وحدت نیوز(اسلام آباد) 8شوال 1344ہجری کا دن تاریخ اسلام کا وہ سیاہ ترین دن ہے کہ جب جنت البقیع میں اہل بیت اور اصحاب رسول (ص) کے مزارات مقدسہ کو منہدم و مسمار کر دیا گیا ، امت مسلمہ کی خاموشی نے آج دشمنان اسلام کواتنی جرات اور ہمت بخشی کے نوبت کربلا ، بغداد ، مکہ اور شام کے مقدس مقامات تک آن پہنچی ہے،جنت البقیع میں مدفون ملت اسلامیہ کے تمام مکاتب کی محترم اور مقدس شخصیات کی قبور کی تعمیر نو اور اس عظیم سرمایہ کی حفاظت کے لئے ایک بین الاقوامی تحریک کا آغاز کیا جائے ۔

ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکریٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری (حفظ اللہ) نے یوم انہدام جنت البقیع کی موقع پر مرکزی سیکریٹریٹ سے جاری اپنے مذمتی بیان میں کیا ۔ ان کا کہنا تھا کہ تاریخ اسلام کے سیاہ ترین ایام کا ذکر کیا جائے تو 8شوال یوم انہدام جنت البقیع ہمارے دل کو اس طرح رنجیدہ کر دیتا ہے جیسے یہ دل خراش واقعہ آج ہی رونماء ہوا ہو ۔ 1344ہجری میں وہابی عقائدکے پیروکارآل سعود نے مدینتہ النبی (ص)پر قبضے کے بعد اسلام کے تاریخی قبرستان اور اس میں موجود شیعہ سنی مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والی اہم شخصیات کی قبور بارگاہوں اور مزاروں کو مسمار ومنہدم کردیا ، جہاں اجداد رسول اکرم (ص) اہل بیت (ع) ، امہات المومنین (رض) اور اصحاب پیغمبر (ص) کے مزارات موجود تھے۔

ان کا کہنا تھا کہ اگر جنت البقیع کی تاراجی کے وقت ملت اسلامیہ یک زبان ہو کر اس عظیم اہانت اور توہین پر سراپا احتجاج ہو جا تی تو آج ان اسلامی مقدسات کے دشمنوں کی اتنی مجال نہ ہو تی کہ یہ بغداد، کربلا، شام ، مصر اور دیگر ممالک میں اہل بیت اور اصحاب رسول (ص) کے مزارات کی جانب میلی آنکھ اٹھا کر بھی دیکھتے ۔ مزارات اور قبور مقدس کا احترام تمام مکاتب کے درمیان یکساں ہے ، کسی بھی غیرت مند مسلمان کا نفس ان مقدمات مقدسہ کی توہین برداشت نہیں کر سکتا۔

انہوں نے تمام عالم اسلام خصوصاًشیعہ سنی مکاتب فکرسے تعلق رکھنے والے علماء ،دانشور ، اہل ممبراور اہل قلم حضرات کی ذمہ داری ہے کہ جنت البقیع میں مسمار ومنہدم شدہ قبور مقدس کی تعمیر نو کے لئے ایک بین الاقوامی تحریک کی داغ بیل ڈالیں ، تاکہ ، یہ روحانی و معنوی سرمایہ اور آثار قدیمہ سے تعلق رکھنے والے اس عظیم نوعیت کے قبرستان حفاظت کی جائے جس کی فضیلت میں روایات موجود ہیں ، حفاظت اور تعمیر نو کے ساتھ یہاں مدفون ہستیوں کی خدمات کا ادنیٰ سا حق ادا کر سکیں ۔

وحدت نیوز (پاراچنار) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ ناصر عباس جعفری نے اپنے دورہ پاراچنار کے دوران سابق سینیٹر اور تحریک حسینی کے سپریم لیڈر علامہ سید عابد حسین الحسینی سے ملاقات کی۔ اس ملاقات کے موقع پر تحریک حسینی کے سپریم لیڈر نے پاکستان میں ملت تشیع کے لئے ایم ڈبلیو ایم کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ ناصر عباس جعفری کی کاوشوں کو سراہا۔ انہوں نے علامہ ناصر عباس جعفری کو انکی خدمات خصوصاً سانحہ کوئٹہ کے خلاف ایم ڈبلیو ایم کی جانب سے کامیاب ملک گیر دھرنے پر زبردست خراج تحسین پیش کیا۔

علامہ عابد حسینی نے ایم ڈبلیو ایم کے پلیٹ فارم سے کی جانے والی اب تک خدمات کو ملت تشیع کے لئے امید کی ایک نئی کرن قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ قوم کی کشتی ایک عرصہ تک تزلزل میں رہنے کے بعد اب ساحل سے ہمکنار ہوگئی ہے۔ انشاءاللہ قوم کو گذشتہ کئی سالوں میں جو صدمے پہنچے ہیں، ایم ڈبلیو ایم خصوصاً راجہ صاحب آئندہ ایسے چیلنجوں کا جراتمندی سے مقابلہ کریں گے اور قوم کی متزلزل کشتی کو ساحل سے لگائیں گے۔

واضح رہے کہ پاراچنار دورے کے دوران علامہ ناصر عباس جعفری نے تحریک حسینی کے صدر مولانا منیر حسین جعفری، انکی پوری ٹیم، مجلس علمائے اہلبیت کے سینئر رہنماوں، انجمن حسینیہ کے اراکین اور مرکزی جامع مسجد کے پیش امام علامہ شیخ نواز عرفانی، نئی مرکزی قومی انجمن کے سیکریٹری جنرل کیپٹن علی اکبر اور دیگر رہنماؤں ریٹائرڈ ایئر مارشل سید قیصر حسین اور سید اقبال میاں، شہید قائد کے فرزند علامہ سید علی الحسینی، آئی ایس او اور آئی او کے اراکین سمیت اہم سیاسی اور مذھبی شخصیات کے علاوہ حالیہ دہرے بم دھماکوں میں جاں بحق ہونے والوں کے لواحقین سے علیحدہ علیحدہ ملاقاتیں کیں۔ اس موقع پر انہوں نے شہداء کے خانوادوں سے اپنی دلی ہمدردی کا اظہار کیا۔

وحدت نیوز (قم المقدسہ) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کی شوری عالی کے رہنما اور بزرگ عالم دین علامہ حیدرعلی جوادی نے کہا ہے کہ ہمیں شہید قائد کی سیرت پر عمل کرتے ہوئے اتحادو وحدت کا پرچار کرنا چاہیے اور آپس کے تمام داخلی اختلافات بھلاکر ملت اور استحکام پاکستان کے لیے کام کرنا چاہیے۔ ان خیالات کا اظہار اُنہوں نے مجلس وحدت مسلمین (شعبہ قم المقدسہ)کے زیراہتمام شہید علامہ عارف حسین الحسینی کی پچیسویں برسی کے موقع پر منعقدہ سیمینارسے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

 علامہ حیدرعلی جوادی نے کہا کہ شہید قائد نے اپنی زندگی میں شیعہ سنی وحدت کے لیے بے مثال کام کیاجو کہ دشمن کے لیے ناقابل برداشت تھا۔ یہی وجہ تھی کہ شہید قائد کو وقت کے نمرود وفرعون نے راستے سے ہٹا کرایک بار شیعہ سنی کے درمیان نفرت ڈالنا شروع کردی۔ اُنہوں نے کہا کہ شاید لوگ اس بات سے بے خبر ہوں کہ شہید قائد صرف شیعوں کے رہنما اور لیڈرنہیں تھے بلکہ میں کئی ایسے اہلسنت لیڈر تھے جو شہید قائد کی دل سے عزت کرتے تھے اور یہی حال اہلسنت عوام کا تھا۔

وحدت نیوز (کراچی ) پاکستان کے 67 ویں یوم آزادی پر تمام مظلوم پاکستانی عوام کو مبارک باد پیش کرتے ہیں، پاکستان ایک مرتبہ پھر آزادی کا طلبگار ہے، دہشت گردی اور لوڈشیڈنگ نے ہمارے وطن کو اندھیروں میں دھکیل دیا ہے، بانیان پاکستان کے فرامین کو ردی کی ٹوکریوں کی نذر کر دیا گیا ہے، تمام مکاتب فکر کو اکھٹا ہوکر ملک دشمن عناصر کے خلاف علم جہاد بلند کرنا ہوگا، نوجوان اس ملک کی تقدیر بدل سکتے ہیں، یوم آزادی پر عہد کریں کہ وطن عزیز کی ترقی، خوشحالی کے ساتھ ساتھ، سامراجی شکنجے سے آزادی کی بھی جدوجہد کریں گے۔ ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ڈپٹی سیکریٹری جنرل و ترجمان علامہ حسن ظفر نقوی نے 67 ویں یوم آزادی پاکستان کے موقع پر وحدت ہاؤس کراچی سے جاری اپنے بیان میں کیا۔

علامہ حسن ظفر نقوی کا کہنا تھا کہ پاکستان اپنے قیام کے 67 برس بعد بھی اندرونی اور بیرونی محازوں پر دہشت گردوں کا سامنا کر رہا ہے، جھوٹ وہ لعنت ہے جس نے ہمارے ملک و قوم کو ترقی کرنے سے روکا ہے، حکمران اور چند مفاد پرست سرمایہ داروں نے اس ملک کا دیوالیہ نکال دیا ہے۔ قائد اعظم محمد علی جناح (رہ) نے برطانوی سامراج سے برصغیر کے مسلمانوں کو آزادی دلوائی لیکن آج ہمارے وطن فروش حکمرانوں نے اس آزاد وطن کو امریکی سامراج کی غلامی میں دے دیا۔ آج ایک مرتبہ پھر ہمیں اس عزم کا اعادہ کرنا ہوگا کہ چاہے جو قربانی بھی دینی پڑے لیکن ہم اپنی مادر وطن کو امریکی غلامی سے آزاد کروا کے ہی دم لیں گے۔

وحدت نیوز(نواب شاہ) کراچی میں اسماعیلی برادری پر دہشت گردوں کی جانب سے کریکر حملے ملک کی سالمیت پر حملہ ہیں ، ہم اس کی پرزور مذمت کر تے ہیں ، دہشت گردوں نے جشن آزادی کے موقع پر دہشت گردانہ کاروائی سے ثابت کردیا کے ان کے دل میں اس وطن اور اس کے عوام کے لئے ذرہ برابر بھی ہمدردی نہیں ، پاکستان اس وقت تاریخ کے ناذک ترین دور سے گزر رہا ہے ، پاکستان کو اندرونی اور بیرونی دونوں محاذوں پر جنگ کا سامنا ہے ۔ ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین پاکستان صوبہ سندھ کے سیکریٹری جنرل علامہ مختار احمد امامی نے اپنے مذمتی بیان میں کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ جب کے پوری ملک محب وطن عوام جشن آزادی کی خوشیوں میں مگن ہیں ، ملک دشمن عناصر اپنی پاکستان دشمنی میں مصروف ہیں ،کوئی بھی مسلک کوئی بھی مکتب پاکستان میں دہشت گردی سے محفوظ نہیں ہے۔کوئی ادارہ اپنی ذمہ داری ادا کرنے کو تیار نہیں ، غرض یہ کہ سکیورٹی اداروں پر حملے ہو رہے ہیں ، اور حکمرانوں نے کبوتروں کی طرح آنکھیں بند کی ہوئی ہیں ۔ پاکستان اس وقت تاریخ کے ناذک ترین دور سے گزر رہا ہے ، پاکستان کو اندرونی اور بیرونی دونوں محاذوں پر جنگ کا سامنا ہے، پاکستان کی داخلی سکیورٹی کی صورتحال سے فائدہ اٹھا کر ہمارا پڑوسی ملک بھارت ہمیں آنکھیں دکھا رہا ہے ،ایل او سی پرگذشہ کئی روز سے جاری بھارتی جارحیت ہمارے اندرونی سکیورٹی خامیوں کا نتیجہ ہیں ۔

ان کا کہنا تھا کہ اب وقت کم ہے فوجی اور سول لیڈر شپ کو پاکستان کے استحکام کے لئے ٹھوس اور موثر حکمت عملی وضح کرنی ہو گی ورنہ اس ملک میں جلد دہشت گردوں کا عملی راج ہو گا ، انہوں نے مطالبہ کیا کہ حکومت تمام مکاتب فکر کے شہریو ں کی جان و مال کے تحفظ کو یقینی بنائے ، اور دہشت گردوں کو نشان عبرت بنا کرمثال قائم کرے۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل و سیکرٹری امور خارجہ نے بارہ کہو خودکش حملے کی تحقیقات ہونے والی اب تک کی پیش رفت کو حوصلہ افزاء قراردیتے ہوئے کہا اصل کامیابی اس وقت ہوگی جب اس واقعے میں ملوث مجرم دہشتگردوں کو تختہ دار پر لٹکایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ دہشتگردا نہ ریاست کو مانتے ہیں نہ ریاست کے آئین کو اور نہ قانون کو ایسے میں ان کے ساتھ مذاکرات انتہائی غیر منظقی بات ہے۔ انہوں نے کہا کہ جودہشتگرد وطن عزیز پاکستان کو ہی قبول نہیں کرتے ان سے کس طرح کے مذاکرات ہوسکتے ہیں۔

 

علامہ شفقت شیرازی نے مزید کہا ان مذاکرات وہاں پر ممکن ہے کہ دہشتگرد ملک کے آئین اور پارلیمنٹ کو تسلیم کریں جو لوگ ملک کی اہم تنصیبات اور عوام پر شب وروز حملے کررہے ہوں جو بہ بانگ دہل یہ کہتے پھریں کہ ہم پاکستان کے آئین و قانون کو نہیں مانتے، جو گولی اور بندوق کے زور پر اپنی بات منوانا چاہتے ہیں ان سے صرف آہنی ہاتھوں سے نمٹا جاسکتا ہے۔ سیکرٹری امور خارجہ نے مزید کہا کہ دنیا بھر میں ملک کی جگ ہنسائی ہورہی ہے کہ ہم کئی دہائیوں سے اس بات پر الجھے ہوئے ہیں دہشتگردوں کو دہشتگرد کہیں یا نہ کہیں ان سے مذاکرات کریں یا مقابلہ ،انہوں نے کہا کہ ریاست کے اندر ریاست بنانے کا تصور خطرناک عمل ہے اور اس کا تجربہ ہم سوات میں کرچکے ہیں

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree