وحدت نیوز(قصور) مجلس وحدت مسلمین پاکستان پنجاب کی کابینہ کے وفد جس کی سربراہی صوبائی ڈپٹی سیکرٹری جنرل و سیکرٹری تنظیم سازی مولانا سید ملازم حسین نقوی نے کی آج ضلع قصور کی تنظیمی فعالیت کا جائزہ لینے اور صوبائی و مرکزی پروگرام برائے تنظیم سازی پر عمل درآمد کے لیئے ضلع قصور کا دورہ کیا جہاں ضلعی سیکرٹری جنرل سید متقی جعفری اور انکی کابینہ سے ملاقات کی اس موقعہ پر تنظیمی صورتحال کا جائزہ کیا گیا اور طے پایا کہ یکم جنوری تک ضلع کی تمام تحصیلوں میں یونٹ سازی مکمل کی جائے گی اور مرکزی یپروگرام کے مطابق یونٹ کی تعداد مکمل کی جائے گی اور ضلعی شوری کا اجلاس منعقد کیا جائے گا وفد میں مرکزی معاون سیکرٹری تنظیم سازی آصف رضا ایڈووکیٹ  رابطہ سیکرٹری پنجاب رائے ناصر علی سیکرٹری عزاداری سیل رانا ماجد علی شامل تھے۔

وحدت نیوز(کراچی) مجلس وحدت مسلمین صوبہ سندھ کے پولیٹیکل سیکریٹری علی حسین نقوی نے کہاہے کہ خاتون زائر امام حسین علیہ السلام زبیدہ خانم پر بمقام سندھ بلوچستان بارڈر ڈیرہ الہیار ضلع جعفرآباد صوبہ بلوچستان ایس ایچ او کا گاڑی چڑھا کر بیہمانہ قتل کرنے کے خلاف ہم بھرپور احتجاج کرتے ہیں۔زائرین امام حسین علیہ السلام کے ساتھ بلوچستان پولیس کا معتصبانہ رویہ حکومتی پالیسیز کا عکاس ہیں۔بلوچستان پولیس میں شدت پسند اور انتہا پسند سوچ کو اگر نہیں کچلا گیا تو یہ رویہ ملک اور صوبہ بلوچستان کے لیئے انتہائی نقصان کا حامل ہے۔


انہوں نے کہاکہ نا اہل افراد کی سفارشی بھرتیاں اور رشوت کے زور پر تعیناتیوں کے نتیجے میں بلوچستان پولیس زبوں حالی کا شکار ہے اور بہت سے چور اور قاتل بھی پولیس میں بھرتی ھوچکے ہیں۔وفاقی وزیر داخلہ اور آئی جی بلوچستان اس سنگین واقع کا فوری نوٹس لیتے ہوئے متعلقہ ایس ایچ او کو قتل عمد میں گرفتار کرنے کے فوری گرفتار کرنے کے احکامات جاری کریں۔اگر فوری طور پر قاتل کے خلاف اقدام نہ لیئے گئے تو ملت جعفریہ انصاف کے حصول کے لیئے ملک بھر میں احتجاجی تحریک شروع کرنے کا حق محفوظ رکھتی ہے۔

انہوںنے مزیدکہاکہ گزشتہ کئ ماہ سے ملت جعفریہ کے ساتھ جو رویہ روا رکھا جا رہا ہے بالخصوص اکابرین ملت جعفریہ اور علماء کرام کو 4th شیڈول میں ڈالنا فیصل رضا عابدی کی گرفتاری، ملت جعفریہ کے جوانوں کو بغیر کوئی وجہ بتائے لاپتہ کردیا جانا کئ سوالوں کو جنم دے رہا ہے اور ملت جعفریہ میں غم و غصے کی کیفیت میں مسلسل اضافہ ہورہا۔ایک سوچے سمجھے منصوبے کے تحت مکتب اہل بیت کو دیوار سے لگایا جارہا ہے۔ ہم امن پسند اور محب وطن قوم ہیں مگر نا انصافیوں اور زیادتیوں کو برداشت کرنے پر ہرگز آمادہ نہیں۔ہمیں اپنے حقوق کے لیئے احتجاج کا راستہ اختیار کرنے پر مجبور نہ کیا جائے۔

وحدت نیوز (اوکاڑہ) مجلس وحدت مسلمین پاکستان ضلع اوکاڑہ کا سید انوارالحق زیدی کو آئندہ چھ ماہ کے لیئے عبوری سیکرٹری جنرل نامزد کر دیا گیا ہے اس حوالے سے صوبائی سیکرٹری تنظیم سازی مولانا سید ملازم حسین نقوی ،مرکزی معاون سیکرٹری تنظیم سازی آصف رضا ایڈووکیٹ، صوبائی رابطہ سیکرٹری رائے ناصر علی، صوبائی سیکرٹری عزاداری کونسل رانا ماجد علی نے آج اوکاڑہ کا تنظیمی دورہ کیا جہاں مقامی کارکنوں اور عہدیداروں سے ملاقات کی جس میں ضلع کی تنظیمی صورتحال کا جائزہ لیا گیا اور اتفاق رائے سے صوبائی سیکرٹری تنظیم سازی نے سید انوارالحق زیدی کو آئندہ تنظیمی کنونشن تک عبوری سیکرٹری جنرل نامزد کیا اور حلف لیا اجلاس میں فیصلہ ہوا کہ 20 نومبر تک یونٹ سازی کر کے ضلعی شوری کا اجلاس منعقد کیا جائے گا جس میں مرکزی اور صوبائی نمائندگان خصوصی شرکت کریں گے۔

وحدت نیوز(لاہور) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے صوبائی سیکرٹریٹ پنجاب شادمان میں شیعہ بانیان مجالس کا اجلاس منعقد ہواجس کی صدارت ایم ڈبلیو ایم کے صوبائی رہنما علامہ اقبال کامرانی نے کی،اجلاس میں محرم الحرام کے دوران عزاداروں پر درج کی جانے والی جھوٹی ایف آئی آرز اور انتظامیہ کی پالیسیوں پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔

 اجلاس کے بعد میڈیا نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے ایم ڈبلیو ایم لاہور کے سیکرٹری جنرل سید حسن رضا ہمدانی کا کہنا تھا کہ پنجاب کے مختلف شہروں میں بانیان مجالس کے خلاف غیر قانونی ایف آئی آرز کاٹ کر بے گناہ شہریوں کو حراساں کیا گیا، جبکہ ان مجالس کے خلاف کسی شہری کی جانب سے کوئی شکایات سامنے نہیں آئیں اور تمام ایف آئی آرز پولیس اور ریاست کی مدعیت میں کاٹی گئیں جس کی بھرپور مذمت کرتے ہیں. انہوں نے کہا کہ عزاداری حضرت امام حسین علیہ السلام نہ صرف ہمارا مذہبی فریضہ ہے بلکہ آئین پاکستان کے مطابق ہمارا آئینی و قانونی حق ہے جس پر کسی قسم کا قدغن قابل قبول نہیں۔ ہم نے ہمیشہ اقبال اور قائد کے پاکستان کی جدوجہد کی ہے ، کسی صورت بھی پاکستان کو پولیس اسٹیٹ نہیں بننے دیں گے۔ان کا کہنا تھا کہ پولیس نے کس آئین و قانون کے تحت چادر اور چار دیواری کے تقدس کو پامال کیا جبکہ لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کے مطابق چار دیواری میں مجالس منعقد کرنے کے لیے کسی اجازت نامے کی ضرورت نہیں بلکہ پولیس عزاداروں کو سیکورٹی فراہم کرنے کی پابند ہے ،لیکن اس کے برعکس پنجاب پولیس کی بانیان مجالس کے خلاف غیر قانونی ایف آئی آرز اور دیگر مقدمات میں الجھانا سمجھ سے بالاتر ہے۔

 انہوں نے مزید کہا کہ ہم پنجاب حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ سابقہ گورنمنٹ کی روش پر چلنے کی کوشش نہ کی جائے ہم موجودہ حکومت کے اتحادی ضرور ہیں لیکن عزاداری سے متعلق کسی قسم کی رکاوٹ کو ہرگز برداشت نہیں کریں گے۔ ایم ڈبلیو ایم قائدین نے وزارت داخلہ سے مطالبہ کیا کہ پرامن ماحول میں منعقد ہونے والے روایتی اور لائسنس یافتہ مجالس اور جلوس ہاے عزا پر ناجائز ایف آئی آرز کو فی الفور خارج کیا جائے کیوں کہ عزادروں میں ان مسلسل ہونے والی ایف آئی آرز کے حوالے سے انتہائی غم و غصہ پایا جاتا ہے جبکہ موجودہ حکومت کی سابقہ حکومتی پالیسیوں پر عمل درآمد کو شکوک و شبہات کی نظر سے دیکھا جا رہا ہے۔

بانیان مجالس پر ناجائز ایف آئی آرز کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ لاہورساندہ میں گھر میں پڑھی جانے والی حدیث کساءکے دوران عزاداروں کو چادر اور چار دیواری کا تقدس پائمال کر کے گرفتار کیا گیا ، جبکہ اس کے علاوہ مشہور ڈیزائنر محترمہ بی جی کے گھر عرصہ پچیس سال سے ہونے والی قدیمی مجلس کے دوران چادر اور چار دیواری کے تقدس کو پامال کیا گیا اور شب عاشور عزا خانہ گلشن زہرہ وحدت روڈ پر عزاداری امام حسین علیہ السلام کے خلاف پولیس گردی نے ڈیپارٹمنٹ کی کارکردگی پر سوالیہ نشان چھوڑ دیا ہے ۔اس تمام معاملے پر آئی جی پنجاب اور وزارت داخلہ نوٹس لیں اگر پولیس گردی کے اس سلسلے کو نہ روکا گیا اور سابق حکومت کی عزاداری مخالف پالیسیوں کو ترک نہ کیا گیا تو عزاداران امام حسین علیہ السلام احتجاجی دھرنا دینے پہ مجبور ہوجائیں گے۔

اجلاس میں مجلس وحدت مسلمین سمیت مختلف شعیہ تنظیموں کے سربراہان اور بانیان مجالس رانا ماجد رائے ناصر علی، خرم عباس نقوی ،پیر نوبہار شاہ صدر شعیہ پولیٹکل پارٹی ، سید وقار الحسنین نقوی چئیر مین شعیہ شہریان پاکستان ، ابوذر بخاری، خواجہ محسن عباس، امیر علی شاہ، افسر رضا خان ، سید حسین زیدی ، نجم عباس، شیخ عمران ، انور گجر، سجاد گجر، مجاہد نقوی ، خواجہ میثم عباس و دیگر نے شرکت کی. ملت جعفریہ کی نمایندہ تنظیموں اور شخصیات نے اس بات پر اتفاق کیا کہ اگر آئندہ روزِ جمعة المبارک تک عزاداری امام حسین (ع) برپا کرنے پر درج کی گئی جھوٹی ایف آئی آرز خارج نہیں کی گئیں تو ملت جعفریہ بھرپور احتجاجی تحریک چلانے پر مجبور ہو جائے گی ۔

وحدت نیوز (کراچی) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ڈپٹی سیکریٹری جنر ل علامہ سید احمد اقبال رضوی نے کہاہے کہ پاکستان میں کسی بھی شہری کو ایک شہر سے دوسرے شہرمیں داخل ہونے کیلئےاین اوسی کےحصول کوآئین پاکستان کے مطابق بنیادی شہری آزادی پر قدغن شمار کرتے ہیں ،سندھ اور بلوچستان کو زائرین کے لئے نوگوایریا بنا دیاگیا ہے، سندھ سے بلوچستان میں داخل ہونے ہوالے زائرین سے سکیورٹی اداروں کا این او سی طلب کرنا علاقائی، لسانی اور مذہبی تعصب کو فروغ دے رہاہے، ہم زائرین سے ایک صوبے سے دوسرے صوبے میں داخلے پر این اوسی کی طلبی کو مسترد کرتے ہیں ،این او سی کے نام پر زائرین کی آمد ورفت میں رکاوٹ ملت جعفریہ کو کسی صورت منظور نہیں، وفاقی حکومت این اوسی کی آڑ میں شہری آزادیوں پر قدغن کا فوری نوٹس لے اور سابقہ حکومت کے شیڈول روٹس کے قانون پر نظر ثانی کرے بصورت دیگر بھرپور احتجا ج کیاجائے گا۔ ان خیالات کا اظہارانہوں نے صوبائی سیکریٹریٹ وحدت ہائوس سولجر بازارمیں ہنگامی پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، اس موقع پر علامہ مرزایوسف حسین،علامہ صادق جعفری ،علامہ مبشرحسن، علامہ نعیم الحسن الحسینی،علامہ علی انور جعفری،ناصرحسینی ، میر تقی ظفراورمیثم عابدی بھی موجود تھے۔

انہوں نے کہاکہ حالیہ انتخابات کے بعد وزیر اعظم پاکستان عمران خان اور وزیر داخلہ شہریار آفریدی کی جانب سے زائرین کے مسائل اور تفتان بارڈر پر درپیش مشکلات کے ازالے کے لئے فوری اقدامات کی ہدایات جاری کیں تھیں ملت جعفریہ میں امید کی کرن جاگی تھی کہ سابقہ دور حکومت سے زائرین کو درپیش مشکلات کے خاتمے کا وقت قریب آپہنچا ہے لیکن افسوس بلوچستان حکومت ، سکیورٹی اداروں اور ایف سی حکام نے وزیر اعظم اور وزیر داخلہ کے احکامات کو ہو ا میں اڑا دیا ہے، تفتان، کوئٹہ اور اب سندھ بلوچستان بارڈر پر زائرین کو شدیدازیتوں اور مصائب میں مبتلا کیا جارہا ہے، توبت زائرین کی ہلاکتوں تک پہنچ چکی ، وزیر اعظم پاکستان اور وزیر داخلہ اس صورت حال کا فوری نوٹس لیں اور سابقہ مسلم لیگ نواز کی طرز حکمرانی کی روش پر چلنےسے اجتناب کریں۔ورنہ ملت جعفریہ ن  لیگ حکومتی کی طرح موجودہ حکومت کے ظالمانہ کردار اور رویئے کے خلاف صدائے احتجاج بلند کرے گی۔

ان کا کہنا تھاکہ ہر سال کی طرح اس سال بھی زمینی اور ہوائی راستے سے تقریباً1لاکھ 40ہزار سے زائد زائرین کربلا معلیٰ کی زیارت کی تیاری کرچکے ہیں، اس وقت بھی تین ہزار سے زائد زائرین ایک ہفتے سے کوئٹہ میں موجود ہیں اور تفتان بارڈر کی جانب روانگی کے لئے حکومتی اجازت نامے کے منتظر ہیں لیکن تاحال انہیں اجازت نہیں دی جارہی ، کوئٹہ سے موصولہ اطلاعات کے مطابق آئندہ وآنے والے چند روز میں 40ہزار کے قریب زائرین کوئٹہ پہنچنے والے ہیں،ایسی ہی صورت حال کا سامنا زائرین کو تفتان بارڈر پربھی ہے جہاں ایران وعراق سے واپس آنے والے زائرین ہفتوں کھلے آسمان تلے دن کی دھوپ اور رات کی سردی میں زندگی گذارنے پر مجبور ہیں،تفتان بارڈر پر بھی زائرین کو سکیورٹی کلیئرنس کے نام پر ہفتوں ازیت پہنچانے کاسلسلہ تاحال جاری ہے، حکومتی اداروں کی نا اہلی اورسہولیات کی عدم فراہمی کے سبب تفتان اور کوئٹہ میں تین زائرین گذشتہ ایک ہفتے میں جاں بحق ہوچکے ہیں۔

انہوں نے مزید کہاکہ زائرین امام حسین ؑ پر ظلم وبربریت کے قصے فقط کوئٹہ اور تفتان بارڈر تک محدود نہیں یہ مظالم سندھ بلوچستان بارڈر تک پھیل چکے ہیں، جیکب آباد کے راستے سندھ سے بلوچستان میں داخل ہونے والے زائرین کے قافلوں کو پولیس اور سکیورٹی اداروں کی جانب سے این او سی کے نام پر روکا جارہا ہے، جہاں رشوت کی وصولی کی بھی اطلاعات ہیں ، آج الصبح ایک خاتون زائرہ کوشراب کے نشے میں دہت پولیس اہلکاروں نے مبینہ غفلت کے نتیجے میں بس سے کچل کر شہید کردیاہے، شہید زائرہ زبیدہ خانم کا تعلق کراچی سے تھا جنہیں بے دردی سے کچل دیا گیا، ہم اس ظلم پر خاموش نہیں رہیں گے،بلوچستان کی بیوروکریسی اور پولیس میں سفارشی بھرتیوں کے باعث شدید بد انتظامی دیکھنے میں آتی ہے، وزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال سے مطالبہ کرتے ہیں کہ اس سانحے میں ملوث ایس ایچ او گل حسن ،چوکی انچارج داد محمد ودیگر پولیس اہلکاروں کے خلاف فوری طور پر مقدمہ درج کیا جائے اور انہیں قرارواقعی سزادی جائے، بصورت دیگر ملت جعفریہ شدید احتجاج کا حق محفوظ رکھتی ہے۔

رہنمائوں نے مزید کہاکہ عراقی سفارت خانے کی جانب سے ویزے کے اجراءمیں تاخیر کے باعث اب تک ایک درجن سے زائد فلائٹس زائرین کو لئے بغیر روانہ ہوگئی ہیں جس سے ہزاروں زائرین کو کروڑوں روپے کا نقصان ہوا ہے،ہم عراقی وزارت خارجہ سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ اسلام آباد میں قائم عراقی سفارت خانے کوبروقت ویزوں کے اجراء کا پابند بنائے تاکہ ایک لاکھ 40ہزار سے زائرین جنہوں نے عراقی ویزوں کے لئے رجوع کیا ہوا ہے بروقت اپنے ویزے حاصل کرکے اپنی بک شدہ فلائٹس سے عراق روانہ ہوسکیں اور ٹکٹس کی بکنگ کی مدمیں کروڑوں روپے کا ضیاع نا ہوسکے ، اس حوالے سے پاکستانی وزارت خارجہ بھی اپناسفارتی کردار اداکرتے ہوئے عراقی حکومت سے پاکستان میں پھنسے ہوئے ایک  لاکھ سے زائد زائرین کی فوری طور پر عراق روانگی کے لئے دبائو ڈالےتاکہ لاکھوں زائرین کی تشویش اور مشکلات کا خاتمہ ممکن ہو سکے ۔

رہنمائوں کا آخر میں کہناتھا کہ فیصل رضا عابدی ایک محب وطن اور شہید پرور شخصیت ہیں،ان پر دہشت گردی کی دفعات کے تحت مقدمے کا اندراج قابل مذمت ہے ، افسوس کی بات ہے کہ اس وطن عزیز میں ہزاروں بے گناہ شیعہ سنی پاکستانیوں ، افواج پاکستان اور معصوم بچوں کے قاتل آزاد گھوم رہے ہیں، چوک چوراہوں پر بیٹھ پر معزز جج صاحبان کو مغلظات بکنے والے سینہ تان کر گھوم رہے ہیں، ٹی وی چینلز پر بیٹھ کر اعلیٰ عدلیہ پر صبح شام لعن طعن کرنے والوں کو کوئی نہیں پوچھتا لیکن ایک تنقیدی انٹرویو پر فیصل رضا عابدی کے خلاف دہشت گردی کی دفعات پر مشتمل مقدمے کا اندراج پولیس کے متعصبانہ کرادر کی عکاسی کرتا ہے، فیصل رضا عابدی کو زنجیروں میںجکڑ کر عدالت میں لایا جانا قابل مذمت ہے ایسے مناظر تو قوم نےبھارتی ایجنٹ کلبھوشن یادیو کی گرفتاری کے وقت بھی نہیں دیکھے تھے، ہم محترم چیف جسٹس آف پاکستان سے اپیل کرتے ہیں ہے کہ فیصل رضا عابدی کے حوالے سےعدلیہ کے سخت موقف میں نرمی برتے ہوئےفوری رہائی کے احکامات جاری فرمائیں تاکہ قوم کی اضطراب اور تشویش کا بھی خاتمہ ممکن ہو سکے ۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) سربراہ مجلس وحدت مسلمین پاکستان علامہ راجہ ناصر عباس جعفری و مرکزی سیکرٹری سیاسیات اسد عباس نقوی اور معاون امور خارجہ مجلس وحدت مسلمین علامہ ضیغم عباس نے زائرین کو درپیش مسائل پر اسلام آبادمیں متعین عراقی سفیر سے ملاقات کی اور انہیں زائرین کو درپیش مشکلات سے آگاہ کیا، سفیر محترم نے علامہ راجہ ناصرعباس جعفری کو بتایا کہ سفارتحانے کا عملہ رات دن زائرین کے ویزوں کے اجراءمیں مصروف عمل ہے، ہماری جانب سے کوئی رکاوٹ نہیں البتہ ٹریول ایجنٹس اپنا کام مکمل رکھیں ۔

بعد ازاں علامہ راجہ ناصرعباس جعفری نے سفارت خانے کے باہر موجود زائرین اور قافلہ سالاروں سے ملاقات کی اور ان کے مسائل سنے قائد وحدت علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ زائرین کی خدمت کو عبادت سمجھتا ہوں اور مجلس وحدت مسلمین عراقی حکومت،سفارت خانہ اور وزارت داخلہ سے مسلسل رابطے میں ہیں انشاءاللہ تمام مسائل حل ہونگے ہم اس ایشو میں تمام ذمہ داران سے رابطے میں ہیں۔

Page 1 of 828

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree