The Latest

وحدت نیوز(کراچی)مجلس وحدت مسلمین سندھ کے صوبائی سیکرٹری جنرل علامہ سید باقر عباس زیدی نے نامور خطیب اہل بیتؑ علامہ ضمیر اختر نقوی کے انتقال پر تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کی مذہبی، علمی اور ادبی خدمات کو خراج تحسین پیش کیا۔

انہوں نے کہا کہ مرحوم کے انتقال سے قوم ایک اعلی درجے کے محقق سے محروم ہو گئی ہے۔مرحوم ایک بے مثال علمی شخصیت اور منفرد انداز بیاں کے مالک تھے۔ان کے خطابات اور تصانیف ان کی پُرمغز تحقیق کا نچوڑ تھے۔مرحوم کی مذہبی و علمی کاوشوں کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔انہوں نے مرحوم کی بلندی درجات اور پسماندگان کے لیے صبر جمیل کی دعا کی ہے۔

وحدت نیوز(کراچی)مجلس وحدت مسلمین سندھ کے صوبائی سیکرٹری جنرل علامہ باقر عباس زیدی نے کہا ہے کہ پاکستان میں فرقہ وارانہ فسادات کے پیچھے عرب ریاستوں کا ہاتھ ہے۔ بحرین سمیت دیگر عرب ریاستیں اسرائیل کے ساتھ تجارتی معاہدوں اور سفارتی روابط میں مصروف ہیں۔ پاکستان کے عوام کی طرف سے اسرائیل کے خلاف ممکنہ ردعمل سے بچنے کے لیے انہیں آپس میں الجھایا جا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کا عدم استحکام عالمی استکباری ْقوتوں کے مفادات کے لیے نفع بخش ہے۔فرقہ واریت کی آگ لگانے کے لیے یہود ونصاریٰ نے اپنے پے رول پر موجود کالعدم جماعتوں کی ایک بار پھر پشت پناہی شروع کر دی ہے۔ امریکہ،  اسرائیل  اور بھارت پاکستان کے امن کو تباہ کرنے کیلیے بھیانک کھیل کھیل رہے ہیں۔پاکستان میں سوشل میڈیا کے ذریعے توہین و تکفیر کا بازار گرم کر کے گلی کوچوں میں فتنہ پھیلانے کی منظم منصوبہ بندی کو عملی شکل دی جا رہی ہے۔پاکستان میں شیعہ نسل کشی کا دوبارہ آغاز تشویشناک ہے۔ریاستی اداروں کی طرف سے خاموشی ان ملک دشمن عناصر کے لیے تقویت کا باعث بنے گی۔

انہوں نے کہا ایک طرف ملت تشیع کے خلاف انتقامی کارروائیاں عروج پر ہیں  اور بے گناہ عزاداروں پر مقدمات قائم کیے جا رہے ہیں جب کہ دوسری طرف کالعدم جماعتیں اپنے غنڈوں کے ہمراہ ہماری عبادت گاہوں پر حملہ اور تکفیر کے نعرے لگاتے پھر رہے ہیں۔انہیں کوئی روکنے والا نہیں۔قومی سلامتی کے اداروں کی یہ بے بسی سمجھ سے بالاتر ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم اتحاد بین المسلمین کے داعی اور مذہبی ہم آہنگی کے خواہاں ہیں لیکن یہ تب ہی ممکن ہے جب باہمی احترام قائم رہے۔انہوں نے مطالبہ کیا ہے کہ مسجد وامام بارگاہ پر حملہ کرنے والوں کو انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) علماءوذاکرین کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئےمجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ راجہ ناصرعباس جعفری نے کہاکہ مکتب تشیع کی اجتماعی جدوجہد اور مبارزات کی تاریخ میں آج کا دن ایک اہم سنگ میل کی حیثیت رکھتا ہے اور بہت اہمیت کاحامل ہے۔قوموں کی تاریخ میں نشیب وفراز آتے رہتے ہیں، ایسا مکتب جو ظلم ستیز ہو ، طول تاریخ میں ہم نے مشکلات کا دور گزارا ہے۔آج سوشل میڈیا کا دور ہے، ہمیں علمی و تحقیقی انداز میں اپنا نظریہ بیان کرنا چاہیے۔میڈیا پر توحیدِ شیعہ، مناجات محمد و آل محمدؐ، دعائیں و اخلاقِ آل محمد ،ؐمکتب تشیع کے اصول و فروع کوتقابلی انداز میں اچھی حکمت و تدبیر کے ساتھ بغیر کسی کی اہانت کے بیان کرناچاہیے۔

انہوں نے کہا کہ فتنہ گر اس وقت وطن عزیز میں اپنی سازشوں میں ہیں ، انہیں پہلے کی طرح کی ناکامی کا منہ دیکھنا پڑے گا۔یہ اجتماع اس بات کی دلیل ہے کہ ان قوتوں نے شکست کھانی ہے ، ناکامی ان کا مقدر ہے۔ لیکن شرط یہ ہے کہ ہم منظم انداز میں آگے بڑھیں اور اپنے امور کو ترجیحی بنیادوں پر استوار کریں۔ ہمیں پہلے اپنا ہاؤس ان آرڈر کرنا ہوگا، علماء، خطباء اور واعظین کے ساتھ موثررابطے رکھنے ہوں کے ان کی اصلاح کرنی ہوگی ۔ اربعین حسینی ؑ کو پرشکوہ انداز میں منعقد کرنا چاہئے، یہ دن مکتب تشیع کی قدرت اورطاقت کی تجلی قرار پانا چاہئے۔ ہمیں متعدل اہل سنت علماء کےساتھ اپنے رابطوں کو منظم کرنا ہوگا، انہیں عالمی سازشوں سے آگاہ کرنا ہوگا۔ اتحاد ووحدت کے عنوان سے مشترکہ اجتماعات منعقد کرنا ہوں گے ،ربیع الاول میں جشن میلاد النبی ؐ کو شیعہ سنی کو مل کر منانا چاہیے۔

علامہ راجہ ناصرعباس نے کہا کہ دشمن بیدار ہے ، ایک معمولی ذاکر کی بات کو اتنی اہمیت دی گئی اور ہمارے فقہاء کے مقدسات اہل سنت کے احترام کے فتاویٰ کو یکسرنظر اندازکردیا گیا، ایک دو افراد کی غلطی کے سبب پوری قوم کو زیر سوال نہیں لایا جاسکتا ہم آپ کے مسلمہ مقدسات کی توہین نہیں کرتے،الحمداللہ شیعہ فقہاء کا فتوی ہے کہ مقدسات کی توہین جائز نہیں ہے،لیکن اس سے آگے نہ بڑھو ڈو مورکا مطالبہ قبول نہیں، دباؤ کے ذریعہ، چند مظاہرےکر کے تم کچھ حاصل نہیں کرسکو گے اس سے فقط فتنہ و فساد ہوگا، ملک کو نقصان پہنچائو گے، لہٰذا ہمارے فقہاء و بزرگان دین نے جو خطوط اور لائن ہمارے لیے مقرر کی ہے ہم اسی میں رہتے ہوئے آگے بڑھیں گے، اہل سنت ہمارے بھائی ہیں ہم مل کر رہیں گے،آپ کے جذبات کا احساس کرتے ہیں، آپ کا خیال رکھتے ہیں لہٰذا آپ بھی ہمارے جذبات و احساسات کا خیال رکھیں ، آپ بھی اہل بیت علیہم السلام کے دشمنوں کے بارے اس طرح کی بات نہ کریں کہ ان کو آپ صحابی بنا دیں اور پھر کہیں کہ ان کا احترام آپ پر واجب ہوگیا ہے، یہ ہرگز نہیں ہوسکتا۔

وحدت نیوز(ملتان) مجلس وحدت مسلمین جنوبی پنجاب کے سیکرٹری جنرل علامہ اقتدار حسین نقوی نے کہا ہے کہ پاکستان جسے شیعہ سنی نے مل کر بنایا تھا اور جس کی آبیاری میں لاکھوں پاک فوج، ایف سی، پولیس اور سویلین کا خون شامل ہے، آج ایک بار پھر ملک میں انتشار پیدا کیا جارہا ہے جس کا ملک کسی بھی طرح متحمل نہیں ہے، پاکستانی عوام اہلیبیت اور صحابہ کرام سے محبت اور عقیدت رکھتی ہے لیکن بعض شرپسند تکفیری عناصر اس ملک میں امن کو تباہ کرنے پر تل گئے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار اُنہوں نے ملتان میں ایم ڈبلیو ایم جنوبی پنجاب کی سپریم کونسل کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں جنوبی پنجاب کے تمام اضلاع کے سیکرٹریز اور صوبائی کابینہ کے اراکین موجود تھے۔

علامہ اقتدار نقوی نے کہا کہ گزشتہ روز کراچی میں تکفیری عناصر کی جانب سے امام بارگاہ اور مسجد کی بے حرمتی کے سا تھ ساتھ غلیظ زبان استعمال کی گئی جو کہ قانون نافذ کرنے والی ایجنسیوں کے لیے کھلا چیلنج تھا لیکن سیکیورٹی فورسز کی موجودگی میں امام بارگاہ اور مسجد کی توہین اور شیعہ کی تکفیر کے نعرے لگائے گئے جو کہ نیشنل ایکشن پلان اور شہداء کے خون کے ساتھ غداری ہے، کراچی میں ہونے والے دلخراش واقعات سیکیورٹی اداروں کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہیں، حکومت سندھ اور وفاقی حکومت کے ساتھ قانون نافذ کرنے والے اس کا نوٹس لیں وگرنہ ملک میں انتشار کی ایک نئی لہر پیدا ہوگی۔

 علامہ اقتدار نقوی نے کہا کہ کراچی میں کالعدم جماعت کی جانب سے ریلی کا نکلنا اور کالعدم جماعت کے رہنمائوں کا خطاب نیشنل ایکشن پلان کے منہ پر زور دار طمانچہ ہے، ہم سمجھتے ہیں یہ پاکستان جس کی آبیاری میں پاک فوج کے شہداء اور سیکیورٹی فورسز کے جوانوں کا خون شامل ہے کے ساتھ سنگین غداری ہے، کاش اس ملک میں نیشنل ایکشن پلان اور پیغام پاکستان پر من و عن عمل کرایا جاتا، اُنہوں نے کراچی میں امام بارگاہ اور مسجد کی بے حرمتی اور شیعہ تکفیر کے نعروں پر آرمی چیف ، وزیراعظم، چیف جسٹس اور سندھ حکومت سے سخت کاروائی کا مطالبہ کیا۔ اُنہوں نے کہا کہ اس طرح کے واقعات ہمارے ملک کے لیے نقصان دہ ہیں ۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) بزرگ علمائے شیعہ کی جانب سے جامع امام الصادق ؑ جی نائن اسلام آباد میں منعقدہ علماء و ذاکرین کانفرنس مشترکہ اعلامیہ کے ساتھ اختتام پذیر ہوگئی، اس کانفرنس میں استادالعلماءمفسر قرآن علامہ شیخ محسن نجفی حفظہ اللہ ،سربراہ مجلس وحدت مسلمین پاکستان علامہ راجہ ناصرعباس جعفری حفظہ اللہ،تحریک اسلامی پاکستان کے سربراہ علامہ سید ساجد علی نقوی حفظہ اللہ ، علامہ حافظ ریاض نجفی حفظہ اللہ ، علامہ شیخ حسن جعفری، علامہ محمد امین شہیدی، علامہ سید تقی شاہ سمیت قومی تنظیمات آئی ایس او ، جسے ایس او ،آئی او کے مرکزی رہنما ، بزرگ علمائےکرام و ذاکرین نےشرکت کی۔

علماء و ذاکرین کانفرنس میں متفقہ اعلان کردہ قرارداد کچھ یوں ہے:

1) آج کا یہ عظیم الشان اجتماع فرانس سے شائع ہونےوالے چارلی ہیبڈو میگزین میں پیغمبر اسلام حضرت محمد صلی اللہ علیہ والہ وسلم کی شان اقدس کےحوالےسے شائع کردہ گستاخانہ خاکوں اور سویڈن میں قرآن مجید کی بے حرمتی کے مذموم واقعے کی پرزور مذمت کرتاہے۔

2) یہ اجتماع عرب امارات، بحرین اوردیگر عرب ممالک کے اسرائیل کےساتھ تعلقات کی بحالی کو فلسطینی موقف سے کھلا انحراف سمجھتے ہوئے اس صورتحال پر اپنے غم و غصہ کا اظہارکرتاہے۔

3) علماءوذاکرین کانفرنس کا یہ عظیم الشان اجتماع مقبوضہ کشمیر کے مسلمان بھائیوں سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے ان پر توڑے جانے والے بھارتی مظالم کی شدید مذمت کرتا ہے۔

4) پاکستان کا آئین اپنے تمام شہریوں کو اظہار رائے کے یکساں مواقع فراہم کرتا ہے اور ملت تشیع اس کی دفاعی و نظریاتی سرحدوں کی محافظ ہے ۔اس ملت نے طول تاریخ میں ہزاروں قیمتی جانوں کی قربانی دے کر وطن عزیز کو عدم استحکام کا شکار ہونے سے بچایا ہے اور کسی بھی صورت شرپسند عناصر کو فرقہ واریت پھیلانے کا موقع نہیں دیا۔اور نہ ہی آئندہ اس قسم کی کسی کوشش کو کامیاب ہونے دیاجائےگا۔

5) یہ عظیم الشان اجتماع مطالبہ کرتا ہے کہ ملک بھر میں مجالس عزا اور روایتی جلوسوں کے خلاف جو ایف آئی آرز درج کی گئی ہیں ان کو فی الفور واپس لیا جائے اوریہ اجتماع یہ بھی واضح کرتا ہے کہ عزاداری سید الشہداء کے راستے میں آنے والی کسی بھی رکاوٹ کو ہرگز قبول نہیں کیا جائے گا لہٰذا ایسے کسی بھی اقدام سے گریز کیا جائے ورنہ حالات کی تما م ترذمہ داری ارباب اختیار پر ہوگی۔

6) شیعہ قوم کےقائدین و بزرگان پوری امت کو ہمیشہ اتحاد ووحدت کی دعوت دی ہے اور فرقہ واریت پھیلانے والے تمام عناصر کی ہمیشہ مذمت کی ہے۔

7) شیعہ قوم کے قائدین و بزرگان ایک غیر ذمہ دار شخص کی طرف سےہونےوالی گستاخی سےبیزاری کااعلان کرتےہیں اور ایک فرد کی دریدہ دہنی کوجوازبناکرشیعہ قوم کےخلاف اسی نوعیت کی دریدہ دہنی کو غیر شرعی اورسنگین جرم قراردیتےہیں۔

8) یہ اجتماع پنجاب اسمبلی کےاجلاس میں پیش کردہ تحفظ بنیاد اسلام بل کو متنازع قرار دیتے ہوئے یکسر مسترد کرتا ہے جبکہ اس حوالے سے پہلے سےہی قانون موجود ہے لہٰذا تحفظ بنیاد اسلام جیسے متنازعہ بل کو فی الفور واپس لیاجائے۔

وحدت نیوز(کوئٹہ) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ترجمان علامہ مقصود علی ڈومکی نے کہا ہے کہ غاصب اسرائیل کو تسلیم کر کے متحدہ عرب امارات اور بحرین نے امت مسلمہ اور فلسطين سے خیانت کی ہے جبکہ آل سعود اور نام نہاد امام کعبہ بھی غاصب اسرائيل کے تحفظ اور بقا کے لئے قبلہ اول اور مسجد اقصی کا سودا کر چکے ہیں۔ امت مسلمہ عرب حکمرانوں کی خیانت پر چپ کا روزہ توڑدے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان امت مسلمہ کا اہم ملک ہے پاکستانی عوام نے ہمیشہ قبلہ اول بیت المقدس اور فلسطين کی جدوجہد آزادی کی حمایت کی ہے۔ لہذا سامراجی قوتیں اور ان کے خائن اتحادی پاکستان میں فرقہ واریت کو ہوا دے رہے ہیں۔ تاکہ امت مسلمہ خائنوں کا تعاقب کرنے کی بجائے آپس میں الجھی رہے۔

انہوں نے کہا کہ قائد کے شہر کراچی سمیت ملک بھر میں کالعدم دہشت گرد اور تکفیری گروہ بیرونی امداد کے نتیجے میں ایک دفعہ پھر سرگرم ہو چکے ہیں اور انہوں نےبانی پاکستان حضرت قائد اعظم محمد علی جناحؒ کی یوم وفات پر ان کے مسلک کو کافر کہہ کر توہین کی ریاستی ادارے اس مجرمانہ عمل کا فوری نوٹس لیں۔ پاکستان دشمن قوتیں ایک دفعہ پھر وطن عزیز کو فرقہ واریت اور دھشت گردی کی آگ میں جلانا چاہتی ہیں۔ محب وطن قوتیں متحد ہوکر دشمن کے عزائم خاک میں ملا دیں۔

وحدت نیوز (لاہور) شیعہ وحدت کونسل پنجاب کے زیر اہتمام قومی مرکز شاہ جمال لاہور میں ایک اہم مشاورتی اجلاس کا انعقاد کیا گیا، جس کی صدارت مجلسِ وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری سیاسیات سید اسد عباس نقوی و سیکرٹری جنرل مجلسِ وحدت مسلمین پنجاب علامہ عبد الخالق اسدی نے کی،اجلاس میں نامور علما و ذاکرین، مذہبی جماعتوں کے رہنما، بانیان مجالس و جلوس، متولیان امام بارگاہ، ماتمی انجمنوں کے سالار اور ملت تشیع کے اکابرین شریک ہوئے۔اجلاس میں عزاداری کو درپیش مسائل، بڑھتی ہوئی فرقہ واریت اور عالم اسلام کے خلاف استکباری سازشوں پر گفت و شنید کی گئی۔

اجلاس میں شرکا نے دس نکاتی اعلامیہ کی بھی مشترکہ طور پرمنظوری دی۔ اجلاس میں کہا گیا کہ آج کا یہ اجتماع فرانس اور سویڈن میں قرآن پاک اور رسول اکرم صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کی توہین پر شدید رنج ، غم کا اظہار کرتا ہے اور ان واقعات کی مذمت کرتا ہے۔ نیز عالمی طاقتوں کو مخاطب کرتے ہوئے یہ پیغام دیتا ہے کہ اسطرح کے واقعات مسلمانوں کے لئے نا قابل برداشت ہیں ۔کشمیر میں بھارتی دہشت گردی اور فلسطین میں اسرائیل کی دہشتگردی کی بھرپور مذمت کرتا ہے اور عرب امارات و دیگرعرب ممالک کی طرف سے اسرائیل کو تسلیم کئے جانے کو فلسطینیوں کی جدوجہد اور عالم اسلام سے غداری سے تعبیر کرتا ہے ۔ ملک میں بڑھتی ہوئی فرقہ واریت پرانتہائی تشویش کا اظہارکرتا ہےاورسمجھتا ہے کہ عالمی استعماری قوتیں پاکستان کوغیرمستحکم کرنے کے لئے اپنے آلہ کاروں کے ذریعہ سے فرقہ وارایت کے پھیلاؤ کا گھناونا کھیل کھیل رہی ہیں ۔ پاکستان ایک ایسا اسلامی ملک ہے جس میں مختلف اسلامی مسالک آباد ہیں۔ یہاں کسی بھی مسلک کی مذہبی آزادی کو چھیننے کی کوشش کرنا دراصل پاکستان کی بنیاد کو کھو کھلا کرنے کی کوشش کے مترادف ہے '' اپنا عقیدہ چھوڑو نہیں اور دوسرے کا عقیدہ چھیڑو نہیں ''  پرعمل پیرا ہوتے ہوئے پاکستان کی نظریاتی و جغرافیائی سرحدوں کے تحفظ کو یقینی بنایا جا ئے۔ پاکستان کی دوسری بڑی اکثریت اہل تشیع کو دیوارسے لگانے اور علماء ،ذاکرین ، عزاداران، بانیان مجالس پر بے بنیاد مقدمات قائم کرنے کی بھی مذمت کرتے ہیں۔

شرکائے اجلاس ذاکرین عظام پرجعلی ایف آئی آرکے اندراج پرشدید احتجاج کرتے ہیں اوراسے پولیس گردی کی بد ترین مثال قرار دیتے ہے۔ حکومت پاکستان ، صوبائی حکومت، آرمی چیف اور چیف جسٹس آف پاکستان سے مطالبہ ہے کہ وہ ذاکرین امام حسین علیہ السلام کی توہین کا فوری نوٹس لیں اور ذمہ داران افسران کے خلاف تا دیبی کاروائی کریں ۔  ان نام نہاد ، مذہبی اسکالرز ، کو فوری نظر بند / گرفتار کرنے کا مطالبہ کرتے ہیں جو حقائق کو مسخ کر کے عوام کو اشتعال  میں لانے کی کوشش کر رہے ہیں ۔ حکومت پاکستان اورسیکورٹی اداروں سے مطالبہ کرتے ہیں کہ سوشل میڈیا پر فعال تکفیری گروہوں کے خلاف فوری کاروائی کی جائے اورانہیں قانون کے کٹہرے میں لا کھڑا کیا جائے ۔ اس عزم کا اظہار کرتے ہیں کہ ملت جعفریہ اپنے مسلمہ عقائد سے ایک انچ اور ایک لمحہ کے لئے بھی کسی طرح کا سمجھوتا نہیں کرے گی۔  اہل سنت بھائی ہماری جان ہیں اور ہم اہل سنت کے مسلمات کی توہین کو جائز نہیں سمجھتے۔

وحدت نیوز(کراچی)مجلس وحدت مسلمین ضلع غربی حیدری یونٹ کراچی کے ڈپٹی سیکریٹری جنرل محمد ظل حسنین ابن خادم حسین حرکت قلب بندہوجانے کے باعث اچانک انتقال کرگئے، ایم ڈبلیوایم کے انتہائی فعال اور محنتی رکن محمد ظل حسنین کی اچانک رحلت پر مجلس وحدت مسلمین کراچی ڈویژن کے سیکریٹری جنرل علامہ محمد صادق جعفری، ضلعی غربی کے سیکریٹری جنرل کلیم حیدر اور دیگر رہنماؤں نے دلی رنج وغم اور افسوس کا اظہا رکیاہے۔

رہنماؤں نے کہاکہ محمد ظل حسنین مرحوم انتہائی جفاکش ، ملنساراور فعال تنظیمی ساتھی تھے، ہمیشہ دکھی انسانیت کی خدمت میں پیش پیش رہتے تھے، ان کی ناگہانی وفات پر ان کے تمام والدین سمیت تمام پسماندگان کے غم میں برابرکے شریک ہیں، خدا وند متعال سے دعا گو ہیںکہ وہ مرحوم کوجوارآئمہ معصومین ؑ میں محشور فرمائے اور تمام لواحقین کو صبر جمیل عنایت فرمائے ۔

وحدت نیوز(سکردو) مجلس وحدت مسلمین پاکستان گلگت بلتستان کے سیکرٹری جنرل آغا علی رضوی اور پاکستان تحریک انصاف بلتستان ڈویژن کے صدر وزیرولایت علی کی آج اہم ملاقات وزیر ہاؤس سکردو میں ہوئی۔ اس ملاقات میں پی ٹی آئی کے سینئر رہنما یوسف نمبردار اور ایم ڈبلیو ایم کے سینئیر رہنما کاظم میثم موجود تھے۔

ملاقات میں گلگت بلتستان کی سیاسی و علاقائی صورتحال پر گفت و شنید ہوئی۔ دونوں جماعتوں کے رہنماوں نے بروقت اور شفاف الیکشن کو ناگزیر قرار دیا۔ اس موقع پر سیاسی جدوجہد کے ذریعے گلگت بلتستان کی تعمیر و ترقی کے لیے خطے کی سیاسی و مذہبی جماعتوں کو کردار ادا کرنا وقت کی ضرورت قرار دیا۔

 اس موقع پر پاکستان تحریک انصاف کے رہنما نے آغا علی رضوی کی عوامی حقوق کے لیے جاری جدوجہد کو سراہا اور اس بات کی یقین دہانی کرائی کہ تحریک انصاف گلگت بلتستان کے عوامی حقوق کے حصول کے لیے جدوجہد جاری رکھے گی۔ میرٹ کی بالادستی اور کرپشن کا خاتمہ ہماری جماعت کی بنیادی ترجیحات میں سے ہیں۔

 آغا علی رضوی نے کہا کہ گلگت بلتستان کے  حقوق کے حصول اور خطے کی تعمیر و ترقی کے لیے تمام سیاسی جماعتوں کو کردار ادا کرنا ہوگا۔ گلگت بلتستان کے عوام میں روز افزوں بڑھتا ہوا احساس محرومی کا کسی طور خطہ متحمل نہیں ہے۔تمام سٹیک ہولڈر کو عوامی حقوق خطے کی تعمیر و ترقی کے لیے بھرپور کردار ادا کرنے کی ضرورت ہے۔ ملاقات میں خطے کی سیاسی صورتحال پر بھی سیر حاصل گفتگو ہوئی۔

وحدت نیوز (لاہور) بانی پاکستان قائداعظم محمد علی جناح کے یوم وفات کے موقع پر رکن پنجاب اسمبلی و مرکزی سیکرٹری جنرل ایم ڈبلیوایم شعبہ خواتین سیدہ زھرا نقوی نے اپنے پیغام میں کہا محمد علی جناح جیسے عظیم سیاستدان ، ممتاز قانون دان اور فقید المثال رہنما نے منتشر قوم کو ایک پرچم تلے اکھٹا کرکے وہ تاریخی کارنامہ انجام دیا جس کی مثال نہیں ملتی۔

 انھوں نے کہا کہ ایک ایسی بکھری ہوئ شکستہ قوم کوجو مدتوں سے اپنا الگ تشخص کھو چکی تھی یکجا کرنا آسان کام نہ تھا لیکن قائداعظم محمد علی جناح کی بابصیرت قیادت نے ناممکن کو ممکن کر دکھایا۔ ان کا کہنا تھا کہ بانی پاکستان مخلص، انتھک کام کرنے والے تھے، بظاہر فولادی مگر درد مند دل رکھنے والے ، قول کے سچے، بات کے پکے اور اصولوں کے پابند تھے ان کا دل برصغیر کےمسلمانوں کے ساتھ دھڑکتا تھا۔

 سیدہ زھرا نقوی کا مزید کہنا تھا کہ قائد اعظم ملک پاکستان کو ایک آزاد فلاحی و اسلامی مملکت بنانا چاہتے تھے ایک ایسی خود مختار ریاست جسکے اختیارات میں سامراجی قوتیں مداخلت نہ کریں۔ سیدہ زھرا نقوی نے کہا کہ ہم اپنے عظیم رھبر و رہنما بانی پاکستان محمد علی جناح کی روح سے تجدید عہد کرتے ہیں کہ پاکستان کی سلامتی و خود مختاری اور اسکے نظریاتی تحفظ کی خاطر تا دم مرگ جدوجہد کرتے رہیں گے اور اپنے عظیم قائد کے نقش قدم پر چلتے ہوۓ کبھی کسی سامراجی و طاغوتی طاقت کے آگے نہیں جھکیں گے ۔

Page 4 of 1054

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree