The Latest

وحدت نیوز ( کراچی ) حوا کی بیٹیوں کا استحصال ہمارے معاشرے میں ایک عمومی مسئلہ بن چکا ہے ، آئے روز معصوم بچیوں کے ساتھ ہونے والی مبینہ بد فعلی کی خبروں کے شدت سے نشر ہو نے پر اس قبیح فعل میں اضافہ ہو تا چلا جارہا ہے،ترکی سے درآمد شدہ بیہودہ ڈراموں نے بھارتی فحش چینلز کی جگہ لے لی ہے ، پیمرا اور وزارت اطلاعات و نشریات تمام نجی چینلز کے لئے بیہودگی اور فحاشی کے خلاف ضابطہ اخلاق جا ری کرے ، لاہور کے بعد اب کراچی میں بھی ایک معصوم بچی درندگی کا نشانہ بن گئی ، لیکن مجرم ابھی تک آزاد ہیں۔

ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین پاکستان شعبہ خواتین سندھ کی سیکریٹری جنرل خانم زہرا نجفی نے میڈیا سیل کو جاری اپنے مذمتی بیان میں کیا ، ان کا کہنا تھا کہ مختلف نجی ٹی وی چینلز کرائم شوز کے نام پر ایسے بیہودہ ڈرامے نشر کر رہے ہیں جو معاشرتی بگاڑ کا باعث بن رہے ہیں ، کراچی اور لاہور میں وحشی درندوں کی بربریت کا نشانہ بننے والی بچیوں کی اس حالت کی ذمہ داری ہمارے حد سے زیادہ آزاد میڈیا پر بھی عائد ہو تی ہے ، بعض چینلز محض ریٹنگ بڑھانے کے لیئے معصوم بچیوں کی عزت کا جنازہ نکالتے رہتے ہیں ، حکومت اور متعلقہ اداروں کو اس حوالے سے سخت قانون سازی کرنی ہو گئی ۔

ان کاکہنا تھا کہ ذرائع ابلاغ معاشرے میں بے راہ روی کو پروان چڑھانے والے پروگرامات سے اجتناب کریں ، اس سے نوجوانوں میں معاشرتی برائیاں جنم لے رہی ہیں اور اس طرح کے پروگرامات دیکھ کر معاشرہ اس برائی کی جانب رغبت حاصل کر رہا ہے ، انہوں نے ذرائع ابلاغ کو مخاطب کر تے ہو ئے کہا کہ ایک اسلامی ریا ست میں میڈیا کی راہ و روش بھی تعلیمات اسلامی کے عین مطابق ہو نی چاہئے ، ایسے پروگرامات نشر کیئے جائیں جو کہ نہ صرف تعمیری ہوں بلکہ اسلامی معاشرے حقیقی عکاس بھی ہوں ۔

پشاور(وحدت نیوز) مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین پشاور کی سیکرٹری جنرل سیدہ نسیم نقوی نے وفد کے ہمراہ چرچ دھماکوں میں زخمی ہونے والی خواتین اور بچوں کی عیادت کی اور دھماکوں کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ بم دھماکے کرنے والے انسان نہیں درندے ہیں، انہیں نہ مردوں کی زندگیاں عزیز ہیں نہ خواتین کی۔ یہ درندے بچوں کو بھی اپنے وحشیانہ طرز عمل کا نشانہ بنا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ہم سب پاکستانیوں کا ہے۔ قائد اعظم محمد علی جناح نے اقلیتیوں کے حقوق کا خاص خیال رکھنے کی تلقین کی تھی۔ جبکہ مذہب اسلام میں ایک انسان کا قتل پوری انسانیت کا قتل قرار دیا گیا ہے۔

وحدت نیوز (لاہور) مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین نے جماعت اسلامی اور تحریک منہاج القرآن کے ساتھ حجاب کے فروغ کے لئے مشترکہ جدوجہد کا اعلان کیا ہے۔ لاہور میں حجاب سے متعلق تصویری نمائش کے موقع پر میڈیا سے گفتگو میں مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین کی مرکزی صدر خانم سکینہ مہدوی نے کہا کہ حجاب نے عورت کو وقار عطا کیا ہے۔ دنیا میں ایسا ماحول پیدا کیا جائے کہ کوئی خاتون پردے کے بغیر گھر سے نہ نکلے۔ انہوں نے کہا کہ ایم ڈبلیو ایم جماعت اسلامی اور تحریک منہاج القرآن کے ساتھ مل کر سرکاری دفاتر میں حجاب کے لئے قانون سازی کے لئے جدوجہد کریں گی۔ ان کا کہنا تھا کہ حجاب صرف عورت کے سرچھپانے کا ہی نام نہیں، مردوں کی نظروں کا بھی حجاب ضروری ہے۔

ایک سوال کے جواب میں خانم ذکیہ نقوی نے کہا کہ چہرے کو کھلا رکھ کر حجاب کرنا فتوٰی ہے جبکہ اسے مکمل ڈھانپ لینا تقوٰی ہے۔ انہوں نے کہا کہ عورتوں ہی نہیں مردوں کی بھی ذمہ داری ہے کہ وہ اپنی بیویوں اور بیٹیوں کو حجاب کروائیں۔ خانم ہما تقوی نے کہا کہ عورت نے زیب و زینت کی ہو تو اسے نامحرم نظروں سے چھپانا واجب ہے۔ اس موقع پر حجاب کے حوالے تصویری نمائش کا بھی اہتمام کیا گیا تھا، جسے بڑی تعداد میں خواتین اور مردوں نے دیکھا۔

جنت البقیع کا انہدام اور شام میں جاری مزارات مقدسہ کی بے حرمتی ایک ہی سازش کی کڑیاں ہیں،مدینہ منورہ میں اہل بیت اطہار ، صحابہ کرام اور ازواج مطہر رسول اکرم (ص) کی قبروں کو منہدم کرنا اور شام میں نواسی رسول اکرم (ص) سیدہ زینب سلام اللہ علیہا اور جلیل القدس صحابہ کے مزارات پر حملے صیہونی اورآل سعود کی ملی بھگت کا نتیجہ ہے

ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین پاکستان کراچی کی سیکرٹری جنرل خواہر زہرا نجفی امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کراچی ڈویژن کی صدر خواہر گلِ زہرااورجنرل سیکرٹری خواہر نرجس نے 8شوال یوم انہدام جنت البقیع کی مناسبت سے کراچی پریس کلب کے سامنے منعقدہ احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔احتجاجی مظاہرے کا اہتمام امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن اور مجلس وحدت مسلمین کی جانب سے کیا گیا تھا، احتجاجی مظاہرے میں سیکڑوں خواتین اور مختلف اسکولوں ، کالجز اور جامعات کی طالبات نے شرکت کی، شرکائے احتجاجی مظاہرہ نے ہاتھو ں میں سیاہ پرچم اٹھا رکھے تھے جبکہ سروں پر سرخ اور سبز رنگ کی پٹیاں باندھ رکھی تھیں جن پر لبیک یا رسول اللہ ، لبیک یا فاطمۃ الزہرا(س)،لبیک یا زینب(س) کے نعرے درج تھے۔شرکائے احتجاجی مظاہرہ نے ہاتھوں میں بینر ز اور پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے جس پر صیہونیزم اور آل سعود کے خلاف نعرے درج تھے اور مدینہ منورہ میں سنہ 1925ء میں آل سعود نے صیہونی آقاؤں کی خوشنودی کی خاطر آخری نبی حضرت محمد صلی اللہ علیہ والہ وسلم کے اہل بیت اطہار (ع) اور ازواج رسول اکرم (ص) سمیت جلیل القدس صحابہ کرام (رض) کے مزارات مقدسہ کو منہدم کر دیا تھا تاہم پوری دنیا میں اس دن کو یوم سیاہ کے طور پر منایا جاتا ہے اور مسلم امہ آل سعود اوع صیہونزم کے پیروکاروں کے خلاف سراپا احتجاج ہوتی ہے۔

کراچی پریس کلب پر منعقدہ یوم انہدام جنت البقیع کے احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کراچی ڈویژن کی صدر خواہر گلِ زہرا ، جنرل سیکرٹری خواہر نرجس اور مجلس وحدت مسلمین پاکستان کراچی کی سیکرٹری جنرل خواہر زہرا نجفی نے کہا کہ افسوس کی بات ہے کہ آج آل سعود کے محل تو روشن ہیں لیکن محسن انسانیت کے خاندان سے تعلق رکھنے والے اور پیغمبر اکرم (ص) کے گوشہ جگر حضرت فاطمۃ الزہرا(س) سمیت ازواج رسول اکرم (ص) اور صحابہ کرام کے مزارات منہدم کر دئیے گئے ہیں، ان کاکہنا تھا کہ آل سعود امریکہ اور صیہونیزم کے غلام ہیں جن کا اصل ایجنڈا مسجد اقصیٰ کے ساتھ ساتھ مسجد نبوی (ص) اور مسجد حرام (کعبۃ اللہ) پر صیہونی غاصابانہ تسلط کو انجام دینا ہے۔انہوں نے پاکستان کے مسلمانوں سے اپیل کی ہے کہ وہ سعودی عرب کی طرح اب شام میں بھی نواسی رسول (ص) سیدہ زینب سلام اللہ علیہا کے مزار مقدس سمیت جلیل القدس صحابہ کرام کے مزارات پر ہونے والے حملوں کے خلاف سراپا احتجاج بن جائیں ورنہ تاریخ کبھی مسلم امہ کو معاف نہیں کرے گی۔

اس موقع پر شرکائے احتجاجی مظاہرہ نے لبیک یا رسول اللہ ، لبیک یا زہرا، لبیک یا زینب ، لبیک یا مہدی ، امریکہ مردہ باد ، آل سعود مردہ باد، اسرائیل نا منظور اور دہشت گردی نا منظور کے نعرے لگائے جبکہ اس موقع پر آل سعود کے آقاؤں امریکہ اور اسرائیل کے شیطانی پرچم بھی نذر آتش کئے گئے۔

وحدت نیوز (لاہور) مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین پاکستان کی مرکزی سیکرٹری جنرل خانم سکینہ مہدوی نے بارہ کہو سانحہ کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس واقعے کے بعد ملت جعفریہ یہ سوچنے پر مجبور ہو گئی ہیں کہ دہشت گردوں کی سرپرستی میں ریاستی ادارے ملوث ہیں کیونکہ اسلام آباد جیسے حساس مقام پر ان سفاک قاتل درندوں کی مجودگی خود انتظامیہ کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہیں۔بارہ کہو سانحہ میں انتظامیہ کی مجرمانہ غفلت پربہت سے سوالات چھوڑ گئے ہیں اس حملے کا دراصل ٹارگٹ مجلس وحدت مسلمین کی اعلیٰ قیادت تھی جو ہمارے جانباز رضاکاروں نے ناکام بنا دی، شہید امین حسین نے اپنی جان دے کر ملت کو عظیم سانحے سے بچا لیا اور حقیقی غلامان غازی عباس میں اپنا نام لکھ دیا، مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین ان کی عزم وہمت،بہادری،فرض شناسی اور شوق شہادت کو سلام پیش کرتی ہے۔ خانم سکینہ مہدوی کا کہنا تھا کہ بہت جلد لاہور سے ایم ڈبلیو ایم خواتین ونگ کے ارکان کوہاٹ شہید کو خراج عقیدت پیش کرنے اور شہید کے خانوادہ سے تعزت کے لیئے روانہ ہونگے۔ ان کا کہنا تھا اس قوم میں جب شہید امین حسین جیسے جذبہ شہادت سے سرشار نوجوان موجود ہوں وہ کبھی بھی دشمن کے مذموم عزائم کو کامیاب نہیں ہونے دینگے۔ انہوں نے شہید کی درجات کی بلندی کیلئے دعا اور لاحقین سے اظہار تعزیت کیا۔

وحدت نیوز (لاہور) مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین کے زیر اہتمام جامع مسجد الحسین اچھرہ ماربل مارکیٹ لاہور میں اجتماعی،تربیتی،معرفتی خواتین کے لیئے اعتکاف کا اہتمام کیا گیا جس میں خواتین کی بڑی تعداد شریک ہوئی۔ دوران اعتکاف مختلف تربیتی پروگراموں کا انعقاد کیا گیا جیس میں مختلف علمائے کرام نے دروس دیئے۔ مرکزی رہنما مجلس وحدت مسلمین پاکستان علامہ ابوذر مہدوی نے فلسفہ اعتکاف اور اسرار اعتکاف پر جامع درس دیا اور خواتین کی تربیت کو معاشرہ سازی کیلئے سنگ میل قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ رہبر انقلاب آیت اللہ روح اللہ خمینی (رح) نے ماں کی گود کو یونیورسٹی یعنی درس گاہ کا درجہ دیا کیونکہ بچے کی پہلی درس گاہ اس کی ماں کی گود ہیں بہتریں ماں ہی اعلیٰ معاشرے کی تکمیل کیلئے کردار ادا کرتی ہیں۔ معتکفین سے جامع مسجد الحسین کے خطیب علامہ حسن رضا قمی نے عبادات اور دعا کے موضوع پر درس دیتے ہوئے کہا کہ معصومین (ع) کا فرمان ہے کہ دعا مومن کا اسلحہ ہے معاشرے میں بگاڑ کی اصل وجہ مسلمانوں کا دعا و عبادات سے دوری ہیں اگر ہم غیراللہ کے بجائے رب زوالجلال کے سامنے سربسوجود ہوں تو ان تمام خرافات سے معاشرہ پاک ہو سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ دنیا بھر میں آئے دن آفات جو کبھی دہشت گردی،سیلاب،قحط ذدگی، ناگہانی اموات کا اصل سبب احکامات الہی سے دوری اور دعا و عبادات سے غافل ہونا ہے۔

 

معتکفین سے خطاب میں سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین پاکستان خواہر خانم سکینہ مہدوی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین کی ہمیشہ سے کوشش رہی ہیں کہ وہ ملت کی خواتین کی تربیت اور بیداری میں حالات جیسے بھی ہوں کردار ادا کریں الحمد اللہ آج پاکستان میں ملت جعفریہ کے خواتین ملی،مذہبی امور میں اپنے بھائیوں کے شانہ بشانہ کھڑی نظر آتی ہیں چاہے وہ ملک میں ہونے والے سانحات میں دشمن کے خلاف ہونے والے مظاہروں،دھرنوں،امدادی کاموں،یا تربیتی و تبلیغی امور ہوں ہر جگہ خواتیں صف اول کا کردار ادا کرتی رہی ہیں۔ اجتماعی اعتکاف میں نوجوان بچیوں کی بڑی تعداد شریک تھیں۔ لاہور شہر میں خواتین کی اجتماعی اعتکاف کا پہلا منظم اور پر وقار اجتماع تھا جو قابل تعریف اور قابل تقلید پروگراموں میں سے تھا۔ مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین لاہور کی سیکرٹری جنرل خواہر ہما تقوی کی بھی اس روح پرور پروگرام کی انعقاد میں گراں قدر خدمات سر انجام دیے۔

zehra najfiوحدت نیوز(کراچی)۔ امریکہ ، اسرائیل و سعودیہ کان کھول کر سن لیں اگر دوبارہ تم نہ حرم مطہر جناب سیدہ کی جانب میلی آنکھ سے دیکھا تو دنیا بھر سے کنیزان زینب (س ) حرم کے دفاع کے لئے صف اول میں کھڑی ہوں گی ۔ان خیالات کا اظہارایم ڈبلیو ایم لیڈیز ونگ صوبہ سندھ کی سیکریٹری جنرل خانم زہرہ نجفی نے مجلس وحدت مسلمین پاکستان کراچی ڈویژن شعبہ خواتین کی جانب سے کراچی پریس کلب پر حرم جناب سیدہ (س) پر تکفیریوں کے حملے کے خلاف منعقدہ احتجاجی مظاہرے سے خطاب کر تے ہو ئے کیا۔

 خانم زہرہ نجفی نے کہا کہ پیروان زینب (س) آج تکفیری دہشتگردوں کی ان کارروائیوں پر سراپا احتجاج ہیں کہ جو انہوں نے شام میں نواسی رسول حضرت زینب (س) اور اصحاب رسول (رض) کے مزارات پر حملہ کرکے کی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آج مقامات مقدسہ پر تکفیری دہشتگروں کے حملوں کے بعد دنیا جان چکی ہے کہ یہ دہشتگرد شام میں عوام کی نہیں بلکہ امریکی و اسرائیلی ایجنڈے کی تکمیل میں مصروف ہیں، لیکن امت مسلمہ ان کے عزائم کو پہچان چکی ہے اور دنیا بھر کے شیعہ و سنی عوام ان کی سازشوں کے خلاف متحد و منظم ہیں اور اس بات کا اعلان کررہے ہیں کہ ہم نے تمہاری جانب امت میں دراڑ ڈالنے کی پالیسی کو پہچان لیا اور اب ہم اپنے اتحاد سے تمہاری ہر سازش کو ناکام بنائیں گے۔

ladies protestوحدت نیوز(کراچی) نواسی رسول حضرت زینب (س) اور اصحاب رسول کے مزارات پر حملہ کرنے والوں کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں ہے، مزارات مقدسہ پر حملہ کرنے والوں نے توہین رسالت کے جرم کا ارتکاب کیا ہے، نواسی رسول حضرت زینب (س) اور اصحاب رسول کے مزارات پر حملہ کے خلاف شیعہ و سنی مسلمانوں نے احتجاج کرکے یہ ثابت کردیا ہے کہ تکفیریوں کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں ہے بلکہ یہ اسلام کے نام پر صیہونیت کے پیدا کردہ لوگ ہیں جن کا مقصد فقط عالم اسلام کو انتشار کا شکار کرنا ہے۔ ان خیالات کا اظہار مقررین نے مجلس وحدت مسلمین پاکستان کراچی ڈویژن شعبہ خواتین کے تحت شام میں نواسی رسول حضرت زینب (س) اور اصحاب رسول (رض) کے مزارات پر باغی تکفیریوں کی جانب سے دہشتگردانہ حملہ کے خلاف کراچی پریس کلب پر منعقدہ احتجاجی مظاہرہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ مقررین میں مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی رہنما علامہ اعجاز حسین بہشتی اور صوبہ سندھ کی سیکریٹری جنرل خانم زہرہ نجفی شامل تھیں۔ احتجاجی مظاہرے میں پیروان زینب (س) کی بڑی تعداد نے شرکت کی اور اس عزم کا اظہار کیا کہ پیروان زینب (س) تکفیری قوتوں کی جانب سے اسلام کے مقدسات کے توہین کے خلاف ہمیشہ میدان میں حاضر رہیں گی اور اپنی صدائے احتجاج کو بلند کریں گی۔ اس موقع پر شرکاءنے لبیک یاسول اللہ (ص)، لبیک یا زینب (س) ، امریکہ مردہ باد، اسرائیل نامنظور سمیت دہشت گردی کے خلاف شعار بلند کئے۔
علامہ اعجاز بہشتی نے شرکائے احتجاجی مظاہرہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج شام میں نواسی رسول بی بی زینب (س) اور اصحاب رسول (رض) کے روضہ جات کی بے حرمتی سے امت مسلمہ کے باغیرت انسان کا دل خون کے آنسو رو رہا ہے،تکفیریت کے پروردہ سامراجی ایجنٹوں نے مقامات مقدسہ پر حملہ کرکے امت محمدی کے جگر کو پارہ پارہ کردیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بی بی زینب (س) کا روضہ آج بھی ظالم قوتوں کے خلاف ایک مظبوط للکار ہے جو ہمیشہ ہر مظلوم کو طاقت فراہم کرتا ہے اور اسے ظالموں کے مقابلے میں قیام کرنے کا درس دیتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ بی بی زینب (س) کے اس ہی پیغام سے خوفزدہ ہوکر اسلام کا کلمہ پڑھنے والوں نے اپنے جد امجد یزید کی سنت پر عمل کرتے ہوئے ظلم کی وہ تاریخ رقم کی ہے جو رہتی دنیا تک ہر باضمیر شخص کے لئے ایک دردناک یاد ہے، لیکن بی بی زینب (س) کے پیغام پر عمل کرنے والے ہمیشہ کردار زینبی ادا کریں گے اور ہر ظالم کے خلاف اپنی آواز حق کو بلند کریں گے۔

وحدت نیوز (لاہور) مجلس وحدت مسلمین خواتین ونگ کی سیکرٹری جنرل خانم سکینہ مہدوی نے کہا کہ شام میں محسنہ اسلام کے روضہ اقدس پر حملہ دراصل اسلام پر حملہ ہے ۔انہوں نے کہاکہ اس بہادر بی بی نے واقعہ کربلا کے بعد فوج یذید اور یذیدی سوچ کو شکست دی، آج بھی اولاد یذید بی بی زینب (س) سے خوفزدہ ہے۔

سرزمین پاکستان سے ہم زینبیات حرم سیدہ زینب (س) کی حفاظت کے لئے اپنے حزب الہیٰ بھائیوں کے شانہ بشانہ دفاع اور حفاظت کے لئے تیار ہیں ۔
آج کا یزید ملعون بھی جناب سیدہ زینب (س) کے جلال و جمال سے خوف ذدہ ہے ۔

mwm pak flagوحدت نیوز (بلتستان)  مجلس وحدت مسلمین پاکستان بلتستان ڈویژن شعبہ خواتین کے زیر اہتمام شام میں بی بی زینب سلام اللہ علیہا کے روضہ اقدس پر تکفیریوں کی جانب سے راکٹ حملہ کے خلاف ایک احتجاجی پروگرام کا انعقاد الزہراء ہال اسکردو میں ہوا۔ احتجاجی مجلس سے خطاب ہوئے مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین کی رہنماء معلمہ سیدہ عصمت رضوی نے کہا کہ شام میں حضرت زینب کبری س کی روضہ اقدس پر حملہ یزید وقت کی کارستانی ہے۔ انہوں نے کہا کہ دنیا بھر کی ظالم طاقتیں فکر کربلائی اور سفیر کربلا کی فکر سے پریشان ہیں۔ روضہ زینب (س) پر حملہ دراصل خانواندہ نبوت و وحی پر حملہ ہے۔

عصمت رضوی نے کہا کہ رسول مکرم (ص) کی نواسی، علی کی بیٹی اور ثانی زہراء نے امام حسین (ع) کی شہادت کے بعد شام و کوفہ کے درباروں میں جا کر یزید اور یزید کے پیروکاروں کے تخت و تاج کو جس بہادری اور شجاعت کے ساتھ روند ڈالا وہ قیام قیامت تک کے یزیدیوں کے منہ پر طمانچہ اور یزیدیت کی شکست کی بین علامت ہے۔ یہی وجہ ہے کہ ابوجہل و یزید کے فرزندوں سے چودہ سو سال گزرنے کے بعد بھی خانوادہ رسالت سے بغض و عناد ختم نہیں ہوا اور اب بھی اہلبیت ع کے شعار کو مٹانے کے درپے ہیں۔ یزیدی طاقتوں کو یہ واضح ہو جانا چاہیے کہ اہل بیت ع کا نور کفر کی ہواوں سے بجھنے والا نہیں ہے۔

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree