The Latest

وحدت نیوز(فیصل آباد) سانحہ مچھ میں ہونے والے ظلم و بربریت اور شھداء کے لواحقین کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لئے فیصل آباد میں احتجاجی مظاہرہ کیا گیا جس میں مجلس وحدت مسلمین دیگر ملی تنظیموں نے شرکت کی اور ریلی امین پور بازار سے ہوتی ہوئی گھنٹہ گھر پھر گھنٹہ گھر سے کچہری بازار تک ریلی نکالی گئی ریلی میں مردوں، عورتوں اور بچوں کی کثیر تعداد میں شرکت کی شرکاء ریلی نے شدید مزمت کی اور نعرے بازی کی۔ ریلی میں مرکزی سیکریٹری فلاح و بہبود ایم ڈبلیو ایم شعبہ خواتین محترم فرحانہ گلزیب نے میڈیا سے گفتگو میں شدید الفاظ میں مزمت کرتے ہوئے حکومت وقت سے مطالبہ کیا کہ قاتلوں کو فوراً گرفتار کر کے کڑی سے کڑی سزا دی جائے ۔

انھوں نے کہا حکومت اگر مجرموں کو سزا دیتی تو آج پھر سے یہ واقعات  پیش نہ آتے ان کا کہنا تھا کہ اگر حکومت نے شھداء کے لواحقین کے مطالبات نہ مانے تو ملک کے تمام شہروں میں دھرنے دیا جاے گا۔ انھوں نے مزید کہا کہ ہم کوئٹہ کی ماؤں بہنوں کو پیغام دینا چاہتے ہیں کہ اس مشکل اور مصیبت کی گھڑی میں ہم آپ کے ساتھ ہیں ۔

وحدت نیوز(سکردو) بلوچستان کے علاقہ مچھ میں شیعہ ہزارہ کارکنوں کا بہیمانہ قتل کیخلاف سکردو میں مجلس وحدت مسلمین اور آئی ایس او کے زیر اہتمام احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ نماز ظہرین کے بعد حسینی چوک سے شروع ہونے والے احتجاجی جلوس نے یادگار شہدا پہنچنے پر احتجاجی جلسے کی شکل اختیار کی۔ احتجاجی مظاہرے میں سینکڑوں لوگ شریک ہوئے، جس سے مجلس وحدت مسلمین آئی ایس او کے رہنماؤں نے خطاب کئے۔

 احتجاجی جلسے اور جلسے کی قیادت کرنے والے ایم ڈبلیو ایم کے رہنماؤں نے شیعہ نسل کشی کیخلاف گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سیکیورٹی کی ناکامی اور حکومتی غفلت پر یہ بہت بڑا سوالیہ نشان ہے۔ ضلعی سکریٹری جنرل ایم ڈبلیو ایم سکردو شیخ فدا علی ذیشان ، صوبائی رہنما شیخ علی محمد کریمی ، رہنما ایم ڈبلیو ایم آغا مصطفیٰ شاہ ، آئی ایس او کے سابق صدور سید اطہر موسوی اور وقار روش نے وفاقی حکومت اور حکومت بلوچستان پر شدید تنقید کرتے ہوئے فی الفور قاتلوں کو گرفتار کرکے کیفر کردار تک پہنچانے کا مطالبہ کیا۔

شیخ فدا علی ذیشان نے اس موقع پر کہا کہ ہم مرکزی قیادت کے حکم منتظر ہیں، حکومت اور سیکیورٹی ادارے اپنی ذمہداری ادا نہیں کرتی تو ہم گلگت بلتستان سمیت پورے ملک کو جام کرنے پر مجبور ہوں گے۔ شیخ علی محمد کریمی نے کہا کہ پرامن شہریوں کو شیڈول فور میں ڈالا جاتا ہے مگر لوگوں کے گلے کاٹنے والوں کے سربراہ دندناتے پھر رہے ہیں، یہ حکومت کے منہ پر طمانچہ کے مترادف ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریاست مدینہ کے دعویداروں کی کارکردگی پر عوام حیران ہیں کہ انکے دعوے کچھ کارکردگی کچھ اور نظر آتی ہے مگر پھر بھی ملک و قوم کیلئے کوئی لائحہ عمل نظر نہیں آتا۔

مقررین نے شرکاء جلسہ سے خطاب میں کہا کہ ہماری جماعت وفاقی حکمران جماعت کی اتحادی ضرور ہے مگر ہم کسی بھی نا انصافی اور قتل و غارت گری پر حکومتی نا اہلی پر خاموش تماشائی بن جر نہیں رہ سکتے۔ ہمیں معلوم ہے کہ ظلم و نا انصافی ہر ہمارا وظیفہ کیا ہے۔

 رہنماؤں نے مزید کہا کہ جو لوگ اپنے تئیں کچھ کرنا تو دور کی بات احتجاج تک کرنے کے اہل نہیں وہ سوشل میڈیا پر عوام کیلئے متحرک جماعتوں پر تنقید کرکے اپنا قد کاٹھ بڑھانے اور واہ واہ لینے کی کوشش کرتے ہیں۔ ہم ہر نا انصافی کیخلاف عوام کی ترجمانی کرتے رہے ہیں جن سے عوام بخوبی واقف ہیں، ایسے میں کسی خودساختہ رہنما کے اعتراض کی کوئی اہمیت نہیں۔

مقررین نے احتجاجی مظاہرے کے دوران مقامی مسائل پر بھی انتظامیہ کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے لاوڈشیدنگ کے خاتمے کیلیے اقدامات کرنے کا مطالبہ کیا، بلتستان یونیورسٹی میں جاری بد انتظامی اور خلاف میرٹ تعیناتیوں کی مزمت کرتے ہوئے اہل اور دیانتدار افراد کو انتظامی اور فیکلٹی پوزیشن دینے کا مطالبہ کیا۔

 وائس چانسلر کو مخاطب ہوتے ہوئے اس دوران رہنماؤں کا کہنا تھا کہ ایک نا اہل کو رجسٹرار تعین کروانے کیلئے تین مرتبہ اہلیت کے معیار میں رد و بدل کیا گیا جس سے ثابت ہوا کہ وی سی من مانی کرکے قوانین کی دھجیاں اڑاتے ہوئے ادارے کو ناکام بنانا چاہتے ہیں جسے ہم کسی صورت برداشت نہیں کرینگے۔ گورنر گلگت بلتستان کی بلتستان یونیورسٹی ایشو پر کردار ادا نہ کرنے پر بھرپور مذمت کی گئی۔

وحدت نیوز(کشمیر) مجلس وحدت مسلمین آزادجموں وکشمیر کے شعبہ سیاسیات نے پولٹیکل سیل تشکیل دے دیا۔ پولٹیکل سیل کا پہلا باضابطہ اجلاس علامہ سید تصور حسین نقوی الجوادی سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین آزادجموں و کشمیر کی زیر صدارت وحدت ہاؤس مظفرآباد میں منعقد ہوا۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ مجلس وحدت مسلمین آمدہ انتخابات میں اقتدار نہیں اقدار کے ماٹو کے تحت انتخابات میں بھرپور حصہ لے گی اس سلسلے میں آزادکشمیر کے تمام حلقوں میں رابطہ مہم تیز کرنے کے عزم کا اعادہ کیا گیا۔

 اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے سیکرٹری جنرل نے کہا کہ ہم سانحہ مچھ کے شہداء کے لواحقین سے اظہار ہمدردی کرتے ہیں اور اس سانحہ کی پرزور مزمت کرتے ہیں اور حکومت پاکستان اور ریاستی اداروں سے ملزمان کی فوری گرفتاری کا مطالبہ کرتے ہیں۔

 اجلاس میں سید ذوالفقارحیدرنقوی سیکرٹری سیاسیات, خالد محمود عباسی, سید رضی عباس سبزواری, سید غفران علی کاظمی, سید وقار علی کاظمی کے علاوہ سید فدا حسین نقوی سیکرٹری تنظیم سازی اور سید عامر علی نقوی سیکرٹری روابط شریک ہوئے۔

وحدت نیوز(کوئٹہ)مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ترجمان مقصود علی ڈومکی نے سانحہ مچ میں گیارہ بے گناہ انسانوں کے مظلومانہ قتل کے خلاف ایم ڈبلیو ایم کے زیر اہتمام منعقدہ احتجاجی مظاہرے میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہزارہ شیعہ نسل کشی گذشتہ دو دہائیوں سے جاری ہے مگر اس کے باوجود آج بھی بلوچستان کی سرزمین پر داعشی دہشت گرد دندناتے پھر رہے ہیں جن کے خلاف فی الفور فوجی آپریشن کی ضرورت ہے۔ پاک فوج نے جس طرح آپریشن ضرب عضب اور آپریشن ردالفساد کے عنوان سے دہشت گردوں کے خلاف فیصلہ کن آپریشن کا آغاز کیا تھا اس آپریشن کو آخری دہشت گرد کے خاتمے تک جاری رہنا چاہیے۔

 انہوں نے کہا کہ ہم کوئٹہ کے مظلوم ہزارہ شیعہ وارثان شہداء کو یہ پیغام دینا چاہتے ہیں کہ آپ اکیلے نہیں ہیں اس ملک کے کروڑوں عوام آپ کے درد کو اپنا گھر سمجھتے ہیں آپ کی مظلومیت کا درد محسوس کرتے ہیں لہٰذا وہ ہر قدم پر آپ کا ساتھ دینے کے لئے آمادہ و تیار ہیں۔

انہوں نے کہا کہ رات کی تاریکی میں بزدل دہشتگردوں نے یزید اور شمر کا کردار ادا کرتے ہوئے بے گناہ اور نہتے انسانوں پر حملہ کیا اور انہیں بڑی بے دردی کے ساتھ ہاتھ باندھ کر اور آنکھوں پر پٹیاں باندھ کر جانوروں کی طرح ذبح کیا گیا۔ بین الاقوامی بد نام زمانہ دہشت گرد تنظیم داعش نے اس سانحے کی ذمہ داری قبول کر لی جو کہ حکومت اور ریاستی اداروں کے لیے لمحہ فکریہ ہے یہ بات واضح ہوگئی کہ ملک کے طول و عرض میں آج بھی بد نام زمانہ دہشت گرد تنظیم داعش کے حامی اور سپورٹرز موجود ہیں جو سپاہ صحابہ لشکر جھنگوی طالبان اور کالعدم اہلسنت و الجماعت کی صورت میں داعش کے سپوٹرز ہیں لہذا ان کالعدم دہشت گرد تنظیموں کے خلاف آپریشن کیا جائے تاکہ ملک سے دہشتگردی کا خاتمہ ہو۔ انہوں نے کہا کہ بلوچستان سمیت ملک بھر سے داعش کے ٹریننگ کیمپس کا فوری خاتمہ ضروری ہے۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین کے زیر اہتمام سردار شہید قاسم سلیمانی، ابو مہدی مہندس اور رفقاء کی پہلی برسی کے سلسے میں اسلام آباد کے مقامی ہوٹل میں شہید قدس گول میز کانفرنس کا انعقاد کیا گیا جس میں ملک کی نامور مذہبی و سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں نے شرکت کی۔ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ کوئٹہ میں غریب محنت کشوں کو بےدردی سے شہید کیا گیا۔ مقتولین کے ورثا گزشتہ تین روز سے جنازے رکھ کر شدید سردی میں وزیر اعظم کی آمد کے منتظر ہیں۔ انہیں ان کی غربت کے باعث نظر انداز کیا جا رہا ہے۔ ہم ایسا نہیں ہونے دیں گے، عوام کی جان و مال کا تحفظ حکمرانوں کی ذمہ داری ہے۔ اگر وزیر اعظم وہاں نہ گئے تو پورے پاکستان میں ملت تشیع مظلوموں کی حمایت میں اپنے گھروں سے باہر نکل آئے گی۔ ہم شہدائے کوئٹہ کے لواحقین کے ساتھ کھڑے ہیں۔

سربراہ ایم ڈبلیو ایم نے کہا کہ اس خطے میں بدامنی پھیلانے کے لیے امریکہ اور اس کے حواری خطرناک کھیل شروع کر رکھا ہے۔ پاکستان تاریخ کے نازک ترین دور سے گزر رہا ہے۔ اسرائیل کو گریٹر اور ایشیا کو عدم استحکام کا شکار کر کے امریکہ پوری دنیا پر قابض ہونا چاہتا تھا۔ امت مسلمہ کی تقسیم کے لیے کروڑوں ڈالڑ خرچ کیے جا رہے ہیں۔ یہود و نصاریٰ کے اہداف کو ناکام بنانے کے لیے قاسم سلیمانی نے بہترین حکمت عملی اپنائی۔ انہوں نے لبنان، شام  اور یمن کو ہتھیاروں تیاری سکھائی۔ انہوں نے ہمیشہ صف اول میں رہ کر مجاہدانہ کردار ادا کیا۔ قاسم سلیمانی کی مزاحمت کے نتیجے میں گریٹر کا خواب دیکھنے والا اسرائیل سکڑنا شروع ہوگیا۔ قاسم سلیمانی کے تربیت یافتہ آج مزاحمتی تحریکوں کی رہنمائی کر رہے ہیں۔ ایشیا اور امت مسلمہ کو ٹوٹنے سے بچانے میں قاسم سلمانی کا کلیدی کردار تھا۔ وہ انسانیت کے قدر دان تھے۔ انہوں نے دوٹوک انداز میں کہا تھا کہ دشمن پاکستان میں خانہ جنگی چاہتا ہے۔ انہوں نے امت مسلمہ کو ان کے حقیقی دوست دشمن کی شناخت کرائی۔ کم ظرف دشمنوں نے ان پر چھپ کر وار کیا۔

سربراہ ایم ڈبلیو ایم نے کہا کہ قاسم سلمانی کا قتل ریاستی دہشت گردی ہے جس کی پوری دنیا کو مذمت کرنی چاہیئے تھی۔ قاسم سلیمانی کے بعد کھیل ختم نہیں ہوا بلکہ اسلام دشمنوں اور غاصبین کے خلاف مسلمانوں کے غم و غصہ میں اضافہ ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کو اسرائیل تسلیم نہیں کرنے دیں گے۔ پاکستان امت مسلمہ کا دل اور اسلام کا قلعہ ہے اسے اپنے حصے کا کردار ادا کرنا ہوگا۔ امریکہ کی کمزوری اسرائیل کی تباہی ثابت ہو گی۔ ہم نے ظالمین عالم کو تباہ ہوتے دیکھنا ہے۔

وحدت نیوز(اسلام آباد)مجلس وحدت مسلمین کے زیر اہتمام سردار شہید قاسم سلیمانی، ابومہدی مہندس اور رفقاء کی پہلی برسی کے سلسے میں اسلام آباد کے مقامی ہوٹل میں شہید قدس گول میز کانفرنس کا انعقاد کیا گیا جس میں ملک کی نامور مذہبی و سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں نے شرکت کی۔ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ کوئٹہ میں غریب محنت کشوں کو بے دردی سے شہید کیا گیا۔مقتولین کے ورثا گزشتہ تین روز سے جنازے رکھ کر شدید سردی میں وزیر اعظم کی آمد کے منتظر ہیں۔انہیں ان کی غربت کے باعث نظر انداز کیاجارہا ہے۔ہم ایسا نہیں ہونے دیں گے۔عوام کی جان و مال کا تحفظ حکمرانوں کی ذمہ داری ہے۔اگر وزیر اعظم وہاں نہ گئے تو پورے پاکستان میں ملت تشیع مظلوموں کی حمایت میں اپنے گھروں سے باہر نکل آئے گی۔ہم  شہدائے کوئٹہ کے لواحقین کے ساتھ کھڑے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اس خطے میں بدامنی پھیلانے کے لیے امریکہ اور اس کے حواری خطرناک کھیل شروع کر رکھا ہے۔ پاکستان تاریخ کے نازک ترین دور سے گزر رہا ہے۔اسرائیل کو گریٹر اور ایشیا کو عدم استحکام کا شکار کر کے امریکہ پوری دنیا پر قابض ہوناچاہتا تھا۔امت مسلمہ کی تقسیم کے لیے کروڑوں ڈالڑ خرچ کیے جا رہے ہیں۔یہودونصاری کے اہداف کوناکام بنانے کے لیے قاسم سلیمانی نے بہترین حکمت عملی اپنائی۔انہوں نے لبنان، شام اور یمن کو ہتھیاروں تیاری سکھائی۔ انہوں نے ہمیشہ صف اول میں رہ کر مجاہدانہ کردار ادا کیا۔قاسم سلیمانی کی مزاحمت کے نتیجے میں گریٹر کا خواب دیکھنے والا اسرائیل سکڑنا شروع ہوگیا۔ قاسم سلیمانی کے تربیت یافتہ آج مزاحمتی تحریکوں کی  رہنمائی کر رہے ہیں۔ایشیا اور امت مسلمہ کو ٹوٹنے سے بچانے میں قاسم سلمانی کاکلیدی کردار تھا۔وہ انسانیت کے قدر دان تھے۔انہوں نے د و ٹوک انداز میں کہا تھا کہ دشمن پاکستان میں خانہ جنگی چاہتا ہے۔

انہوں نے امت مسلمہ کو ان کے حقیقی دوست دشمن کی شناخت کرائی۔کم ظرف دشمنوں نے ان پر چھپ کر وار کیا۔قاسم سلمانی کاقتل ریاستی دہشت گردی ہے جس کی پوری دنیا کومذمت کرنی چاہیئے تھی۔ قاسم سلیمانی کے بعدکھیل ختم نہیں ہوا بلکہ اسلام دشمنوں اور غاصبین کے خلاف مسلمانوں کے غم و غصہ میں اضافہ ہوا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کو اسرائیل تسلیم نہیں کرنے دیں گے۔پاکستان امت مسلمہ کا دل اور اسلام کاقلعہ ہے اسے اپنے حصے کا کردار ادا کرنا ہو گا۔امریکہ کی کمزوری اسرائیل کی تباہی ثابت ہو گی۔ہم نے ظالمین عالم کو تباہ ہوتے دیکھنا ہے۔

سنی اتحاد کونسل کے چیئرمین صاحبزادہ حامد رضا نے کہا کہ ہزارہ قبیلہ کے ساتھ  وحشت و بربریت کا جوکھیل کھیلا گیا ا سکی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے قاسم سلیمانی حریت پسندرہنما تھے۔ان کی دنیائے اسلام کے لیے ان گنت خدمات ہیں۔انہوں نے کہا کہ اسرائیل کوتسلیم کرنے کی مہم کے دوران حجاز مقدس کے غاصبوں کا اصل چہرہ بھی سامنے آگیا ہے۔او آئی سی اسلامی ممالک کو درپیش مشکلات سے کوئی تعلق نہیں بلکہ یہ باہمی مفادات کے تحفظ کی تبظیم ہے جو غیر مند قوموں کو اپنے مقاصد کے لیے استعمال کر رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ قاسم سلیمانی کی زندگی کا مقصد ہی شہادت تھا۔ان کی زندگی ہم سب کے لیے مشعل راہ ہے۔ غاصبین کا  مقابلہ کرنے والا ہر جوان قاسم سلیمانی ہے۔

سینئر صحافی اور کالم نگار مظہر برلاس نے کہا کہ انقلاب پسند شخصیات دنیا دار نہیں ہوتے بلکہ زندگی کا کوئی عظیم ہدف رکھتے ہیں۔دشمنانِ اسلام  فلسفہ انقلاب سے آج بھی خائف ہیں۔قاسم سلیمانی کو شہید کرنے والوں کو قاسم سلیمانی کی ہیبت آج بھی سکون سے سونے نہیں دیتی۔انہوں نے کہا کہ قوم کی حیثیت سے بانی پاکستان کے فرمودات پر عمل سب کا فریضہ ہیں۔کشمیر و فلسطین کے حوالے سے ہم بانی پاکستان کے موقف کے پابند ہیں۔

سینئر صحافی و اینکر پرسن امیر عباس نے کہا کہ غیر مسلم انقلابی شخصیات کے ایام اگر پاکستان میں منائیں جا سکتے ہیں تو پھر قاسم سلیمانی جیسے عظیم اور نڈر مجاہد کاذکر کیوں نہیں کیا جاسکتا۔شہید قاسم سلیمانی کے قتل میں امریکہ کے ساتھ اسرائیل بھی شامل تھا۔ٹارگٹ کلنگ کے  حوالے سے اسرائیل کی شناخت دنیا کے بدترین ممالک میں ہوتی ہے۔انہوں نے کہا کہ قاسم سلیمانی شہید کا دن ہمیں ہر سال پوری جرات سے منانا چاہیئے تاکہ ہماری نسلوں کی بہترین فکری رہنمائی ہو سکے۔

 مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل سید ناصر شیرازی نے کہا کہ پاکستان کی سرزمین پر داعش کا وجود ناقابل قبول ہے۔پاکستان کے بیٹے داعش کے خاتمے کے لیے پوری جرات کے ساتھ کھڑے رہیں گے۔انہوں نے کہا کہ فلسطینیوں کی حمایت قائد اعظم کے موقف کی تائید ہے جنہوں نے اس سرزمین  پر سب سے پہلے  یوم فلسطین منایا۔اسرائیل کے مقابلے میں فلسطین کو جس شخصیت نے جرات عطا کی اس کا نام شہید قاسم سلیمانی ہے۔ کل تک جو اسرائیل گریٹر کے منصوبے بنا رہا تھا آج اپنی بقا وسالمیت کے لیے اضطراب کا شکار ہے۔اہلبیت اطہار علیہم السلام اورصحابہ کے مزارات دنیائے اسلام کے مقدسات ہیں۔داعش انہیں تباہ کرنا چاہتی تھی لیکن شہید قاسم سلیمانی دشمن کے سامنے سیسہ پلائی ہوئی دیواربن کرکھڑے رہے۔مسئلہ کشمیرو فلسطین پر شہیدقاسم سلیمانی کاموقف ان ریاستوں کے باسیوں کے دل کی آواز تھی۔

جمعیت علمائے پاکستان(نیازی)کے صدر سیدمعصوم نقوی نے کہاہے کہ قاسم سلیمانی کاذکر کسی محدود کانفرنس کی بجائے ہر گلی محلے میں ہوناچاہیئے۔شام وعراق کو داعش کے ناپاک وجود سے پاک کرنے کا سہرا امت مسلمہ کے اس  سچے عاشق رسول ﷺکے سر ہے۔ہمارے لیے یہ شخصیت مشعل راہ ہے۔

فلسطین فاؤنڈیشن کے چیئرمین صابر ابو مریم نے کہا کہ داعش کے سامنے سب سے  مضبوط مزاحمتی قوت شہید قاسم سلیمانی کی تھی۔انہوں نے کہاہر محاذ پر ان شیطانی طاقتوں کو شکست دی۔ شہید قاسم سلیمانی عالم اسلام کے ہی نہیں بلکہ  عالم انسانیت کے بھی مسیحا تھے۔

ملی یکجہتی کونسل کے رہنما علامہ ثاقب اکبر نے کہا کہ پاکستان کی بنیاد کلمہ طیبہ ہے یہی رشتہ قاسم سلیمانی کے ساتھ بھی ہے اور قدس کے ساتھ بھی۔قاسم سلیمانی کی شہادت وہ ظلم ہے جس پر خاموش نہیں رہا جا سکتا۔ اسرائیل اور سعودری عرب کے دوستانہ تعلقات کے بعد القدس کی آزادی کے ساتھ ہمیں حرمین کے تحفط کی بھی تحریک شروع کرنا ہو گی۔امت مسلمہ کو سعودی عرب کی خیانت پر متوجہ رہنا چاہئیے۔

اسلام آباد کے ڈپٹی میئر ذیشان نقوی نے کہا کہ شہید قاسم سلیمانی کی خدمات کسی سے ڈھکی چھپی نہیں۔انہوں نے دنیا کو اسلام کااصل چہرہ دکھایا۔پیر سید صفدر گیلانی نے کہا کہ زندہ قومیں اپنے محسنوں کوخراج تحسین پیش کرنے کے لیے ہمیشہ یاد رکھتی ہیں۔قاسم سلیمانی اتحاد امت کے سب سے بڑے داعی تھے۔ایران کے ساتھ ہندوستان کے تجارتی وابط قائم رہ سکتے ہیں تو پاکستان کے راستے میں کیا رکاوٹ ہے۔فلسطین اور اسرائیل حق وباطل کے معیار ہیں۔ جو طاقتیں اسرائیل کے ساتھ ہوں گی وہ کبھی حق پر نہیں ہو سکتیں۔انہوں نے کہا کہ ہزارہ قبیلہ کب تک لاشیں اٹھائے گا۔ہمارے ادارے کیا کر رہے ہیں۔کانفرنس سے علامہ حسنین گردیزی اور ڈاکٹر امجد حسین چشتی سمیت دیگر مذہبی،صحافتی و سیاسی شخصیات نے خطاب کیا۔

وحدت نیوز(کراچی) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کراچی ڈویژن کے سیکرٹری جنرل علامہ صادق جعفری نے کہا ہے کہ شیعہ ہزارہ برادری کے غم میں ہر محب وطن شامل ہے، مچھ دہشتگردی سفاک قاتلوں کی فوری گرفتاری اور سر عام پھانسی کا مطالبہ کرتے ہیں۔ کراچی میں پاور ہاؤس چورنگی پر منعقدہ احتجاجی دھرنے سے خطاب میں ایم ڈبلیو ایم رہنما نے کہا کہ بلوچستان داعش دہشتگردوں کی آماجگاہ بن چکا ہے، بلوچستان میں حکومت و ریاستی ادارے عوامی تحفظ میں ناکام ہوگئے ہیں، بلوچستان کا امن بھرپور فوجی آپریشن کے بغیر ناگزیر ہے۔

وحدت نیوز(ملتان) بلوچستان کے علاقے مچھ میں ہزارہ برادری کے قتل ہونے والے گیارہ افراد کی اندوہناک شہادت کیخلاف ملتان میں مجلس وحدت مسلمین اور امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن کے زیراہتمام پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ اور بعدازاں نواں شہر چوک تک احتجاجی ریلی نکالی گئی، نواں شہر پہنچ کر شرکا نے دھرنا دیدیا۔ دھرنے کی قیادت مجلس وحدت مسلمین جنوبی پنجاب کے صوبائی سیکرٹری جنرل علامہ اقتدار نقوی، علامہ قاضی نادر علوی، علامہ وسیم معصومی، سلیم عباس صدیقی، مہر سخاوت علی، حسنین بخاری، فخر نسیم صدیقی، آئی ایس او ملتان کے ڈویژنل صدر ثقلین ظفر اور عاطف حسین نے کی۔علامہ اقتدار نقوی نے کہا ہے کہ بلوچستان میں وطن کے بیٹوں کے گلے نہیں کاٹے بلکہ ملک کے امن و امان کا گلا کاٹنے کی کوشش کی گئی ہے، پاکستان اور اسلام کے دشمن ہم پر حملہ آور ہوئے ہیں، قومی سلامتی کے اداروں کو مزید چوکنا ہونے کی ضرورت ہے، دشمن اپنی کمین گاہوں سے نکلنا شروع ہو گئے ہیں۔بھارت، امریکہ، اسرائیل اور ان کے اتحادی وطن عزیز کو عدم استحکام کا شکار کر کے ان عالمی تبدیلیوں کو روکنا چاہتے ہیں جن سے ان کے مفادات کو سنگین خطرہ ہے۔ دشمنوں نے اپنے اہداف کا تعین کر رکھا ہے اور موقع کی تاک میں ہے۔

علامہ قاضی نادر علوی نے کہا کہ مذہبی منافرت پھیلانے میں ناکامی اور سیاسی بحران پیدا کرنے میں بدترین شکست کے بعد دہشت گردانہ کارروائیوں سے مقاصد حاصل کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے، ملت تشیع پر حملے کر کے ملک میں بے چینی پیدا کرنا دشمنوں کے ایجنڈے کا حصہ ہیں، ہمیں خود بھی محتاط رہنا ہو گا، اپنے اردگرد نگاہ رکھیں اور دشمن کی سازشیں تدبر، فہم اور چوکنا رہ کر ناکام بنائی جائیں۔ انہوں نے کہا کہ مقتولین کے ورثا منفی 9 کی سخت سردی میں دو روز سے دھرنا دیے ہوئے ہیں، حکومت اور مقتدر اداروں کی یہ ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ شرکا دھرنے کے مطالبات پورے کریں۔ اگر کسی حکومتی شخصیت نے ان کی شنوائی نہ کی تو پھر دھرنوں کا یہ سلسلہ پورے ملک تک پھیل جائے گا۔تاریخ شاہد ہے کہ شیعہ قوم اپنے اصولی موقف سے کبھی پیچھے نہیں ہٹتی۔

آئی ایس او ملتان کے ڈویژنل صدر ثقلین حیدر نے کہا کہ داعش کی طرف سے اس واقعہ کی ذمہ داری قبول کیا جانا اس حقیقت کا بین ثبوت ہے کہ ملک کے اندر عالمی دہشت گرد تنظیموں کے لے پالک موجود ہیں، جب تک ان کی پناہ گاہوں کا مکمل خاتمہ نہیں ہو جاتا تب تک امن کا حقیقی قیام محض ایک خواب ہی رہے گا، دھرنے میں مولانا صابر بلوچ، مولانا جعفر انصاری سمیت دیگر موجود تھے۔

وحدت نیوز(کراچی) مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین کراچی کی جانب سے بسلسلہ شھادت شھزادی کونین حضرت فاطمتہ س ، مرد مجاہد شھید قاسم سلیمانی و رفقاء، آیت اللہ مصباح یزدی اور بلوچستان سانحہ مچھ کے شھداء کے بلندی درجات کے لیے مجلس عزا کا انعقاد کیا گیا  جس سے عالمہ محترمہ طاہرہ فاضلی صاحبہ نے خطاب کیا۔

 انھوں نے اپنے خطاب میں شھزادی کونین بیبی فاطمہ س کی زندگانی پر روشنی ڈالی کہ کسطرح وہ اول ترین مدافع ولایت ہیں اور پھر یہ ہی دفاع ولایت کا سلسلہ آج شھداء کی شھادت میں جلوہ گر نظر آتا ہے ان کا کہنا تھا کہ حضرت فاطمتہ الزہرا س اس عظیم دفاع ولایت کی پہلی  شھیدہ ہیں اور اس دفاع مقدس میں قربانیوں کا سلسلہ کبھی قاسم سلیمانی و ابو المہدی مھندس کی صورت تو کبھی جگہ جگہ مختلف شہروں اور ملکوں میں مسلکی بنیاد پر ان شھادتوں کا سلسلہ کی صورت میں جاری ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ دشمن ہمیں مار کر ختم کرنا چاہتا ہے مگر یہ اسکی بھول ہے کہ ہر شھادت کے بعد ہمارا ولایت سے رشتہ مظبوط سے مضبوط تر ہوتا چلا جاتا ہے۔ مجلس کے اختتام پر  تمام شھداء ملت کےلئے فاتحہ خوانی ہوئی اور سانحہ بلوچستان پر رنج و غم کا اظہار کیاگیا۔بعد ازاں یک میٹنگ بھی ہوئی جسمیں تنظیم سازی اور یونٹ سازی کے حوالے سے گذارشات پیش کی گئیں۔

وحدت نیوز(لاہور) وحدت مسلمین لاہور کی جانب سے پریس کلب لاہور کے باہر سانحہ مچھ کے خلاف شدید احتجاج کیا گیا جس میں  مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین لاہور کی سیکرٹری جنرل محترمہ حنا تقوی کی سربراہی میں لاہور کی تمام ضلعی کابینہ سمیت تمام یونٹ اراکین نے شرکت کی پریس کلب لاہور کے سامنے منعقدہ احتجاج علامتی دھرنے میں تبدیل ہوگیا بارش کے باوجود بچوں اور خواتین کی بڑی تعداد دھرنے میں موجود رہی اور فضا لبیک یا حسین ؑکے بھر پور نعروں سے گونج اٹھی ۔

اس موقع پر محترمہ حنا تقوی سیکرٹری جنرل ایم ڈبلیو ایم شعبہ خواتین لاھور نے خطاب کرتے ہوئے کہا بے گناہ لوگوں کے قتل کی ذمےداری تمام سیاسی جماعتوں پہ ہے ہر جماعت کے دور اقتدار میں ھزارہ کمیونٹی پر ظلم ہوتا رہا اور ایک بھی دہشت گرد آج تک گرفتار نہ کیا گیا اور جو گرفتار کر بھی لیے جاتے ان کو بھی بعد میں رہا کردیا جاتا ان کا کہنا تھا گیارہ بے گناہ نہتے لوگوں کے ہاتھ پیر باندھ کر انہیں ذبح کر کےفا ئر نگ بھی کی گئی اور ریاستی ادارے غفلت کی نیند سوتے رہے۔دھشت گرد دندناتے پھر رہےہیں آخر ان کو قانون کے شکنجے میں کیوں نہیں لایا جا رہا اور کیوں مظلوموں کی داد رسی نہیں کی جارہی۔

انھوں نے مزید کہا کہ ریاست مدینہ کے دعوے داروں کو ھم تنبیہ کر تے ہیں کہ ہزارہ کمیونٹی کے 11 بے گناہ مزدوروں کے قاتلوں کو فی الفور گرفتارکر کے قرار واقعی سزا دی جاے ۔

Page 4 of 1090

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree