آزادی ، خودمختاری اور انکے حق خودارادیت کے مطالبات کرتے رہیں گے؟اور مظلوم کشمیریوں کے نام پر صرف اور صرف سیاست کرتے رہیں گے؟ یا واقعتا کشمیری عوام کی آزادی کیلئے کوئی واضح حکمت عملی بھی بنائیں گے؟انہوں نے کہاکہ مجلس وحدتِ مسلمین اس ملک کی واحد جماعت ہے جس نے اپنے قیام کے دن سے آج تک کشمیر یا مظلوم کشمیری عوام کے نام پر سیاست نہیں کی بلکہ مظلوم کشمیری عوام کی عملاً مدد کی اور کرنا چاہتے ہیں ۔گزشتہ 65سالوں سے مقبوضہ کشمیر میں مظلوم کشمیری عوام کے ساتھ انسانیت سوز مظالم ہورہے ہیں، ان کے ساتھ غیرانسانی سلوک کیا جارہا ہے اورمسلسل کشمیری عوام اپنی آزادی ، خودمختاری اور حق خودارادیت کیلئے اپنی جانوں کے نذرانے پیش کررہے ہیں ۔انہوں نے بھارت کے حکمرانوں، سیاستدانوں ، دانشوروں ، قلمکاروں ، انسانی حقوق کی انجمنوں اور صحافیوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ آخروہ کشمیری عوام کی خواہشات اور امنگوں کے خلاف طاقت کے بل پر کشمیر کو اپنے ساتھ زبردستی کیوں ملائے رکھنا چاہتے ہیں ؟ بھارت ایک بڑی طاقت ہے ، وہ کشمیری عوام کی خواہشات اور اقوام متحدہ کی متفقہ قراردادوں کے مطابق کشمیری عوام کو ان کی آزادی اور حق خودارادیت کیوں نہیں دے دیتا؟ بھارت یہ سمجھتا ہے کہ مقبوضہ کشمیر کے عوام کی اکثریت اس کے ساتھ ہے تو وہ اقوام متحدہ کی نگرانی میں کشمیری عوام کی رائے طلب کرلے ۔اگر کشمیری عوام کی اکثریت بھارت کے ساتھ الحاق کا فیصلہ کرتی ہے توپاکستان اس کو تسلیم کرے گا لیکن اگر اقوام متحدہ کے مبصرین کی نگرانی میں ہونیوالی رائے شماری کے نتیجے میں کشمیری عوام کی اکثریت یہ فیصلہ کرے کہ انہیں آزادی چاہئے تو پھر بھارت کوکشمیری عوام کو آزادی دے دینی چاہئے ۔

 

علامہ شفقت شیرازی نے کہاکہ بھارت کواس بات کوسمجھ لیناچاہیے کہ آج دنیاگلوبل ولیج کی شکل اختیارکرچکی ہے ، آج دنیاکے کسی بھی حصہ میں ہونے والے واقعات کودنیاسے چھپایانہیں جاسکتا، کل تک نہ میڈیااتناآزاد تھا اورنہ ہی انفارمیشن ٹیکنالوجی نے اتنافروغ پایاتھا ، انفارمیشن ٹیکنالوجی کی وجہ سے ہی آج دنیا کشمیری عوام پر ڈھائے جانے والے مظالم کواپنی آنکھوں سے دیکھ رہی ہے اور اب کشمیری عوام کی آواز اورانکی امنگوں، خواہشات اوران کی قربانیوں کو چھپایا نہیں جاسکتا۔انہوں نے بھارت کے حکمرانوں اورسیاستدانوں سے اپیل کی کہ وہ مزیدانسانوں کی جانوں کے زیاں کے بجائے ایساراستہ اختیار کریں جس میں بھارت کی بھی نیک نامی ہو اورکشمیری عوام کوپرنہ صرف مظالم بندہوں بلکہ انہیں انکی امنگوں کے مطابق آزادی بھی مل جائے ۔ انہوں نے حکومت پاکستان سے مطالبہ کیاکہ مسئلہ کشمیرکے حل کیلئے بھارت کے ساتھ بامقصد،مخلصانہ اورایماندارانہ مذاکرات کئے جائیں۔پاکستان کے حکمران اورسیاستدان بھی ایمانداری سے مذاکرات کریں ،اسی طرح بھارت کے حکمراں،اسٹیبلشمنٹ اورسیاستداں بھی ایمانداری سے مذاکرات کریں تو مسئلہ حل ہوجائے گااوردونوں ممالک میں جنگ وجدل کاخطرہ بھی ختم ہوجائے گا۔کشمیر کے مسئلے کو انسانیت کا مسئلہ سمجھ کر ان کے بنیادی حقوق تسلیم کئے جائیں ، بنیادی حقوق کی پاسداری کی جائے اور بین الاقوامی قوانین کی پاسداری کی جائے ۔مسئلہ کشمیرکے دو فریقین پاکستان اور انڈیا کی بات ہوتی ہے ہم سمجھتے ہیں کہ تیسرے فریق جو کشمیر کے عوام ہیں انہیں بھی مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے شامل کرنا ہوگا اور ان کی رائے اور انہیں اعتماد میں لیکر کشمیر کے مسئلے کو حل کرنا ہوگا۔ انہوں نے کہاکہ میں کشمیری عوام کو یقین دلاتاہوں کے مجلس وحدتِ مسلمین ان کے ساتھ تھی، ساتھ ہے اور انشاء اللہ ساتھ رہے گی اور کشمیری عوام کے مسائل کے حل کیلئے ہرممکنہ اقدام کرے گی۔ انہوں نے حکومت سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ آزادکشمیرمیں جلدازجلد بلدیاتی انتخابات کرائے جائیں اور کشمیری عوام کا برسوں کادیرینہ مطالبہ پوراکیاجائے تاکہ گراس روٹ لیول پر عوامی نمائندے سامنے آسکیں۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) گلگت بلتستان کے عوام کو تاریخی احتجاج اور استقامت کی بدولت حقوق کے حصول پر مبارک باد پیش کرتے ہیں ، غیور قوم نے ثابت کر دیا کہ اتحاد واتقاق کی برکت سے ہر کام ممکن بنایا جا سکتا ہے،عوامی ایکشن کمیٹی کی لیڈر شپ اور گلگت بلتستان کے عوام  کی بہادری اور استقامت پر پوری قوم کا سر فخر سے بلند ہوا ہے، حقوق کے حصول کی جنگ بہت طویل ہے یہ تو نقطہ آغاز ہے، بارہ روزہ احتجاج میں اپنے اور پرائے سب آشکار ہو گئے، اس خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکریٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے گلگت بلتستان میں بارہ روزہ طویل اور کامیاب تاریخی دھرنے کے اختتام اورعوامی ایکشن کمیٹی کے نو نکاتی چارٹرڈ آف ڈیمانڈ کی وفاقی وصوبائی حکومت کی جانب سے منظوری پر اپنے تہنتی پیغام میں کیا۔

 

مرکزی سیکریٹریٹ سے جاری اپنے پیغام میں علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا ہے کہ آج ایک مرتبہ پھر حق کی فتح ہوئی اور باطل شکست کھانے پر مجبور ہواہے، بارہ روز تک کھلے آسمان تلے بیٹھنے والے غیور عوام کی استقامت رنگ لائی اور ظالم حکومت گھٹنے ٹیکنے پر مجبور ہوئی، گلگت بلتستان کےعوام کے ساتھ ساتھ وہ تمام سیاسی مذہبی جماعتیں ، انسانی حقوق کی تنظیمیں اور شہری جنہوں نے خطہ بے آئین گلگت بلتستان کے حقوق کی بحالی کے لئے آواز بلند کی سب خراج تحسین کے مستحق ہیں ۔ملک کو درپیش سنگین خطرات اور جاری دہشت گردی میں کہ جب عوام خوف مایوسی اور عدم تحفظ کا شکار ہیں ، عوامی جدوجہد سے اپنے جائز حقوق کا حصول کسی معجزے سے کم نہیں ،ملک بھر میں بسنے والے اٹھارہ کروڑپسماندہ شہری گلگت بلتستان کے عوام سے سبق لیتے ہوئے اپنے حقوق کےحصوک کے لئے میدان میں اتر آئیں، گندم سبسڈی کی بحالی کی تحریک عظیم مقاصد کے حصول کی تحریک کا نقطہ آغاز ہے نہ کہ نقطہ انجام ، اس تاریخی احتجاج نے جہاں نے ظالم حکمرانوں کو ذلیل و رسوا کیا وہیں عوام سے دوری اختیار کرنے والی مذہبی وسیاسی جماعتوں کے چہروں سے بھی نقاب نوچ ڈالی ہے، انشاءاللہ گلگت بلتستان کےغیور اور بیدار  عوام خائن و نا اہل سیاسی ومذہبی جماعتوں کو آئندہ قانون ساز اسمبلی کے انتخابات میں ان کی خیانتوں کا سلہ ضرور دیں گے۔

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree