The Latest

میرا بابا کب آئے گا۔۔۔ !!!

وحدت نیوز(آرٹیکل) یہ سوال ہے جو ہر وہ بچہ کرتا ہے جس کے بابا اس ریاست کے سفید و سیاہ کے مالک بنے ہوئے افراد کی غفلت، نا اہلی، غلط پالیسیوں اور ملک سے زیادہ ذاتی و خاندانی مفادات کیلئے، اور بیرونی طاقتوں کے اشارے پر ان کے مفادات کے تحفظ کیلئے اداروں کو چلانے کی وجہ سے یا تو شہادت سے گلے لگانا پڑتا ہے ، یا دن دیہاڑے "نا معلوم" طاقتوں کے ہاتھوں اغوا ہوگیا ہوتا ہے۔

گزشتہ دنوں جب میجراسحاق دہشت گردوں سے لڑتے ہوئے ڈیرہ اسماعیل خان کے علاقے میں شہید ہوگئے تو تمام محب وطن شہریوں کو اسکا دکھ ہوا۔ سب ان کے گھر والوں خاص طور پر میجر کے ننھے بیٹے کے ساتھ ہمدردی کا اظہار کرتے دکھائی دیئے۔ آرمی چیف خود ان کے نماز جنازے میں شرکت کیلئےگئے ۔ ہر طرف سوشل میڈیا سمیت پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا پر میجر اسحاق شہید کی بیٹے کیساتھ تصویر اور وہ تصویر جس میں انکی زوجہ انکا آخری دیدار کرتے ہوئے دیر تک گویا ان کیساتھ باتیں کررہی تھیں ، دکھایا جارہا ہے۔ وہ دل کو چیرنے والا منظر ہے، جسے دیکھ کر ضبط کے تمام بندھن ٹوٹ جاتے اور بے اختیار آنسو نکل آتے۔ یقینا وطن کی سالمیت اور خودمختاری کا دفاع کرتے ہوئے ایک عظیم بیٹے کی عظیم قربانی پر جتنی بھی افسوس کی جائے کم ہے۔

جب میں شہید میجر اسحٰق کی گود میں اس چاند کے ٹکڑے کو مسکراتا ہوا دیکھتا ہوں تو بے اختیار ناصر عباس شیرازی کے اس بیٹے کو آنکھوں کے سامنے پاتا ہوں۔ اور اس ننھی سی بیٹی کوجو لاہور کے مال روڈ پر گزشتہ ہفتے ہاتھ میں پلے کارڈلئے احتجاج کرنیوالوں میں شریک تھیں جس پر لکھا ہوا تھا کہ "میرے بابا ناصر شیرازی کو بازیاب کراو۔۔۔۔" خدا ایسے دن کسی کے ننھے بچوں کو نہ دکھائے۔ میجر اسحٰق نے ملک پر جان نچھاور کردی، امر ہوگئے، ان کے خانوادہ کو اب یقین ہوچکا کہ وہ واپس نہیں آنیوالے۔ ان کو معلوم ہے کہ شہید امر ہوگئے، وہ اللہ کے ہاں نعمت پانیوالے ہیں۔ لیکن ان تمام محب وطن فرزندوں کا کیا، جن کو ریاستی اداروں کی غفلت اور اپنے فرائض کی بجاآوری سے پس و پیش کرنے، ریاست کی طرفسے تفویض کردہ ذمہ داریوں کی بجائے سیاسی نا اہلوں کی نوکری اور انکے مفادات کی تحفظ کرنے کی وجہ سے جیتے جی اپنے لاڈلوں اور جگر گوشوں سے دور کر دیئے گئے؟ ان کے گھر والے اور چاند جیسے بچے تو یہ بھی نہیں سمجھ پاتے کہ آخر ان کے بابا کہاں ہیں، کس حال میں ہیں؟ اتنے دنوں سے کن لوگوں نے اور کس وجہ سے ان سے دور کردیئے ہیں؟ صرف ناصر شیرازی ہی نہیں بلکہ اکتوبر اور نومبر کے شروع کے ہفتوں میں پاکستان بھر میں تحریک چلائی گئیں جن میں درجنوں ایسے غیرتمند فرزندوں کی ماورائے عدالت و قانون اغوا اور گرفتاریوں کو ایڈریس کیا گیا۔ یعنی درجنوں بلکہ سینکڑوں افراد اس ریاست میں بغیر کسی جرم و سزا کے غائب کردیئے گئے ہیں۔ اور انکے گھر والے اپنے پیاروں کی آمد کے منتظر ہیں۔

اب ناصر شیرازی کے بچوں کو کیسے سمجھائیں کہ بیٹاآپ کے بابا نے ریاستی اداروں کو نقصان پہنچانے والے، کالعدم تنظیموں سے ملکر ملک کے خلاف سازش کرنیوالے اور وزارت کے نشے میں دہشت گردی کرنیوالے ایک وزیر کے خلاف کورٹ میں کیس کیا ہوا تھا۔ انہیں کیسے سمجھائیں کہ بیٹا انہوں نے تو ہمیشہ ملک کی نظریاتی اقدار کے تحفظ کیلئے اپنا آرام و سکون کھویا، آپ کے بابا نے ہمیشہ سے اتحاد بین المسلمین کیلئے کوششیں کیں۔ انہوں نے تکفیریت کے خلاف منظم جدوجہد کی اورشیطان بزرگ کی سازشوں کوہمیشہ بر وقت آشکار کرکے ملت کو آگاہی دی۔ اور ہر سازش کیلئے جوانوں اور طالبعلموں کو متحرک کیا۔ طالبعلمی اور جوانی سے لیکر اب تک ان کا پل پل ملک و ملت کیلئے کوششیں کرتا گزرتا تھا،اور یہی سب آج ان کا جرم بن گیا۔

اور تو اور عدالت نے ریاستی اداروں کو کئی بار مہلت دیکر سختی کیساتھ حکم دیئے کہ کسی صورت ان کو عدالت کے روبرو پیش کئے جائیں، لیکن ملک کے دوسرے بڑے شہر لاہور میں گوڈ گورننس کے نام پر دھوکہ، کرپشن اوردہشت گردوں کو پناہ دینے والی حکومت اوران کے سامنے بھیگی بلی بنے اداروں کے سربراہ سب نا اہل نکلے، یہ سب ریاست پاکستان کے نہیں گویا ملک کو لوٹنے والی جماعت کی نوکری پر مامور ہیں۔ ورنہ اب تک تو دنیا سے باہر بھی ہوتے تو انکو لا کر پیش کردیتے۔

میں ان قانون نافذ کرنیوالے اداروں، خفیہ ایجنسیوں میں کام کرنیوالوں اور ان کے سربراہوں سے سوال کرتا ہوں کہ کیا تمہارے گھر میں چھوٹے بچے نہیں ہیں؟ کیا تم سب لاولد ہو ؟ کیا تم اپنے باپ کے گود میں نہیں پلے بڑھے؟ اگر ہاں تو شہید میجر اسحاق کے بیٹے کو دیکھ کر کیا تمہیں نہیں لگتا کہ جن افراد کو بے گناہ اغوا کرکے انکے جگر گوشوں سے جدا کیا ہوا ہے انکی حفاظت تمہاری ذمہ داری تھی؟ اور تمہاری غفلت اور افسران شاہی کی نوکری ان بچوں کی سسکیوں کی وجہ بنی؟

کبھی خود بھی سوچ لیں کہ جب تمہارے بچے تمہارے لئے سڑکوں پر نکلیں گے اور ہر ایک سے سوال کریں گے۔۔۔۔"میرا بابا کب آئے گا۔۔۔۔۔"

تحریر ۔۔۔۔شریف ولی کھرمنگی

وحدت نیوز(گلگت) قائد حزب اختلاف گلگت بلتستان اسمبلی جناب کیپٹن (ر)محمد شفیع نے اسمبلی اجلاس کے دوران پوائنٹ آف آرڈر پر بات کرتے ہوئے ڈپٹی سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین  ناصرعباس شیرازی ایڈوکیٹ  کی جبری گمشدگی پر حکومت خاص کر پنجاب حکومت اور رانا ثناء اللہ پر سخت تنقید کرتےہوئے ان کی فوری بازیابی کامطالبہ کردیا،اپنی گفتگو کے دوران انہوں نے ملت تشیع کے بیگناہ افراد کی جبری گمشدگی کو آئین اور قانون سے متصادم قرار دیا،انہوں نے مطالبہ کیا کہ اگر کوئی گناہگار ثابت ہوا ہے تو انہیں عدالت کے سامنے پیش کیا جائے اور تمام قانونی تقاضوں کو پوراکرکے سزادی جائے،ملت تشیع کا دہشت گردی سے کوئی  تعلق تھا اور نہ ہے ہم نے قیام پاکستان سے لیکرآج تک  استحکام پاکستان کیلئے بیش بہا قربانیاں دی ہیں،حکومت کو چاہئے کہ ملت تشیع کے ساتھ دہشت گردوں جیسا سلوک بند کرے اور ہمیں سخت احتجاج پر مجبور نہ کیا جائے۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مغوی رہنما سید ناصرشیرازی کی جبری گمشدگی پاکستان کے ایوان بالا سینیٹ آف پاکستان میں بھی آواز احتجاج بلند ، پاکستان مسلم لیگ ق کے رہنما سینیٹر کامل علی  آغا کی جانب سے ناصرشیرازی کے تین ہفتے قبل ہونے والے اغواپر شدید تشویش کا اظہار کیا، چیئرمین سینیٹ میاں رضا ربانی کا وزارت داخلہ کو صوبائی حکومت سے تفصیلات  لیکر جمعہ کو سینٹ میں جواب داخل کرانے کی ہدایت۔

تفصیلات کے مطابق 22نومبر بروز بدھ سینیٹ کے اجلاس میں پاکستان مسلم لیگ ق کے سینیئررہنما سینیٹر کامل علی  آغا نے پوائنٹ آف آرڈرپر گفتگوکرتے ہوئےکہ مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی ڈپٹی سیکریٹری جنرل ناصرشیرازی کوواپڈا ٹاون لاہور سے  غائب ہوئے تین ہفتے ہو گئے ہیں اور اب تک انکی بازیابی ممکن نہیں ہو سکی ہے۔ سینیٹر کامل علی آغا نے کہا کہ ناصر شیرازی نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کی انکوائری رپورٹ پر رانا ثناء اللہ کی جانب سے دئیے گئے بیان پر لاہور ہائی کورٹ میں پٹیشن فائل کی تھی خدشہ ہے کہ انہیں اس کے باعث اغواء کیا گیا۔ کامل علی آغا نے چیئرمین سینیٹ کو متوجہ کرتے ہوئے کہا کہ آپ اس مسئلہ کو دیکھیں اور وفاقی وزیر داخلہ کو سینیٹ میں طلب کریں  تاکہ وہ ایوان کو بتائیں کہ ناصر شیرازی کس حال میں ہیں اور کہاں ہیں ۔

چیئرمین سینیٹ میاں رضا ربانی نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ اس معاملے پر وزارت داخلہ کو فوری نوٹس جاری کیا جائے اور ان سے کہاجائے کہ صوبائی حکومت سے تفصیلات لیکر بروز جمعہ 24نومبر کو سینیٹ کے اجلاس میں پیش ہوں، واضح رہے کہ ایم ڈبلیوایم کے مرکزی ڈپٹی سیکریٹری جنرل ناصرشیرازی کےپنجاب حکومت کی ایماءپر  اغواء کو تین ہفتے مکمل ہو چکے ہیں جبکہ تاحال ان کے حوالے سےحکومتی اور عسکری ادارے کوئی بھی اطلاع دینے میں ناکام دکھائی دیتے ہیں، ناصرشیرازی کی بازیابی کیلئے پٹیشن لاہور ہائی کورٹ میں بھی زیر سماعت ہے واضح رہے کہ پاکستان مسلم لیگ ق کے سربراہ چوہدری شجاعت حسین نے مجلس وحدت مسلمین کے سربراہ علامہ راجہ ناصرعباس جعفری کو ناصرشیرازی کے اغواء کے خلاف سینیٹ اور قومی اسمبلی میں صدائے احتجاج بلند کرنے کی یقین دہانی کروائی تھی،اس کے علاوہ پنجاب اسمبلی اور گلگت بلتستان اسمبلی بھی ناصرشیرازی کی جبری گمشدگی کے خلاف ہم خیال سیاسی جماعتوں کے ارکین نے صدائے احتجاج بلند کیا تھا۔

وحدت نیوز(ملتان) مجلس وحدت مسلمین جنوبی پنجاب کے سیکرٹری جنرل علامہ اقتدار حسین نقوی نے کہا ہے کہ نواز شریف کو پاکستان کی سب سے بڑی عدالت نے متفقہ طور پر چور قرار دیا ہے، پانامہ پیپرز میں نام آنے کے بعد یہ بین الاقوامی چور بن چکے ہیں، بدقسمتی سے اس بین الاقوامی چور کو بچانے کیلئے تمام نااہل اور کرپٹ عناصر جمع ہوچکے ہیں، مگر قوم انہیں کبھی معاف نہیں کرے گی۔ گذشتہ روز نااہل شخص کو پارٹی صدر بنانے سے روکنے کا قانون منظور نہ ہونا پوری پارلیمنٹ کی توہین ہے، اس میں حکومت کے ساتھ اپوزیشن بھی برابر کی قصور وار ہے۔ جب نااہل شخص کو پارٹی صدر بنانے کا قانون منظور ہو رہا تھا تو اس وقت اپوزیشن خواب خرگوش کے مزے کیوں لیتی رہی۔ حکمرانوں نے انتخابی اصلاحات بل میں ترمیم کی آڑ میں ختم نبوت حلف نامے میں بھی ترمیم کر دی، یہ سب بیرونی آقائوں کے اشارے پر کیا گیا، جس کیلئے پوری سازش تیار کی گئی۔ اگر حکمران اس معاملے میں بے قصور ہیں تو پھر پوری قوم کے مطالبے پر اس قانون میں ترمیم کرنے والے ختم نبوت کے ڈاکووں کو سامنے کیوں نہیں لاتے، ذمہ داران کو چھپانے کیلئے حکمران جس قدر زور دے رہے ہیں، اس سے ثابت ہوتا ہے کہ پوری حکومت ہی اس قانون کی تبدیلی میں ملوث ہے۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی قائدین کی جانب سے ایم ڈبلیوایم ضلع اسلام آباد کے رہنما مسرور نقوی کے والد بزرگوار سید فخر عالم نقوی کے انتقال پرملال پراہل خانہ سے تعزیت اور افسوس کا اظہار، تفصیلات کے مطابق ایم ڈبلیوایم ضلع اسلام آبادکے ڈپٹی سیکریٹری جنرل سید مسرورنقوی کےوالد محترم مختصر علالت کے باعث اسلام آباد کے مقامی اسپتال میں رضائے الہیٰ سے انتقال فرماگئے ، ان کی رحلت پر مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی سیکریٹری جنرل علامہ راجہ ناصرعباس جعفری، علامہ احمد اقبال رضوی، علامہ شفقت شیرازی، علامہ مبارک موسوی، علامہ مقصودڈومکی، علامہ آغا علی رضوی، علامہ تصور نقوی، علامہ اقبال بہشتی، علامہ برکت مطہری سمیت ملک بھر سے قائدین اور رہنماوں نے دلی رنج وغم اور افسوس کا اظہار کیا ہے، رہنماوں نے دعاکی کہ خدا وند قدوس مرحوم کو جوار اہل بیت ؑ میں محشور فرمائے اور پسماندگان کو صبر جمیل عنایت فرمائے، مرحوم کی نماز جنازہ آج بعد نماز مغربین مرکزی امام بارگاہ اثناءعشری جی سکس ٹو میں ادا کی جائے گی جبکہ تدفین ایچ الیون قبرستان میں عمل میں لائی جائے گی جس میں ایم ڈبلیوایم کے مرکزی اور ضلعی رہنماوں سمیت عزیز واقارب بڑی تعداد میں شرکت کریں گے، ایم ڈبلیوایم کے مرکزی رہنماعلامہ اصغر عسکری نے تمام مومنین ومومنات سے آج شب مرحوم کے لئے نماز وحشت قبر کی بھی التماس کی ہے۔

وحدت نیوز(لاہور) پنجاب حکومت ناصر شیرازی کے اغوا کی ذمہ دار ہے،کل(25نومبر) کی آل پاکستان شیعہ پارٹیز کانفرنس میں آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان کریں گے،ظالم اور مظلوم کو ایک ہی لاٹھی سے ہانکنے کے عمل کو بند کیا جائے،ملت جعفریہ کیخلاف انتقامی کاروائیاں عالمی ایجنڈے کا حصہ ہیں،حکمران ہوش کے ناخن لیں اور ہمارے صبر کا مزید امتحان نہ لیں ،ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی سیکرٹری سیاسیات سید اسد عباس نقوی نے آل پارٹیز کا نفرنس کے انتظامی کمیٹی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا،اجلاس میں آل پارٹیز کانفرنس کے انتظامی امور کا جائزہ لیا گیا،بہتریں انتظامات پر اراکین کمیٹی کے کاوشوں کو سراہا۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں جہاں جہاں مسلم لیگ ن کی حکومت ہیں وہاں ملت جعفریہ مشکلات کا شکار ہیں،ن لیگ بیرونی آقاوں کے اشارے پر ملک میں ڈرٹی گیم کھیل رہی ہے،اس کے مثبت اثرات مرتب نہیں ہونگے،انہوں نے ڈی آئی خان میں شہید ہونے والے میجر شہید اسحاق اور شہدائے ڈیرہ اسماعیل خان کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا،انشااللہ شہداء کے پاکیزہ لہو سے ہم عہد کرتے کہ مملکت خداداد سے اس ناسور کے خاتمے تک ان ملک دشمنوں کیخلاف ہم میدان میں حاضر رہینگے،ڈیرہ اسماعیل خان میں ان درندوں کیخلاف بے رحمانہ آپریشن ہی اس ناسور کے خاتمے کا واحد حل ہے،دہشتگردوں کیساتھ ان کے سیاسی سرپرستوں اور سہولت کاروں کو بھی کسی مصلحت پسندی کے بغیر نشان عبرت بنایا جائے۔

وحدت نیوز (تہران) عالمی محبان اہلبیتؑ و مسئلہ تکفیر کانفرنس کاایران کےدارالحکومت تہران میں آغاز، ہوگیا ہے، اس کانفرنس میں دنیا بھر کے 90ممالک سے 500سے زائدشیعہ سنی علماء، مشائخ واکابرین شریک ہیں، پاکستانی وفد کی قیادت مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ راجہ ناصرعباس جعفری کر رہے ہیں، تفصیلات کے مطابق تہران میں سربراہ مجلس خبرگان رہبری آیت اللہ احمد جنتی اورسربراہ تشخیص مصلحت نظام کونسل آیت سید محمود ہاشمی شاہرودی کی سربراہی میں جاری عالمی محبان اہل بیتؑ و مسئلہ تکفیر کانفرنس میں ایم ڈبلیوایم کے مرکزی سیکریٹری امور خارجہ علامہ ڈاکٹر شفقت حسین شیرازی اور ڈپٹی سیکریٹری امور خارجہ علامہ سید ظہیرالحسن نقوی، سربراہ جمیعت علمائے پاکستان(نیازی) پیر معصوم شاہ نقوی، مرکزی صدر جمیعت علمائے پاکستان(نورانی)صاحبزادہ ابولخیر محمدزبیر،گدی نشین درگاہ حضرت لال شہباز قلندرؒ سید ولی محمد شاہ بھی شرکت ہیں۔

وحدت نیوز (اسلام آباد) ڈیرہ اسماعیل خان میں ایک ہفتہ کے دوران تین افراد کی شیعہ ٹارگٹ کلنگ کی مذمت کرتے ہیں، ہر جگہ ناکوں، چیک پوسٹوں اور سیکورٹی اداروں کے حصار کے باوجود شیعان علی کی ٹارگٹ کلنگ کی جارہی ہے، یہ کیسی مثالی حکومت ہے جس میں ایک ہی مکتب و فکر کے افراد کو ہی بار بار نشانہ بنایا جارہا ہے۔ مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ترجمان علامہ مختار امامی نے میڈیا سیل سے جاری اپنے بیان میں کہا کہ ڈیرہ اسماعیل خان کو ملت تشیع کی مقتل گاہ بنا دیا گیا ہے، ہمارے نوجوانوں کو آئے روز شہید کیا جا رہا ہے اور قاتل حکومتی گرفت سے آزادی دندناتے پھرتے ہیں، گزشتہ ایک ہفتے کے دوران تین گھر اجاڑ دیئے گئے، خیبر پختونخواہ کی حکومت ملت تشیع کو تحفظ دینے میں مکمل طور پر ناکام ہو چکی ہے، جب لوگ ماہ ربیع الاول منانے میں مصروف عمل ہیں اور ہم اپنے شہداء کی لاشیں اٹھا رہے ہیں اور انصاف کے حصول کے لئے تڑپ رہے ہیں، خیبر پخونخواہ کا وزیراعلیٰ ایک نا اہل شخص ہے، وہ عوام کی جان و مال کا تحفظ دینے میں مکمل طور پر ناکام ہو چکے ہیں، خیبر پختونخواہ حکومت کی طرف سے ملت تشیع کو اگر یونہی نظر انداز کیا جاتا رہا توپھر ہماری جانب سے کسی بھی تعاون کی امید دل سے نکال دیں۔

وحدت نیوز(تہران) ولی امر مسلمین جہاں آیت اللہ سید علی خامنہ ای نے ایرانی رضاکار فورس اور اس کے اعلی کمانڈروں سے ملاقات میں کہا ہے کہ خطے میں امریکہ کو شکست دینا انقلاب اسلامی ایران کا معجزہ ہے۔ رپورٹ کے مطابق آیت اللہ خامنہ ای نے کہا کہ انقلاب اسلامی کی کامیابی کے 38 سال بعد ایسے جوانوں کی مختلف میدانوں میں موجودگی انقلاب کے معجزات میں شامل ہے جنہوں نے نہ امام خمینی کو دیکھا ، نہ دفاع مقدس کا دور دیکھا اور نہ ہی انقلاب کا زمانہ دیکھا ، اس کے باوجود ان کی مختلف میدانوں میں موجودگی انقلاب اسلامی کی معجزات میں شامل ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ انقلاب اسلامی کے انہی جوانوں نے آج خطے میں امریکہ کو گھٹنے ٹیکنے پر مجبور کردیا ہے، امریکہ نے انقلاب اسلامی کی فکر کو خطے سے دور کرنے کے لئے بڑی بڑی سازشیں کیں لیکن امریکہ کی تمام سازشیں ناکام ہوگئی ہیں اور آج انقلاب اسلامی کی فکر نہ صرف خطے میں بلکہ انقلابی فکر عالمی سطح پر چھا گئی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ نے دہشت گرد تنظیم داعش کو انقلاب اسلامی اورخطے میں اسلامی مزاحمتی تنظیموں کا مقابلہ کرنے کے لئے عراق اور شام میں تشکیل دیا لیکن آپ جیسے غیور جوانوں نےاس امریکی کینسر کو جڑ سے اکھاڑ کر پھینک دیا ہے۔

آیت اللہ خامنہ ای کا کہنا تھا کہ بعض لوگ غفلت کی بنا پر کہتے ہیں کہ امریکہ کا مقابلہ نہیں کیا جاسکتا لیکن ایرانی جوانوں نے ثابت کردیا ہے کہ امریکہ کی تسلط پسندانہ پالیسیوں کا مقابلہ کیا جاسکتا ہے اور امریکہ کے کبر و غرور کو چکنا چور کیا جاسکتا ہے، امریکہ اور اسرائيل بعض عرب ممالک کے سہارے خطے میں اپنی ریشہ دوانیاں جاری رکھے ہوئے ہیں ۔ فلسطینیوں پر ہونے والے مظالم میں امریکہ کے اتحادی عرب ممالک برابر کے شریک ہیں۔

ولی امر المسلمین نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے خطے میں امریکہ کی تمام پالیسیوں کو ناکام بنادیا ہے اور آئندہ بھی خطے میں امریکہ کی شوم پالیسیوں کا مقابلہ جاری رہے گا، امریکہ کا مقابلہ کرنے پر مبنی انقلاب اسلامی کا پیغام آج پوری دنیا میں پھیل چکا ہے اور دنیا کے گوشے گوشے میں آج امریکی صدر اور امریکی حکام کے پتلے جلائے جاتے ہیں اور امریکی پرچم کو نذر آتش کیا جاتا ہے کیونکہ امریکی پرچم دنیا میں ظلم ، تشدد ، دہشت گردی اور تسلط پسندی کا مظہر ہے۔

وحدت نیوز(سکردو) ممتاز عالم دین اور سیکریٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان آغا سید علی رضوی نے اپنے ایک صوتی پیغام میں قومی حقوق کی حصول کیلئے صبر اور استقامت کے ساتھ جدوجہد کرنے والوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے گلگت بلتستان کے مظلوم عوام کو اب سیاسی ،مذہبی، مسلکی اور علاقائی تعصبات سے بلاتر ہوکر ایک مظلوم قومی کی حیثیت سے اپنے غیر آئینی ٹیکس کے نفاذ کے خلاف اور  جائز حقوق کیلئے بھرپور انداز میں آواز اُٹھانے کی ضرورت ہے۔

اُنکا کہنا تھا حالیہ مسئلہ چونکہ قومی ہے لہذا موجودہ حکومت کے ممبران کو بھی چاہئے کہ اس تحریک میں عوام کے ساتھ شامل ہوجائیں کیونکہ چاہئے قانون ساز اسمبلی کا ممبر ہو یا رکن جی بی کونسل اس مسند نے مختصر وقت میں ختم ہوجانا ہے اور موجودہ حکمرانوں کو بھی واپس عوام میں ہی جانا ہے لہذا گلگت بلتستان میں ہونے والے مظالم کے پیش نظر ان افراد کو بھی چاہئے کہ وہ عوام کے ساتھ مل جائیں اور اپنے حقوق کیلئے ملکر جدوجہد کریں۔ اُنکا یہ بھی کہنا تھا کہ قوم کو یکجا ہونے کیلئے انتہائی ضروری ہے کہ عوام تمام قسم کے تعصبات کو دفن کرکے قومی ایشو پر ایک ہوجائیں تاکہ دشمن کو موقع نہ ملے۔

 اُنہوں نے انجمن تاجران گلگت بلتستان اور عوامی ایکشن کمیٹی کے ساتھ مکمل طور پر اظہار یکجہتی کرتے ہوئے اُنکی استقامت پر زبردست خراج تحسین پیش کیا ہے اور یہ بھی خدشہ ظاہر کیا ہے کہ اس تحریک کو ثبوتاز کرنے کیلئے جو قوتیں اس وقت سرگرم ہے یقیناًاُنکی طرف سے دباو بھی بڑھایا جائے گا ڈرایا دھمکایا جائے گا لہذا قومی یکجہتی کے ساتھ عوامی مسائل اور قومی حقوق کی حصول کیلئے اپنے صفوں میں صبر استقامت کے ساتھ قیام کرنے کی ضرورت ہے۔

Page 1 of 785

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree