وحدت نیوز (اسلام آباد) کالعدم جماعتوں کو کس قانون کے تحت نیکٹا نے کلین چٹ دی ہے ۔حالیہ دہشتگری کی لہر نے پور ی قوم کے دل زخمی کر دیئے ہیں ۔ایک طرف دہشتگرد اور دوسری طرف شریف خاندان ملک میں بے چینی پھیلا رہے ہیں ایم ایم اے اور ن لیگ کے ہوتے ہوئے کسی آئی جے آئی کی ضرورت نہیں ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔

انہوں نے کہا کہ ملک حساس دور سے گزر رہا ہے دشمن پر امن الیکشن کی راہ میں روڑے اٹکارہا ہے ۔حالیہ دہشتگردی کے واقعات میں بے گناہ پاکستانیوں کی شہادتیں المناک ہیں ہارون بلورکی شہادت سے پاکستان کا نقصان ہوا ہے ۔نہایت افسوس ہے کہ جن لوگوں ملک میں شدت پسند ی تکفیریت کے زریعے قتل و غارت گری کے بازار گرم کئے ان کو کلین چٹ دے کر شہدا کے وارثوں کے زخمو ں پر نمک پاشی کی گئی رمضان مینگل جو کہ تکفیری گروہ کا سربراہ ہے وہ سراج ریئسانی کے خلاف الیکشن لڑ رہا تھا ،ایسے دہشت گردوں کو شامل تفتش ہونا چاہئے مستونگ ہی کے مقام پر گزشتہ دہائیوں سے ملت جعفریہ کے بے گنا ہ افراد کا قتل عام ہوتا رہا لاشیں زمین پر پڑی رہیں لیکن اٹھانے والاکوئی نہیں تھا ہم چیخ چیخ کر کہتے رہے خدار ا اس دہشت گرد گروہ کے خلاف کاروائی کی جائے لیکن حکمرانوں کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگی ،اس ملک کی کی ناعاقبت اندیش حکمران اور مقتدر طاقتیں ناک تک دیکھتی ہیں شدت پسندوں اور تکفیری گروہ کو دی جانے والی چھٹی کا خمیازہ ہماری آئندہ آنے والی نسلیں بھگتیں گی ، ہمار ے حکمران اور مقتدر حلقے جنرل ضیاء کی پالیسی سے اب تک سبق نہیں سیکھ سکے۔ الیکشن فری اینڈ فیئر ہونے چاہیں شرپسندوں کو الیکشن میں کھلی چھوٹ دینے کی مذمت کرتے ہیں ۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ نواز شریف ایک مجرم ہے اور اس کے ساتھ قانون کے مطابق سلوک ہونا چاہئے ۔شریف خاندان کو ان کے گناہوں کی سزامل رہی ہے سانحہ ماڈل ٹاون کو چھوٹا واقع نہیں تھا ۔ساری دنیا کے سامنے عورتوں کے منہ پرگولیاں ماری گیں ۔ایک طرف دہشت گردد ملکی سلامتی پر وار کررہے ہیں دوسری طرف شریف خاندان ملک میں بے چینی پیدا کرنے کے درپے ہیں یہ سراسر ملک دشمن قوتوں کے ایجنڈے کا حصہ ہے ۔ کچھ جماعتوں کے الیکشن مہم میں مشکلات پیش آرہی ہیں ۔شفاف اور آزادانہ الیکشن کے لئے نگران حکومت اس طرف توجہ ضرور کرئے ہماری جماعت کے بھی قائدین کو باوجود سیکورٹی تھرٹ ہونے کے ان سے سیکورٹی واپس لے لی گئی ہے ۔علامہ راجہ ناصر عباس نے ایک صحافی کے سوال پر جواب دیتے ہوئے کہا کہ ایم ایم اے اور ن لیگ کے ہوتے ہوئے کسی ائی جے آئی کی ضرورت نہیں ملک میں الیکشن کو ثبوتاژ کرنے والوں 25جولائی کو منہ کی کھانا پڑے گی انشااللہ قوم بھر پور انداز میں گھروں سے نکلے گی اور ملک کی سلامتی و ترقی کے لئے ووٹ دے گی ۔

وحدت نیوز (کراچی)  کالعدم جماعتیں کس قانون کے تحت الیکشن لڑ رہی ہیں۔ پاکستان کو گرے ممالک کی لسٹ میں ڈالا جا چکا ہے مگر ملکی پالیسی ساز ادارے خواب خرگوش کے مزے لے رہے ہیں۔ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی ترجمان علامہ مختار امامی نے میڈیا سیل سے جاری بیان میں کیا، انہوں نے کہا کہ نیشنل ایکشن پلان میں واضح طور پر کہا گیا کہ کالعدم جماعتیں الیکشن نہیں لڑسکتیں اور نام بدل کر کام کرنے والی کالعدم جماعتیں بھی الیکشن میں شریک نہیں ہو سکتیں۔ پاکستان پہلے بھی عسکریت پسندوں کے ہاتھوں بھاری جانی اور مالی نقصان اٹھا چکا ہے۔اس کے باوجود کس طرح ان نام بدل کرآنے والی کالعدم جماعتوں کو الیکشن لڑنے کی اجازت ملی ہے۔ایک جماعت کو الیکشن سے کچھ ماہ قبل عالمی دبائو پر کالعدم کیا گیا اور اس جماعت نے جب نئے نام سے سیاسی جماعت بنائی تو پہلے اس کو رجسٹر نہیں کیا گیا مگر الیکشن سے قبل ہی اس جماعت کو رجسٹرر کر لیاگیا۔یہ کون سی پالیسی ہے جس کے تحت ملک دشمن عناصر دہشت گردوں کو قانوں ساز اداروں میں پہنچانے کے انتظامات کئے جا رہے ہیں۔ ایک طرف دہشت گردی کے خلاف جنگ لڑی جار ہی ہے دوسری طرف ان کو ریلیف دیا جار ہا ہے۔

مجلس وحدت مسلمین پاکستان اس دہرے معیار اور خطرناک پالیسی کی شدید مذمت کرتی ہے۔مجلس وحدت مسلمین وطن عزیز میں تکفیریت،شدت پسند ی اور مذہبی جنونیت کے خلاف جدوجہدکرتی رہے گی۔ ہم نے اپنے منشور میں نعرہ لگایا ہے کہ ہم پاکستان کو قائداعظم اور علامہ اقبال کا پاکستان بنائیں گے۔ایسا پاکستان جس میں برابری ہو۔ایک مسلم پاکستان جس کی خارجہ اور اندرونی پالیسی میں کسی ملک کے مفادات کا عمل دخل نا ہو بلکہ پاکستان اور پاکستانیوں کا مفاد سب سے اولین ترجیح ہو۔ایک ایسا پاکستان جو شدت پسند ی سے پاک ہو پرامن اور ترقی کرتا ہوا پاکستان مجلس وحدت مسلمین کی جدوجہد کا محور ہے۔

وحدت نیوز(کراچی) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصرعباس جعفری نے کہا ہے کہ الیکشن 2018کو شفاف بنانے کے لیے ضروری ہے کہ ان عناصر کو انتخابی عمل سے دور رکھا جائے جن کا فرقہ واریت کے فروغ اور تکفیریت کے پرچار میں مرکزی کردار رہا ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے وحدت ہاوس انچولی میں صوبائی کابینہ کے اجلاس کے سربراہی خطاب میں کیا اس موقع پر مرکزی سیکرٹری سیاسیات اسد عباس نقوی ،محسن شہریار ،مرکزی سیکرٹری تنظیم سازی مہدی عابدی ،صوبائی سیکرٹری جنرل علامہ مقصود علی ڈومکی سمیت دیگر رہنما موجود تھے۔

 انہوں نے کہا کہ کالعدم مذہبی جماعتوں کے رہنماوں کا الیکشن میں حصہ لینا قومی سلامتی کے لیے شدید خطرہ ہے۔ کچھ کالعدم مذہبی جماعتوں نے اپنے کارکنوں کے نام پر الیکشن کمیشن آف پاکستان میں جماعتیں رجسٹر کروا رکھی ہیں تاکہ الیکشن میں حصہ لیا جا سکے۔ایسے عناصر جو ملک میں دہشت گردی کے متعدد واقعات میں ملوث ہیں الیکشن میں حصہ لینے کے کسی طور بھی اہل نہیں۔انہیں انتخابی عمل میں شمولیت کی اجازت دینا الیکشن کمیشن آف پاکستان کے بنیادی قواعد کی ہی خلاف ورزی نہیں بلکہ نیشنل ایکشن پلان کی بھی بدترین پامالی ہے۔

انہوں نے کہا کہ قومی سلامتی کے اداروں اور ارض پاک کے خلاف سب سے زیادہ دہشت گردانہ کاروائیاں کالعدم مذہبی جماعتوں نے کی ہیں۔نواز شریف کی سابق حکومت کے متعدد وزراء اپنے سیاسی مفادات کے لیے ان دہشت گرد قوتوں کے سہولت کار بنے رہے جس کا خمیازہ ساٹھ ہزارسے زائد لاشوں کی صورت میں قوم کو بھگتنا پڑا۔یہی سیاسی قوتیں سیٹ ایڈجسٹمنٹ کے نام پر تکفیری قوتوں کی حمایت کر کے انہیں ایوان تک لانا چاہتی ہیں جس سے ملک و قوم کو ناقابل تلافی نقصان پہنچنے کا خطرہ ہے۔

انہوں نے مطالبہ کیا کہ الیکشن کمیشن آف پاکستان نام بدل کر الیکشن میں حصہ لینے والی جماعتوں پر کڑی نظر رکھیں اور ان لوگوں کو الیکشن میں حصہ لینے کی قطعا اجازت نہ دی جائے جو ملک دشمن سرگرمیوں میں ملوث رہے ہیں۔وطن عزیز کو قائد و اقبال کا حقیقی پاکستان بنانے کے لیے انتہا پسندی کا خاتمہ ضروری ہے اور یہ اسی صورت ممکن ہے جب ایسے عناصر کی حوصلہ شکنی کی جائے جو نظریاتی و فکری اختلاف رکھنے والوں کو کافر اور واجب القتل سمجھتے ہیں۔جو جماعتیں عبادت گاہوں اور پاک فوج پر حملوں میں ملوث رہی ہیں ان کے رہنماؤں کو الیکشن لڑنے کی اجازت دینے کی بجائے قانون کے شکنجے میں کسنے کی ضرورت ہے۔

وحدت نیوز (ٹیکسلا) نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے ذکر پر پابندی لگانے والی حکومت تباہ و برباد ہو جائے گی، کمیونٹی ہال میں رحمۃ العالمین کانفرنس کی اجازت نہ دیکر مجرمانہ فعل انجام دیا گیا۔ تاجدار کائنات کے دور میں غیر مسلموں کو بھی ان کے حقوق حاصل تھے، حضور اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے نجران کے عیسائیوں کے لئے بھی اپنے دروازے کھول دیئے تھے لیکن آج نام نہاد مسلمان اپنے مسلمان بھائیوں کے گلے کاٹ رہے ہیں۔ سرور کائنات صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے تو محبت اور امن کا درس دیا تھا۔ ان خیالات کا اظہار مقررین نے ٹیکسلا میں منعقدہ رحمت العالمین (ص) کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ کانفرنس سے مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے قائمقام مرکزی سیکرٹری جنرل احمد اقبال رضوی، تحریک منہاج القرآن کے رہنما ڈاکٹر آفتاب احمد، مرکزی وائس چیئرمین سنی اتحاد کونسل سید جواد الحسن کاظمی، رہنما ایم ڈبلیو ایم نثار فیضی، عیسائی برادری کے نمائندہ ایلڈر جان، ضلعی سیکرٹری جنرل راولپنڈی علامہ علی اکبر کاظمی اور دیگر نے خطاب کیا۔

علامہ سید احمد اقبال رضوی نے کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کائنات کی سب سے اعلی ترین لیڈر شہ رسول اللہ ص کی تھی انہوں نے اعلان رسالت سے قبل خود کو صادق اور امین منوایا آج کے لیڈر اور حکمران کیا صادق اور امین ہیں؟ اگر نہیں تو یہ فرعون ہیں. راحیل شریف ہیرو سے زیرو ہوچکے ہیں علامہ سید علی اکبر کاظمی نے اپنے خطاب میں کہا کہ ہمیں ہر وہ کام کرنا چاہیے جس سے رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کی ذات گرامی خوش ہوں اور ان کے اہداف و مقاصد کی تکمیل کا ذریعہ ہو. سنی اتحاد کونسل کے چیئرمین نے اپنے خطاب میں کہا کہ پاکستان اسلام کے نام پر بنا ہے لیکن حکمرانوں نے اسکا چہرہ مسخ کر دیا ہے راحیل شریف ریال شریف بن چکے ہیں۔ راحیل شریف کے عمل سے ملت اسلامیہ تقسیم ہوئی اور ہر پاکستانی کا سر شرم سے جھک گیا۔

 مقررین نے مسلم لیگ (ن) ٹیکسلا کی جانب سے رحمۃ العالمین کانفرنس کے لئے کمیونٹی ہال نہ دینے پر سخت برہمی کا اظہار کیا، سیکرٹری جنرل ایم ڈبلیو ایم ٹیکسلا نے بتایا کہ اسسٹنٹ کمشنر ٹٰیکسلا نے کمیونٹی ہال دینے سے یہ کہہ کر انکار کر دیا کہ حال ہی میں منتخب ہونے والے چیئرمین بلدیہ ٹیکسلا کا تعلق نواز لیگ سے ہے جنہوں نے ایم ڈبلیو ایم کو ہال دینے سے منع کیا ہے کیونکہ ایم ڈبلیوایم حکومت مخالف دھرنوں کا حصہ رہی ہے ۔ جس پر تقریب میں موجود تمام شرکاء نے شیم شیم کے نعرے بلند کئے۔ منہاج القرآن کے رہنما ڈاکٹر آفتاب احمد نے کہا کہ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا ذکر روکنے والے ہر دور میں ذلیل رسوا ہوئے ہیں۔ آج انہی تکفیری ذہینت کے لوگوں نے پوری دنیا میں اسلام کا چہرہ مسخ کرکے رکھ دیا ہے۔ مقررین نے سابق آرمی چیف کے مسلکی اتحاد میں شریک ہونے کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا۔

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree