The Latest

وحدت نیوز(منڈی بہاؤالدین) سٹی منڈی بہاوالدین میں شیعہ مذہبی و سیاسی جماعتوں کا مشترکہ اجلاس، ضلع میں امن وامان کی خراب صورتحال پر انتظامیہ کی طرف سے ناقص کارکردگی کا جائزہ لیا گیا۔ مجلس وحدت مسلمین پنجاب کے سیکرٹری جنرل علامہ عبدالخالق اسدی سیکٹری تبلیغات و سابق ضلع سیکرٹری جنرل مولانا مظہر عباس ہادی نے خطاب کیا ۔

اس کے علاوہ شیعہ علما کونسل پنجاب کے نائب صدر سید اظہر تقوی ،ڈویژنل صدر شیعہ علما کونسل سید عمران شاہ ،ضلعی صدر سید ظفر شاہ ،تحصیل صدر شیعہ علما کونسل ڈاکٹر سید کاظم شاہ،سٹی صدر ناصر عباس جعفری ، احسان کریم جعفری ،چوہدری غلام رضا گوندل ،چوہدری امجداقبال گوندل ،سید غضنفر عباس ،سید طاہر عباس نقوی ایڈووکیٹ،خواجہ فرخ عباس،سید علی رضوی امامیہ سٹوڈنٹس آرگنائزیشن کے ڈویژنل صدر سید حسنین کاظمی نے شرکت کی ۔

متفقہ طور پرشیعہ جماعتوں کی نمائندہ ضلعی کمیٹی کا اعلان کیا گیا جس کی سربراہی چوہدری غلام رضا گوندل صاحب کو دی گئی  آئندہ کے تمام معاملات کی سرپرستی اس کمیٹی کے سپرد کی گئی۔ اس اجلاس میں متفقہ اعلامیہ جاری کیا گیا ضلع منڈی بہاؤالدین کی انتظامیہ اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی مقتول ملک علمدار حسین کے قاتلوں کی عدم گرفتاری ان کی نااہلی کا منہ بولتا ثبوت ہے لیکن ہم متنبہ کرتے ہیں کہ مزید تاخیری حربے برداشت نہیں کیے جائیں گے 18 اکتوبر کو ہم ملک عملدار حسین کے ختم چہلم کے موقع پر ایک بڑا اجتماع برپا کریں گے جس میں مجلس وحدت مسلمین و شیعہ علما کونسل کی قیادت اور ضلع بھر کی عوام بھرپور انداز میں شرکت کرے گی ۔

وحدت نیوز(سکردو) مجلس وحدت مسلمین بلتستان کے ترجمان وزیر غلام محمد کلیم نے اپنے اخباری بیان میں کہا کہ گلگت بلتستان تمام تر محرومیوں کے باوجود ابتک ملک کیساتھ وفادار اور جغرافیائی و نظریاتی سرحدوں کی حفاظت میں ہر اول دستے کا کردار ادا کرتے رہے مگر ہمیں نظر انداز کیا جاتا رہا۔ مزید محرومی نئی نسل اور نوجوانوں کو ملک سے متنفر کرنے کا سبب بنے گا جس کے ذمہ دار فیصلہ ساز ادارے، اور وفاقی حکومت اور بڑی جماعتوں کے رہنما ہونگے۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ مزید طفل تسلیوں کے ذریعے بہلانے کی کوشش کرنے کی بجائے دیگر صوبوں کے برابر ہر پلیٹ فارم ، قانون ساز و فیصلہ ساز اور مالیاتی اداروں میں شامل کرتے ہوئے مکمل شہری حقوق فراہم کئے جائیں۔

ترجمان ایم ڈبلیو ایم نے علاقہ گلگت بلتستان میں جاری غیر انسانی و غیر آئینی اقدامات کو روکے جائیں، زمینوں پر جبری قبضے، پرامن محب وطن شہریوں پر دہشت گردی کے قوانین کا نفاذ اور عوامی استحصال کا مکمل خاتمہ اور عوام پر اعتماد کی فضا قائم کرنا ضروری ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ شاہراہ بلتستان پر ابتدائی نقشے میں موجود ٹنلز اور نقشے کے مطابق کام کروانا ضروری ہے۔ بصورت دیگر عوام بھرپور احتجاجی تحریک چلانے میں حق بجانب ہیں۔ وہ تمام سیاستدان بالخصوص سابق حکمران جماعت کے رہنما جو سکردو روڈ کے نقشے میں تبدیلی جیسے اہم معاملے میں خاموش تماشائی بنے رہے وہ اس وقت سیاسی پوائنٹ سکورنگ کیلئے جھوٹ پر جھوٹ بول رہے ہیں، مگر عوام انکی مجرمانہ خاموشی کو بخوبی سمجھتے ہیں۔

وحدت نیوز(سبی)مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ترجمان علامہ مقصود علی ڈومکی  ایک روزہ دورے پر ضلع سبی آئے اس موقع پر مرکزی امام بارگاہ میں منعقدہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس وقت امت مسلمہ کو اتحاد اور وحدت کی ضرورت ہے وطن عزیز میں صدیوں سے شیعہ سنی مسلمان بھاٸی بھاٸی بن کر رہتے ہیں اور ان کے درمیان اخوت اور بھائی چارے پر مبنی تعلق قائم ہے۔ جبکہ اسلام دشمن سامراجی قوتیں مسلمانوں کو آپس میں لڑانا چاہتی ہیں لڑاو اور حکومت کرو کی سامراجی پالیسی کے تحت پاکستان کے اندر امریکی ڈالروں کے نتیجے میں فرقہ وارانہ منافرت کو ہوا دی جا رہی ہے۔ لہذا شیعہ سنی علماء اور اکابرین کی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ محبت اور اخوت کی فضا کو قائم کرنے کے لیے اپنا کردار ادا کریں۔

انہوں نے کہا کہ چہلم شہدا کربلا کے موقع پر پورے ملک میں تاریخی جلوس برآمد ہوں گے جس میں لاکھوں کروڑوں کی تعداد میں عاشقان اہلبیتؑ شریک ہوکر امام عالیمقام ع سے تجدید عہد کریں گے۔ امام حسینؑ عالی مقام نواسہ رسول ص کسی ایک فرقے کے نہیں بلکہ پوری امت مسلمہ اور عالم انسانيت کے رہبر ہیں۔ حکومت کی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ چہلم شہدائے کربلا کے موقع پر فول پروف سیکورٹی انتظامات کرے۔

 انہوں نے کہا کہ ناٸیجریا کے عالمی شہرت یافتہ انقلابی رہنما علامہ ابراہیم زکزاکی جو بغیر جرم و خطا گزشتہ کٸی سال سے قید و بند کی صعوبتیں برداشت کر رہے ہیں انہیں فی الفور رہا کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ نائجیریا کی حکومت غیر آئینی طور پر ایک عالمی لیڈر کو قید میں رکھے ہوئے ہے جبکہ شیخ زکزاکی کی طبیعت صحیح نہیں ہے اور ان کے علاج کے لئے بھی کوئی اقدامات نہیں کیے جا رہے ہیں انہوں نے امید ظاہر کی کہ نائجیریا کی اعلی عدالت سپریم کورٹ ابراہیم زکزاکی کی فوری رہائی کے احکامات صادر کرے گی۔اس موقع پر اجلاس سےمجلس  وحدت مسلمین ضلع سبی کے سیکرٹری جنرل بشیر حسین کربلائی اور دیگر نے خطاب کیا۔

وحدت نیوز(سکردو)ڈپٹی سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان شیخ احمد علی نوری نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ گلگت بلتستان کو آئینی قومی دھارے میں شامل کرنے کا عمل خوش آئند ہے تاہم اس کے ساتھ ساتھ وفاقی حکومت ستر سالہ محرومی کا ازالہ کرنے کے لئے مسائل کے حل اور حقوق کی فراہمی یقینی بنائیں۔

انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان جن ہنگامی مسائل سے دوچار ہیں ان میں بااختیار سیٹ اپ بنیادی انسانی حقوق کی عدم فراہمی سر فہرست ہے۔ وزیر اعظم پاکستان اس خطے کی تعمیر و ترقی چاہتا ہے تو آئینی سیٹ اپ کے ساتھ ساتھ سی پیک میں متناسب حصہ اور سوست ڈرائی پورٹ کو فعال کرنے تمام سرحدی حدود کے تنازعات کو ختم کرے اور جی بی کے سرحدوں کے تحفظ کو یقینی بنائے۔ گلگت بلتستان میں موجود توانائی کے مواقع سے استفادہ کرتے ہوئے خطے میں توانائی بحران کو ختم کیا جائے بلخصوص ہینزل، شغرتھنگ، ہرپوہ، غواڑی پاور پروجیکٹس کو فوری طور پر مکمل کیا جائے۔

ان کاکہنا تھا کہ شونٹر پاس روڈ کی تعمیر کو یقینی بنایا جائے۔سدپارہ ڈیم پروجیکٹ کو کامیاب بنانے کے لئے شتونگ نالے کو ڈائیورڈ کیا جائے نیز لفٹ رائیٹ چینل کو فعال بنایا جائے۔خالصہ سرکار کے نام پر زمینیوں کی بندر بانٹ کو روکا جائے۔تعلیمی مسائل کے حل کے لیے بلتستان میں میڈیکل کالج اور ایگریکلچر یونیورسٹی کے ساتھ ساتھ وویمن یونیورسٹی کا قیام عمل میں لایا جائے۔سکردو میں بوائز اور وومن ڈگری کالج کا قیام عمل میں لایا جائے۔گلگت سکردو روڈ کی معیاری تعمیر اور بر وقت تکمیل کے ساتھ ساتھ اسکی توسیع شگر،خپلو اور کھرمنگ تک کی جائے۔گلگت اور سکردو شہر کو بگ سٹی ڈکلیئر کیا جائے۔

انہوں نے مزید کہاکہ گلگت بلتستان میں سیاحت کو انڈسٹری کا درجہ دیا جائے اور دونوں ائیر پورٹس کو انٹرنیشنل کا درجہ دیا جائے۔گلگت بلتستان کے جوانوں کو روزگار کی فراہمی کے لئے جامع پلان بنایا جائے یہاں کی معیشت کو بہتر بنانے کے لئے سیاحت،زراعت، مونٹیرنگ،مائنگ لائیو سٹاک فارسٹی پر خصوصی توجہ دی جائے۔وفاقی سیاسی جماعتیں جی بی کے لئے جامع پلان کے بغیر سیاسی میدان میں اترنے کا مزید حق نہیں رکھتیں، یہ جماعتیں گلگت بلتستان کے عوام کے ساتھ اس وقت مخلص ہو سکتی ہیں جب ان حقیقی مسائل کا حل نکالیں۔

وحدت نیوز(کوئٹہ) مسلمان ممالک کا اسرائیل کو تسلیم کرنا مسئلہ فلسطین اور کشمیر سے سنگین غداری ہے۔ملک بھرمیں امریکہ اور اسرائیل کے نپاک عزائم اور سازشوں کو کچلنے کے لئے اسرائیل نامنظور مہم چلائی جا رہی ہے۔اسرائیل نامنظور مہم کے تحت پاکستان کے تمام بڑے شہروں میں عالمی دہشت گرد امریکہ اور اس کی ناجائز اولاد اسرائیل کے ناپاک عزائم کے خلاف پروگرام ترتیب دئیے جا چکے ہیں۔سوشل میڈیا پر بھرپور مہم کا آغاز کیا جائے گا، پریس کانفرنسز او ر سیمینارز منعقد کئے جائیں گے، ریلیاں اور احتجاجی مظاہرے کئے جائیں گے۔ان خیالات کا اظہار فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان بلوچستان چیپٹر کے سرپرست اراکین نے کوئٹہ میں مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان بلوچستان چیپٹر کے رہنماؤں نے کہا کہ مرکزی سطح پر فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان نے اسرائیل نا منطور مہم کا اعلان کیا تھا تاہم آج کی پریس کانفرنس اسرائیل نامنظور مہم کا تسلسل ہے۔

اس موقع پر مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ترجمان علامہ مقصودڈومکی نے کہا کہ خطے میں اسرائیلی مفادات کے دفاع کے لئے پاکستان کے خلاف سازشیں کی جا رہی ہیں۔امریکہ اور اسرائیل ہندوستان کے ساتھ مل کر پاکستان میں انارکی پھیلانے چاہتے ہیں۔افواج پاکستان کے خلاف منفی پراپیگنڈا اور سازشیں اسرائیلی مقاصد کی تکمیل کی کڑی ہے۔ عرب امارات اور بحرین نے اسرائیل کے ساتھ تعلقات قائم کر کے فلسطین سمیت مسلم امہ اور مسئلہ کشمیرکے ساتھ بہت بڑی خیانت کی ہے۔

ان کاکہنا تھا کہ جب یہ عرب ریاستیں اسرائیل کے ناجائز وجود کو تسلیم کر رہی ہیں تو ا س کا مطلب یہ ہوا کہ فلسطین کی جد وجہد اور فلسطین کے ساتھ ہونے والے ناانصافی کو تسلیم کیا جا رہاہے تاہم ایسی صورت میں پاکستان کو ان عرب ریاستوں کی جانب سے مسئلہ کشمیر پر کسی مثبت موقف کی امید باقی نہیں رہی۔ان کاکہنا تھا کہ اسرائیل غاصب صہیونیوں کی قائم کردہ جعلی ریاست ہے جو خطے سمیت دنیا کے امن کیلئے خطرہ ہے، اسرائیل فلسطین پر قابض ہے اور اب لبنان اور شام پر اپنا تسلط قائم کرنے کے لئے عرب ریاستوں کے ساتھ مل کر نئی سازشوں کا جال بنایا جا رہاہے۔

 ان کاکہنا تھا کہ عرب امارات ہوں یا بحرین ان دونوں ریاستوں کی جانب سے اسرائیل کے ساتھ تعلقات قائم کرنے سے خود خلیجی عرب ممالک کی سیکورٹی بھی خطرے میں پڑ چکی ہے۔انہوں نے کہا کہ خطے میں اسرائیل کے اثر و رسو خ کو بڑھا کر حقیقت میں فلسطین کے ساتھ ساتھ کشمیر کی جدوجہد کو بھی دبانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔خلیجی ممالک نے اسرائیل کے ساتھ تعلقات قائم کر کے او آئی سی اور عرب لیگ سمیت خلیج کونسل کے وجود کو بھی خطرے میں ڈال دیا ہے۔

وحدت نیوز (اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ اہلسنت ہمارے بھائی ہی نہیں ہماری جان ہے۔ اربعین کے روز ہم سب نے مل کر وحدت و اخوت کا عملی مظاہرہ کرنا ہے ۔پوری دنیا دیکھے گی کہ ایک دوسروں کے ساتھ ہمارا صدیوں سے معاشرتی، سماجی اور خاندانی تعلق پہلے جیسی مضبوطی کے ساتھ اب بھی قائم ہے۔تاریخ شاید ہے کہ شیعہ سنی ایک دوسرے کے گھروں میں پلے بڑھے ہیں۔جو قوتیں ہمارے مذہبی اختلاف کو نفرتوں میں بدلنے کے لیے ایڑی چوٹی کا زور لگا رہے ہیں ان کا مقصد بھائی کو بھائی سے لڑا کر ارض پاک کی گلی کوچوں میں تصادم کی فضا پیدا کرنا ہے۔ناموس صحابہ کے نام پر شروع ہونے والے احتجاج اب صرف تکفیریت پر ہی ختم نہیں ہو رہے بلکہ ان "منافقانہ اجتماعوں" میں مولا کائنات حضرت علی علیہ السلام کے خلاف گستاخانہ کلمات اور یزید لعین کی مدح سرائی بھی ہونی شروع ہو گئی ہے۔ان تکفیری گروہوں کا ایجنڈا کھل کر سامنے آچکا ہے۔یہی وجہ ہے سنی مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والے باشعور افراد نے ان سے فوراََ علحیدگی اختیار کر لی ۔

انہوں نے کہا "یزید زندہ باد" کے کسی نعرے سے کسی عاشق رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا کوئی تعلق نہیں ہو سکتا۔اس ملک میں تین دہائیوں تک شیعہ نسل کشی ہوتی رہی۔جناب سیدہ سلام اللہ علیہا کی شان اقدس میں گستاخی کی گئی لیکن ہم نے کبھی کسی کے انفرادی فعل کو کسی مخصوص مکتبہ فکر کے ساتھ نتھی کر کے مسلک پر انگلی نہیں اٹھائی۔ہم نے جب بھی بات کی ان تکفیریوں گروہوں اور کالعدم جماعتوں کی بات کی جو ملک کے امن اور قومی سلامتی کو نشانہ بنانے کے لیے یہود و ہنود کے ایجنڈے پر عمل پیرا ہیں۔شیعہ سنی مکاتب فکر کو اپنی سوچ میں وسعت لانا ہو گی۔مختلف ایشوز کو سطحی انداز میں سوچنے کی بجائے اس کے مختلف پہلوؤں کو عالمی حالات کے تناظر میں سمجھنے کی ضرورت ہے۔شیعہ سنی طاقتوں کو ملک دشمنوں کے خلاف مضبوط ڈھال بن کر رہنا ہو گا۔اس سلسلے میں تمام نوجوان، بزرگوں، اہل قلم، مفتیان اور ہر طبقے کو اپنے حصے کا کردار ادا کرنے کی ضرورت ہے۔

وحدت نیوز(کوئٹہ) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ترجمان علامہ مقصود علی ڈومکی نے جمیعت علمائے اسلام کے مرکزی رہنما حافظ حسین احمد سے ملاقات کی اور انہیں فلسطین فاؤنڈیشن بلوچستان کے زیر اہتمام جمعہ 25 ستمبر کو منعقد ہونے والی آل پارٹیز کانفرنس میں شرکت کی دعوت دی۔

انہوں نے کہا کہ اس وقت قبلہ اول بیت المقدس اور فلسطین کے خلاف سامراجی سازشیں جاری ہیں متحدہ عرب امارات کے بعد بحرین کی طرف سے غاصب صہیونی ریاست کو تسلیم کرنا المیہ ہے جو فلسطينيوں کے ساتھ خیانت کے مترادف ہے۔

انہوں نے کہا کہ بلوچستان اور پاکستان کے عوام نے ہمیشہ تحریک آزادی فلسطين کی حمایت کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اب وقت آگیا ہے کہ پاکستان کی سیاسی اور مذہبی جماعتیں مظلوم فلسطينيوں کے حق میں آواز بلند کریں۔

 اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے جمعیت علمائے اسلام کے مرکزی رہنما حافظ حسین احمد نے کہا کہ ہم تحریک آزادی فلسطین کے حامی ہیں ،بیت المقدس اور قبلہ اول ہماری محبت اور عقیدت کا مرکز ہے اور ہم نے ہمیشہ تحریک آزادی بیت المقدس کی حمایت کی ہے ،انشاءاللہ فلسطين کانفرنس میں جمعیت علماء اسلام کا ایک وفد شریک ہوگا۔

وحدت نیوز(سکردو) مجلس وحدت مسلمین پاکستان گلگت بلتستان کے سیکرٹری جنرل آغا علی رضوی نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ گلگت بلتستان کو قومی دھارے میں شامل کرنے کے اقدام کی تائید کرتے ہیں اور خطے کے لئے مزید طفل تسلیاں کسی صورت قومی اور علاقائی مفاد میں نہیں۔

 انہوں نے کہا گلگت بلتستان کی آئینی حیثیت کے تعین میں مزید سستی کا خطہ متحمل نہیں۔ گلگت بلتستان کو یہاں کے عوامی امنگوں کے مطابق سیٹ اپ دیا جائے۔ قومی اسمبلی اور سینیٹ میں نمائندگی کے ساتھ ساتھ تمام قومی اداروں میں نمائندگی دی جائے۔اختیارات سے عاری نام نہاد سیٹ ایپ قبول نہیں کریں گے۔

جی بی سیٹ اپ کا تعین الیکشن کے بعد کرانے کا مطالبہ کرنے والے خطے سے ہرگز مخلص نہیں۔وفاقی حکومت الیکشن سے قبل سیٹ اپ کے خدوخال کا اعلان کرے۔الیکشن سے قبل اعلان کرنے کے بعد اس کی مخالفت کرنے والے بے نقاب ہو جائیں گے اور عوام خود انکا جواب دیں گے۔

وحدت نیوز(منڈی بہاؤالدین)پاکستان دشمن قوتیں ملکی سالمیت کے درپے ہیں شرپسند عناصر انہی قوتوں کے آلہ کار بنے ہوئے ہیں،وطن عزیز کی بقاء ہمیں سب سے بڑھ کر عزیز ہے وطن عزیز پر آنچ نہیں آنے دیں گے ۔ملک علمدار حسین جعفری کے قاتلوں کی عدم گرفتاری نے ریاستی اداروں کی کارکردگی پر سوالات کو جنم دیا ۔ہم مزید تاخیری حربے برداشت نہیں کر سکتے۔ ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین کے صوبائی سیکرٹری جنرل علامہ عبدالخالق اسدی نےنواحی قصبہ ہیلاں میں ہنگامی پریس کانفرنس کرتے ہوئےکیا۔

 انہوں نے مزید کہا کہ ملک میں فرقہ وارایت نہیں بلکہ عالمی سطح پر بدلتے ماحول میں پاکستان کو کمزور کرنے کی گھناؤنی اور ناپاک سازش کی جارہی ہے۔ ریاست کے سیکورٹی اداروں کو پوری جرات اور قوت کے ساتھ اس سازش کا مقابلہ کرنا ہوگا اوراسے ناکام بنانا ہو گا مودی سرکار پوری قوت کے ساتھ وطن عزیز کے درپے ہے اور ملک میں حالیہ فرقہ وارانہ لہر کے پیچھے بھارتی حکومت کا ہاتھ کارفرما ہے۔ ملک میں موجود شرپسند تکفیری "را" کے ہاتھوں میں کھلونا بنے ہوئے ہیں۔ یہ ملک دشمن ملک کے طول و عرض میں جس جنگ کو شروع کرنا چاہتے ہیں ۔محب وطن شیعہ اور سنی عوام نے اسے ناکام بنا دیا لیکن ملک کے طاقتور اداروں کو بھی ماضی کی طرح ایک بارپھر پوری قوت کے ساتھ ان سازشوں اور سازشی عناصر سے آہنی ہاتھوں نمٹنا ہو گا۔ اس ملک کو شیعہ اور سنی نے مل کر بنایا اب اس کی بقا کی جنگ بھی ہم سب کو مل کر لڑنا ہو گی۔ پاکستان ہماری سب سے بڑی مجبوری ہے ہمیں سبز ہلالی پرچم کو ہمیشہ سربلند رکھنا ہے۔

 انہوں نے مزید کہا کہ اسرائیل ایک غاصب یہودی ریاست ہے اس کے ناپاک وجود کو تسلیم کرنا اسلام اور مسلمانوں سے غداری ہے۔ مسلم دنیا کو ظالم اسرائیل کے مقابل مظلوم فلسطینی مسلمانوں کا دست و بازو بننا چاہیے ۔پاکستان کے خلاف سازشوں میں بھی اسرائیل بھارت کا پکا حلیف ہے اور موجودہ صورتحال پیدا کرنے میں اس کے ملوث ہونے کا قوی امکان موجود ہے۔

 ان کا کہنا تھا کہ ہمارے نزدیک تشویش ناک امر یہ ہے کہ ریاست اور قانون نافذ کرنے والے ادارے ابھی تک شرپسندوں کو لگام دینے اور انہیں قانون کی گرفت میں لانے اور ان کے مراکز بند کرانے میں ناکام نظر آتے ہیں تشیع کی سرخ تاریخ اس بات کی گواہ ہے کہ شہادت ہمارا ورثہ ہے ۔ضلع منڈی بہاؤالدین کی انتظامیہ اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی مقتول ملک علمدار حسین کے قاتلوں کی عدم گرفتاری ان کی نااہلی کا منہ بولتا ثبوت ہے لیکن ہم متنبہ کرتے ہیں کہ مزید تاخیری حربے برداشت نہیں کیے جائیں گے۔ 18 اکتوبر کو ہم ملک عملدار حسین کے ختم چہلم کے موقع پر ایک بڑا اجتماع برپا کریں گے جس میں مجلس وحدت مسلمین کی قیادت اور عوام بھرپور انداز میں شرکت کرے گی ۔

وحدت نیوز(سکھر) مجلس وحدت مسلمین پاکستان صوبہ سندھ کی جانب سے کرسٹل بینکویٹ ھال سکھر "وحدت امت و پیغام امام حسین علیہ السلام کانفرنس" کا انعقاد کیا گیا۔وحدت امت و پیغام امام حسین علیہ السلام کانفرنس میں علماء کرام، ماتمی انجمنوں کے سالار، بانیان مجالس و جلوس اور تنظیمی برادران کی شرکت۔ کانفرنس سےمجلس وحدت مسلمین پاکستان صوبہ سندھ کے صوبائی سیکریٹری جنرل علامہ سید باقر عباس زیدی، علامہ سید عالم شاہ موسوی، علامہ علی بخش سجادی، علامہ عبد المجید بھشتی، علامہ عبداللہ مطھری، علامہ یوسف نفسی، علامہ پھلوان علی و دیگر علماء کرام بانیان و ماتمی سالاروں نے خطاب کیا۔کانفرنس سے مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری حفظہ اللہ نے ٹیلیفونک خطاب کیا۔کانفرنس کے اختتام پر ایک اعلامیہ جاری کیا گیا جو کہ درج زیل ہے۔


1. فرانس کے جریدہ چارلی ہیبڈو میں توہینِ رسالت کے خاکوں کا شایع ہونا
اور سوئیڈن میں توہینِ کتاب الٰھی انتہائی ناقابل برداشت عمل ہیں
2. مقبوضہ کشمیر میں بھارتی دہشتگردی، مظلوم کشمیریوں کا قتل عام اور اقوام متحدہ کی خاموشی ناقابل برداشت عمل ہیں
3. مقبوضہ فلسطین پر غاصب اسرائیل کا قبضہ اور عرب ممالک کا اسرائیل کو تسلیم کرنا ناقابل برداشت عمل ہیں
4. امریکا،اسرائیل، ھندوستان اور انکے حواری عرب ممالک پاکستان کو غیر مستحکم اور سی پیک کے خلاف سازشوں میں مصروف ہیں اور یہ بھی ناقابل برداشت عمل
5. پاکستانی آئین میں تمام مسالک اور شھريوں کے حقوق مساوی ہیں کسی کا مذھبی آزادی کا حق چھینا نہیں جا سکتا
6. حکومت پاکستان کے ذمہ داران وزیراعظم، صدر، چیف آف آرمی سٹاف، چیف جسٹس سپریم کورٹ پاکستان اور مقتدر اداروں سے گزارش ہے کہ مذہبی منافرت پھیلانے والوں کے خلاف بے رحمانہ آپریشن کیا جائے
7. ملت تشیع کے علماء و افراد کی بلاجواز گرفتاریوں اور جھوٹے مقدمات کا سلسلہ فی الفور بند کیا جائے
8. تمام مسالک کے مسلمہ مقدسات کی توہین و دل آزاری سے اجتناب کیا جائے
9. اگر ملت تشیع کے کسی خاص فرد کے خلاف کوئی مقدمہ یا گرفتاری کا مطالبہ کیا گیا تو ملت تشیع بھی ایسے کئی نام اور شواہدات کے پیش نظر مقدمات درج کروانے کا حق استعمال کر سکتی ہے اور اس کے لیے تحریک چلانے سے بھی دریغ نہیں کریں گے
10. وطن عزیز میں مٹھی بھر تکفیری عناصر ملکی امن و استحکام کو داؤ پر لگاتے ہوئے تکفیریت اور قتل و غارت کا بازار گرم کئے ہوئے ہیں ھم حکومت پاکستان کو ان گروہوں کے خلاف بے رحمانہ آپریشن کرنے کی اپیل کرتے ہیں
11. پاکستان میں کسی ایک فریق کی فقہ کو دوسرے فریق کی فقہ پر قطعی طور پر مسلط نہیں کیا جاسکتا
12. عزادارئ سيد الشهداء ھماری رگ حیات ہے ملت تشیع اس کے خلاف کسی بھی یزیدی سازش کو ناکام بنانے کی مستحکم قوت رکھتی ہے
13. ھم وطن عزیز کے بلافصل فرزند ہیں اس کے امن و استحکام کی خاطر بے تحاشہ قربانیوں کے ساتھ صبر کا دامن تھامے ہوئے ہیں اور وطن کے آئین و دستور کے پابند رہیں گے ہمیں کسی سے "حب الوطنی" کا سرٹیفیکیٹ لینے کی ضرورت نہیں ہے
14. شیعانِ پاکستان اپنے نظریات کے تئیں "نظام ولایت فقیه" یعنی رھبرِ شیعانِ جہان آیۃ الله العظميٰ سيد علی خامنہ ای حفظه الله تعالی اور آیۃ الله العظميٰ سيد علی سیستانی نور الله وجه کی بابصیرت رھبریت و رھنمائي پر کامل عقیده اور پختہ ایمان رکھتے ہیں
اور شیعانِ پاکستان کے اس نظریے کو پاک وطن کی نظریاتی اور جغرافیائی سرحدوں کے خلاف نظریہ تصور نہ کیا جائے.

Page 1 of 1055

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree