The Latest

وحدت نیوز (لاہور) رکن پنجاب اسمبلی اور مرکزی سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین سیدہ زہرا نقوی نے کہا ہے کہ خواتین کے حقوق کی آڑ میں ملک میں فحاشی، عریانی اور بے حیائی کی اجازت نہیں دی جا سکتی، اسلام میں یہ عمل حرام ہے، اس کیخلاف ہر سطح پر مخالفت کی جانی چاہیے۔

لاہور میں کارکنان سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ عورت حیا اور عفت کی علامت ہے، پاکستانی خواتین عورت مارچ جیسے غیر ملکی ایجنڈے کا حصہ نہیں بنیں گی، کیونکہ عورت مارچ کی شرکاء کا عورتوں کے حقیقی مسائل سے دور دور کا تعلق نہیں ہوتا۔ خواتین کے عالمی دن کے موقع پر پاکستانی خواتین اپنے حقیقی مسائل کو اجاگر کریں اور ان کا حل بھی تلاش کرنے کی کوشش کریں تاکہ این جی اوز مافیا اور مادر پدر آزادی کے حامی ٹولے کو حقیقت بے نقاب کی جا سکے۔

وحدت نیوز(لاہور) لاہور الفاطمہ مسجد و امام بارگاہ واپڈا ٹاؤن میں مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین مرکز کی جانب سے تیرہ ، چودہ اور پندرہ رجب کی تاریخوں میں خواتین کے لیے سالانہ اعتکاف ِ علوی ؑکا اہتمام مرکزی سیکرٹری تنظیم سازی محترمہ معصومہ نقوی کی زیر سرپرستی کیا گیا ۔

معنویت سے بھرپور اس اعتکاف کی محفل میں خواتین نے تلاوت قرآن ، دعا و مناجات اور ذکر خداوندی کیساتھ ساتھ مختلف معلمات اور علماے کرام کے دروس سے بھی استفادہ کیا ۔

ڈپٹی سیکرٹری جنرل ایم ڈبلیو ایم پاکستان علامہ احمد اقبال رضوی ، مرکزی سیکرٹری جنرل ایم ڈبلیو ایم شعبہ خواتین و رکن پنجاب اسمبلی محترمہ سیدہ زہرا نقوی، مرکزی سیکرٹری تنظیم سازی و رکن قرآن بورڈ محترمہ معصومہ نقوی ،جناب مولانا حسن مھدی کاظمی اور خانم اقصی ذاکر نے معتکفین سے مختلف موضوعات پر خطاب کیا ۔

اعتکاف کے تیسرے اور آخری روز مجلس شہادت جناب زینب الکبری سلام اللہ علیھا سے خانم اقصی ذاکر نے خطاب کیا ، نماز ظہرین کے بعد اعمال ام داود کا اہتمام کیا گیا جس میں معتکفین کے ساتھ ساتھ لاہور کے دیگر علاقوں سے بھی خواتین نے شرکت کی۔

 اس موقع پر سیکرٹری جنرل ایم ڈبلیو ایم شعبہ خواتین لاہور محترمہ حنا تقوی اور ڈپٹی سیکرٹری جنرل محترمہ عظمی نقوی نے بھی شرکت کی اور تمام معتکفین خواہران میں خاک شفا و تسبیح بطور تبرک تقسیم کیا ْ

آخر میں منتظمین کی جانب سے اعتکاف میں شرکت کرنے والی خواہران کا شکریہ ادا کیا گیا، اس موقع پر محترمہ معصومہ نقوی کا کہنا تھا کہ محترمہ صبا رضا اور محترمہ زیدی اور ان کی پوری ٹیم  اور الفاطمہ مسجد و امام بارگاہ انتظامیہ کے تہہ دل سے مشکور ہیں جنہوں نے اس نورانی اعتکاف کے انتظامات کے حوالے سے مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین کی مرکزی کابینہ سے بھرپور تعاون کیا۔

وحدت نیوز(گلگت) امیر المومنین حضرت علی ان ابی الطالب علیہ السلام کے یوم ولادت بسعادت کے موقع پر تربیت گاہ زینب کبریؑ  ( یتیم خانہ ) کے زیر اہتمام ایک عظیم الشان تقریب کا انعقاد کیا گیا جس میں مومنات کی کثیر تعداد نے شرکت کی ۔جشن کی تقریب سے مرکزی سیکٹرٹری یوتھ مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین محترمہ سائرہ ابراہیم نے بھی خطاب کیا ۔

ان کا کہنا تھا کہ امیر المومنین حضرت علی ابن ابی الطالبؑ کائنات کی ایک ایسی عظیم الشان ہستی ہیںجن کی سیرت پاک میں انسان اور انسانیت کی بقا اور آزادی کا راز مضمر ہے ۔حضرت علی علیہ السلام کی شان اور فضیلتوں کا احاطہ کرنا ناممکن ہے بلکہ قرآن و علم پر مکمل دسترس رکھنے والے ہی کسی حد تک ان کی معرفت حاصل کر سکتے ہیں، انہوں نے کہا کہ مولائے کائنات فقط کسی خاص مسلک،ملت یا مذہب سے وابسطہ نہیں بلکہ آپ کائنات کے ذرہ ذرہ کا سرمایہ ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ابدی زندگی اور دنیوی کامیابی حاصل کرنے کے لئے معرفت امام کی ضرورت ہے ۔تقریب سے منتظم مدرسہ خانم نور جہاں (فارغ التحصیل قم المقدس ) نے بھی خطاب کیا اور معاشرہ سازی اور یتیموں کے لئے کی گئیں مجلس وحدت مسلمین کی کوششوں کو سراہا اختتام پر بچوں میں عیدی کے طور پر نقدی تقسیم کی گئی۔

وحدت نیوز(لاہور) تیرہ رجب یوم ولادت با سعادت امیرالمومنین،  شیر خدا ، وصی رسول اللہ ، مولائے کائنات حضرت علی علیہ سلام کی ولادت باسعادت کے موقع پر ایم ڈبلیو ایم شعبہ خواتین و رکن صوبائ اسمبلی محترمہ سیدہ زہرا نقوی نے اپنے تہنیتی پیغام میں  کہا پروردگار کا لاکھ لطف و احسان ہے کہ اس نے اپنے محبوب نبی کے بعد ہمیں امام علی علیہ جیسا رہبر و رہنما عطا کیا آپ کی ذات فضائل و کمالات کا ایسا مجموعہ ہے کہ کوئی دانشور مفکر نکتہ داں اس کا احاطہ نہیں کر سکتا ۔

انہوں نے کہا کہ امیرالمومنین ایسی شخصیت ہیں جن کے اندر متضاد صفات پائی جاتی ہیں۔ جو شخص جنگجو ہوتا ہے وہ اہل عبادت نہیں ہوتا، جو طاقت کے بل بوتے پر زندگی بسر کرتا ہے وہ زاہد و پرہیزگار نہیں ہو سکتا، جو ہمیشہ تلوار چلاتا ہو اور منحرف افراد کو سیدھے راستے پر لگاتا ہو وہ لوگوں پر مہربان نہیں ہو سکتا لیکن حضرت امیر المومنین علیہ السلام اس ذات کا نام ہے جس میں متضاد صفات پائی جاتی تھیں۔ وہ دنوں کو روزے رکھتے تھے اور راتوں کو عبادت میں مصروف رہتے انہوں نے کہا کہ آج تیرہ رجب  ایسا دن ہے جس میں رسول اسلام صل اللہ علیہ و آلہ وسلم کو قرآن کریم اور اپنی سنت کا مفسّر ملا ہے اور دین اسلام کو اس دن حامی و مددگار ملا ہے، اس عظیم مولود کے وجود سے بعثت رسول اسلام صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم پایہ تکمیل تک پہنچی اور دین کامل ہوا ۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ امام علی علیہ سلام کی محبت و ولایت ہمارا ایمان ہے اسکے بغیر ہمارا ایمان مکمل نہیں ہوتا پیروان امیرالمومنین کی ذمہ داری ہے کہ وہ اس عظیم الہی نعمت کی قدر کریں اور ان کے سیرت و کردار کو مشعل راہ بنا کر دنیا و آخرت میں نجات کا سامان کریں۔

وحدت نیوز(اٹک)مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین ضلع اٹک کے زیر اہتمام بھارت کی ظالم جابر مودی سرکار کی ہندوستان کے مسلمانوں کے خلاف مسلم اقدامات اور حالیہ دنوں حجاب کی پابندی کے خلاف احتجاج ریکارڈ کروایا گیا جس میں تینوں یونٹس کی خواہران کے علاؤہ اہلسنت والجماعت کی خواہران نے شرکت کی ۔

اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے خواہر چمن نے کہا کہ موجودہ حالات میں ہمیں کردار زینبی ع ادا کرنا چاہیے جیسے بی بی زینب ع نے مشرک فاسق یزید کے سامنے کلمہ حق کہا اور اپنے پردہ کی حفاظت کی  اسی طرح جہاں پر ظلم ہو اسی طرح حق کے سامنے ڈٹ جانا چاہیے چاہے آپ تعداد میں کم کیوں نہ ہو حق ہمیشہ غالب آتا ہے اور مسکان خان کے ساتھ ہماری پوری مسلم امت کھڑی ہے ۔

خواہر زینب بنت الہدی مرکزی ڈپٹی سیکریٹری سوشل میڈیا نے بھی حاضرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مظلوم کا ساتھ دینا اور ظلم کے خلاف آواز بلند کرنا ایک مؤمن کی نشانی ہے اور اس پر خاموشی اختیار کرنا ظلم کے ساتھ دینے کے مترادف ہے۔احتجاج میں مرکزی مسئول مالیات خواہر قراةالعین اور ضلعی سیکرٹری جنرل خواہر نزہت نقوی اور ضلعی مسئول مالیات خواہر عاصمہ نوید اور ایکس سیکرٹری جنرل خواہر زینب رباب کے علاؤہ پی ٹی آئی اٹک کینٹ کی صدرماریہ نے شرکت کی۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان شعبہ خواتین کے زیر اہتمام اسلام آباد،لاہور،کراچی،کوئٹہ، پشاوراور آزادکشمیر سمیت ملک کے مختلف شہروں میں "یوم حجاب" منایا گیا جس کا مقصد بھارت اور دنیا کے دیگر ممالک میں حجاب پر پابندی کے خلاف اپنے ردعمل کا اظہار کرنا تھا۔اس  سلسلے میں اسلام آباد پریس کلب کے سامنے احتجاج کیا گیا۔

مقررین نے بھارت میں مسلمانوں کے خلاف مودی حکومت کے متعصبانہ اقدامات پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ بھارتی وزیر اعظم نے ہندوستان میں اقلیتوں پر عرصہ حیات تنگ کر رکھا ہے۔مودی کے سطحی اقدامات ریاست ہند کے ٹکروں میں تقسیم کا راہ ہموار کریں گے۔بھارت کی ظالم، جابر اور فاشسٹ مودی حکومت کے  مسلم کش اقدامات، حجاب پر پابندی کا حالیہ فیصلہ اور مسلم خواتین کو ہراساں کرنے کے خلاف انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں اور امت مسلمہ کو آواز بلند کرنی چاہیے۔

اسلام اباد میں ہونے والے احتجاج سے خطاب کرتے ہوئے خواہر قندیل زہرا کاظمی نے کہا مغرب کی پیروی کرتے ہوئے  بھارتی حکومت حجاب کے خلاف نہ صرف قانون سازی کر رہی ہے بلکہ خواتین کو حجاب اتارنے اور عملی طور پر ہراساں کرنے کے واقعات میں آئے دن اضافہ ہوتا جارہا ہے ۔حجاب فقط ہندوستان میں بسنے والی خواتین کا حق نہیں بلکہ تمام کلمہ گو خواتین  کا شرعی فریضہ ہے۔ ہندوستان کے اندر  مسلمانوں پر جو مظالم ڈھائے جارہے ہیں اور مسئلہ حجاب کے خلاف جو سازشیں کی جارہی ہیں اس کی بھرپور مذمت کرتے ہیں۔

ہندوستان کروڑوں مسلمانوں کا مسکن ہے ۔ یہ کہاں کی جمہوریت ہے کہ کروڑوں انسانوں کے بنیادی حقوق کو پائمال کرتے ہوئے ان کے خلاف قانون پاس کرایا جائے ۔بھارت میں مذہبی جنونیوں کے سامنے نعرہ توحید بلند کرنے والی بیٹی مسکان تنہا نہیں ہم سب مائیں، بہنیں ،بیٹیاں ان کے ساتھ ہیں ۔آر ایس ایس کے غنڈوں کے ناروا رویے کے خلاف ہم سراپا احتجاج ہیں ۔ 

مودی حکومت ہوش کے ناخن لے.حجاب محض عورت سے منسوب نہیں بلکہ یہ مکمل نظام اخلاق اور نظام عفت و عصمت ہے ۔ حجاب کو مسلم خواتین کی پسماندگی کی علامت قرار دینے والے اس کی طاقت سے آگاہ نہیں۔ مغرب اور بھارت کی حجاب دشمنی دراصل اسلام دشمنی اور ان کے  دوہرے معیار پر دلالت کرتا ہے۔ مغرب نے عسکری و ثقافتی یلغار کے ہتھیار سے مسلم معاشرے کی ثقافت و روایات کو مسخ کرنے کی بھرپور کوشش کی تاہم مسلم خواتین اسلامی تعلیمات کے دفاع میں کبھی پیچھے نہیں رہیں گی۔

حجاب کے دفاع میں ان گنت قربانیاں دی گئی ہیں۔ مسلم خواتین کے حجاب کے حوالے سے مغرب کا رویہ  نفرت آمیز، پر تعصب اور عدم برداشت کا ہے۔عدالت میں مروا شیربینی کا حجاب کی وجہ سے قتل ،اور مجمع عام میں مسکان جیسی نہتی لڑکی کے خلاف ہجوم کی نعرہ بازی نام نہاد مہذب طبقے کی اصلیت کو واضح کرتا ہے۔ احتجاجی مظاہرے سے محترمہ قندیل زہراء مرکزی سیکریٹری خواہران زینب (زینبیہ گائیڈ ) ، محترمہ خدیجہ کائنات ضلعی سیکریٹری جنرل ضلع اسلام آباد ۔ محترمہ بینا شاہ مرکزی آفس مسئول شعبہ خواتین اور محترمہ بتول صاحبہ یونٹ آرگنائزر علی پور مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین نے بھی خطاب کیا ۔

وحدت نیوز(کراچی)بھارت میں حجاب پر پابندی کے خلاف مجلس وحدت مسلمین کراچی، خواتین ونگ کی جانب سے کراچی پریس کلب پر احتجاجی مظاہرہ کیا گیا جس سے خواہر بنین، خواہر شاذیہ امام اور مولانا صادق جعفری نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بھارت کی مودی سرکار نے مسلم خواتین کو للکار کر اکیسویں صدی میں ایک بار پھر ہندوستان کی تقسیم کی بنیاد ڈال دی ہے۔ مسکان کی نعرہ تکبیر کی صداوں نے عالم اسلام کو متحد اور نام نہاد انسانی حقوق کے چیمپنئن کی سیکولر بھارت کی تنگ نظری کو بے نقاب کردیا ہے۔مقررین نے مزید کہا کہ حجاب ہمارا شرعی فریضہ ہے۔ایک گز کپڑا سر پر ڈالنے پر بھارت کی متعصب حکومت تلملا کررہ گئی وہ دیگر اقلیتوں کو حقوق دینے کے دعوے کس طرح کرتی ہے۔ ہندوستان میں اقلیتوں بالخصوص مسلمانوں کے ساتھ مودی سرکار کا جو رویہ ہے اس سے پوری دنیا بخوبی واقف ہے۔ انھوں نے مزید کہا کہ عیسائی، ہندو، مسلمان، یہودی اور دیگر مذاہب میں بھی بے حجابی کی اجازت نہیں ہے۔ ہندو سیتا کی پاکبازی کا ذکر کرتے ہیں،مسیحی برداری میں جناب مریم کی عصمت کی تاسی میں لڑکی نن بن جاتی ہیں۔

انھوں نے بھارت کو متنبہ کیا کہ اپنی روش تبدیل کرے ورنہ وہ دن دور نہیں کہ بھارت کی اکھنڈتا پارہ پارہ ہوکر رہ جائے گی۔بھارتی حکومت حجاب کے خلاف نہ صرف قانون سازی کر رہی ہے بلکہ خواتین کو حجاب اتارنے اور عملی طور پر ہراساں کرنے کے واقعات میں آئے دن اضافہ ہوتا جارہا ہے۔حجاب فقط ہندوستان میں بسنے والی خواتین کا حق نہیں بلکہ تمام کلمہ گو خواتین کا شرعی فریضہ ہے۔ ہندوستان کے اندر مسلمانوں پر جو مظالم ڈھائے جارہے ہیں اور مسئلہ حجاب کے خلاف جو سازشیں کی جارہی ہیں اس کی بھرپور مذمت کرتے ہیں۔ ہندوستان کروڑوں مسلمانوں کا مسکن ہے۔ یہ کہاں کی جمہوریت ہے کہ کروڑوں انسانوں کے بنیادی حقوق کو پائمال کرتے ہوئے ان کے خلاف قانون پاس کرایا جائے۔بھارت میں مذہبی جنونیوں کے سامنے نعرہ توحید بلند کرنے والی بیٹی مسکان تنہا نہیں ہم سب مائیں، بہنیں،بیٹیاں ان کے ساتھ ہیں۔آر ایس ایس کے غنڈوں کے ناروا رویے کے خلاف ہم سراپا احتجاج ہیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ مودی حکومت ہوش کے ناخن لے.حجاب محض عورت سے منسوب نہیں بلکہ یہ مکمل نظام اخلاق اور نظام عفت و عصمت ہے۔ حجاب کو مسلم خواتین کی پسماندگی کی علامت قرار دینے والے اس کی طاقت سے آگاہ نہیں۔ مغرب اور بھارت کی حجاب دشمنی دراصل اسلام دشمنی اور ان کے دوہرے معیار پر دلالت کرتا ہے۔ مغرب نے عسکری و ثقافتی یلغار کے ہتھیار سے مسلم معاشرے کی ثقافت و روایات کو مسخ کرنے کی بھرپور کوشش کی تاہم مسلم خواتین اسلامی تعلیمات کے دفاع میں کبھی پیچھے نہیں رہیں گی۔ حجاب کے دفاع میں ان گنت قربانیاں دی گئی ہیں۔ مسلم خواتین کے حجاب کے حوالے سے مغرب کا رویہ نفرت آمیز، پر تعصب اور عدم برداشت کا ہے۔عدالت میں مروا شیربینی کا حجاب کی وجہ سے قتل،اور مجمع عام میں مسکان جیسی نہتی لڑکی کے خلاف ہجوم کی نعرہ بازی نام نہاد مہذب طبقے کی اصلیت کو واضح کرتا ہے۔

وحدت نیوز(چنیوٹ)مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین کی طرف سے ملک گیر یوم حجاب کے موقع پر ریلی کا انعقاد کیا جا رہا ہے اسی سلسلے میں جامعہ بعثت رجوعہ سادات شعبہ خواہران کی جانب سے مرکزی سیکرٹری تنظیم سازی ایم ڈبلیو ایم شعبہ خواتین اور جامعہ کی پرنسپل محترمہ معصومہ نقوی کی قیادت میں طالبات نے احتجاجی مظاہرہ کیا ،جس میں ہندوستان کے بیہمانہ اقدامات کے خلاف آواز بلند کی گئ اور مسکان خان کو ان کی جرات و بہادری پر خراج تحسین پیش کیا گیا۔

  احتجاجی مظاہرے سے محترمہ معصومہ نقوی نے خطاب بھی کیا، انہوں نے کہا دنیا کی کسی طاقت کو یہ اختیار اور حق حاصل نہیں کہ مسلمان خواتین کے حجاب پر انگلی اٹھائے اور اسے غیر قانونی قرار دے ، حجاب خاتون کی عزت اور پاکدامنی کا محافظ ہے اور دین اسلام میں با حجاب خواتین کی بے انتہا قدر و قیمت ہے انہوں نے کہا دنیا میں جہاں کہیں بھی حجاب کے خلاف اقدام کیا جائے گا ہم دختران اسلام حجاب کے دفاع میں میدان میں اتریں گی ۔

وحدت نیوز(گلگت )مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین کی جانب سے یومِ حجاب کے سلسلہ میں گلگت میں بھی احتجاج ریکارڈ کروایا گیا جس کی قیادت سابق رکن جی بی اسمبلی/صوبائی ڈپٹی سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین گلگت بلتستان محترمہ بی بی سلیمہ صاحبہ اور سیکرٹری تربیت گلگت ڈویژن محترمہ صائمہ شفیع صاحبہ (حافظ قرآن) نے کی۔

احتجاجی پروگرام میں مرکزی سیکرٹری یوتھ ایم ڈبلیو ایم شعبہ خواتین محترمہ سائرہ ابراہیم اور معاون سیکرٹری یوتھ محترمہ رباب رضوی کے علاوہ زندگی کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی خواتیں نے شرکت کی اور مسکان خان کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتے ہوئے یوم حجاب کی مناسبت سے آواز بلند کی۔

احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے سابق رکن جی بی اسمبلی/صوبائی ڈپٹی سیکرٹری جنرل ایم ڈبلیو ایم شعبہ خواتین محترمہ بی بی سلیمہ صاحبہ نے کہا کہ آج ہم دیکھتے ہیں بھارت میں بھی مغرب کی پیروی کرتے ہوئے ،حجاب کے خلاف نہ صرف قانون بن رہا بلکہ خواتین کو حجاب اتارنے اور عملی طور پر ہراسان کیا جارہا جس کی ہم بھرپور مذمت کرتے ہیں ۔ ہندوستان میں کروڑوں مسلمان بستے ہیں ۔ یہ کہاں کی جمہوریت ہے کہ کروڑوں انسانوں کے بنیادی حقوق کو پائمال کیاجائے ۔ اور ان کے خلاف قانون پاس کرایا جائے ۔مسلمان جسم واحد کی مانند ہیں ۔ مسکان مسلمان ہے اور وہ تنہا نہیں ہم سب مائیں، بہنیں ،بیٹیاں ان کے ساتھ ہیں ۔آر ایس ایس کے غنڈوں کے ناروا رویے کے خلاف ہم سراپا احتجاج ہیں۔احتجاجی پروگرام کا اختتام دعائےسلامتی امام زمانہ عج کیساتھ ہوا۔

وحدت نیوز(ملتان)مجلس وحدت مسلمین کے سربراہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کی کال پر شعبہ خواتین کے زیراہتمام ملک بھر میں یوم حجاب منایا گیا، اسلام آباد،کراچی،لاہور اور ملتان سمیت تمام بڑے شہروں میں احتجاجی مظاہرے کیے گئے۔ ملتان میں بھی چوک کمہاراں والا پر احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ مظاہرے کی قیادت خانم تصدق زہرا قاضی نے کی۔

 احتجاجی مظاہرے سے مجلس وحدت مسلمین جنوبی پنجاب کے سیکرٹری جنرل علامہ اقتدار حسین، صوبائی رہنما علامہ قاضی نادر حسین علوی، ضلعی سیکرٹری جنرل مولانا وسیم عباس معصومی نے خطاب کیا، مظاہرے میً شریک خواتین نے بھارت مین مسلمانوں پر ہونے والے مظالم اور حجاب پر پابندی کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔

رہنماؤں نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بھارت میں مسلمانوں کے متعصبانہ رویے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں، اور مسلمان طالبہ مسکان کی ہمت کو سلام پیش کرتے ہیں، بھارت میں اور کشمیر میں مسلمانوں پر مسلسل مظالم ڈھائے جا رہے ہیں، مودی سرکار کے مسلمانوں پر مظالم قابل مذمت ہیں۔

 رہنماؤں نے انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں اور اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا کہ بھارت مسلسل انسانی حقوق کی پامالی کر رہا ہے، مظاہرے کے اختتام پر شرکاء کی جانن سے بھارت میں اور کشمیر میں مسلمانوں پر ہونے والے مظالم کیخلاف قرارداد منظور کی گئی۔ اس موقع پر انجینیئر سخاوت علی، مرزا وجاہت علی، عاصم نقوی، عون رضا انجم، محمد رضا مومن، صابر بلوچ اور دیگر موجود تھے۔

Page 4 of 93

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree