وحدت نیوز(لاہور) نماز جمعہ کے بعد لاہور پریس کلب کے سامنے مجلس وحدت مسلمین،جمعیت علمائے پاکستان نیازی اور اتحاد امت مصطفیٰ کے زیر اہتمام پنجاب کے وزیر قانون رانا ثنااللہ کا اعلیٰ عدلیہ کو مسلکی بنیادوں پر تقسیم کرنے اور ختم نبوتﷺ شق میں حکومتی شرمناک ترمیم کیخلاف مشترکہ احتجاجی مظاہرہ کیا گیا،مظاہرے میں بڑی تعداد میں لوگوں نے شرکت کی،مظاہرے کی قیادت جمعیت علمائے پاکستان کے رہنماوں پیر عثمان نوری،علامہ جاوید اکبر ثاقی،ڈاکٹرامجد چشتی،پیر اختررسول اور مجلس وحدت مسلمین کے رہنماوں اسد عباس نقوی،علامہ مبارک موسوی،علامہ حسن ہمدانی اور سید حسین زیدی نے کی۔

مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے ،جمعیت علمائے پاکستان کے رہنما پیر عثمان نوری نے کہا کہ پنجاب میں ن لیگ اپنے غیر ملکی آقاوں کی ایماء پر ایک خوفناک سازش میں مصروف ہیں،اس سازش کا مرکزی کردار رانا ثنااللہ ریاست کے اہم ستون اعلیٰ عدلیہ کو مسلکی بنیادوں پر تقسیم کرنے کا اعلان کر چکا ہے،اعلیٰ عدلیہ کے معزز ججوں کو اپنی گھناونے جرائم چھپانے کے لئے مسلکی بینادوں پر تقسیم کرنے والے ملک و قوم کے غدار ہیں،آج ن لیگ وہ وہ کام کررہی ہیں جو ہمارے دشمن کرنے میں ناکام رہے،ہم شیعہ سنی متحد ہیں اور فرقہ واریت پھیلانے والوں کیخلاف آخری حد تک جائیں گے،سانحہ ماڈل ٹاوُن کے قاتل دنیا اور آخرت دونوں میں نہیں بچ پائیں گے،ہم سپریم کورٹ اور مقتدر قوتوں سے مطالبہ کرتے ہیں کہ آپتیشن ردالفساد کا دائرہ کار پنجاب اسمبلی تک بڑھایا جائے،اور اسمبلی میں بیٹھے کالی بھیڑوں،دہشتگردوں کے سرپرستوں کو کٹہرے میں لایا جائے،جو اپنی بادشاہت کے لئے ملک میں بھائی سے بھائی کو لڑانے کی سازشوں میں مصروف ہے۔

مظاہرے سے علامہ جاوید اکبر ثاقی نے بھی خطاب کیا انہوں نے کہا نواسہ رسول ﷺ اور خاندان رسالت سے محبت مسلمانوں کے ایمان کاجز ہے،راناثنااللہ نے پنجاب کو ایک دفعہ پھر فرقہ واریت کی دلدل میں دھکیلنے کی کوشش کی ہے،اگر اس مفسد شخص کیخلاف کاروائی نہ کی گئی تو ملک گیر احتجاجی مظاہروں کا اعلان کرینگے،انہوں نے کہا ہماری جانیں فدا ہوں سرکار دوعالم ﷺ پر ختم نبوت قانون میں تبدیلی کرنے والے وزیر کو برطرف کر دیا جائے،اور اسے تاحیات کے لئے نااہل قرار دیا جائے۔

احتجاجی مظاہرے سے مجلس وحدت مسلمین پنجاب کے سیکرٹری جنرل علامہ مبارک موسوی نے بھی خطاب کیا، انہوں نے کہا کہ افسوس کی بات یہ ہے کہ آج حکمرانوں کو چاہیئے تھا کہ مذہبی ہم آہنگی کے لئے کردار اداکرے لیکن آج پنجاب کے نام نہاد وزیر قانون نے خود قانون کو ہاتھ میں لے لیا اور صوبے میں فرقہ پرستوں کو یہ باور کرایا کہ تم فرقہ واریت پھیلاو ہم سرپرستی کے لئے تیار ہے،اعلیٰ عدلیہ کو تقسیم کرنا ملک سے بغاوت ہے،لیکن یہاں جنگل کا قانون نافذ ہے،چودہ معصوموں کے قاتل اورعدلیہ اور قومی اداروں کیخلاف ہرزہ سرائی کرنے والے اس بدمعاش شخص کو کوئی لگام دینے والا نہیں،رانا ثنااللہ یہ یاد رکھیں جب فرعون ،نمرود اور یزید جیسے ظالم نہیں رہے تو تم اور تمھاری لیگی حکومت بھی بہت جلد اپنے انجام کو پہنچ جائیں گے،دنیا وی قانون اور عدالت خداوندی سے اب کوئی طاقت تمہیں بچانہیں سکے گا،ہم جناح اور اقبال کے پاکستان کو شدت پسندوں کے سرپرستوں کے ہاتھوں یرغمال نہیں ہونے دینگے،انشااللہ ملک دشمنوں کیخلاف ہر فورم آواز بلند کرتے رہیں گے۔لاہور پریس کلب کے سامنے مظاہرین حکومت اور راناثنااللہ کے خلاف نعرہ بازی کرتے رہے،بعد میں پرامن طور پر منتشر ہوگئے۔

وحدت نیوز(حیدرآباد) مجلس وحدت مسلمین  ضلع حیدرآباد کی جانب سے ضلعی سیکریٹری جنرل  ایڈوکیٹ رحمان رضا عباسی،  سید صفدر عباس عابدی، ترجمان علامہ گل حسن مرتضوی اور سیکریٹری نشرواشاعت عابد علی قریشی کی قیادت میں لاپتہ شیعہ علماءوجوانوں کی بازیابی اور علامہ حسن ظفر نقوی صاحب کی جیل بھرو مہم کی حمایت میں قدم گاھ مولا علی پر بعد نماز جمعہ بھرپور احتجاج کیا گیا۔ مقررین نے کہا کہ  ہم لاپتہ کئے گئے عزاداران کی بازیابی کے لئیے جدوجہد کرنے والے مرد مجاھد علامہ حسن ظفر نقوی کے ساتھ ہیں اور حکم ملنے پر حیدرآباد کے مومنین بھی عزاداران امام کی بازیابی کی خاطر اپنی گرفتاری کے لئیے تیار ہیں۔

وحدت نیوز(لاہور) پنجاب کے متعصب وزیر قانون رانا ثنااللہ کا مسلکی بنیاد پر لاہور اعلیٰ عدلیہ کے معزز ججز کو تقسیم کرنے اور ملک میں فرقہ واریت کو ہوا دینے کی سازش کیخلاف شیعہ سنی علماء و اکابرین آج بعد از نماز جمعہ سہ پہر چاربجے لاہور پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کرینگے،مجلس وحدت مسلمین لاہور کے سیکرٹری جنرل علامہ حسن ہمدانی نے کہا ہے کہ پاکستان میں بسنے والے شیعہ سنی متحد ہیں،شدت پسندوں کے سرپرست رانا ثنااللہ قومی مجرم ہے،جو اداروں کو تقسیم کرکے پاکستان کو کمزور کرنے کی سازش کررہا ہے،یہ شخص کبھی پاک فوج کیخلاف ہرزہ سرائی کرتا ہے تو کبھی عدلیہ کو نشانہ بناتا ہے،ہم ایسے ملک دشمنوں کو قانون کے گرفت میں لانے تک جدو جہد جاری رکھیں گے،جمعیت علمائے پاکستان نیازی کے رہنما ڈاکٹر امجد چشتی نے کہا کہ پاکستان میں شیعہ سنی کے نام پر تقسیم پیدا کرنے والے انڈیا اور مودی کی زبان بول رہے ہیں،رانا ثنااللہ سانحہ ماڈل ٹاون کے شہداء کا قاتل ہے،ہم اسے محب وطن پاکستانیوں کو تقسیم کرنے اور فرقہ واریت پھیلانے کی اجازت نہیں دینگے،انشااللہ ایسے ملکدشمن عناصر کیخلاف ہر فورم پر آواز بلند کرتے رہیں گے۔

وحدت نیوز(کراچی) پاکستانی شیعہ مسلمانوں کی غیر اعلانیہ و غیر قانونی گرفتاریاں و حبس بے جا میں رکھنے کے خلاف ان لاپتہ افراد کے اہل خانہ نے گذشتہ روز عائشہ منزل پر بعد ختم مجلس عزا احتجاجی مظاہر ہ کیا اور اپنے پیاروں کی بازیابی کا مطالبہ کیا۔اس موقع پر سیکڑوں مومنین جمع تھے اور انہوں نے بھی ریاستی اداروں کی جانب سے اس غیر قانونی اقدام کی شدید مذمت کرتے ہوئے لاپتہ افراد کو پیش کرنے کا مطالبہ کیا، اس موقع پر انکا کہنا تھا کہ شیعہ پاکستانیوں کی غیر اعلانیہ و غیر قانونی گرفتاریاں و حبس بے جا میں رکھنا بنیادی انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔

احتجاج سے خطاب کرتے ہوئے معروف شیعہ عالم دین اور مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی رہنما علامہ سید حسن ظفر نقوی نے کہا کہ اس وقت پورے پاکستان میں ہلچل مچی ہے اور سب سے پہلے شیعہ لاپتہ عزاداروں کا مسئلہ ہی اٹھا ہوا ہے اور انشاللہ عاشورہ سے پہلے رہائی ملے گی اور اگر نہیں ملتی تو میں یہ اعلان کرچکا ہو کہ عاشور کے بعد پہلے جمعہ کو میں علما کے ساتھ گرفتاری دونگا انہوں نےکہا کہ کمیٹی کام کررہی ہے امید رکھیں  وہ مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے آبدیدہ ہوگئے اور کہا کہ میں نے نہ آپ کو کل اکیلا چھوڑا ہے اور نہ آج اپ لوگ تنہا نہیں پورا پاکستان آپ کے ساتھ ہے۔

واضح رہے کہ ملک بھر سے سیکڑوں شیعہ جوانوں اور علمائے کرام کو ریاستی اداروں نے بلا کسی جرم و خظا گھروں سے غائب کیا ہو اہے، لہذا اب ملت جعفریہ کے صبر کا پیمانہ لبریز ہوگیا ہے، جبکہ ریاستی و حکومتی اداروں کی بے حسی بھی کم ہونے کا نام نہیں لے رہی ہے، لہذا قومی امید کی جارہی ہے کہ روز عاشورہ ملک بھر میں جلوس ہائے عزا کو روک کراپنے پیاروں کی بازیابی کا مطالبہ کیا جائے گا۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے مطالبہ کیا ہے کہ ملت تشیع کے لاپتابے گناہ نوجوانوں اور علما کو فوری طور پر بازیاب کرایا جائے ۔نوجوانوں کی جبری گمشدگی اہل خانہ کے لیے اذیت کا باعث بنی ہوئی ہے۔انہوں نے کہا کہ ملک کے مختلف حصوں سے تعلق رکھنے والے ملت کے پڑھے لکھے نوجوانوں کو ان کے گھروں سے اغوا کیا گیاجن کی تاحال کوئی اطلاع نہیں ۔کئی سال گزرنے کے بعد بھی بیشتر نوجوانوں کو نہ تو عدالتوں کے سامنے پیش کیا جا رہا ہے اور نہ ہی ان کے اہل خانہ کو ان کی خیریت سے آگاہ کیا جا رہا ہے۔ یہ اقدام بنیادی انسانی حقوق کے منافی اور آئین پاکستان سے روگردانی ہے۔ملت تشیع کے نوجوانوں نے ہمیشہ حب الوطنی کامظاہرہ کیا اور قانون و آئین کی پاسداری کی ہے۔اگر کوئی نوجوان کسی جرم میں ملوث ہے تو اسے عدالت میں باضابطہ طور پر پیش کیا جانا چاہیے۔سزا و انصاف کا فیصلہ کرنا عدلیہ کا کام ہے۔ملک کے کسی بھی ادارے کو یہ حق حاصل نہیں کہ وہ عدالت کے سامنے پیش کیے بغیر کسی بھی شہری کو اس طرح حراست میں رکھے۔

انہوں نے کہا کہ گمشدہ افراد کی بازیابی کے مطالبے کو گزشتہ کئی سالوں سے دہرا یا جا رہا ہے ۔پانچ کروڑ سے زائد افراد پر مشتمل ملت تشیع کے مسائل سے دانستہ غفلت حکومت کی سیاسی ساکھ کے لیے بھی سخت نقصان دہ ثابت ہو گی۔ دہشت گردی کے ساتھ ہمیں ریاستی جبر کا شکار نہ بنایا جائے۔انہوں نے وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی، وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال اور چیف جسٹس سپریم کورٹ آف پاکستان سے مطالبہ کیا ہے کہ انسانی حقوق کی اس پامالی کا فوری نوٹس لیا جائے اور ملت کے جبری گمشدہ نوجوانوں کی فوری بازیابی کے احکامات صادر کیے جائیں۔

وحدت نیوز (اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان شعبہ روابط کے زیر اہتمام یوم دفاع پاکستان کے عنوان سے مرکزی سیکرٹریٹ اسلام آباد میں مختصر ننشست کا ااہتمام کیا گیا، جس میں مرکزی سیکرٹری تعلیم نثار علی فیضی، مرکزی سیکرٹری روابط ملک اقرار حسین، مرکزی معاون سیکرٹری تنظیم سازی علامہ اصغر عسکری، علامہ اقبال بہشتی، رکن شوریٰ عالی علامہ حسنین گردیزی سمیت راولپنڈی اسلام آباد کے تنظیمی اراکین نے شرکت کی۔ نشست کے شرکاء نے شہداء وطن کو خراج عقیدت پیش کیا، نیز برما کے مظلوم مسلمانوں سے اظہار یکجہتی کے لئے جمعہ کو اسلام آباد میں عظیم الشان حمایت مظلومین ریلی کے انعقاد کا اعلان کیا گیا، ریلی کا آغاز امام بارگاہ اثنا عشری گی سکس ٹو سے ہوگا، جبکہ ریلی چائنہ چوک پر پہنچ کر ختم ہوگی۔ ریلی کی قیادت مرکزی قائدین کریں گے، علاوہ ازیں اقوام متحدہ کے دفتر میں احتجاجی قرارداد بھی پیش کی جائے گی، جس میں برما میں مسلمانوں پر ڈھائے جانے والے مظالم کی مذمت کی جائے گی، اجلاس میں شہدائے دفاع پاکستان کے درجات کی بلندی اور پاکستان کی سلامتی کیلئے دعا بھی کی گئی۔

Page 1 of 35

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree