وحدت نیوز(مظفرآباد) مجلس وحدت مسلمین آزاد کشمیر کی رابطہ مہم عروج پر، علامہ تصور جوادی پر حملہ کرنے والے مجرمان کی عدم گرفتاری کے خلاف 7مارچ احتجاج کے لیے گاؤں گاؤں دورہ جات، لوگوں سے ملاقات ، احتجاج میں شرکت کی دعوت، کئی شخصیات کی جانب سے حمایت کا اعلان۔ تفصیلات کے مطابق مجلس وحدت مسلمین آزاد کشمیرو انسداد دہشت گردی پبلک ایکشن کمیٹی کے رابطہ مہم جاری ، 7مارچ بھرپور شرکت متوقع، مجلس وحدت مسلمین آزاد کشمیر کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل مولانا سید طالب حسین ہمدانی ، سیکرٹری جنرل مظفرآباد سید غفران علی کاظمی کے کوہالہ ویلی و اندرون شہر دورہ جات جاری ۔جبکہ انسداد دہشت گردی پبلک ایکشن کمیٹی جہلم ویلی میں متحرک، سید شجاعت علی کاظمی ، سید تصور عباس موسوی ، سید راشد علی نقوی و دیگر کی لوگوں سے ملاقات، احتجاج میں شرکت کی دعوت ۔د

دوسری جانب تنظیم السادات یوتھ ونگ مظفرآباد کی جانب سے حمایت و بھرپور شرکت کا اعلان، تحریک انصاف آزاد کشمیر کے رہنماء سید تبریز علی کاظمی ، مجہوئی سے معروف شخصیت مخدوم سید تنویر حسین کاظمی ، گوڑی سے سید کرامت کاظمی ، بندوے سے سید واجد کاظمی ، کھن بانڈی سے سید فخر کاظمی ، نگرہ سیداں سے سید حسین نقوی ، گڑھی دوپٹہ سے سید امجد حیدری ، کمہار بانڈی سے سید مجاہد کاظمی ، کوہالہ ویلی سے سید شاہد کاظمی ، سید زاہد کاظمی ، سید شیراز کاظمی و دیگر کی جانب سے بھرپور شرکت کا اعلان ۔ مولانا سید طالب حسین ہمدانی و سید غفران علی کاظمی نے اپنے مشترکہ بیان میں کہا کہ 7مارچ تاریخی احتجاج ہو گا، اب کسی صورت بھی مہلت نہیں دی جا سکتی ، حکومت کو ہمارے مطالبات پر غور کرنا ہو گا، دہشت گردوں اور ان کے سہولت کاروں کو گرفتار کر کے قرار واقعی سزا دینا ہو گی بصورت دیگر آنے والے سخت و شدید ردعمل کو روکنا حکومت و انتظامیہ کے لیے مشکل کام ہو گا۔ ہم نہیں چاہتے تھے کہ سڑکوں پر نکلیں لیکن اب خاموشی ناممکن امر ہے ۔ ایک سال سے اوپر ہو گیا ، حکومت کے کان پر جوں تک نہیں رینگی۔

وحدت نیوز(مظفرآباد) 7مارچ تاریخی مارچ ہو گا، علامہ تصور جوادی پر حملہ کرنے والے مجرمان کی تا حال عدم گرفتاری انتظامیہ و حکومت کی نااہلی کا منہ بولتا ثبوت ہے، ہم کسی طور پر بھی اب چپ نہیں رہ سکتے ، ان خیالات کا اظہا رمجلس وحدت مسلمین آزاد کشمیر کے ترجمان سید حمید حسین نقوی نے ریاستی دفتر سے جاری پریس ریلیز میں کیا۔ انہوں نے کہا کہ 7مارچ تاریخی احتجاج ہو گا، اس حوالے سے رابطہ مہم کا باقاعدہ آغاز مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین پاکستان علامہ احمد اقبال رضوی نے کیا ۔

 علامہ احمد اقبال رضوی نے مرکزی رہنماؤں ملک اقرار حسین ، ارشاد حسین بنگش ، ریاستی رہنماؤں مولانا طالب ہمدانی، سید حسین سبزواری ، سید غفران علی کاظمی اور سید ممتاز حسین نقوی کے ہمراہ کردلہ سیداں و جہلم ویلی کا دورہ کرتے ہوئے کیا۔ ان دورہ جات کے دوران انہوں نے کردلہ امامبارگاہ میں ایک بڑے اجتماع سے خطاب میں لوگوں کو شرکت کی دعوت دی ، جبکہ دورہ جہلم ویلی کے دوران انہوں نے مختلف شخصیات سے ملاقاتیں کرتے ہوئے احتجاج میں شرکت کی اپیل کی۔ جبکہ اس کے علاوہ مولانا سید طالب حسین ہمدانی، علامہ سید فرید عباس نقوی ، سید غفران علی کاظمی ، سید حسین سبزواری ، سید عمران حیدر ، معروف سیاسی شخصیت سید تصور عباس موسوی، سربراہ انسداد دہشت گردی پبلک ایکشن کمیٹی سید شجاعت علی کاظمی مختلف علاقوں کے دورہ جات پر ہیں ، جہاں و عوام و شخصیات سے ملاقاتیںکر کے احتجاجی مارچ میں شرکت کی دعوت دے رہے ہیں ۔

 انہوں نے مذید بتایا کہ مجلس وحدت مسلمین اب کسی صورت اس مسئلے کو پس پشت نہیں ڈالنے دے گی ۔ 7مارچ نئے عزم سے تحریک کا آغاز کر رہے ہیں ۔ اگر جلد از جلد اس مسئلے کو منطقی انجام کی جانب نہ لے جایا گیا تو 7مارچ کے بعد یہ سلسلہ سخت و طویل ہو سکتاہے۔ اس لیے اب بھی وقت ہے انتظامیہ و حکومت ہوش کے ناخن لے اور ہمارے مطالبات پر غور کرے۔ورنہ فیصلہ سڑکوں پر ہوگا۔

وحدت نیوز (مظفرآباد) مجلس وحدت مسلمین کی ریاستی کابینہ کا اجلاس سیکرٹری جنرل علامہ سید تصورحسین نقوی کی زیر صدارت منعقد ہوا۔ اجلاس میں ڈپٹی سیکرٹری جنرل مولانا سید طالب حسین ہمدانی ، ترجمان مولانا سید حمید حسین نقوی، سیکرٹری تنظیم سید حسین سبزواری ، سیکرٹری یوتھ سید عمران حیدر ، سیکرٹری شماریات ڈاکٹر عابد علی قریشی و دیگر شریک ہوئے۔ سیکرٹری جنرل ضلع مظفرآباد سید غفران علی کاظمی نے بھی اس اجلاس میں خصوصی شرکت کی۔ اجلاس میں تنظیمی صورتحال اور علامہ تصور جوادی کیس کے حوالے سے جائزہ لیتے ہوئے اہم فیصلہ جات کیے گئے۔ تنظیم سازی کے عمل کو تیز تر کرنے کے حوالے سے حکمت عملی طے گئی۔ جبکہ علامہ تصور جوادی کیس کے حوالہ سے مجرمان کی گرفتاری کے لیے پانچ مارچ کی ڈیڈ لائن اور احتجاجی پروگرام کے فائنل اعلان کے لیے ریاست آزادکشمیر کی تمام سیاسی و مذہبی جماعتوں سے مشاورت کا بھی فیصلہ کیا گیا۔ اس سلسلہ میں اٹھائیس فروری کو آل پارٹیز کانفرنس کا انعقاد کیا جائے گا۔

وحدت نیوز (مظفرآباد) تفصیلات کے مطابق ترجمان ایم ڈبلیو ایم آزادکشمیر سید حمید حسین نقوی نے کہا کہ مجلس وحدت مسلمین آزادکشمیر کا اہم اجلاس وحدت سیکرٹریٹ مظفرآباد میں منعقد ہوا۔اجلاس کی صدارت سیکرٹری جنرل ایم ڈبلیوایم آزادکشمیر علامہ سید تصور نقوی الجوادی نے کی۔ اجلاس میں ڈپٹی سیکرٹری جنرل مولانا سید طالب ہمدانی،ڈاکٹر عابد علی قریشی اور سید عاطف ہمدانی کے علاوہ دیگر ریاستی کابینہ کے ،معزز اراکین نے شرکت کی۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے علامہ تصور جوادی نے کہا کہ ماہ ربیع الاول انتہائی بابرکت مہینہ ہے کیونکہ اس ماہ میں ہمارے پیارے نبی ﷺکی ولادت کے علاوہ امامت کی چھٹی کڑی امام جعفر صادقؑ کی بھی ولادت ہوئی ہے۔ اس مہینہ میں مسلمان خوشی و مسرت کا اظہار کرنے کے لیے میلاد ریلیاں اور میلاد محافل منعقد کرکے تاجدار مدینہ کو خراج عقیدت پیش کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس با برکت ماہ کی آمد پر پوری امت مسلمہ کو ہدیہ تبریک پیش کرتا ہوں۔

 انہوں نے کہا کہ مجلس وحدت مسلمین آزادکشمیر12تا 17ربیع الاول ہفتہ وحدت کے طور پر منائے گی۔ اس ہفتہ میں تمام تنظیمی ضلعی ہیڈکوارٹرز و یونٹ سطح پر میلاد ریلیاں اور محافل میلاد کا انعقاد کیا جائے گا۔ انہوں مذیدکہاکہ حکومتی و انتظامی ادارے ماہ ربیع الاول کے جملہ پروگرامات کی فول پروف سکیورٹی کو یقینی بنائیں۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے مولانا طالب ہمدانی نے کہا کہ ہم علامہ تصور جوادی کیس پر پولیس کی کارکردگی سوالیہ نشان اٹھاتے ہیں اور ان کی نا اہلی و مجرمانہ خاموشی پر شدید تحفظات رکھتے ہیں۔ ہم نے انتظامی اداروں کو بہت وقت دیا لیکن اسے ہماری کمزوری تصور کیا گیا،لیکن بہت جلد اس کیس کے سلسلہ میں لائحہ عمل کا اعلان کریں گے۔

انہوں نے مذید کہا کہ پنجا ب حکومت اپنے اوچھے ہتھکنڈے ملت تشیع کے ساتھ نہ اپنائے ، اور ہمارے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل سید ناصرعبا س شیرازی کو جلد رہا کرے۔ انہوں نے کہا کہ ہم قائد وحدت علامہ راجہ ناصر عباس کے حکم کے منتظر ہیں اور ہمہ وقت آمادہ ہیں۔مجلس وحدت مسنگ پرسنز کے مسئلہ پر صدائے احتجاج بلند کرتی رہے گی اور یہ مطالبہ کرتے ہیں کہ کہ جلد از جلد ہمارے مسنگ پرسز کو عدالتوں میں پیش کیا جائے اور اگر ان پر کوئی مقدمہ ہے تو قانون کے مطابق ان کو سزاء دی جائے،لیکن ماوارئے عدالت گرفتاریاں ہر گز منظور نہیں۔ اجلاس کا اختتام دعائے سلامتی امام زمانہؑ سے ہوا۔

وحدت نیوز(مظفر آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل سید ناصر شیرازی ایڈووکیٹ کے اغوا کے خلاف، شیعہ جوانوں کی ماورائے عدالت گرفتاریوں اور آزاد حکومت کی علامہ تصور جوادی کیس پر غفلت کے خلاف ریاست آزادکشمیر میں احتجاجی مظاہرے۔ بروز جمعہ یوم احتجاج کے طور پر منایا گیا۔ خطباء نے جمعہ کے خطبات میں احتجاج ریکارڈ کروایا۔ مرکزی احتجاجی مظاہرہ سینٹرل پریس کلب کے قریب برہان مظفر وانی چوک مظفرآباد میں ہوا، جس میں مجلس وحدت مسلمین اور امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن آزادکشمیر ڈویژن کے رہنماؤں اور کارکنوں، علمائے کرام اور مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے لوگوں نے شرکت کی۔مظاہرین نے بینر اٹھا رکھے تھے جن پر ناصر شیرازی کے اغوا اور علامہ تصور جوادی کیس پر آزاد حکومت کی غفلت کے خلاف نعرے درج تھے۔ شرکا ء نے پنجاب اور آزاد کشمیر کی حکومتوں کے خلاف نعرے بازی بھی کی۔ احتجاجی مظاہرہ سے ڈپٹی سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین آزاد کشمیر مولانا سید طالب ہمدانی، ترجمان ایم ڈبلیو ایم آزادکشمیر مولانا حمید نقوی، نمائندہ آئی ایس او سید رضی عباس، رہنما ایم ڈبلیو ایم آزادکشمیر مولانا زاہد کاظمی، مولانا جواد سبزواری اور سید ممتاز حسین نقوی نے خطاب کیا۔

مقررین نے کہا مجلس وحدت مسلمین ایک ملک گیر سیاسی و مذہبی جماعت ہے اور جماعت کے مرکزی سینئر رہنما ناصر شیرازی ایڈوکیٹ کو اغوا کرکے حکومت پنجاب نے جس غنڈہ گردی کا مظاہرہ کیا ہے اور سیاسی و مسلکی انتقام کا مظاھرہ کیاجس کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے۔ ایم ڈبلیو ایم ایک پُرامن جماعت ہے جس کا ملکی استحکام، رواداری و بھائی چارے کے فروغ میں اہم کردار رہا ہے۔اس جماعت نے ہمیشہ ایسی قوتوں کی مخالفت کی ہے جو ملک میں نفاق کا بیج بو کر وطن عزیز کو عدم استحکام سے دوچار کرنا چاہتے ہیں۔رانا ثنا اللہ اپنے بیانات کے ذریعے عدلیہ کو مسلکی بنیادوں پر تقسیم کرنے کی کوششوں میں مصروف تھا۔ اس کے خلاف ناصر شیرازی ایڈوکیٹ نے عدالت عالیہ میں پٹیشن دائر کر رکھی تھی جس پر انہیں انتقام کا نشانہ بناتے ہوئے اغوا کرایا گیا ہے۔انہوں نے کہا ریاستی اداروں کو گھر کی لونڈی سمجھنے والے نا اہل حکمران اپنے انجام سے زیادہ دور نہیں ہیں۔مقررین نے سپریم کورٹ سے مطالبہ کیا ہے کہ ایک ملک گیر مذہبی و سیاسی جماعت کے سینئر رہنما کے اغوا پرسوموٹو ایکشن لیتے ہوئے ذمہ دار اداروں کو طلب کیا جائے۔ انہوں نے کہا سیکورٹی اداروں کو دہشت کی علامت بنا کرعوام کو عدم تحفظ کا شکار کیا جا رہا ہے۔ لوگوں کے بنیادی انسانی حقوق سلب کیے جا رہے ہیں۔ملک میں قانون و آئین کی بجائے طاقت و اختیارات کی حکمرانی ہے۔انہوں نے کہا کہ اگر ذمہ داران کو انصاف کے کٹہرے میں نہ لایا گیا تو پھر قانون کے نام پر قانون شکنی کرنے والے عناصر کے حوصلوں کو تقویت ملتی رہے گی۔انہوں نے کہا کہ ناصر شیرازی پر کسی قسم کا کوئی مقدمہ یا الزام نہیں ہے،ان کی جبری گمشدگی پنجاب حکومت کی غنڈہ گردی اور انتقامی کاروائی ہے۔ وزیر اعظم اور وفاقی داخلہ سے بھی مطالبہ کیا کہ ناصر شیرازی کی فوری بازیابی کے احکامات صادر کیے جائیں۔

مقررین نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عوام کی جان و مال کا تحفظ ریاست کی ذمہ داری ہے۔ ریاستی اداروں کو آئین و قانون کے تابع ہونا چاہیے مگر بدقسمتی سے ادارے نا اہل حکمرانوں کی اطاعت میں پیش پیش ہیں۔ ملت تشیع کے سینکڑوں نوجوان کئی سالوں سے جبری گمشدہ ہیں۔انہیں نہ تو عدالتوں میں پیش کیا جا رہا ہے اور نہ ہی ان کے اہل خانہ کو ان کی خیریت سے آگاہ کیا جارہا ہے۔جو بنیادی انسانی حقوق کی بدترین پامالی ہے۔ملت تشیع کے تمام نوجوانوں کو فوری بازیاب کیا جائے۔ مقررین نے علامہ تصور جوادی پر حملہ کرنے والوں کی عدم گرفتاری پر بھی آزاد حکومت کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ نو ماہ گزر جانے کے بعد ہم یہ کہنے میں حق بجانب ہیں کہ آزادکشمیر حکومت نا اہل ہے۔ ریاست کے امن کے ساتھ کھیلنے والوں کو گرفتار نہ کیا جانا باعث تشویش ہے۔ کیا یہ حکمران اسلم رئیسانی کا انجام بھول گئے۔ ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ علامہ جوادی پر حملہ کرنے والوں کو جلد از جلد گرفتار کرتے ہوئے سامنے لایا جائے بصورت دیگر شہری سڑکوں پر نکلنے اور تمہارے ایوانوں کا گھیراؤ کرنے کا حق محفوظ رکھتے ہیں۔

وحدت نیوز(مظفرآباد) پوری دنیا میں بھارتی یوم جمہوریہ یوم سیاہ کے طور پر منا کر کشمیری طمانچہ رسید کر رہے ہیں ، بھارت نام نہاد جمہوریت ہے، وہ کشمیریوں کا بنیادی حق غصب کیے بیٹھا ہے، کشمیری بھارتی مظالم کو بے نقاب کرتے رہیں گے۔ بھارت بڑے شوق سے یوم آزادی منائے مگر اس سے قبل اسے کشمیریوں کو استصواب رائے کا حق ضرور دینا ہو گا۔ ان خیالات کا اظہار سیکرٹری نشرو اشاعت مجلس وحدت مسلمین آزاد جموں و کشمیر سید عمران حیدر سبزواری نے وحدت سیکرٹریٹ سے جاری ایک بیان میں کیا۔

انہوں نے کہا کہ آج نام نہاد جمہوریہ بھارت اپنا یوم آزادی منا رہا ہے۔ ہم منع نہیں کرتے اور نہ ہمیں حق ہے مگر وہ اپنے آپ کو جمہوریہ اور آزاد کہنے سے قبل کشمیر سے اپنی افواج واپس بلائے، خطے میں قیام امن کا خواب کشمیریوں کو حق زندگی دینے سے شرمندہ تعبیر ہو گا۔ بھارت ایک طرف امن و آشا کی بات کرتا ہے جبکہ وہ وہ کشمیر میں بے پناہ ظلم کر رہا ہے، کشمیری بھارتی مظالم کو اسی طرح بے نقاب کرتے رہیں گے۔ آج انڈیا کے یوم آزادی کے موقع پر پوری دنیا میں یوم سیاہ منا کر کشمیری بھارت کو یہ پیغام دے رہے ہیں کہ تم جتنا مرضی اپنی خوشیاں مناؤ مگر تمہاری خوشیاں اس وقت تک ادھوری کرتے رہیں گے جب تک تم ہمیں ہمارا حق نہیں دے دیتے ، بھارت کا اصل یہ ہے کہ وہ ظالم و جابر ہے، وہ آزادی مخالف ہے، وہ مسلمان مخالف ہے، وہ اسلام دشمن ہے، وہ سیکولر نہیں بلکہ ہندہ انتہاء پسند ریاست ہے۔ لیکن وہ کفر تو چل سکتا ہے پر ظلم نہیں انشاء اللہ وہ وقت دور نہیں جب کشمیری انڈیا کے تسلط سے آزاد ہو کر رہیں گے۔

Page 1 of 6

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree