The Latest

وحدت نیوز(پشاور) مجلس وحدت مسلمین خیبرپختونخوا کے صوبائی سیکرٹری جنرل علامہ سید وحید کاظمی نے کہا ہے کہ کوہاٹ میں شیعہ ٹارگٹ کلنگ کے واقعات کا تسلسل وطن عزیز کو کسی نئی آزمائش میں جھونکنے کی سازش ہے۔شیعہ نسل کشی کی تازہ لہر کالعدم تکفیری جماعتوں کی فعالیت کی نشاندہی کر رہی ہے۔ اگر حالات کی سنگینی کا بروقت درک نہ کیا گیا تو پوری قوم کو بھیانک نتائج کا سامنا کرنا پڑ جائے گا۔قوم نے دہشت گردی کے خلاف جو جنگ ستر ہزار جانوں کی قربانی دے کر جیتی ہے اسے رائیگاں نہ جانے دیا جائے ۔

ان کا کہنا تھا کہ ملک کے مختلف حصوں میں شیعہ نوجوانوں کو نشانہ بنا کر فرقہ واریت کے فروغ کے لیے فضا ہموار کرنے کی کوشش طاغوت کا ایجنڈا ہے۔عالم استکباری طاقتیں ہمارے نبی کریم اور قران پاک کی سر عام توہین کی جسارت کرتے ہیں لیکن ہماری مذہبی جماعتیں عالم اسلام کے مشترکہ دشمنوں کے خلاف آواز بلند کرنے کی بجائے اپنے مسلمانوں کے خلاف چیخ و پکار کر کے وطن عزیز کے امن و تباہ کر رہی ہیں، شیعہ ٹارگٹ کلنگ کی تازہ لہر کے محرک وہ نام نہاد علما ءہیں جو مذہبی منافرت کی آگ لگانے میں مصروف ہیں ۔

انہوں نے کہا شیعہ قوم مدبر، بابصیرت اورحکیمانہ سوچ کی مالک اور افہام وتفہیم کی قائل ہے۔تاہم یہ امر قطعاً قابل قبول نہیں کہ ہماری امن کی خواہش کو ہماری کمزوری سمجھا جائے۔انہوں نے قومی سلامتی کے ذمہ دار ریاستی اداروں سے مطالبہ کیا ہے کیا شیعہ نسل کشی کے واقعات میں ملوث افراد کو گرفتار کر کے کیفر کردار تک پہنچایا جائے تاکہ ملک میں امن قائم ہو۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کوہاٹ میں میں دو شیعہ نوجوانوں کی ٹارگٹ کلنگ پر شدید غم و غصے کا اظہار کرتے ہوئے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان کے اندر تکفیری گروہوں اور کالعدم جماعتوں کے پُرتشددمظاہروں کے دوران مفتیان اور نام نہاد علما کی سرپرستی میں ملت تشیع کے خلاف اشتعال انگیز تقاریر و گمراہ کن نعرے شیعہ نسل کشی کا اصل محرک ہیں۔کالعدم مذہبی جماعتوں کے پیشہ ور دہشت گرد ایک بار پھر ملک میں قتل و غارت کا بازارگرم کرنے کے لیے اپنی کمین گاہوں سے نکلنا شروع ہو گئے ہیں۔دہشت گردی کے خلاف جیتی ہوئی جنگ کو ہرانے کی ہرمذموم کوشش کو محب وطن قوتیں مل کر ناکام بنائیں گی۔

علامہ راجہ ناصرعباس نےکہاکہ حکومت کو اس نکتے پر توجہ کرنا ہو گی کہ شیعہ ٹارگٹ کلنگز کی کاروائیوں کے آغاز کے لیے ان علاقوں کا انتخاب کیا گیا ہے جہاں پی ٹی آئی کی حکومت ہے۔ عالمی طاغوتی طاقتیں پاکستان کوغیر مستحکم کرنے کے لیے مذہبی کارڈ استعمال کررہی ہیں۔وہ عناصر جو مذہبی اختلافات کو ہوا دے کر ملک میں فرقہ واریت کا فروغ چاہتے ہیں ان کی ڈور یہود و نصاریٰ کے ہاتھوں میں ہے۔ عوام کی توجہ قبلہ اول اور کشمیر سے ہٹانے کے لیے داخلی انتشتار پیدا کیا جا رہا ہے۔امریکہ اور اس کے حواری طاقت کے توازن کی ایشیا کی جانب منتقلی سے خائف ہیں۔خطے میں امن وامان اور سی پیک منصوبے کو سبوتاژ کرنا دشمن کا اولین ہدف ہے۔

انہوں نے کہا ملک کو عدم استحکام اور بدامنی کا شکار بنانے کے ناپاک عزائم کو ناکام نہ بنایا گیا تو خانہ جنگی پورے ملک کو اپنی لپیٹ میں لے لے گی۔ کالعدم جماعتوں کے سرکردہ افراد اور مذہب کے لبادے میں چھپی ہوئی وہ شخصیات دشمن کی اصل آلہ کار ہیں جو مذہبی منافرت کے پرچار اور تکفیری نظریے کی آبیاری میں مگن ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پوری منصوبہ بندی کے ساتھ ملک دشمن قوتوں کے مفادات کی تکمیل کی جارہی ہے۔قومی سلامتی کے ذمہ دار ریاستی اداروں کی یہ ترجیحی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ ملک دشمن سرگرمیوں میں مصروف عناصر پر آہنی ہاتھ ڈالیں ۔ان فتنوں کا راستہ روکنے کے لیے وزیر اعظم عمران خان، وزیر داخلہ اعجاز شاہ اور دیگر اعلی حکام کوخصوصی توجہ دینا ہو گی بصورت دیگر فرقہ واریت کی جس آگ کو سلگانے کی کوشش کی جارہی ہے اگر وہ بھڑک اٹھی تو اس کے نتائج انتہائی بھیانک ہوں گے۔

وحدت نیوز(ٹھٹھہ) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ترجمان علامہ مقصود علی ڈومکی نے پیپلز پارٹی کے رکن قومی اسمبلی سید ایاز شاہ شیرازی سے ملاقات کی۔اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے علامہ مقصود علی ڈومکی نے کہا کہ سندہ دھرتی عاشقان اہل بیت کی سر زمین ہے یہاں رہنے والے ھندو بھی نواسہ رسول امام حسین عالی مقام سے محبت رکھتے ہیں۔ سادات کرام محبت اہل بیت کے پیغام کو عام کریں کیوں کہ عشق آل رسول کی شمع تاریک دلوں کو منور کرتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ مکتب اہلبیت سے تعلق رکھنے والے اراکين اسمبلی ملت کے مسائل کے حل کے لۓ بھی اپنا کردار ادا کریں۔اس موقع پر گفتگو کرتے ہوۓ ایم این اے سید ایاز شاہ شیرازی نے کہا کہ ہمارے خاندان پر اللہ تعالی کا خصوصی کرم ہے کہ اس نے ہمیں مکتب اہلبیت سے وابستہ کیا ہے۔ ہم نے ہمیشہ رنگ و نسل و مذہب سے بالاتر ہوکر حلقے کے عوام کی خدمت کی ہے اسی لۓ عوام نے ہمیشہ ہم پر اعتماد کیا ہے۔ہمیں یہ بھی اعزاز حاصل ہے کہ ہم عزادار اور فرش عزا بچھانے والے ہیں۔اس موقع پر علامہ مقصود علی ڈومکی نے ایم این اے ایاز شاہ شیرازی کو قرآن کریم اور کتاب القول المعتبر فی الامام المنتظر کا تحفہ پیش کیا۔

وحدت نیوز(قم) وحدت بین المومنین اور اس کے ذریعے تکفیری فتنہ کا مقابلہ و وطن عزیز کی سالمیت و امنیت کی خاطر اپنے بزرگ علماء کے اقدامات کی تائید اور مزید بہتری لانے کیلئےمجلس وحدت مسلمین قم کی مجلس شوریٰ کے سینئر اراکین کی ایک مشاورتی میٹنگ ہوئی ۔جس میں قم المقدس میں درس و تدریس  میں مصروف، قوم کا درر رکھنے والے مخلص جید علماء و فضلاء گرامی نے بھرپور شرکت کی۔

جلسہ کا آغازمولانا بشارت امامی نے تلاوت قرآن پاک سے کیا اور اس کے بعد امام سجاد علیہ السلام کی شہادت کی مناسبت سے منقبت پڑھی۔اس کے بعد جلسے کے ایجنڈے کی تفصیل سے آگاہی اور ابتدائی گفتگو کیلئے سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین پاکستان شعبہ قم المقدس حجۃالاسلام شیخ عادل مہدوی نے پاکستان میں تکفیریوں کی طرف سے تشیع کے خلاف ہونے والی سازشوں اور ان کے مقابل علماء قم المقدس کی ذمہ داریاں کے حوالے سے مختصر گفتگو کی اور اس بات کی تاکید کی کہ تکفیریت کا مقابلہ قومی وحدت اور اتحاد کے ذریعہ ہی ہو سکتا ہےاور پاکستان میں ہم بزرگان کے اتحاد اور وحدت کے ہر اقدام کی تائید کرتے ہیں اور یہاں قم سے ہر قسم کے تعاون کیلئے ہمہ وقت تیار ہیں۔

اس کے بعد معزز شرکاء سے ملک خدا داد پاکستان میں دشمن کی سازشوں کو کچلنے اور اپنے بزرگوں کی حمایت کیلئے تجاویز اور رائے طلب کی گئیں۔ جس میں،طلاب ،علماء اور فضلاء گرامی نے ترتیب سے جو تجاویز دیں ان کا خلاصہ پیش خدمت ہے۔

1-حجۃ الاسلام راجہ سعید صاحب:
کانفرنس کی حمایت کرتے ہیں، اچھا قدم ہے۔مگر تمام کی نمائندگی ہونا چاہیئے تھی کہ جو نقص تھا کانفرنس کا۔مدارس کو اپنا کردار ادا کرنا چاہیئے کہ جو وہ کما حقہ ادا نہیں کر رہے۔اس کے علاوہ اہم بین الاقوامی ایشوز پر بھی نظر رکھ کر حکمت عملی بنانا چاہیئے۔

2- حجۃالاسلام شیخ احسان دانش صاحب:
قم المقدس میں ایک شوری یا کمیٹی بنانا چاہیئے کہ جس میں سب کی نمائندگی ہو ۔۔جو ملکر ملک کیلئے لائحہ عمل تیار کریں۔

3- حجۃالاسلام سید احمد حسینی صاحب:
دشمن کے شبہات کے جوابات دینے کے لیے علمی نشستیں ہونا چاہیئں اور  تحریریں لکھنا چاہئیں۔

4- حجۃالاسلام شیخ حسن باقری صاحب:
ہم کانفرنس منعقد کرنے والے تمام علماء کو خط لکھ کر شکریہ ادا کریں اور ایک قرارداد لکھ کر  تھران میں واقع پاکستان کے سفارت خانے تک پہنچانا چاہئے۔

5- حجۃالاسلام  شیخ یعقوب بشوی صاحب:
ہم آپس میں اتحاد کے ساتھ سوشل میڈیا میں دشمن کے خلاف عملی جوابات دیں۔منبر کو درست سمت میں لے جانے کی ضرورت ہے۔ایک جلسہ نہیں بلکہ مسلسل رابطوں اور کام کی ضرورت ہے۔

6- حجۃالاسلام شیخ شبیر احمد سعیدی صاحب:
کانفرنس میں آئندہ کا لائحہ عمل نہیں دیا گیا کہ آئندہ کیا کرنا چاہیے۔تمام تنظیموں کی نمائندگی ہونا چاہیئے اور آئندہ کا لائحہ عمل طے کرنا چاہیے۔

7- حجۃالاسلام سید حسنین جعفر زیدی صاحب:
سب سے پہلے ہمیں قم المقدس میں آپس میں اتحاد و وحدت اور ہم آہنگی کی ضرورت ہے جو بزرگان کو اپنا رول ادا کر کے یہ کام کرنا چاہیے۔وسعت ظرفی اور قلبی کی اشد ضرورت ہے ۔اس کے بعد ہی آئندہ کے لیئے اقدام کے بارے میں سوچا جا سکتا ہے۔

8- حجۃالاسلام شیخ شاھد عرفانی صاحب:
پاکستان اور قم میں اتحاد و وحدت کی ضرورت ہے تمام تنظیموں کے درمیان۔

9- حجۃالاسلام سید قمر کاظمی صاحب:
موجودہ واقعات کی وجوہات کی شناخت کی ضرورت ہے۔تعامل بین مومنین اور تعامل بین مسلمین کو سمجھنے اور اقدامات کی ضرورت ہے۔

10- حجۃالاسلام شیخ نقی خان صاحب:
سب سے پہلے تو اس کانفرنس کی تائید کرتے ہیں۔ہم میں جاذبہ کی کمی ہے۔پاکستان میں ایسا ادارہ بنانے کی ضرورت ہے جو خطباء اور ذاکرین کی تربیت کرے۔اس کام کیلئے میں اپنی لب سڑک 10 ایکڑ زمین دینے کیلئے تیار ہوں۔فتنہ گروں کو مشخص کرنا چاہیے۔علماء ایک دوسرے کا احترام کریں۔آئندہ کا لائحہ عمل دیا جائے۔

11-حجۃ الاسلام شیخ سکندر حیدری صاحب:
علماء کے درمیان اتحاد ہو گا تو آگے بڑھیں گے۔

12- حجۃالاسلام شیخ مقدسی صاحب:
غلو کے معیارات مشخص کرنے کی ضرورت ہے۔ذاکرین کے ساتھ اتحاد کی اشد ضرورت ہے۔

13- حجۃالاسلام شیخ بشارت امامی صاحب:
ذاکرین کو بصیرت اور مواعظ حسنہ کے ذریعہ راہنمائی اور اتحاد کی ضرورت ہے۔

14- حجۃالاسلام عباس ھاشمی صاحب:
اس مسئلے کو ہمارے بزرگوں نے صحیح ہینڈل نہیں کیا اور نہ سمجھا۔یہ مسلکی مسئلہ نہیں تھا جو دشمن نے بنا دیا ۔۔یہ حکومت اور قانون کو حل کرنا چاہیئے تھا۔ان مسائل کو علمی اعتبار سے حل کرنا چاہیئے اور اپنے مسلمات سے پیچھے نہیں ہٹنا چاہیے۔

15- حجۃالاسلام شفقت صاحب:
ولی فقیہ کے مطابق دوسروں کے مقدسات کی توہین حرام ہے ۔ملک کے مسائل ملک میں رہنے والے بزرگوں کو ہی حل کرنا چاہئیں۔قم۔مین پروگرام مشترکہ طور پر ہونا چاہیئے۔

16- حجۃالاسلام سید اصغر کاظمی صاحب:
 قم المقدس سے مشترکہ بیانیہ جاری ہونا چاہیے۔علمی مواد ہمیں تیار کر کے دینا چاہیے۔ منبر کو خالی نہیں چھوڑنا چاہیے اور ہمیں سب طلاب کو خطابت کرنا چاہیے۔

17- حجۃالاسلام سید غضنفر فائزی صاحب:
اس طرح کے اجتماعات باعث برکت ہیں۔مشاورت ضروری ہے۔سلسلہ رکنا نہیں چاہیئے۔تحریک وغیرہ  کے دوستوں کو بھی اس قسم کی نشست رکھنا چاہیے۔امر بالمعروف اور نہی عن المنکر کرتے رہنا چاہیے۔

اس نشست کا اختتام دعا سے کیا گیا ۔درمیان میں شرکاء کی چائے اور کیک وغیرہ سے پزیرائی بھی کی گئی۔یاد رہے کہ یہ اس سلسلے کا پہلا جلسہ تھا اور اس قسم کے اجلاس آئندہ بھی جاری رہیں گے۔


شرکاء جلسہ مشاورت
1-حجۃ الاسلام محمد عادل مھدوی
2-حجٰٰۃ الاسلام اکبر حسین مخلصی
3-حجۃ الاسلام سید عابدین رضوی
4-حجۃ الاسلام سید نصرت جنتی
5-حجٰۃ الاسلام راجہ سعید مھدی
6-حجۃ الاسلام شیر مقدسی
7-حجۃ الاسلام شاھد حسین عرفانی
8-حجۃالاسلام ابرار نقوی
9-حجۃ الاسلام احسان دانش
10-حجۃ الاسلام  وسیم ربانی.
11-حجٰۃ الاسلام نقی خان
12-حجٰۃ الاسلام سید حسنین جعفر
13-حجۃ الاسلام سید احمد حسینی
14-حجۃ الاسلام سید عمران نقوی
15-حجۃ الاسلام عباس ھاشمی
16-حجۃ الاسلام سید محمد فائزی
17-حجۃ الاسلام سکندر حیدری
18-حجۃ الاسلام شفقت عباس
19-حجۃ الاسلام محمد حسن باقری
20-حجۃ الاسلام شبیر سعیدی
21-حجٰۃ الاسلام گلفام حسین
22-حجۃ الاسلام یعقوب بشوی
23-حجۃ الاسلام سید اصغر کاظمی
24-حجۃ الاسلام سید عباس حسینی
25-حجۃ الاسلام سید  قمر کاظمی
26-حجۃ الاسلام زوار حسین
27-حجۃ الاسلام حافظ امام علی
28-حجۃ الاسلام بشارت امامی
29-حجۃ الاسلام شجاعت علی
30-حجۃ الاسلام محمد علی جلبانی ودیگران۔۔۔۔

وحدت نیوز(ملتان) مجلس وحدت مسلمین جنوبی پنجاب کی صوبائی پولیٹیکل کونسل کا اجلاس جامعہ شہید مطہری ملتان میں منعقد ہوا۔ اجلاس کی صدارت مرکزی سیکرٹری سیاسیات سید اسد عباس نقوی نے کی۔ اجلاس میں صوبائی پولیٹیکل کونسل کے اراکین صوبائی سیکرٹری سیاسیات مہر سخاوت علی، سید طاہر عباس گردیزی، سید نعیم حیدر کاظمی، رحمت حسین کھوسہ، صوبائی ڈپٹی سیکرٹری جنرل سلیم عباس صدیقی، علامہ قاضی نادر حسین علوی اور دیگر موجود تھے۔ اجلاس میں آئندہ بلدیاتی انتخابات کے حوالے سے لائحہ عمل طے کیا گیا۔ اجلاس میں خصوصی طور پر علامہ ملازم نقوی معاون مرکزی سیکرٹری سیاسیات اور عارف رضا زیدی ممبر مرکزی پولیٹیکل ایگزیکٹو کونسل نے خصوصی شرکت کی، اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ آئندہ الیکشن میں بھرپور طریقے سے حصہ لیا جائے گا اور اس کے ساتھ ساتھ الیکشن مہم جلد شروع کی جائے گی۔ اجلاس کے بعد ''وحدت نیوز'' سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے صوبائی سیکرٹری سیاسیات مہر سخاوت علی کا کہنا تھا کہ بلدیاتی الیکشن اہمیت کا حامل ہے، ہم اس بلدیات میں اپنا بھرپور کردار ادا کریں گے، اُنہوں نے کہا کہ پہلے مرحلے میں جنوبی پنجاب کے تمام اضلاع کے دورہ جات کیے جائیں گے اور مختلف اضلاع میں اپنے اپنے نمائندوں کا اعلان کیا جائے گا۔

وحدت نیوز(گلگت) ایم ڈبلیوایم گلگت بلتستان کے ترجمان محمد الیاس صدیقی نے کہا ہے کہ صوبائی ہیڈکوارٹر ہسپتال گلگت میں کرونا کے پھیلاؤ کا سبب بن رہا ہے۔ ایمرجنسی میں صرف 3 بندوں سے چوبیس چوبیس گھنٹے کام لیا جا رہا ہے حالانکہ ایمرجنسی میں اٹھارہ ڈاکٹر و ملازمین کی ضرورت ہے۔ یہ چند ملازمین کرونا کے مریضوں کو بھی دیکھ رہے ہیں اور ساتھ عام مریضوں کو بھی۔ ڈاکٹرز اور دیگر کئی سٹاف اٹیچمنٹ پر من پسند جگہوں پر ڈیوٹی دے رہے ہیں جبکہ پی ایچ کیو ہسپتال ویران پڑا ہوا ہے۔ ہم نے تمام فورمز پر آواز بلند کی اور ایک دو دن میں چیف سیکرٹری، سیکرٹری ہیلتھ سے ایک بار پھر مطالبہ دہرائیں گے اگر پھر بھی ہسپتال کا مسئلہ حل نہ ہوا تو جمعرات کے روز چیف کورٹ میں پیٹیشن دائر کرینگے۔ 

انہوں نے کہا کہ ہسپتال میں گریڈ ون سے ٹیکنیشن کا کام لیا جا رہا ہے جبکہ جن کے پاس ڈپلومہ ہے اب کو اپ گریڈ کرنے کی بجائے باہر سے لوگوں کو بھرتی کیا گیا ہے جن کے پاس کوئی تجربہ نہیں، ہسپتال میں ناقص انتظامات اور سہولیات کا فقدان پر ماتم کرنے کو دل کرتا ہے کیونکہ اس ہسپتال پر پورے صوبے کا بوجھ ہے لیکن یہاں سہولیات سرے سے نہیں۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ روز ہی ہسپتال میں لائے گئے تین خواتین اور دو مرد مریضوں میں کرونا کی تصدیق ہوئی۔ لیکن ان مریضوں کو دیکھنے والے سٹاف کے پاس نہ تو کوئی پی پی ایز ہے اور نہ ہی دیگر سہولیات۔ چند سٹاف سے چوبیس چوبیس گھنٹے کام لیا جا رہا ہے، یہ سٹاف عام مریضوں کے ساتھ کرونا کے مریضوں کو بھی دیکھ رہا ہے، احتیاطی تدابیر اختیار ہی نہیں کی جا رہی، سٹاف کے پاس پی پی ایز نہیں، ہسپتال میں کرونا سے بچاؤ کیلئے کوئی اقدامات ہی نہیں، لوگوں کا بھیڑ جمع ہے اور بغیر کسی ماسک کے ہسپتال میں مجمع اکھٹا ہو رہا ہے۔ پی ایچ کیو ہسپتال گلگت میں کرونا کے پھیلاؤ کی سب سے بڑی وجہ بن رہا ہے اور لوگوں کو متاثر کر رہا ہے، اس وقت گلگت کے آدھے سے بھی زیادہ لوگ کرونا سے متاثر ہیں لیکن تشخیص نہ ہونے سے سامنے نہیں آرہے، صوبائی ہیڈکوارٹر ہسپتال کا یہ حال ہے تو پھر دیگر ہسپتالوں کا خدا ہی حافظ ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم ایک سال سے ہسپتال کی حالت زار پر چیخ رہے ہیں، ہر فورم پر آواز بلند کی لیکن ہسپتال پر کوئی توجہ دینے والا نہیں، چیف کورٹ ہر اہم ایشوز پر نوٹس لے رہی ہے اور کئی اہم مسئلے حل بھی کروا دیئے ہیں، ہمارا چیف کورٹ سے مطالبہ ہے کہ اس حساس ترین معاملے پر بھی ازخود نوٹس لیا جائے۔ کیونکہ یہ ہسپتال پورے صوبے کی ضرورت ہے اور سب سے اہم مسئلہ بھی ہے۔ پھر بھی ہم جمعرات کے روز چیف کورٹ میں پیٹیشن دائر کرنے جا رہے ہیں۔

وحدت نیوز(لاہور) لاھور موٹروے پر خاتون کی عصمت دری کے بدترین واقعہ کے ملزمان کی فوری گرفتاری اور قرار واقعی سزا دلوانے کے لیے مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین لاھور نے پریس کلب لاھور کے سامنے شدید احتجاج کیا اس احتجاج میں ایم ڈبلیو ایم کی درجنوں کارکنان کے علاوہ دیگر خواتین کی بھی کثیر تعداد شریک تھی ۔

اس موقع پر ایم ڈبلیوایم وومن ونگ کی مرکزی سیکرٹری جنرل اور رکن پنجاب اسمبلی محترمہ سیدہ زھرا نقوی نے خطاب کرتے ہوۓ شدید غم و غصے کا اظہار کیا ان کا کہنا تھا کہ آے روز ملک میں اس قسم کے شرمناک واقعات رونما ہو رہے ہیں جس سے یہ بات ثابت ہوتی ہے کہ حیوانوں سے بھی بدتر ان مجرموں کو سزا نہیں دی جاتی اگر ملک میں عدل و انصاف کے تقاضے پورے کیے جاتے تو آج ہماری خواتین اور بچے اس درندگی کا شکار نہ ہوتے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہمارا معاشرہ تیزی سے بے راہ روی کا شکار ہو رہا ہے جس کی ایک بڑی وجہ تربیت کا فقدان ھے انھوں نے وزیراعظم عمران خان کو مخاطب کرتے ہوۓ کہا کہ وہ اس واقعے کا از خود نوٹس لیں اور مجرموں کو جلد از جلد قرار واقعی سزا دی جاۓ۔

محترمہ سیدہ زھرا نقوی کا کہنا تھا کہ وزیر اعلی عثمان بزدار نے اس واقعے کا نوٹس لیا ہے اور ہم امید کرتے ہیں کہ ُمجرموں کو جلد کیفر کردار تک پہنچایاجاے گا ایم ڈبلیو ایم شعبہ خواتین لاھور کی سیکرٹری جنرل محترمہ حنا تقوی نے اپنے خطاب میں کہا ایسے مجرم معاشرے کا ناسور ہیں قانونی اداروں کو جلد از جلد ان درندہ صفت مجرموں کو آڑے ہاتھوں لینا ہوگا۔ انھوں نے کہا کہ اس گھناونے فعل کے مرتکب افراد کو ایسی عبرتناک سزا دی جاے جو دیکھنے والوں کے لیے باعث عبرت ہو اور معاشرہ اصلاح کی طرف گامزن ہو۔

وحدت نیوز(منڈی بہاؤالدین) مجلس وحدت مسلمین پنجاب کے سیکرٹری جنرل علامہ عبدالخالق اسدی نے منڈی بہاوالدین میں شیعہ عزادار علمدار حسین کی ٹارگٹ کلنگ پر گہرے غم و غصے کا اظہار کرتے ہوئے اسے انتشار پیدا کرنے کی منظم سازش قرار دیا ہے۔ منڈی بہاوالدین میں شہید علمدار حسین کی نماز جنازہ کے بعد خصوصی گفتگو میں انہوں نے کہا کہ ملک میں بڑھتی ہوئی فرقہ واریت انتظامی اداروں کی ناکامی کو ظاہر کرتی ہے، تکفیریت نے ملک کو فرقہ واریت کی آگ میں جھونکنے کیلئے ایک بار پھر کمر کس لی ہے، اگر کالعدم جماعتوں کو اسی طرح بے لگام چھوڑ دیا گیا تو دہشت گردی کے عفریت سے نجات دلانے کیلئے دی گئی ستر ہزار سے زائد قربانیاں رائیگاں چلی جائیں گی۔

انہوں نے کہا کہ تاریخ شاہد ہے کہ شیعہ نسل کشی سے شروع ہونیوالی دہشتگردی نے اس ملک میں ریاستی اداروں، سکولوں اور عبادت گاہوں پر حملے کرکے ہزاروں بے گناہ اور معصوم افراد کے خون سے ہولی کھیلی، اگر اس انتہاء پسندی کو اس کے آغاز سے نہ روکا گیا تو اس کے بھیانک نتائج پوری قوم کو بھگتنا پڑیں گے۔ انہوں نے کہا کہ تکفیریت کا پرچار اور کالعدم جماعتوں کے سرکردہ افراد کی طرف سے دی جانیوالی ترغیب ہی ٹارگٹ کلنگ کا اصل محرک ہے، اسے روکنے کیلئے قانون نافذ کرنیوالے اداروں کو موثر اقدامات کرنا ہوں گے۔ انہوں نے علمدار حسین کے قاتلوں کی فوری گرفتاری اور قانون کے مطابق سخت ترین سزا کا مطالبہ کیا ہے۔

وحدت نیوز(سکردو) سکریٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان آغا علی رضوی نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ دیامر بھاشا ڈیم کی ملازمتوں میں دیامر اور گلگت بلتستان کے باسیوں کو نظر انداز کرنا عوام کے ساتھ زیادتی اور ظلم ہے جس پر کبھی خاموش نہیں رہا جا سکتا۔

انہوں نے کہا کہ دیامر گلگت بلتستان کا گیٹ وے ہے اور دیامر کے عوام کو کسی صورت نظر انداز نہیں کیا جا سکتا۔ دیامر میں بے روزگاری اور دیگر مسائل کے حل کے لیے ضروری ہے کہ دیامر بھاشا ڈیم میں پیدا ہونے والی ملازمتیں دیامر کے عوام کو ترجیحی بنیادوں پر دی جانی چاہئیں۔ لیکن گلگت بلتستان اور دیامر کے عوام کو نظر انداز کرنا انتہائی ظلم ہے۔ مقتدر حلقوں سے کو ہم متنبہ کرتے ہیں کہ اس اہم مسئلے پر عوامی مطالبات کیمطابق عملدرآمد کو یقینی بناتے ہوئے دیامر کے مقامی افراد کو ترجیحی بنیادوں پر تعینات کرے۔

 مقامی قبائل کو آپس میں لڑانے کی کوشش کرنا عوام کیساتھ زیادتی ہے، تعمیر شدہ عمارات کو منصفانہ طریقے سے زمین کے تمام حصہ داروں میں تقسیم کو یقینی بنائی جائے اور قبائلی طرز زندگی پر زبردستی اثر انداز ہونے کی کوشش کرکے عوام میں بے چینی پھیلانے سے باز رہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہرپن داس کے ایشو کو بھی ایک عرصے سے دبائے رکھنا اور کمیٹی کی عدم فعالیت مقامی عوام میں تشویش کا سبب بن رہا ہے، اس کیلئے فوری اقدامات اٹھائے جائیں۔ آغا علی رضوی نے اپنے بیان میں  کہا کہ دیامر بھاشا ڈیم کے رائیلٹی گلگت بلتستان کے عوام کو ہی ملنی چاہیے۔ ہماری زمین پر اوروں کی عیاشی ہم کسی صورت قبول نہیں کریں گے۔

وحدت نیوز(کوئٹہ) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ترجمان علامہ مقصود علی ڈومکی نے کہا ہے کہ ایک منظم سازش کے تحت تکفیری دہشت گردوں کو پاکستان میں فرقہ وارانہ منافرت پھیلانے کی کھلی چھوٹ دے دی گئی ہے جس کے باعث کراچی میں امام بارگاہ اور مسجد پر حملہ کیا گیا اور سندھ اور پنجاب میں مسلسل فرقہ وارانہ منافرت اور دہشت گردی کے واقعات اسی سازش کا حصہ ہیں۔

انہوں نے کہا کہ وطن عزیز پاکستان فرقہ وارانہ منافرت کا متحمل نہیں ہو سکتا شیعہ اور سنی آپس میں بھائی ہیں اور اسلام کے دو بازو ہیں وہ قوتیں جو وطن عزیز پاکستان میں شیعہ سنی منافرت کو ہوا دے کر انہیں آپس میں لڑانا چاہتی ہیں ناکام ہوں گی۔ فریقین کے علماء اور اکابرین کی ذمہ داری بنتی ہے کہ ایسے شرپند عناصر کو اپنے مذموم عزائم میں ناکام بنا دیں۔

انہوں نے کہا کہ عالمی سامراجی قوتوں کی اسلام دشمنی کسی سے ڈھکی چھپی نہیں ہے لڑاؤ اور حکومت کرو کی پالیسی کے تحت عالمی سامراجی قوتیں دنیا اسلام میں فرقہ واریت کے نام پر مسلمانوں کو دست و گریبان دیکھنا چاہتی ہیں وہ لوگ جو شیعہ اور سنی کے درمیان نفرتیں بڑھا رہے ہیں وہ درحقیقت عالمی سامراج کے ایجنڈا کی تکمیل کر رہے ہیں انہوں نے کہا کہ اس موقع پر تمام مکاتب فکر کے علماء اور اکابرین کو مل کر اتحاد بین المسلمین کانفرنسز کا انعقاد کرنا چاہیے۔

Page 10 of 1061

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree