The Latest

وحدت نیوز(سکھر) محترمہ طاہرہ بتول مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین یونٹ تعلقہ صالح پٹ ضلع سکھر کی سیکرٹری جنرل نامزد مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین سکھر کی سیکرٹری جنرل محترمہ سیدہ صاحبہ نے تعلقہ صالح پٹ علاقے کا دورہ کیا اور مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین کا یونٹ تشکیل دیا جس میں محترمہ طاہرہ بتول کو یونٹ سیکرٹری جنرل منتخب کیا گیا۔ یونٹ ممبران سے خطاب کرتے ہوے محترمہ سیدہ نے معاشرے میں خواتین کے کردار کی اہمیت اور ذمہ داری سے آگاہ کیا نیز تنظیم کے پلیٹ فارم سے ہفتہ وار دعا و مناجات اور تربیتی دروس کے انعقاد کو یقینی بنانے کی ھدایات کیں۔

وحدت نیوز(سکردو)صوبائی سیکرٹری ایجوکیشن مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان ایم فل سکالر زاہد حسین نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ21 ویں صدی میں بلتستان میں بننے والی پہلی علمی مرکز میں میرٹ کی بنیاد پر اساتید و دیگر انتظامی عہدوں پر قابل لوگوں کو بھرتی کرنے کی بجائے موجودہ یونیورسٹی انتظامیہ اپنے من پسند لوگوں اور رشتہ داروں کو نواز رہے ہیں جو کہ لمحہ فکریہ ہے۔ نوزائدہ تعلیمی ادارے کو پاکستان کے اعلی اداروں کی طرز پر چلانا چاہئے تھا جو کہ اب تک نظر نہیں آرہا۔ رجسٹرار سمیت اہم انتظامی پوسٹوں کے لئے بنیادی شرائط میں تبدیلی کر کے اعلی تعلیم یافتہ لوگوں کو دیوار سے لگایا جارہا ہے۔ وائس چانسلر شروع دن سے یونیورسٹی کے لئے سنجیدہ نہیں تھے۔ وہ اپنی کمزوری چھپانے کے لئے یونیورسٹی کے سیٹس کو اشرافیہ میں تقسیم کر رہے ہیں۔

انہوں نے مزید کہاکہ یونیورسٹی سیندیکیس کی طرف سے اہم اجلاس سے مسلسل بائکاٹ اس بات کی دلیل ہے کہ وی سی اور رجسٹرار اپنی من مانی کر رہے ہیں۔ مجلس وحدت مسلمین  کسی بھی ادارے میں میرٹ کی پامالی، ظلم اور زیادتی پہ کبھی بھی خاموش نہیں رہیں گے۔ اہلیان بلتستان کی طرف سے یونیورسٹی کی تعمیرات کے لئے دئے گئے زمین کسی بھی دوسرے اداروں کو دینے نہیں دیں گے۔ ایس سی او ایک منافع بخش ادارہ ہے جس کے لئے یونیورسٹی کی زمین لیس پہ دینا یونیورسٹی کے ساتھ غداری ہے۔ مجلس وحدت مسلمین کی جانب سے ان تمام معاملات کو گلگت بلتستان اسمبلی میں بھی اٹھایا جائے گا۔ اور ان مسائل کے حل کے لئے دیگر تمام سیاسی جماعتیں اور طلباء تنظیموں کے ساتھ ہر فورم پہ کھڑے ہیں۔

وحدت نیوز(گلگت) قراقرم انٹرنیشنل یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر عطاء اللہ شاہ سے صوبائی وزیر برائے زراعت میثم کاظم نے ملاقات کی۔پبلک ریلیشنز آفس کے مطابق ملاقات میں وائس چانسلر نے صوبائی وزیر کو یونیورسٹی میں جاری تعلیمی، تحقیقی وتخلیقی سرگرمیوں سمیت تعمیراتی امور سے آگاہ کیا۔

صوبائی وزیر کاظم میثم نے قراقرم انٹرنیشنل یونیورسٹی کے وائس چانسلر کی قیادت پر بھرپور اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے وائس چانسلر اور ان کی ٹیم کی کاوشوں کو سراہا اور اپنی طرف سے بھرپور تعاون کی یقین دہانی کرائی۔

صوبائی وزیر نے وائس چانسلر سے ملاقات کے دوران کہاکہ سکردو حلقہ دو کے عوام کا دیرینہ مطالبہ ہے کہ وہاں قراقرم یونیورسٹی کاوومن سب کیمپس قائم کیاجائے۔کیونکہ طالبات کی بڑی تعدا د یونیورسٹی کیمپس نہ ہونے کی وجہ سے اعلیٰ تعلیم سے محروم رہ جاتی ہیں۔

صوبائی وزیر نے سکردو میں قراقر م یونیورسٹی سب آفس کو برقرار رکھنے کی ضرورت پر بھی زوردیا۔وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر عطاء اللہ شاہ نے گمبہ سکردو میں قراقرم یونیورسٹی کیمپس کے قیام پر اتفاق کرتے ہوئے اس کی فزیبلٹی رپورٹ کے لیے ایسوسی ایٹ پروفیسر ڈاکٹر سجاد علی کی سربراہی میں ایک کمیٹی تشکیل دی۔جس میں ایڈیشنل رجسٹرار ایڈمن شاہداحمد شگری اور لیکچرار محمد رضا شامل ہیں۔

یہ کمیٹی فزیبلٹی رپورٹ تیار کرکے وائس چانسلر کو پیش کرئے گی۔تاکہ سب کیمپس کے فیز IIمیں شامل کیاجاسکے۔وائس چانسلر نے سکردو سب آفس کو وہاں کے طلبہ وطالبات کی سہولت کے لیے برقرار رکھنے کی بھی یقین دہانی کرائی۔

وحدت نیوز(اسلام آباد)مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا ہے کہ مغرب سے مشرق کی جانب طاقت کی منتقلی کے عمل سے دنیا نئے مرحلے میں داخل ہورہی ہے۔امریکہ کو اس خطے میں شکست ہوئی ہے اب وہ سپر پاور نہیں رہا۔ امریکہ اپنی حیثیت کھو چکا ہے یہی وجہ ہے اپنے بغل میں ونزیلا کی حکومت کو ایڑی چوٹی کا زور لگا کر بھی نہ گرا سکا۔امریکہ کی شکست کے پیچھے اصل طاقت اس حریت پسندانہ فکر اورجدوجہد کی ہے جس نے مظلوموں کو ظالموں کے مقابل کھڑا ہونے کا حوصلہ دیا۔لبنان، یمن اور عراق وہ فاتح ہیں جو دور عصر کے فرعونوں کے سامنے سرنگوں نہ ہوئے۔امریکہ اور اس کے اتحادی کمزور سے کمزور تر ہوتے جارہے ہیں۔یمن کے اندر سعودی عرب کو بدترین ہزیمت اٹھانا پڑ رہی ہے۔طاغوت و استعمار کے لیے سب سے بڑا خطرہ کشمیر، فلسطین اور مشرقی وسطیٰ میں انقلابی و مقاومتی تحریکیں ہیں۔ ایشیاء میں امریکہ مخالف قوتوں کی مضبوطی خطے سے امریکی مداخلت کے مکمل خاتمے کا سنگ میل ثابت ہو گی۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کا عدم استحکام عالمی سازش کا نتیجہ ہے۔طاقت کی منتقلی کو روکنے کے لیے پاکستان کو غیر مستحکم کیا جا رہا ہے ۔ملک میں فرقہ واریت کا فروغ اور سیاسی و معاشی بحران کھڑاکرنے کا مقصدمنتخب جمہوری حکومت کو مفلوج کرنا ہے۔سی پیک کی تکمیل میں رخنہ ڈال کر چین کے منصوبوں اور ترقی کی راہ میں رکاوٹ مغرب کے لیے سود مند ثابت ہو گی۔ان حالات کا مقابلہ کرنے کے لیے پوری قوم کو تدبر و حکمت کا مظاہرہ کرنا ہو گا۔پاکستان کے سیاسی عدم استحکام کا سارا فائدہ ملک دشمن قوتوں کو ہو گا۔ملک و قوم کا مفاد ہمیں ہر شے پر مقدم ہے۔ہمیں اس ہر بحران کا راستہ روکنا ہو گا جس سے ملک کی داخلی سلامتی کو نقصان پہنچنے کا اندیشہ ہو ۔شیعہ سنی بھائیوں نے باہمی اخوت و اتحاد کے ساتھ مادر وطن کی حفاظت کرنی ہو گی۔

وحدت نیوز(بدین) مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین کی مرکزی سیکرٹری روابط محترمہ سیمی نقوی ، محترمہ غزالہ جعفری ، محترمہ طلعت نقوی اور محترمہ یاسمین رضا نے ضلع بدین کا تنظیمی دورہ کیا اور آٹھ رکنی ضلعی کابینہ تشکیل دی جس کی ضلعی سیکرٹری جنرل محترمہ تہمینہ فاطمہ نامزد ہوئیں اس موقع پر محترمہ سیمی نقوی نے خواتین سے خطاب کرتے ہوے کہا کہ خواتین کو خدا نے بے پناہ صلاحیتوں سے نوازا ہے ایک خاتون بیک وقت گھریلو زمہ داریوں اور اصلاح معاشرہ کا  فریضہ سر انجام دے سکتی ہے۔

 ان کا کہنا تھا کہ مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین ایک ایسا پلیٹ فارم ہے جو خواتین کی دینی ، فکری اور سیاسی تربیت کرتا ھے تاکہ وہ معاشرے کو سنوارنے اور ظہور امام زمانہ عج کی زمینہ سازی کے لیے عملی میدان میں کوشاں رہے آخر میں محترمہ طلعت نقوی نے نو منتخب کابینہ سے حلف لیا۔

وحدت نیوز(کراچی) مسنگ پرسنز کا مسئلہ سنگین صورت اختیار کرگیا ہے اور ہمارے صبر کا پیمانہ لبریز ہوچکا ہے، جبری گمشدگان کے اہل خانہ احتجاجی تحریک کے نئے مرحلے کا آغاز کررہے ہیں ، پیارے بازیاب نہ ہوئے تو پارلیمنٹ ہاؤس کا رخ کریں گے ۔ان خیالات کا اظہارمجلس وحدت مسلمین کے مرکزی رہنما علامہ سید احمد اقبال رضوی نے جوائنٹ ایکشن کمیٹی فار شیعہ مسنگ پرسنز کے زیر اہتمام کراچی پریس کلب میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

اس موقع پر آئی ایس او پاکستان کے مرکزی صدر عارف حسین الجانی ، علامہ سید حیدرعباس عابدی، ایم ڈبلیوایم کے رہنما علامہ صادق جعفری ، علامہ مبشر حسن اور شیعہ مسنگ پرسنز کے اہل وعیال بھی موجود تھے ۔ علامہ احمد اقبال رضوی نے کہاکہ یہ مائیں، یہ بہنیں، یہ بیٹیاں، یہ معصوم بچے فریاد کرتے ہیں لیکن صاحب اختیار توجہ نہیں دیتے ہیں۔ یہ مظلوم کبھی صدرِ پاکستان کے در پر جاتے ہیں، کبھی وزیر اعظم کو اپنی عرضداشت بھیجتے ہیں ، کبھی آرمی چیف کو اپنی روداد سناتے ہیں تو کبھی چیف جسٹس صاحب سے اس ظلم پر اپنے قانونی حق کا مطالبہ کرتے ہیں لیکن افسوس کہیں سے بھی کوئی خاطر خواہ داد رسی نہیں ہوتی اور یہ فیملیز کوئی ۳ سال سے، کوئی ۴ سال سے اور کوئی ۵ سال سے اپنے پیاروں کی جدائی کے کرب میں مبتلا ہے۔ یہ کرب یہ تکلیف کسی کی موت سے زیادہ ہے، اگر کسی کو مار دیا جائے تو اس کی فیملی کو کچھ دنوں میں آرام آ جاتا ہے لیکن اگر کوئی اس طرح غائب کر دیا جائے کہ پتہ ہی نہ ہو کہ وہ کہاں ہے، کس کے پاس ہے، زندہ بھی ہے یا مار دیا گیا ہے۔ تو یہ تکلیف انسان کو ہر روز مارتی ہے۔

 ان کا کہناتھا کہ ان جبری گمشدگان میں سے کچھ کے والدین ہسپتال کی دہلیز پر پہنچ گئے ہیں اور موت و زندگی کی کشمکش میں مبتلا ہیں اور کچھ اپنے جوان کو یاد کرتے کرتے اس دنیا سے چلے گئے ہیں۔ ان کی موت کا ذمہ دار کون ہے؟ معصوم بچے سوال کرتے ہیں کہ ہمارے باپ کا جرم کیا ہے؟ انہیں کیوں غائب کر دیا گیا ہے؟ انہیں کون لے کر گیا ہے؟ میرے بابا کب گھر آئیں گے؟ بتائیے یہ مظلوم مائیں اپنے بچوں کو ان سوالات کا کیا جواب دیں؟ہمارا سوال ہے مقتدر اداروں سے کیا اس طرح سے وہ ملک کی خدمت کر رہے ہیں، یا ملک سے بغض و عناد کا بیج نئی نسل میں بو رہے ہیں؟
    
انہوں نے کہاکہآج یہ بچے، یہ مظلوم فیملیز، اپنے مقتدر اداروں سے آرٹیکل ۱۰ پر عمل کرنے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ کہ اگر انہوں نے کوئی جرم کیا ہے تو انہیں قانون کے مطابق عدالتوں میں پیش کیا جائے۔ یہ کون سا طریقہ ہے کہ سال، دو سال، پانچ سال تک آپ لاپتہ رکھیں اور ان کا جرم آپ کو پتہ ہی نہ چلے۔ یہ بات قابلِ غور ہے کہ ملک میں مقتدر ادارے قانون پر عمل نہ کریں تو عوام کیا قانون پر عمل کرے گی؟یہ مظلوم خاندان دراصل یہ مطالبہ کر رہے ہیں کہ خدارا قانون پر عمل کریں۔

رہنماؤں نے کہاکہ گزشتہ چند ماہ میں کرونا وباء کے دوران حساس اداروں سے رہنماؤں کی ملاقات کے باوجود اب تک کوئی مثبت نتائج سامنے نہیں آئے ہیں۔ کرونا وائرس کی دوسری شدت آمیز لہر کے دوران شیعہ مسنگ پرسنز کے اہل خانہ پریشان ہیں، اہل خانہ مزید کتنا صبر کریں مسلسل یقین دہانیوں کے باوجود لاپتہ شیعہ افراد کو رہا نہیں کیا گیا ہے۔ گذشتہ ایک سال سے ریاستی اداروں اور حکومتی وزراء سے ملاقاتوں کے باوجود کسی جبری لاپتہ فرد کو بازیاب نہیں کیا گیا ہے اس دوران مسنگ پرسنز کے والدین اپنے پیاروں کی شکل دیکھے بغیر اس دنیا سے انتقال کر گئے ہیں نہ ہی ان کے جنازوں میں شریک ہو سکے۔ گذشتہ چھ چھ سالوں سے ملک کے مختلف حصوں سے شیعہ نوجوان جبری لاپتہ ہیں ہم اپنے احتجاج کو وسیع کر رہے ہیں ملک بھر سمیت دنیا بھر میں شیعہ مسنگ پرسنز کے چاہنے والے اب احتجاج کریں گے۔
    
انہوں نے مزید کہاکہ ہمارے صبر کا پیمانہ لبریز ہو گیا ہے اور ہم ایک مستقل تحریک شروع کر رہے ہیں جس کے سلسلے میں ہم نے علامتی بھوک ہڑتال ۲۲ نومبر ۲۰۲۰ بروز اتوار کو کی تھی اور اب ۲۵ دسمبر ۲۰۲۰ یومِ پیدائش بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح ان کے مزار پر شام ۳ بجے بھرپور احتجاج کریں گے اور ان کے سامنے اپنی مظلومیت کی فریاد بلند کرتے ہوئے یہ سوال کریں گے کہ آپ نے یہ ملک عدل و انصاف کے لئے، قانون پر عمل کرنے کے لئے بنایا تھا، یا قانون کی دھجیاں بکھیرتے ہوئے ظلم کرنے کے لئےتاسیس کیا تھا۔اس کے بعد ملک کے مختلف شہروں میں احتجاج کریں گے۔پھر جینوا سمیت دنیا بھر میں احتجاج کریں گےاور اگر پھر بھی ہماری آواز کو نہیں سنا گیا تو پورے پاکستان سے یہ ساری فیملیز اسلام آباد میں جمع ہو کر اور وہاں پارلیمنٹ ہاؤس کے سامنے بیٹھ کر اپنا حق لیں گے۔ انشاء اللہ

وحدت نیوز(ملتان) مجلس وحدت مسلمین جنوبی پنجاب کے سیکرٹری جنرل علامہ اقتدار حسین نقوی نے کہا ہے کہ سقوط ڈھاکہ قومی المیہ تھا، جس نے پاکستان کو دولخت کیا، یہ رستا ہوا قومی زخم ہے، مگر بدقسمتی سے موجودہ حکمرانوں کی پالیسیاں اور نفرت انگیز رویوں نے قوم کو ایک مرتبہ پھر بند گلی میں دھکیل دیا ہے۔ احساس محرومی کو ختم کیا جائے۔ انتشار، نفرت اور انتقامی سیاست کو بند ہونا چاہیئے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان نازک دہراہے پر کھڑا ہے، سانحہ اے پی ایس کا زخم آج بھی تازہ ہے، دہشت گردی کی عفریت کو جب تک جڑ سے اکھاڑ کر پھینکا نہیں جائے گا، اس وقت تک ملک و قوم محفوظ نہیں ہوسکتے۔ قوم نے نام نہاد امریکی جنگ میں ناقابل تلافی نقصان برداشت کیا ہے، وقت کا تقاضا ہے کہ سقوط ڈھاکہ اے پی ایس اور دیگر سانحات سے سبق سیکھا جائے۔

انہوں نے کہا کہ پی ڈی ایم کے جلسے میں محمود خان اچکزئی کے متنازعہ خطاب سے زندہ دلانِ لاہور کے جذبات مجروح ہوئے ہیں۔ تحریک پاکستان میں اہل لاہور اور اہل پنجاب نے قائداعظم محمد علی جناح کے شانہ بشانہ ہراول دستے کا کردار ادا کیا تھا۔

 انہوں نے مزید کہا کہ مہنگائی آسمان سے باتیں کر رہی ہے۔ پٹرولیم مصنوعات کے نرخوں میں ہوشربا اضافہ قابل مذمت ہے، فی الفور واپس لیا جائے۔ ایک طرف حکمرانوں کی کارکردگی پٹرولیم بحران رپورٹ نے پوری قوم کے سامنے عیاں کر دی ہے جبکہ دوسری جانب بڑی ڈھٹائی کے ساتھ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کرکے عوامی زندگی اجیرن بنا دی ہے۔ المیہ ہے کہ موجودہ حکمران ہر محاذ پر بری طرح ناکام ہوچکے ہیں، تبدیلی عوام کے لیے عذاب سے کم نہیں، کسی بھی شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والا شخص آسودہ حال نہیں۔ عوام پریشان اور اس کا کوئی پرسان حال نہیں۔

وحدت نیوز (اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین کی جانب سے ماہ رمضان المبارک میں المجلس علمی و تربیتی گروپ کے نام سے ایک واٹس ایپ گروپ تشکیل دیا گیا جسکا مقصد مختصر وقت میں دین کی بنیادی معلومات سے آگاہی دینا اور احکام دین کی روشنی میں خواتین کی ذہنی اور فکری تربیت کرنا ہے تاکہ اس مصروف ترین دور میں وہ پورے دن میں آدھے گھنٹہ نکال کر دین کے مختلف تربیتی موضوعات کا علم حاصل کریں ۔

اس سلسلے میں ایم ڈبلیو ایم شعبہ خواتین کی مرکزی سیکرٹری تنظیم سازی محترمہ معصومہ نقوی کی سرپرستی میں ہر ماہ دس روزہ ورکشاپ کا انعقاد کیا جاتا ہے جس میں مختلف جید علماۓ کرام اور معلمات اپنے دروس کے ذریعے خواتین کی فکری تربیت کا فریضہ انجام دے رہے ہیں گروپ میں مختلف شعبہ ہاے زندگی سے تعلق رکھنے والی خواتین استفادہ کر رہی ہیں کرونا وائرس کے باعث لاک ڈاون کے عرصے میں ماہ مبارک رمضان میں پندرہ روزہ تربیتی ورکشاپ کا انعقاد کیا گیا بعد ازاں ماہ ذیقعدہ سے ہر ماہ آن لائن دس روزہ تربیتی دروس کا انعقاد کیا جا رہا ہے جس کا سلسلہ ماہ شعبان تک جاری رہے گا ماہانہ ورکشاپ کے اختتام پر ہرموضوع کا امتحان لیا جاتا ہے جس میں خواتین کی جانب سے بھرپور حصہ لیا جاتا ہے۔

ماہ شعبان تک تربیتی کورس مکمل کرنے اور مقررہ پوائنٹس کا ھدف حاصل کرنے والی خواہران میں مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین پاکستان کی جانب سے اسناد تقسیم کی جائیں گی جبکہ پہلی تین پوزیشنز حاصل کرنے والی خواتین کو اسناد کے ساتھ انعامات بھی دیے جائیں گے ان شاء اللہ دس جمادی الاول سے "الصدیقة الکبری س" ورکشاپ کا آغاز کیا جاۓ گا اس کورس میں اب تک احکام دین ، اخلاق ، سیرت آئمہ معصومین ، تفسیر قرآن ، رسالہ حقوق امام سجاد ، حالات حاضرہ ، دشمن شناسی ، معرفت امام زمانہ عج ، آئین ہمسر داری ، عقائد امامیہ اور سیاسی بصیرت کے عنوانات سے لیکچرز دیے گئے ہیں۔

وحدت نیوز(اسلام آباد)  سینئرصحافی طارق محمودملک کے انتقال پُر ملال پر نہایت دکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئےسربراہ مجلس وحدت مسلمین پاکستان علامہ راجہ ناصرعباس جعفری نے کہاکہ طارق محمود ملک ایک بہترین صحافی اور شریف الطبع انسان تھے جنہوں نے ہمیشہ اعلیٰ صحافتی اقدار کی پاسداری کی۔

انہوں نے مزید کہاکہ طارق محمود کی اعلیٰ صحافتی خدمات کو مدتوں یاد رکھا جائے گا۔طارق محمود کی بلندی درجات اور سوگواران کے صبر کے لیے دعاگو ہیں۔خداوند کریم سے دعا گو ہوں کہ پروردگار مرحوم کی مغفرت ،بلندی درجات اور لواحقین کو صبر جمیل عطا فرمائے۔

وحدت نیوز(ملتان) ینگ پاکستانیز آرگنائزیشن اور پنجاب اوورسیز پاکستانیز کمیشن کے زیراہتمام یومِ شہداء آرمی پبلک سکول پشاور کی یاد میں دعائیہ تقریب اور خراجِ عقیدت پیش کرنے کے لیے سیاسی و سماجی شخصیت رہنما مجلس وحدت مسلمین انجینئر مہر سخاوت علی کی واک میں شرکت۔

 واک کی قیادت صوبائی پارلیمانی سیکرٹری اطلاعات و ثقافت، ترجمان وزیراعلیٰ پنجاب ایم پی اے محمد ندیم قریشی، سنئیر رہنما پاکستان تحریک انصاف و سید گروپ کبیر والہ بیرسٹر سید عابد امام شاہ، چئیرمین پنجاب اوورسیز پاکستانیز کمیشن ملتان مخدوم شعیب اکمل ہاشمی، صدر ینگ پاکستانیز آرگنائزیشن نعیم اقبال نعیم، سیاسی و سماجی شخصیت رہنما مجلس وحدت مسلمین انجینئر مہر سخاوت علی ، ماہرین تعلیم پروفیسر عنایت علی قریشی، پروفیسر اعظم حسین، میاں محمد ماجد، اور انجنئیر رانا محمد شیراز نے کی۔

 اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے محمد ندیم قریشی، بیرسٹر سید عابد امام شاہ، مخدوم شعیب اکمل ہاشمی ، نعیم اقبال نعیم اور انجینئر مہر سخاوت علی نے کہا کہ سانحہ آرمی پلک سکول پشاور پاکستان کے وجود کا وہ گہرا زخم ہے جو کبھی بھرا نہیں جا سکتا۔ شہداء آرمی پبلک سکول پشاور نے اپنے خون سے علم کی شمع کو روشن کر کے علم دشمن قوتوں کی سازش کو ناکام بنا دیا۔ قومیں ہمیشہ عظیم قربانیا ں دے کر ہی زندہ رہتی ہیں۔

 شہداء اے پی ایس کی عظیم و لازوال قربانی نے پوری قوم کو متحد و یکجا کرنے کے ساتھ ساتھ پاکستان کو نئی زندگی بخشی بندوق والوں کے مقابلے میں ہمیں قلم کو اپنا ہتھیار بنا کر ان کے مقاصد خاک میں ملانا ہوں گے۔ ہمارے آج کے طالبِ علم، اساتذہ اور افسران قلم،کتاب اور کاپی کو عام کر کے علم کی روشنی سے چار سو اجالا کرنے کی کوشش کریں۔ اس موقع پر محمد امین انصاری، مختار سومرو، رشید خان، محمد عاصم گولڑوی، ملک حامد رفیق، ارحم روحان، محمد عقیل شریف، مرزا علی رضا، علی صابر سبحانی، شیخ محمد یامین، مہک زہرہ، سونیا زہرہ، فاطمہ، شحرش ظفر اور حسن ندیم و دیگر نے شہداء اے پی ایس کو خراجِ عقیدت پیش کیا اور ایک منٹ کی خاموشی بھی اختیار کی گئی آخر میں استحکام پاکستان اور شہداء کے درجات کی بلندی کے لیے خصوصی دعا بھی کی گئی۔

Page 10 of 1089

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree