The Latest

وحدت نیوز(کراچی) مجلس وحدت مسلمین پاکستان صوبہ سندھ کے تنظیمی انتخابات میں اراکین صوبائی شوریٰ نے علامہ باقر عباس زیدی کو کثرت رائے سے آئندہ تین سال کیلئے صوبہ سندھ کا نیا میر کارواں منتخب کر لیا۔ تفصیلات کے مطابق کراچی کی آئی آر سی امام بارگاہ میں منعقد کئے جانے والے صوبائی جانثاران امام عصر (ع) کنونشن کا آغاز گذشتہ روز جشن انوار شعبان کی تقریب سے کیا گیا، جس کی صدارت علامہ احمد اقبال رضوی نے کی جبکہ اس موقع پر مہمان خصوصی علامہ راجہ ناصر عباس جعفری بھی شریک تھے۔ جشن انوار شعبان میں نظامت کے فرائض علامہ نقی نقوی اور الحاج ناصر عباس نے انجام دیئے جبکہ معروف منقب خواں اور شعرائے کرام قمر حسنین، ثمر حسنین، شجاع رضوی، میثم نقوی، صبیب عابدی، طرماح زیدی، عمار عارف، حسن عباس، احسن مہدی، زین عباس و دیگر نے بارگاہ ولایت و امامت میں نذرانہ عقیدت پیش کیا۔

صوبائی جانثاران امام عصر (ع) کنوشن کے اگلے روز سندھ کے سیکرٹری جنرل کے انتخاب کیلئے شوریٰ کا اجلاس منعقد کیا گیا، جس میں اراکین شوریٰ نے پہلے مرحلے میں مختلف نام پیش کئے، جن میں علامہ باقر عباس زیدی، علامہ مقصود ڈومکی اور علامہ دوست علی سعیدی کا نام ووٹنگ کیلئے پیش کیا گیا۔ ووٹنگ کے مرحلے میں اراکین شوریٰ نے خفیہ رائے شماری کے ذریعے کثرت رائے سے علامہ باقر عباس زیدی کو سندھ کا نیا میر کارواں منتخب کیا۔ نئے میر کارواں کے نام کا اعلان علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کیا اور نومنتخب صوبائی سیکرٹری جنرل سے ان کے عہدے کا حلف لیا۔ اس موقع پر علامہ مختار امامی، بزرگ عالم دین علامہ مرزا یوسف حسین سمیت دیگر تنظیمی رہنما بھی موجود تھے۔ یاد رہے کہ صوبائی سیکرٹری جنرل کے انتخاب کےلئے الیکشن کمیشن کے فرائض علامہ احمد اقبال رضوی، اسد نقوی اور آصف رضا ایڈووکیٹ نے انجام دیئے۔

سربراہ مجلس وحدت مسلمین علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کی صدرت مملکت کی رہائش گاہ کے باہرجاری دھرنے میں آمد،شیعہ مسنگ پرسنز کےاہل خانہ سے ملاقات کی اور ان کے مطالبات کی بھرپور حمایت کا اعلان کیا۔

شیعہ لاپتہ عزادروں کے اہل خانہ سے علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کا کہنا تھا کہمشکل کی اس گھڑی میں شیعہ مسنگ پرسنز کے اہل خانہ کےساتھ کھڑے ہیں، اگر لاپتہ شیعہ عزاداروں کا مسئلہ حل نہ ہوا تو پاکستان سمیت دنیا بھر میں احتجاجی تحریک چلائی جائے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ میں اپنی ماؤں بہنوں سے گزارش کرتا ہوں کہ اب تک جس استقامت کا مظاہرہ کیا ہے اس کو جاری رکھیں اور اپنے پیاروں کی بازیابی تک یہاں سے نہ اٹھیں۔

علامہ راجہ ناصر عباس کا کہنا تھا کہ شیعہ مسنگ پرسنز کی بازیابی کیلیے ہم نے تمام قانونی راستے اختیار کیے مگر مقتدر اداروں نے ہماری شنوائی نہیں کی اب اگر ہمارے یہ جوان بازیاب نہیں ہوتے تو ملک بھر میں اس احتجاجی تحریک کو پھیلادیں گے اور اپنے جوانوں کو بازیاب کروا کر ہی دم لیں گے۔

وحدت نیوز(لاہور) کراچی میں ملت جعفریہ کے جبری گمشدہ افراد  کے لواحقین کے صدارتی کیمپ آفس کے سامنے 6 دن سے جاری دھرنے اور ان کے مطالبات کی حمایت میں ایم ڈبلیو ایم ضلع لاہور کی جانب سے لاہور پریس کلب کے باہر احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ مظاہرے میں بڑی تعداد میں شہریوں نے شرکت کی۔ مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین لاہور علامہ سید حسن رضا ہمدانی اور شعبہ خواتین کی سیکریٹری جنرل محترمہ حنا تقوی نے کہا کہ ہم حکومت اور ریاستی اداروں سے اپیل کرتے ہیں کہ مسنگ پرسنز کے مسٸلے کو فوری حل کیا جاٸے تاکہ ملک سے ہیجانی کیفیت کا خاتمہ ہو۔ انہوں نے کہا کہ ہم ایک جمہوری ملک میں رہتے ہیں، جہاں احتجاج کرنا یا اختلاف راٸے کا اظہار کرنا ہمارا جمہوری حق ہے لیکن ریاستی اداروں میں موجود متعصب افراد بے گناہ لوگوں کو اغوا کر کے قاٸد اعظم اور علامہ اقبال کے نظریات کی دھجیاں اڑا رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہم ہمیشہ سے پُرامن رہے اور پر امن رہیں گے کیوں کہ یہ ملک کسی افراتفری کا متحمل نہیں ہو سکتا۔ علامہ حسن رضا ہمدانی نے کہا کہ وزیر اعلیٰ پنجاب، وزیر اعظم اور آرمی چیف سمیت ریاستی اداروں میں بیٹھے ذمہ داران ان بوڑھی ماٶں اور بیٹیوں کے دکھوں کا مداوا کریں اور لاپتہ افراد کو فوری بازیاب کرایا جاٸے۔ ایم ڈبلیو ایم وومن ونگ کی رہنما حنا تقوی نے اپنے خطاب میں کہا کہ ملت جعفریہ کے جبری گمشدہ افراد کے اہلِخانہ کے مطالبات آرٹیکل 10 اور 10-A کے عین مطابق ہیں، گمشدگان کی بازیابی و ان کی حفاطت ریاست کی قانونی ذمہ داری ہے، صدر و وزیر اعظم فوری طور پہ گمشدگان کہ اہلخانہ کہ مطالبات کو پورا کرائیں۔

مظاہرے کے شرکاء نے اپیل کی کہ معصوم بچے، مائیں، بہنیں، بیٹاں شاہراؤں پہ کھلے آسمان تلے 6 روز سے مسلسل سراپا احتجاج ہیں، ان کی داد رسی کی جائے اور ریاست کو کوئی فرد کسی جرم میں مطلوب ہے تو اس کو عدالتوں میں پیش کرکے اسکا ٹرائل کریں لیکن غیر قانونی گمشدگی آئین و قانون کی مکمل خلاف ورزی ہے۔ احتجاجی مظاہرے میں ایم ڈبلیو ایم کے رہنما رائے ناصر علی، رانا ماجد، سجاد نقوی، نجم خان سمیت کثیر تعداد میں مرد خواتین اور بچوں نے شرکت کی۔

وحدت نیوز(ٹھٹھہ) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل قائد وحدت علامہ راجاناصر عباس جعفری کے حکم پر اسیران ملت جعفریہ اور لا پتہ شیعہ جوانوں کی بازیابی اور پانچ دنوں سے صدر پاکستان عارف علوی کی رہائش گاہ پر جاری دھرنے کی حمایت میں مجلس وحدت مسلمین ضلع ٹھٹھ کی جانب  سے شاھ نجف امام بارگاھ سے شاھجان مسجد ٹھٹھ تک احتجاج ریلی نکلی گئی، جس کے بعد شاہجہاں مسجد کے سامنے احتجاجی مظاھرہ کیا گیا۔

 مظاہرے سے مجلس وحدت مسلمین صوبہ سندھ کے رہنما حفیظ علی شاہ، عبدلحسین شاہ، نے اپنے خطاب میں کہا کہ ملت جعفریہ دوھری مظلومیت کا شکار ہے ایک طرف دھشتگردوں نے گذشتہ کئی دھائیوں سے شیعان علی ع کا قتل عام کیا ہے ہمیں دن کی روشنی میں چوکوں اور چوراہوں پر مارا گیا شناختی کارڈ چیک کرکے گولیوں کا نشانہ بنایاگیا آج تک ریاستی ادارے ان دھشتگردوں کو قانون کی گرفت میں نہ لا سکے۔ آج بھی دھشتگرد اور ان کے سہولت کار ملک کے گلی کوچوں میں دندناتے پھر رہے ہیں جنہوں نے شیعہ کافر کے نعرے لگائے وہ آج بھی ریاستی پروٹوکول میں گھوم رہے ہیں۔

مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے پرنسپل مولانا فدا حسین فردوسی، لالا حسینی نے کہا کہ ملت جعفریہ کے جوانوں کا اغوا حیرت انگیز ہے حالانکہ آج تک ملت جعفریہ نے کبھی پاک وطن سے غداری نہیں کی بلکہ ملت جعفریہ نے ہر مشکل وقت میں پاکستان پر اپنا سب کچھ نچھاور کیا۔ آج ہماری مائیں بہنیں اور بیٹیاں ہمارے بزرگ اور جوان ملک کے ارباب اختیار سے انصاف طلب کر رہے ہیں۔

وحدت نیوز(شہدادکوٹ) مجلس وحدت مسلمین ضلع شدادکوٹ کی جانب سےقائد وحدت علامہ راجاناصر عباس جعفری کے حکم پر اسیران ملت جعفریہ اور لا پتہ شیعہ جوانوں کی بازیابی کیلئے امام بارگاہ  سے  احتجاجی ریلی نکالی گئی۔ ریلی کے شرکاء سے مولانا فدا حسین یزدانی مولانا مولوی امیر حسین لغاری نیاز حسین بھٹی نے خطاب کیا ۔مقررین نے اپنے خطاب میں کہا کہ ملت جعفریہ دوھری مظلومیت کا شکار ہے ایک طرف دھشت گردوں نے گذشتہ کئی دھائیوں سے شیعان علی ع کا قتل عام کیا ہے۔ہمیں دن کی روشنی میں چوکوں اور چوراہوں پر مارا گیا شناختی کارڈ چیک کرکے گولیوں کا نشانہ بنایاگیا۔

آج تک ریاستی ادارے ان دھشت گردوں کو قانون کی گرفت میں نہ لا سکے۔ آج بھی دھشت گرد اور ان کے سہولت کار ملک کے گلی کوچوں میں دندناتے پھر رہے ہیں جنہوں نے شیعہ کافر کے نعرے لگائے وہ آج بھی ریاستی پروٹوکول میں گھوم رہے ہیں۔ایسے میں ملت جعفریہ کے جوانوں کا اغوا حیرت انگیز ہے حالانکہ آج تک ملت جعفریہ نے کبھی پاک وطن سے غداری نہیں کی بلکہ ملت جعفریہ نے ہر مشکل وقت میں پاکستان پر اپنا سب کچھ نچھاور کیا۔ آج ہماری مائیں بہنیں اور بیٹیاں ہمارے بزرگ اور جوان ملک کے ارباب اختیار سے انصاف طلب کر رہے ہیں۔

وحدت نیوز(ملتان) مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کی کال پر کراچی میں صدر پاکستان کی رہائش گاہ کے باہر جاری مسنگ پرسن کے لواحقین کی جانب سے جاری دھرنے کی حمایت ملک گیر یوم احتجاج منایا گیا، دارلحکومت اسلام آباد سمیت چاروں صوبوں، گلگت بلتستان، آزادکشمیر اور جنوبی پنجاب میں احتجاجی مظاہرے اور ریلیاں نکالی گئیں، جنوبی پنجاب کے آٹھ اضلاع بشمول ملتان،بہاولپور،رحیم یارخان،لیہ ،بھکر، علی پور،خانیوال اور ڈیرہ غازیخان میں نماز جمعہ کے بعد احتجاجی مظاہرے اور ریلیاں نکالی گئیں۔

تفصیلات کے مطابق ملتان میں نماز جمعہ کے بعد مجلس وھدت مسلمین ملتان کے زیراہتمام احتجاجی ریلی نکالی گئی، ریلی کی قیادت صوبائی سیکرٹری جنرل علامہ اقتدار حسین نقوی ،علامہ قاضی نادر حسین علوی، مرزا وجاہت علی ، سلیم عباس صدیقی، ڈویژنل صدر آئی ایس او عاطف حسین ، مولانا طاہر عباس نقوی، مولانا عمران ظفر اور دیگر نے کی۔ احتجاجی ریلی امام بارگاہ ابوالفضل العباس سے نکالی گئی جو چوک کمہاراں والا پہنچ کر علامتی دھرنے میں بدل گئی، شرکاء نے چوک کمہاراں والا پر علامتی دھرنا دیا، شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی سیکرٹری جنرل جنوبی پنجاب علامہ اقتدار نقوی کا کہنا تھا کہ کراچی میں ایک تسلسل کے ساتھ ہمارے جوانوں کو لاپتہ کیا جارہا ہے، جو کہ آئین اور قانون کی سراسر خلاف ورزی ہے، ان اداروں نے ملک میں اپنی ایک ریاست بنا رکھی ہے، سانحہ ساہیوال اور سانحہ ماڈل ٹاون انہی عناصر کی کاروائیاں ہیں۔

 اُنہوں نے کہا کہ موجود ہ صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی ممنون حسین سے بھی کمزور اور ماتحت ہے، اگر صدر کو ملک میں جاری آئین اور قانون کی خلاف ورزی روکنے کی طاقت بھی نہیں تو عہدے سے استعفی دے دینا چاہیے، رہنمائوں نے کہا کہ اگر ہمارے لاپتہ افراد کسی جرم میں ملوث ہیں تو اُنہیں عدالتوں میں پیش کیا جائے اور اگر بے گناہ ہیں تو فوری رہا کیا جائے، سیکیورٹی اداروں اور ایجنسیوں کی اس طرح کی کاروائیاں توہین عدالت کے زمرے میں آتی ہیں جس کا چیف جسٹس کو سوموٹو نوٹس لینا چاہیے۔

 مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے علامہ قاضی نادر حسین علوی نے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت میں انصاف ناپید ہوچکا ہے، صدر نے مظاہرین کے خوف سے گھر کو خیر باد کہہ دیا ہے، یہ پی ٹی آئی کی حکومت کس منہ سے ہمارے سامنے آئے گی، وزیراعظم عمران خان جو انصاف کا بھاشن دیتے ہیں اُنہیں کوئی بتائے کہ مسنگ پرسن کا تعلق پاکستانیوں سے ہے، یہ پاکستان کے محب وطن شہری ہیں ، ہم گزشتہ سات روز احتجاجی دھرنا دیے بیٹھے ہیں لیکن حکومت ٹس سے مس نہیں ہوئی ، ہماری خاموشی کو کمزوری نہ سمجھا جائے ، اگر ہم بلوچستان کے رئیسانی کی حکومت گراسکتے ہیں عمران خان بھی نہیں رہے گا۔

 دھرنے کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے مرزا وجاہت علی نے کہا کہ ہم سیکیورٹی فورسز کی اب بھی دل و جان سے عزت کرتے ہیں لیکن ان اداروں میںبیٹھی کالی بھیڑوں نے حکومتی ایجنسیوں کو بدنام کررکھا ہے، آرمی چیف اور آئی ایس آئی چیف ان واقعات کا نوٹس لیں جن کی وجہ سے ملک کے ادارے بدنام ہو رہے ہیں ، اُنہوں نے مزید کہا کہ اگر اتوار تک ہمارے مسنگ پرسن رہا نہ کیے گئے تو اتوار کو شام سے نواں شہر چوک پر غیرمعینہ مدت کے لیے دھرنا شروع کردیا جائے گا۔ دوسری جانب جنوبی پنجاب کے دیگر اضلاع میں بھی احتجاجی مظاہرے اور ریلیاں نکالی گئیں۔

وحدت نیوز(کراچی) سربراہ مجلس وحدت مسلمین پاکستان قائد وحدت علامہ راجہ ناصرعباس جعفری حفظہ اللہ خانواہ اسیران ملت جعفریہ سے اظہار یکجہتی کیلئے آج بروز ہفتہ کراچی پہنچیں گے ۔ترجمان ایم ڈبلیوایم کراچی ڈویژن احسن عباس رضوی کے مطابق علامہ راجہ ناصرعباس جعفری اپنے دوروزہ دورہ کراچی کے موقع خانوادہ اسیران ملت جعفریہ کی جانب سے صدارتی کیمپ آفس پرجاری احتجاجی دھرنے میں شرکت کے علاوہ ، تنظیمی اجلاس کی صدارت کرینگے اور کراچی کے معززین سے ملکی و قومی صورتحال پہ بات چیت بھی کرینگے۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) ایم ڈبلیوایم کاملت جعفریہ کے لاپتہ افراد کے لواحقین کے صدارتی کیمپ آفس کراچی کے سامنے اپنے بے گناہ پیاروں کی بازیابی کے لئے چھ روز سے جاری دھرنے اور ان کے مطالبات کی حمایت میں ملک گیراحتجاجی مظاہرے و ریلیاں،چاروں صوبوں سمیت گلگت بلتستان اور آزاد کشمیر کے تمام اضلاع میں بعد از نماز جمعہ احتجاجی مظاہرے و ریلیاں نکالی گئیں ان مظاہروں کی کال سربراہ مجلس وحدت مسلمین علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے دی تھی، کراچی، لاہور، اسلام آباد، کوئٹہ، گلگت ،سکردو، ملتان، فیصل آباد، ،بھکر،چنیوٹ،جھنگ،اوچشریف،رحیم یارخان،پاراچنار، حیدرآباد، ٹھٹھہ ، سجاول، ٹنڈومحمد خان، نوشہروفیروز، سکھر، شکارپور، لاڑکانہ، سکھر،شہدادکوٹ،ڈیرہ غازی خان،جیکب آباد،نصیر آباد و دیگر شہروں میں احتجاجی مظاہروں اورریلیوں سے خطاب کرتے ہوئے علامہ ، راجہ ناصرعباس جعفری، علامہ باقرعباس زیدی، علامہ آغا علی رضوی، علامہ اعجازبہشتی، علامہ مرزایوسف حسین، علامہ مقصودڈومکی، علامہ حسن رضا ہمدانی، علامہ حسن ظفرشمسی ودیگر مقررین نے کہاکہ آئین کے ارٹیکل ۱۰ اور ۱۰-اے کے تحت تمام گمشدگان کی بازیابی و انکی حفاطت ریاست کی قانونی ذمہ داری ہے۔صدر و وزیراعظم فوری طور پرجبری گمشدگان کے اہل خانہ کے مطالبات کو پورا کرائیں ۔معصوم بچے ، مائیں ، بہنیں ، بیٹاں شاہراؤں پر کھلے آسمان تلے چھ دن سے مسلسل سراپا احتجاج ہیں۔گمشدہ افراد کے اہل خانہ کی داد رسی کی جائے۔ریاست کا کوئی فرد کسی جرم میں مطلوب ہے تو اسکو عدالتوں میں پیش کرکے اسکا ٹرائل کریں۔غیر قانونی گمشدگی آئین و قانون کی مخالفت ہے۔

 اسلام آباد میں احتجاجی مظاہرہ اسلام آباد نیشنل پریس کلب پر ہوا جو بعد ازآں ریلی کی شکل میں چائینہ چوک تک پہنچنے کے بعد علامتی دھرنا دیا گیا،جس کی قیادت سربراہ مجلس وحدت مسلمین علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کی ۔ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ ملک میں ضیاءکے باقیات نے پہلے ہماری منظم نسل کشی کی لیکن اس پر حکمرانوں سمیت کوئی بھی ذمہ دار ٹس سے مس نہیں ہوئے عالمی دباو پر ان ظالم درندوں کو جب لگام ڈالا گیا تو اس کے بعد ہم ریاستی ظلم بربریت کا مسلسل شکار ہو رہے ہیں ہمارے بے گناہ جوانوں کو اغواءکیا گیا درجنوں نوجوانوں کا کوئیہ پتہ نہیں وہ زندہ ہے یا مر گئے ہیں۔علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ ہم کراچی میں ایک ہفتے سے صدراتی کیمپ آفس کے سامنے بیٹھے اپنے ماؤں بہنوں کو یہ پیغام دیتے ہیں آپ تنہا نہیں پوری قوم آپکے ساتھ ہیں میں پوری قوم سے اپیل کرتا ہوں وہ تیاری کریں اگر ملت جعفریہ کے بے گناہ افراد بازیاب نہ ہوئے تو ہم پورا ملک جام کردینگے۔

انہوں نے کہاکہ کراچی کی شدید گرمی میں صدر پاکستان کے گھر کے باہر چھے دن سے ہماری مائیں بہنیں اور بچے دھرنا دیئے بیٹھے ہوئے ہیں۔لیکن ستم ظریفی یہ ہے کہ کسی کے کان پرجوں تک نہیں رینگی،ہم خاموش نہیں رہیں گے۔ ہمارا مطالبہ ہے اس سنگین انسانی حقوق کی خلاف ورزی کو فوری طور پر بند کیا جائے اور ملت جعفریہ کے جبری گمشدہ افراد کو فوری بازیاب کرایا جائے۔بصورت دیگر بعید نہیں یہ احتجاجی تحریک ملک بھر میں پھیل جائے۔

وحدت نیوز(کراچی) ایم ڈبلیوایم کاتحت ملت جعفریہ کے لاپتہ افراد کے لواحقین کے صدارتی کیمپ آفس کراچی کے سامنے اپنے بے گناہ پیاروں کی بازیابی کے لئے چھ روز سے جاری دھرنے اور ان کے مطالبات کی حمایت میں ملک گیر یوم احتجاج منایاگیا،چاروں صوبوں سمیت گلگت بلتستان اور آزاد کشمیر کے تمام اضلاع میں بعد از نماز جمعہ احتجاجی مظاہرےکیئےگئےا ور ریلیاں نکالی گئیں ان مظاہروں کی کال سربراہ مجلس وحدت مسلمین علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے دی تھی۔

کراچی میں خوجہ جامع مسجد کھارادر، جامع مسجد نورایمان ناظم آباد اور جامع مسجد حسینیؑبرف خانہ ملیر کے باہر بعد نماز جمعہ احتجاجی مظاہرے کیئےگئےجس میںبڑی تعدادمیںمظاہرین نے شرکت کی ۔مظاہرین نے گمشدہ افراد کی تصاویر اور لاپتہ افراد کی بازیابی کے حق میں بینرزاورپلے کارڈ اٹھا رکھے تھے ۔مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے مجلس وحدت مسلمین کے رہنما علامہ سید باقرعباس زیدی،مجلس علمائے شیعہ کے رہنماصدرعلامہ مرزایوسف حسین،ہیئت آئمہ مساجد وعلمائے امامیہ کےنائب صدرعلامہ صادق رضا تقوی،شیعہ علماءکونسل کے رہنما کامران حیدرعابدی،ایم ڈبلیوایم کے رہنما علامہ مبشر حسن، علامہ علی انور جعفری،علامہ زاہد حسین ہاشمی، احسن عباس رضوی ،ذاکر اہل بیت ؑ سفیر عباس اور دیگر نے کہا کہ آئین کے ارٹیکل ۱۰ اور ۱۰-اے کے تحت تمام گمشدگان کی بازیابی و انکی حفاطت ریاست کی قانونی ذمہ داری ہے۔صدر و وزیراعظم فوری طور پرجبری گمشدگان کے اہل خانہ کے مطالبات کو پورا کرائیں ۔معصوم بچے ، مائیں ، بہنیں ، بیٹاں شاہراؤں پر کھلے آسمان تلے چھ دن سے مسلسل سراپا احتجاج ہیں۔گمشدہ افراد کے اہل خانہ کی داد رسی کی جائے۔ریاست کا کوئی فرد کسی جرم میں مطلوب ہے تو اسکو عدالتوں میں پیش کرکے اسکا ٹرائل کریں۔غیر قانونی گمشدگی آئین و قانون کی مخالفت ہے۔

 مقررین نے کہاکہ سنگین انسانی حقوق کی پامالیوں پر حکمرانوں کی خاموشی افسوسناک ہے ملت جعفریہ کو منظم منصوبہ بندی کے ساتھ دیوار سے لگانے کی کوشش میں مصروف ضیاء الحق کے باقیات سن لیں ہم بانیان پاکستان کی اولاد ہیں ہمیں ایسے اوچھے ہتھکنڈوں سے مرعوب کرنے والے احمقوں کی جننت میں رہتے ہیں ہم وہ قوم ہیں جنہوں نے سینکڑوں لاشیں سڑک پر رکھ کر بھی ایک پتہ نہیں توڑا، ملک کے طول عرض میں بے دردی ہماری نسل کشی کی گئی لیکن آج تک ہمارے کسی قاتل کو نہیں پکڑا،اپنے بیرونی آقاوں کی خوشنودی کے لئے ہمارے پیاروں کو اٹھا کر غائب کیا گیاہے حکومت سن لیں کفر کے نظام کا چلنا ممکن ہے مگر ظلم کا نہیں۔

انہوں نے کہاکہ کراچی کی شدید گرمی میں صدر پاکستان کے گھر کے باہر چھے دن سے ہماری مائیں بہنیں اور بچے دھرنا دیئے بیٹھے ہوئے ہیں ۔لیکن ستم ظریفی یہ ہے کہ کسی کے کان پرجوں تک نہیں رینگی،ہم خاموش نہیں رہیں گے ہمارا مطالبہ ہے اس سنگین انسانی حقوق کی خلاف ورزی کو فوری طور پر بند کیا جائے اور ملت جعفریہ کے جبری گمشدہ افراد کو فوری بازیاب کرایا جائے،بصورت دیگر بعید نہیں یہ احتجاجی تحریک ملک بھر میں پھیل جائے۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) ایم ڈبلیوایم کاملت جعفریہ کے لاپتہ افراد کے لواحقین کے صدارتی کیمپ آفس کراچی کے سامنے اپنے بے گناہ پیاروں کی بازیابی کے لئے چھ روز سے جاری دھرنے اور ان کے مطالبات کی حمایت میں ملک گیراحتجاجی مظاہرے و ریلیاں،چاروں صوبوں سمیت گلگت بلتستان اور آزاد کشمیر کے تمام اضلاع میں بعد از نماز جمعہ احتجاجی مظاہرے و ریلیاں نکالی گئیں ان مظاہروں کی کال سربراہ مجلس وحدت مسلمین علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے دی تھی اسلام آباد میں احتجاجی مظاہرہ اسلام آباد نیشنل پریس کلب پر ہوا جو بعد ازآں ریلی کی شکل میں چائینہ چوک تک پہنچنے کے بعد علامتی دھرنا دیا گیا،جس کی قیادت سربراہ مجلس وحدت مسلمین علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کی ۔

مظاہرے میں امامیہ سٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان اسلام آباد کے رہنماوں و کارکنان بھی شریک تھے ،شرکاءسے خطاب کرتے ہوئے علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ ملک میں ضیاءکے باقیات نے پہلے ہماری منظم نسل کشی کی لیکن اس پر حکمرانوں سمیت کوئی بھی ذمہ دار ٹس سے مس نہیں ہوئے عالمی دباو پر ان ظالم درندوں کو جب لگام ڈالا گیا تو اس کے بعد ہم ریاستی ظلم بربریت کا مسلسل شکار ہو رہے ہیں ہمارے بے گناہ جوانوں کو اغواءکیا گیا درجنوں نوجوانوں کا کوئیہ پتہ نہیں وہ زندہ ہے یا مر گئے ہیں۔

علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ ہم کراچی میں ایک ہفتے سے صدراتی کیمپ آفس کے سامنے بیٹھے اپنے ماوں بہنوں کو یہ پیغام دیتے ہیں آپ تنہا نہیں پوری قوم آپکے ساتھ ہیں میں پوری قوم سے اپیل کرتا ہوں وہ تیاری کریں اگر ملت جعفریہ کے بے گناہ افراد بازیاب نہ ہوئے تو ہم پورا ملک جام کردینگے۔

 علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے وزیر اعظم عمران خان سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا اگر عمران خان صاحب جبری گمشدہ افراد کے مسئلہ حل نہیں کرسکتے تو مستعفی ہو جائیں،انہوں نے گمشدہ افراد کی عدم بازیابی کی صورت میں ڈی چوک پر دھرنے کا بھی اعلان کیا۔مظاہرے میں کثیر تعدا میں بچوں اور خواتین نے بھی شرکت کی مظاہرین نے گمشدہ افراد کی تصاویر اور لاپتہ افراد کی بازیابی کے حق میں پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے مظاہرین سے خطاب کرے ہوئے مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی رہنما علامہ اعجاز بہشتی نے کہا کہ سنگین انسانی حقوق کی پامالیوں پر حکمرانوں کی خاموشی افسوسناک ہے ۔

امامیہ سٹوڈنٹس آرگنائزیشن اسلام آباد کے رہنما عباس نے کہا کہ ملت جعفریہ کو منظم منصوبہ بندی کے ساتھ دیوار سے لگانے کی کوشش میں مصروف ضیاءالحق کے باقیات سن لیں ہم بانیان پاکستان کی اولاد ہیں ہمیں ایسے اوچھے ہتھکنڈوں سے مرعوب کرنے والے احمقوں کی جننت میں رہتے ہیں۔ ہم وہ قوم ہیں جنہوں نے سینکڑوں لاشیں سڑک پر رکھ کر بھی ایک پتہ نہیں توڑا۔ ملک کے طول عرض میں بے دردی ہماری نسل کشی کی گئی لیکن آج تک ہمارے کسی قاتل کو نہیں پکڑا،اپنے بیرونی آقاوں کی خوشنودی کے لئے ہمارے پیاروں کو اٹھا کر غائب کیا گیاہے۔ حکومت سن لیں کفر کے نظام کا چلنا ممکن ہے مگر ظلم کا نہیں۔

انہوں نے کہاکہ کراچی کی شدید گرمی میں صدر پاکستان کے گھر کے باہر چھے دن سے ہماری مائیں بہنیں اور بچے دھرنا دیئے بیٹھے ہوئے ہیں۔لیکن ستم ظریفی یہ ہے کہ کسی کے کان پرجوں تک نہیں رینگی،ہم خاموش نہیں رہیں گے۔ ہمارا مطالبہ ہے اس سنگین انسانی حقوق کی خلاف ورزی کو فوری طور پر بند کیا جائے اور ملت جعفریہ کے جبری گمشدہ افراد کو فوری بازیاب کرایا جائے۔بصورت دیگر بعید نہیں یہ احتجاجی تحریک ملک بھر میں پھیل جائے۔

Page 12 of 944

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree